: تازہ ترین

تازہ ترین ویڈیو

حکمران عوام کے سر سے چھت چھیننے کا خیال دل سے نکال دیں حافظ نعیم الرحمن


Naeem Final copy January 20, 2019 | 8:28 PM

واٹر بورڈ لیاقت آباد ، سکند رآباداور اعظم آباد کے رہائشیوں کو متبادل مکانات دے ورنہ مکانات خالی نہیں کیے جائیں گے ۔احتجاجی کیمپ سے خطاب
جماعت اسلامی نے ہمیشہ عوام کے مسائل پر آواز بلند کی ہے سندھ اسمبلی میںاینٹی انکروچمنٹ مہم کے خلاف تحریک التواء جمع کرادی ہے ۔سید عبد الرشید
کراچی: (نیوزآن لائن)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ واٹر بورڈ اہلیان پرانا غریب آباد، لیاقت آباد ،سکند رآباداور اعظم آباد کو متبادل مکانات فراہم کرے ورنہ مکانات خالی نہیں کیے جائیں گے ، 50سال سے آبادشہریوں کو کسی صورت چھت سے محروم نہیں ہونے دیں گے ، جماعت اسلامی کے پاس بہترین بلدیاتی تجربہ اور قیادت ہے، ہم سے بات کریں متبادل بتائیں گے اگر 48انچ کی پانی کی لائن کا متبادل نہیں تو پہلے متاثرین کو متبادل جگہ فراہم کی جائے ، نعمت اللہ خان نے جب لیاری ایکسپریس وے تعمیر کیا تو عوام کو پہلے متبادل فراہم کیا تھا، عوام کسی کے فریب میں نہ آئیں ، آپس میں متحد رہیں ، جماعت اسلامی آپ کے ساتھ ہے ۔ اہلیان علاقہ کو کسی صورت بے گھر نہیں ہونے دیں گے ۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے واٹر بورڈ کی جانب سے سکندر آباد ، پرانا غریب آباد اور اعظم نگر کے مکینوں کو مکانات خالی کرنے کے نوٹس کے خلاف لگائے گئے احتجاجی کیمپ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ کیمپ میں بچے ، بوڑھے ،مرد وخواتین نے بڑی تعداد میں شرکت کی اور شہری و صوبائی حکومت کے خلاف زبردست نعرے بھی لگائے ۔ اس موقع پر رکن سندھ اسمبلی و امیر جماعت اسلامی ضلع جنوبی سید عبد الرشید ، ضلع عبوری امیر گلبرگ و سابق ٹاؤن ناظم گلبرگ فاروق نعمت اللہ ، ناظم حلقہ جاوید احمد خان ، عبید احمد،سابق نائب ناظم لیاقت آباد ٹاؤن شہا ب احمد ،سکریٹری اطلاعات زاہد عسکری و دیگر بھی موجود تھے۔ حافظ نعیم الرحمن نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ واٹر بورڈ کے نوٹس نے علاقے کے رہائشیوںمیں بے چینی پیدا کردی ہے ، برسوں سے قائم آبادی جس میں باقاعدہ بجلی کا کنکشن اور گیس کی فراہمی کی گئی ہے لیکن اب واٹر بورڈ نے حکم نامہ جاری کرکے ان کا سکون برباد کردیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ عوام نے جن لوگوں کو ووٹ دے کر منتخب کیا آج وہ لوگ ان آبادیوں سے نکل کر ڈیفنس چلے گئے ہیں انہیں یہاں کے لوگوں کا کوئی خیال نہیں ہے ۔ہم واٹر بورڈ سے پوچھنا چاہتے ہیں کہ انہوں نے کراچی کے عوام کے لیے پانی کی فراہمی میں کتنا اضافہ کیا ؟۔کتنے پمپنگ اسٹیشنز کو ٹھیک کیا ؟۔سابق سٹی ناظم نعمت اللہ خان نے کراچی کے عوام کے لیے 100گیلن پانی کااضافہ کیا اور کے تین منصوبہ مکمل کیا اور اس کے بعد کے فورمنصوبہ کا آغازکیا تھا لیکن بدقسمتی سے اس کے بعد آنے والی حکومت نے ایک گیلن پانی کابھی اضافہ نہیں کیا۔کے فور منصوبہ کی لاگت 16ارب روپے جسے 2010میں مکمل ہونا تھا وہ ابھی تک مکمل نہیں ہوسکا اور اب اس کی لاگت کھربوں روپوں تک پہنچ گئی ہے ۔ جماعت اسلامی اس مشکل گھڑی میں متاثرین کے ساتھ ہے ، کسی قیمت میں بھی متاثرین کو بے گھر نہیں ہونے دیں گے ۔انہوں نے کہاکہ وفاقی و صوبائی حکومت کی ذمہ داری ہے کہ اہلیان سکندر آباد ، پرانا غریب آباد اور اعظم نگر کے عوام کو متبادل جگہیں فراہم کریں ورنہ ہم سڑکوں پر آئیں گے اور ضرورت پڑی تو گورنر ہاؤس کا بھی گھیراؤ کریں گے ۔ رکن صوبائی اسمبلی سید عبد الرشید نے کہاکہ جماعت اسلامی نے ہمیشہ عوام کے مسائل کے حل کے لیے آواز بلند کی ہے اور آئندہ بھی عوام کے ساتھ رہیں گے۔سندھ اسمبلی میں امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن کی ہدایت پر اینٹی انکروچمنٹ مہم کے خلاف تحریک التواء جمع کرادی ہے اور اہلیان سکندر آباد ، پرانا غریب آباد اور اعظم نگر سے منتخب ذمہ دارن سے ملاقات کروں گا اور مجھے امید ہے کہ دیگر منتخب عہدیداران بھی اس مسئلے کے حل کے لیے سے میرا ساتھ دیں گے ۔

مہاجر نوجوان اپنی تعلیم پر توجہ دیں: ڈاکٹر سلیم حیدر


dr saleem haider MIT January 20, 2019 | 7:48 PM

علم اور قابلیت مہاجر قوم کی میراث ہے جسے واپس حاصل کرنا ہے
ماضی کی غلط سیاست نے مہاجروں کے تشخص کو نقصان پہنچایا ہے
کراچی(نیوزآن لائن)مہاجر اتحاد تحریک کے چیئرمین ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہا ہے کہ مہاجر نوجوان اپنی تعلیم پر خصوصی توجہ دیں کیونکہ مہاجروں کی میراث علم ہی ہے۔ علم کے ذریعے ہی مہاجروں نے قیام پاکستان کے بعد اس ملک کے نظم ونسق کو چلایا اور شہری علاقوں کو ترقی دلوائی۔ وہ کراچی کے مختلف کالجوں ، یونیورسٹیز کے طلباء کے ایک اجتماع سے خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہاکہ بدقسمتی سے مہاجر نوجوانوں کو ماضی میں تعلیم سے دور کرکے انہیں تشدد اور جرائم کی طرف لگایا گیا جس کے نتیجے میں پوری مہاجر نسل کو نقصان پہنچا۔ انہوں نے کہاکہ مہاجر تہذیب یافتہ اور شاندار ماضی اور ثقافت رکھنے والی قوم ہے ۔ تعلیم ہی مہاجروں کا ورثہ ہے جسے اب ایک بار پھر مہاجر نوجوان اپنے کھوئے ہوئے ورثے کی طرف واپس پلٹ رہے ہیں۔ تعلیم اور تربیت پر توجہ دیں ۔ پروفیشنل اور ٹیکنیکل تعلیم کے علاوہ مقابلوں کے امتحانات میں شریک ہوکر خود بھی مضبوط بنیں اور قوم کو بھی مضبوط کریں۔ انہوں نے کہا کہ مہاجر ایک شاندار ماضی ، حال اور مستقبل رکھنے والی قوم ہے لیکن بدقسمتی سے ماضی کی غلط سیاست نے مہاجروں کے تشخص کو نقصان پہنچایا اور مہاجروں پر بھتے خوری ، ٹارگٹ کلنگ، دہشت گردی جیسے الزامات لگتے رہے ۔ آج بھی مہاجر نام پر سیاست کرنے والے وہی بھروپیے موجود ہیں جن کی وجہ سے پوری مہاجر قوم تباہی سے ودچار ہوئی ۔ مہاجر نوجوانوں کا مستقبل تاریک ہوا اور آج مہاجر نوجوان بند گلی میں لاکھڑے کئے گئے ہیں۔ انہیں ملازمت سے لے کر تعلیمی اداروں میں داخلے تک ظالمانہ رویوں کا سامنا ہے۔

بارش عوام کے لئے زحمت نہ بن جائے ، ریحان ہاشمی نے بلدیہ وسطی میں ایمرجنسی نافذ کردی


Pic Meeting Emergency January 20, 2019 | 7:46 PM

بلدیاتی افسران اور عملے کہ چوبیس گھنٹے الرٹ رہنے کا حکم، چھٹیاں منسوخ کردی گئی
برساتی نالوں کی صفائی ،ہنگامی اقدامات ، سیوریج لائن اور گٹرز کو رننگ کنڈیشن میں رکھنے کی ہدایت
کراچی :( نیوزآن لائن) محکمہئٔ موسمیات کی جانب سے آج اور کل تیز بارش ہونے کی پیش گوئی کے سبب بلدیہ وسطی میں ہنگامی اقدامات ، برساتی نالوں کی صفائی ، سیوریج اور گڑلائنز کو، رننگ کنڈیشن میں رکھنے کی ہدایات جاری کردی گئیں۔ تفصیلات کے مطابق چیئرمین بلدیہ وسطی ریحان ہاشمی نے محکمہء موسمیات کی جانب سے کراچی میں آج اور کل بارشوں کے امکانات کی گھنٹی بجاتے ہی ضلع وسطی میں ہنگامی اجلاس بلایا جس میں میونسپل کمشنر وسیم سومرو ، منتخب بلدیاتی نمائندے اور متعلقہ بلدیاتی افسران نے شرکت کی۔ریحان ہاشمی نے اجلاس میں ہدایت کی کہ ممکنہ بارشوں کے پیش ِ نظر ہر یوسی کی سیوریج اور گڑلائنوں کورننگ کنڈیشن میں رکھا جائے اور اگر کہیں کسی قسم کی رکاوٹ ہوتو فوری دور کی جائے۔اور روزآنہ معمول کی صفائی میں کسی قسم کا تعطل پید انہ ہو۔ جبکہ برساتی نالوں سے ہر قسم کا کوڑا کرکٹ نکالاجائے تاکہ بارشوں کے دوران بارش کا سیلابی پانی گلیوں، نالیوں اور گٹر لائن سے ہوکر جب برساتی نالوں میں گرے تو بلا روک ٹوک بہتا ہُو ا گجر نالہ سے ہوتا ہُوا ملیر ندی میں جاگرے ۔انہوں نے ہدایت کی کہ ”ڈی واٹرنگ”پمپس ورکنگ کنڈیشن میں رکھے جائیں، دوسری جانب شہری حکومت سے درخواست کی گئی ہے کہ بلدیہ وسطی کوبارش کے دوران ”تھرس پمپ اور گریپ کرین ” مہیا کی جائیں۔ریحان ہاشمی نے گرین بس منصوبے کی انتظامیہ سے کہا ہے کہ وہ بلدیہ وسطی کی حدود میں اُنکے منصوبے سے متاثرہ علاقوں میں نالوں کی صفائی بھی فوری طور پر کرائیں تاکہ عوام کوبارش میں پریشانی کا سامنا نہ ہو۔ واضح رہے کہ بلدیہ وسطی کے علاقے میں موجود نالوں کی طوالت تقریباً چالیس کلو میٹر کے لگ بھگ ہے۔ شدیدبارش کے سبب اگر نالے اُبل پڑیں تو پانی رہائشی اور تجارتی مراکز میں بھر جائے۔ اس صورتِ حال سے بچنے کے لئے ریحان ہاشمی نے تمام برساتی نالوں اور سیوریج لائنوں کی صفائی کا حکم دیا ہے تاکہ بارانِ رحمت عوام کے لئے زحمت نہ بن جائیں۔اگرچہ سیوریج لائنوں کی مرمت و تبدیلی کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کی ذمہ داری ہے تاہم بارہا یاد دہانی کرانے کے باوجود کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کی جانب سے کوئی اقدام نہیں کیا گیا اس لئے بلدیہ وسطی اپنے دستیاب وسائل استعمال کرتے ہوئے سیوریج لائن اوربرساتی نالوں کی صفائی کراتی رہتی ہے۔

انسداد پولیو مہم پیرشروع ہوگی سات روز جاری رہے گی کمشنر کراچی افتخار شالوانی


DSC_2003wwww January 20, 2019 | 4:44 PM

کمشنر کراچی کی زیر صدار ت جائزہ اجلاس منعقد۔
مائکرہ پلان پر غوررہ جانے والے بچوں کی کمی
عالمی ادارہ صحت کا اظہار اطمینان اور تعریف
انسداد پولیو قومی مقصد ہے پولیو کے خاتمہ تک مہم جاری رہے گی کمشنر کراچی افتخار شالوانی
کراچی: (نیوزآن لائن) کمشنرکراچی افتخار شلوانی کی صدارت میںان کے دفتر میں انسداد پولیو کے بارے میں ایک جائزہ اجلاس منعقدہوا اجلاس میں انسداد پولیو کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی گئی ۔ بتایا گیا کہ مہم پیر 21جنوری سے شروع ہوگی ہونے والی این آئی ڈی انسداد پولیو مہم کے انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں۔ مہم سات روز جاری رہے گی ۔ جس میں تیئس لاکھ سے زاید بچوں کو پولیو کے قطرے پلائے جائیں گے۔مہم 192 یونین کونسلوں میں بیک وقت شروع کی جارہی ہے ۔ سیکورٹی کے خصوصی اقدامات کئے گئے ہیں مہم میں تیرہ ہزار سے زائد پولیو ورکرز اپنے فرائض انجام دیں گے۔ اجلاس میں ایمر جنسی آپریشن سینٹر سندھ کے کوآرڈینٹر عمر فاروق ایڈیشنل کمشنر کراچی ون کمشنر کراچی پولیو ٹاسک فورس کے کوآرڈینٹر ڈاکٹر نصرت علی، پولیس رینجرز ،تمام ٹاون ہیلتھ افسران ،عالمی ادارہ صحت، یونیسیف ، بل گیٹس اینڈ ملنڈا کے نمائندوں اور دیگر نے شرکت کی۔ اجلاس میں عالمی ادارہ صحت کے ٹیم لیڈر سندھ نے انسداد پولیو کی کوششوں کو سراہا انھوں نے کہا کہ رہ جانے اور انکار کر نے والے بچوں میں بتدریج کی ہوئی ہے ۔ بہتر کار کردگی پر انھوں نے انتظامیہ ا،محکمہ صحت کے افسران اور دیگر متعلقہ اسٹیک ہولڈرز کی کوششوں کی تعریف کی۔ کمشنر نے کہا کہ انسداد پولیو قومی مقصد ہے اس سے ملک کا وقار اور بچوں کو مستقبل وابستہ ہے ملک کو پولیو سے پاک کر نے تک یہ کوششیں جاری رہیں گی۔انھوں نے کہا کہ قومی جذبہ سے تمام اسٹک ہولڈرز ملک کر کام کریں انھوں نے ڈپٹی کمشنرز سے کہا کہ وہ انسداد پولیو کے مائکرو پلان پر عملدرآمد کو یقینی بنانے میں اپنا کر دار ادا کریں۔ا نھوں نے رہ جانے والے بچوں کی تعداد میں کمی خوش آئند ہے کوشش کی جائے جلد از جلد سو فیصد بچوں کو پولیو کے قطرے پلانے کا ہدف حاصل ہو اور پولیو کا خاتمہ ہو ۔

جامعہ کراچی: تین روزہ بین الاقوامی کانفرنس کی افتتاحی تقریب 07 جنوری کو ہوگی


karachi-University-Logo-KU-Monogram-150x150.jpg 1 January 6, 2019 | 7:33 PM

جامعہ کراچی: تین روزہ بین الاقوامی کانفرنس کی افتتاحی تقریب 07 جنوری کو ہوگی
پاکستان کے مختلف شہروں کے علاوہ جرمنی،تھائی لینڈ،فرانس اور چین کے معروف سائنسدان شرکت کریں گے۔
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے انسٹی ٹیوٹ آف سسٹین ایبل ہیلو فائٹ یوٹیلائزیشن کے زیر اہتمام تین روزہ دوسری بین الاقوامی کانفرنس بعنوان: ”پائیدارترقی : سبزانقلاب میں ہیلوفائٹس کا کردار” کی افتتاحی تقریب بروز پیر07 جنوری 2019 ء کوصبح9:30 بجے کراچی یونیورسٹی بزنس اسکول میں منعقد ہوگی۔ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد اجمل خان صدارت کریں گے جبکہ یونیسکوتھائی لینڈ کے مشیرسائنس ڈاکٹر بینوبوئر اور ڈائریکٹر یونیسکوفرانس ڈاکٹرمیگل گاٹ کلیدی خطاب کریں گے۔ ڈائریکٹر انسٹی ٹیوٹ پروفیسر ڈاکٹر بلقیس گل خطبہ استقبالیہ پیش کریں گی ۔کانفرنس میں پاکستان کے مختلف شہروں کے علاوہ جرمنی،فرانس،چین اور تھائی لینڈ کے معروف سائنسدان شریک ہوں گے۔ڈائریکٹر انسٹی ٹیوٹ آف سسٹین ایبل ہیلو فائٹ یوٹیلائزیشن جامعہ کراچی پروفیسر ڈاکٹر بلقیس گل کے مطابق مذکورہ کانفرنس کا مقصد شعبے کے بین الاقوامی ماہرین،محققین ،اقوام متحدہ کے اداروں ،صنعتوں اور پالیسی سازوں کو ایک جگہ جمع کرکے ہیلوفائٹس کے پائیداراستعمال سے متعلق گفت وشنید اور تحقیق کو فروغ دینا ہے۔غذائی تحفظ کو یقینی بنانے کے لئے ضروری ہے کہ بنجر زمینوں کو قابل کاشت بنایا جائے ،مذکورہ تحقیق پاکستان سمیت دیگر ممالک کے غریب کسانوں کے لئے بیحد فائدہ مند ثابت ہوگی۔جامعہ کراچی کا انسٹی ٹیوٹ آف سسٹین ایبل ہیلو فائٹ یوٹیلائزیشن کاقیام 2006 ء میں عمل میں آیا اور انتہائی قلیل عرصے میں انسٹی ٹیوٹ ہذا مذکورہ شعبے میں دنیا بھر کے معتبر اداروں میں شامل ہوا جس کی بدولت 2009 ء میں ہی یونیسکو نے اولین سسٹین ایبل ہیلو فائٹ چیئر انسٹی ٹیوٹ ہذا میں قائم کی ۔قلیل رقبے اور محدود فنڈنگ کے باوجود انسٹی ٹیوٹ ہذا بین الاقوامی معیار کے ریسرچ میں سرگرم عمل ہے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جامعہ کراچی: الحاق شدہ کالجز میں داخلے برائے سال 2019 ء آج سے شروع ہوں گے
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے رجسٹرار کے اعلامیے کے مطابق جامعہ کراچی سے الحاق شدہ کالجز میں داخلے برائے سال 2019 ء کے شیڈول کا اعلان کردیا گیاہے۔ بی اے (پاس)،بی ایس سی (پاس) اور بی کام سال اول کے لئے داخلہ فارم 07 جنوری تا28 جنوری 2019ء تک جمع کرائے جاسکتے ہیںجبکہ500/= روپے لیٹ فیس کے ساتھ 18 فروری 2019 ء اور 1000/= روپے لیٹ فیس کے ساتھ 11 مارچ 2019 ء تک جمع کراسکتے ہیں۔انرولمنٹ فارم اور فیس جمع کرانے کی آخری تاریخ 18 فروری 2019 ء ہے جبکہ 800/= روپے لیٹ فیس کے ساتھ 12 مار چ2019 ء ہے۔کلاسز کا آغاز 21 جنوری 2019 ء سے ہوگا۔

ضلع کی خوبصورتی اور شہر میں آلودگی کے خاتمے کیلئے شجرکاری مہم کا سلسلہ جاری رکھا جانا ازحد ضروری ہے۔ شرقی معید انور


06-01-2018 January 6, 2019 | 7:28 PM

کراچی:(نیوزآن لائن)چیئرمین بلدیہ شرقی معید انور نے کہا کہ ضلع کی خوبصورتی اور شہر میں آلودگی کے خاتمے کیلئے شجرکاری مہم کا سلسلہ جاری رکھا جانا ازحد ضروری ہے اور بلدیہ شرقی اس عمل سے غافل نہیں ہے اس سلسلے میں بلدیہ شرقی کی جانب سے پہلے مرحلے میں نیم ودیگر پودوں کے درخت ضلع میں لگائے کے ساتھ اب پھل دار درختوں کے ذریعے سینٹرل آئی لینڈ کو مزین کیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے میونسپل کمشنر ایسٹ اختر علی شیخ اورڈائریکٹر پارکس جمشید زون اقبال شیخ کے ہمراہ ضلع شرقی میں سر سید روڈ، شاہراہ قائدین، دادا بھائی نورو جی روڈ کی سینٹرل آئی لینڈ کا معائنہ کرتے ہوئے کیا۔ چیئرمین معید انور نے اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ سینٹرل آئی لینڈ کی خوبصورتی کیلئے کاسمیٹک کاموں پر یقین نہیں رکھتے اس لیئے ایسے درخت لگائے جارہے ہیں جس سے شہر کی خوبصورتی میں بھی اضافہ ہو اورماحولیاتی آلودگی سے نبرد آزما ہونے میں بھی معاونت حاصل ہو انہوں نے مزید کہا کہ بدقسمتی سے شہر کراچی میں ہریالی کے فروغ پر زور نہیں دیا گیا جس سے نہ صرف پارک ویران ہوگئے بلکہ تعمیرات میں بھی اضافہ ہونے کے سبب درختوں کی کٹائی کی گئی، ہم نے بر سر اقتدار آنے کے بعد ترجیحی بنیادوں پر پارکس کے ریوائیول(احیا، تجدید) کے بعد شجرکاری مہم پر زور دیا اور اس سلسلے میں پبلک پرائیوٹ پارٹنرشپ کے ذریعے وسیع پیمانے پر شجرکاری مہم کو یقینی بنایا، اب کوشاں ہیں کہ شہر کراچی کو وہی ماضی والا پر رونق اورہر یالی سے بھرپور شہر بنانے میں اپنا کردار ادا کریں، انہوں نے ڈائریکٹر پارکس اقبال شیخ کو ہدایت کی کہ مذکورہ شاہراہوں پر پھل دار درخت لگانے کے سلسلے میں فوری اقدامات بروئے کار لائے جائیں انہوں نے اس موقع پر عوام سے بھی اپیل کی کہ وہ شجرکاری مہم کو اپنا دینی فریضہ سمجھ کر اپنا جو بھی حصہ دے سکتے ہیں وہ دیں تاکہ اس ماحولیاتی تبدیلی سے ہم بہتر طریقے سے نبرد آزما ہوسکیں۔

نویں و دسویں جماعت کے پری بورڈ امتحانات کی رجسٹریشن کا آغاز کردیا گیا، حسین رضا


iso January 6, 2019 | 7:26 PM

امتحانی فارم 22جنوری تک حاصل و جمع کروائے جاسکتے ہیں ،سیکرٹری تعلیم آئی ایس او پاکستان کراچی ڈویژن
شہر بھر میں 20سے زائد مقامات پر رجسٹریشن و امتحانی مراکز قائم کیے جائیں گے ، سیکرٹری تعلیم آئی ایس او پاکستان کراچی ڈویژن
کراچی:(نیوزآن لائن)امامیہ ایجوکیشن بورڈ کی جانب سے منعقد کردہ نویں و دسویں جماعت کے پری بورڈ امتحانات کے رجسٹریشن فارم22جنوری تک حاصل و جمع کروائے جا سکتے ہیں ۔ جبکہ امتحانات کا آغاز 28جنوری سے ہوگا اور نتائج کا اعلان مارچ میں کیا جائے گا ۔طلباو طالبات کی سہولت کے لئے شہر کے تمام اضلاع میں 20سے زائد مقامات پر رجسٹریشن و امتحانی مراکز کا قیام عمل میں لایا گیا ہے۔ان خیالات کا اظہار آئی ایس او پاکستان کراچی ڈویژن کے تعلیم سیکریٹری حسین رضا نے المصطفی ہاوس میں منعقدہ یونٹس صدورکے اجلاس میں کیا۔ رجسٹریشن مراکز کی تفصیلات فراہم کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ ضلع وسطی میں 7 مراکز قائم کئے گئے ہیں،جبکہ ضلع ملیر میں مقامات پر رجسٹریشن کا عمل جاری رہے گا ، اسکے علاوہ ضلع غربی میں مراکز قائم کئے گئے ہیں، جبکہ ضلع جنوبی میں 3 مقامات پر رجسٹریشن کا عمل جاری رہے گا، ضلع شرقی میں دو مقامات پرفارم حاصل و جمع کروائے جا سکتے ہیں۔ انکا مزید کہنا تھا کہ آئی ایس او پاکستان کراچی ڈویژن گذشتہ 20 سالوں سے طلباو طالبات کی رہنمائی کے لئے امتحانات سے قبل پری بورڈ امتحانات کا انعقاد نہایت ہی احسن طریقے سے سرانجام دے رہا ہے۔ جس میں ہر سال ہزاروں کی تعداد میں طلبا و طالبات شرکت کرتے ہیں۔

برجیس احمد ودیگر کی کراچی پریس کلب کے نومنتخب عہدیداران کو مبارکباد


Jamaat-e-Islami-Pakistan-Flag-744490 December 30, 2018 | 9:13 PM

ملک میں جمہوریت کیلیے جدوجہد ، انسانی حقوق اور عوامی مسائل کو اجاگر کرنے میں پریس کلب کی خدمات ناقابل فراموش ہیں
کراچی : (نیوزآن لائن)جماعت اسلامی کراچی کے قائم مقام امیر برجیس احمد ، سکریٹری اطلاعات زاہد عسکری نے امتیاز خان فاران کو صدر،ارمان صابر کو سیکریٹری سعید سر بازی نائب صدر، راجہ کامران خزانچی اور محمد حنیف اکبر جوائنٹ سیکریٹری اور نومنتخب گورننگ باڈی کو پریس کلب کے انتخابات جیتنے پر دلی مبارکباد دی ہے اورامید ظاہر کی ہے کہ وہ ہمیشہ کی طرح صحافت کی اعلیٰ روایات کو برقرار رکھتے ہوئے کلب اور صحافی برادری کی ترقی میں اپنا مثبت کردار ادا کرتے رہیں گے۔ملک میں جمہوریت کیلیے جدوجہد ،انسانی حقوق اور عوامی مسائل کو اجاگر کرنے میں پریس کلب کی خدمات ناقابل فراموش ہیں۔

ممکنہ طور پر شہر کے مختلف علاقوں اور اضلاع میں ہفتہ وار بازار کے انعقاد کے لئے اقدامات کئے جائیں گیا۔ کمشنر کراچی


commsioner karachi book istal December 30, 2018 | 9:07 PM

کراچی ( نیوزآن لائن) فرئیر ہال اتوار بک بازار کراچی میں دوبارہ آغاز ہو گیا ۔ کمشنر کراچی افتخار شالوانی نے بک بازار کا افتتاح کیا۔ کمشنر کراچی نے اعلان کیا کہ اتوار بازار باقاعدگی سے منعقد کیا جائے گا ہر ممکنہ طور پر شہر کے مختلف علاقوں اور اضلاع میں ہفتہ وار بازار کے انعقاد کے لئے اقدامات کئے جائیں گیا۔ حکومت سے مشاورت کر لی گئی ہے وہ فرئیر ہال اتواربک بازار دوبارہ شروع کرنے کی افتتاحی تقریب سے بحیثیت مہما ن خصوصی خطاب کر رہے تھے
اتوار بازار اور مختلف علاقوں میں کتاب بازار کے انعقا د میں سہولتیں فراہم کر نے اور یہ باقاعدگی سے جاری رہیں انھیں تحفظ فراہم کر نے کے لئے کمشنر کراچی کی سربراہی میں ایڈوائزری کمیٹی قائم کی جاے گی جس میں شہر کی ممتاز ادبی شخصیات، ادبی اداروں کے نمائندے اور رائڑز شامل ہوں گے ۔ جوکمیٹی کے مستقل رکن ہوں گے۔ کمشنر کراچی بہ لحاظ عہدہ اس کے کوآرڈینٹر ہوں گے۔
انھو ں نے کہا کہ حکومت کراچی میں مطالعہ کو فروغ دینے میں دلچسپی رکھتی ہے صوبائی وزرا سعید غنی اور وہاب صدیقی نے انھیں حکومت کی جانب سے ہر ممکنہ مدد کی یقین دہانی کرائی ہے۔ ۔ انھوں نے کہا کہ کوشش کی جائے گی کہ ہر ضلع اور ہر علاقہ میں چھوٹے بڑے بک بازار لگائے جاییں تاکہ لوگوں کو خا ص طور پر ہمارے نوجوانوں کو مناسب قیمت پر اور دستیاب ہوں انھوں نے کہا کہ وہ اس سلسلہ میں کوششیں کر رہے ہیں اس سلسلہ میں وہ مختلف ادبی شخصیات اور ادبی اداروںسے رابطہ میں ہیں ان سے مشاورت کر رہے ہیں،۔ انھوں نے کہا کہ وہ سمجھتے ہیں مطالعہ کا کلچر فروغ دینے کے لئے وہ زیادہ سے زیادہ پبلک لائبریاں قائم کریں جو لابرئریاں بند کر دی گئی ہیں یا ان کی حالت خرا ب ہے انھیں بحال کیا جائیگا ان کی حالت کو بہتر بنایا جائے گا نئی پبلک لاائبریاں قائم کی جائیں گی اس سلسلہ میں حکومت نے ہر ممکنہ مدد کی یقین دہانی کرائی ہ۔انھوں نے اعلان کیا کہ پروفیسر سحر انصاری کی کتابوں کے ضخیم ذخیرہ کو ان کی رہنمائی اور تعاون سے لائبریری میں منتعقل کیا جائے گا انھوںنے انجمن ترقی اردو کے باغ پار ک میں ایک بڑی لائبری قائم کر نے کا اعلان کیا انھوں ن کہا کہ وہ انجمن ترقی اردو کے کتاب پارک کا دورہ کریں گے انھوں نے کہا کہ وہ شہر میں ایک مرکزی پبلک لائبریری قائم کرنا چاہتے ہیں وہ ایک موضوع جگہ کی تلاش میں ہیں اس سلسلہ میں انھوں نے شہر میں دستیاب مختلف عمارتیں دیکھی ہیں اور متعلقہ اداروں سے بات چیت جاری ہے امید ہے وہ جلد جگہ تلاش کر لیں گے۔
وہ ادبی تنظیموں اور ادارون سے مشاورت کریں گے ۔ تقریب میں سینئر افسر حکومت پاکستان طارق مصطفی پروفیسر سحر انصاری فاطمہ حسن ، امینہ سید، آصف فرخی،ذوالقرنین عالی ،احمدشاہ،عقیل عباس جعفری اور تقریب کی آرگنائزنگ کمیٹی کے کو آڑڈینٹر سلطان خلیل بھی مو جو د تھے۔

بانیان پاکستان کی اولادوں کودیوار سے لگانے کی سازشیں ہورہی ہیں،سید عقیل انجم


Baber Brotheran December 30, 2018 | 6:42 PM

ملک کے سواداعظم اہلسنّت وجماعت کی ذمہ داری ہے کہ اپنے اکابرین کی امانت وطن عزیزپاکستان کی حفاظت کا فریضہ انجام دیں،مفتی بشیرالقادری
وطن عزیز آج تاریخ کے انتہائی نازک ترین دورسے گزررہاہے، شکیل قاسمی، ظہیر خان ٹھیکیدارودیگر کالیاقت آباد میں منعقدہ جشن غوث الوریٰ سے خطاب
کراچی (نیوزآن لائن) جمعیت علماء پاکستان کراچی کے صدرعلامہ سید عقیل انجم قادری نے کہا ہے کہ وطن عزیز آج تاریخ کے انتہائی نازک ترین دورسے گزررہاہے، قتل وغارتگری،دہشتگردی اور لاقانونیت کابازارایک بارپھرگرم ہوچکاہے،بانیان پاکستان کی اولادوں کودیوار سے لگانے کی سازشیں ہورہی ہیں،ایسے میں اہلسنّت وجماعت جواس ملک کے سواداعظم ہیں ان کی ذمہ داری ہے کہ اپنے اکابرین کی امانت وطن عزیزپاکستان کی حفاظت کا فریضہ انجام دیں۔ یہ باتیں انہوں نے سکندرآباد لیاقت آباد میںجے یوپی ضلع وسطی کے زیراہتمام منعقدہ جشن غوث الوریٰ سے خطاب کرتے ہوئے کہیں،اس موقع پر جے یوپی کراچی ڈویژن کے جنرل سیکریٹری مفتی محمدبشیرالقادری،چیف آرگنائزرمحمدشکیل قاسمی،نائب صدر سید جہاں زیب سبزواری،میزبان ضلع وسطی کے ناظم اعلیٰ ظہیر خان ٹھیکیدار ودیگر نے بھی خطاب کیا،جبکہ حبیب بھیا،سیکریٹری لیبرافیئرزغلام عباس لنگاہ، ضلع ملیرکے صدر محمداکبروٹو، طارق مغل،مہتاب نورانی،محمودعسکری، سلمان شیخ، محمدہاشم نورانی،کاشف نورانی،جمیل قادری،جمال انصاری،حافظ شہریارقادری، ایان قادری،نورمحمداشرفی ودیگر نے بھی شرکت کی۔جشن غوث الوریٰ میں عالم اسلام کے معروف ثناء خوان رسول حافظ طلحہ قادری، محمدارسلان نقشبندی، بابرنقشبندی، سلمان قادری، اویس رضا قادری، بلال شاہ بخاری،ابوبکر قادری، زوہیب قادری ودیگر نے ہدیہء نعت ومنقبت پیش کیا۔مقررین نے اپنے خطاب میں کہاکہ پاکستان بچانے کی واحدصورت یہ ہے کہ جن اکابرین نے پاکستان بنایاتھا ان کی اولادیں آگے بڑھیںاور پاکستان کوبچائیں۔انہوںنے کہاکہ حضورغوث الاعظم کے مریدین ومعتقدین نے صلیبی جنگوں میںاسلام کی سربلندی میں اہم کرداراداکیا،حضرت مجددالف ثانی نے اپنے دورمیں انقلاب کی راہ ہموار کی، خانقاہی نظام کااصل مقصدہی مسلمانوں کاتحفظ اور شعائراللہ کی حفاظت ہے ،آج بھی اگرصاحبان طریقت موقع کی نزاکت کوسمجھ لیں توملک میں انقلاب نظام مصطفےٰ ۖ کے نفاذ کی منزل قریب تر ہوگی۔انہوں نے کہاکہ جے یوپی قادریوں، نقشبندیوں، چشتیوں اور سہروردیوں کالشکر ہے ،یہ امام نورانی کے چاہنے اور ماننے والو ں کااصل لشکرہے یہ سرکٹاتوسکتاہے ،سرجھکانہیں سکتا۔انشاء اللہ مشن نورانی کوپوراکریں گے اور یارسول اللہ ۖ کے نعرے پرسب کو متحد کریں گے۔ جمعیت علماء پاکستان موروثی جماعت نہیں ہے ہم سب علامہ شاہ احمدنورانی کے بنائے ہوئے دستور کے پابند ہیں۔انہوں نے مطالبہ کیاکہ وطن پاک میں بے روزگاری کے خاتمے کے لئے توانائی کے نئے ذرائع تلاش کئے جائیںاور روزگارکی فراہمی کے لئے نئے صنعتی یونٹس لگائے جائیں اور وہ تمام بیمارصنعتوں کی بحالی کے لئے عملی اقدامات کئے جائیں اور نوجوان نسل کو بے روزگاری سے بچایاجائے۔ پی ٹی آئی کی قیادت نے انتخابات سے قبل قوم سے وعدہ کیاتھاکہ ملک سے کرپشن کاخاتمہ کریں گے ،بدعنوان عناصر کوسرعام سزادی جائے گی اور وہ لوگ جنہوں نے ملک سے بے شماردولت لوٹی ہے وہ پیسہ واپس لیا جائے گا،مگرمیڈیاپر ٹرائل تو نظرآرہاہے لیکن پیسہ نہیں آرہا،مہنگائی کا طوفان غریبوں کے چولہے ٹھنڈے کررہاہے مگر حکمران اربوں روپے خرچ کرکے نئے سنیماتعمیر کئے جارہے ہیں۔حکمران انتخابی وعدے پورے کریں ، مظلوم قوم نے پی ٹی آئی کوتبدیلی کے نام پر ووٹ دیا تھامگر یہ ہماری بدقسمتی ہے کہ نہ توکوئی تبدیلی آئی اور نہ ہی کرپشن کاخاتمہ ہوا،نہ لوڈشیڈنگ ختم ہوئی نہ ملکی وسائل کی لوٹ مار میں کمی آئی،بلکہ ہر آنے والادن پاکستان کے غریب عوام کی پشت پر مہنگائی کے کوڑے برسارہاہے ۔ بجلی، آٹا،پیٹرول اور بنیادی ضرورت کی اشیاء کی قیمتوں میں روزافزوں اضافہ ہورہاہے ور یہ سب کچھ ورلڈ بینک اور آئی ایم ایف کی پالیسیز کی پابندی کانتیجہ ہے ۔عمران خان اپنے وعدے پورے کریں ،ورلڈ بینک وآئی ایم ایف کے شکنجے سے قوم کو آزادی دلائیںتاکہ قوم واقعی خوشحالی کی راہ پر گامزن ہوسکے۔انہوں نے قائدین اہلسنّت سے مطالبہ کیاکہ حالات کی نزاکت کوسمجھیں اب وقت آچکاہے کہ قائدین آج بھی متحد نہ ہوئے توپھرکب ہونگے،ہم تمام قائدین اہلسنّت سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ خدااور اس کے رسول ۖ کے واسطے اپنے تمام تر ذاتی اور گروہی اختلافات کو بالائے طاق رکھ کر اپنی مادری تنظیم جمعیت علماء پاکستان کے پلیٹ فارم پر متحدومنظم ہوجائیں اور پاکستان کو حقیقی معنوں میں نظام مصطفےٰ کا گہوارابنانے کی تحریک کا آغازکریں۔

جامعہ کراچی: داخلہ فیس جمع کرانے کی تاریخ میں توسیع


karachi unversity jpg December 30, 2018 | 6:33 PM

کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے ڈائریکٹر ایڈمیشنز کے اعلامیہ کے مطابق بیچلرز ،ماسٹرز ، ڈاکٹر آف فارمیسی (مارننگ و ایوننگ پروگرام)،ڈاکٹر آف فزیکل تھراپی(مارننگ پروگرام) اور شعبہ ویژول اسٹڈیز کی داخلہ فیس جمع کرانے کی تاریخ میں 02 جنوری2019 ء تک توسیع کردی گئی ہے۔طلباوطالبات اپنی داخلہ فیس آن لائن جمع کراسکتے ہیں۔

آفیسرز الائنس جامعہ کراچی کے افسران کو مایوس نہپیں کریگا۔ 26دسمبر کو پینل کو ووٹ دینے کی اپیل کرتے ہیں ۔منصورحسن امیدوار صدر


December 23, 2018 | 9:17 PM
ضی میں نا انصافی کا شکار افراد کے ساتھ انصاف ، ریٹائرڈ ملازمین کے بچوں کو نوکریاں دلانا، میڈکل انشورنس پالیسی جیسے اقدامات کرائے جائیں گے۔پینل برائے آفیسرز الائنس جامعہ کراچی کا اعلان
کراچی:(نیوزآن لائن)پینل برائے آفیسرز الائنس جامعہ کراچی کے امیدوار برائے صدر منصور حسن اور جنرل سیکریٹری تاج الدین نے پینل کے منشور کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ کامیابی کے بعد آفیسران کی باہمی مشاورت سے ایک ویلفیئر بورڈ کی تشکیل، ریٹائرمنٹ کے وقت ملنے والے فنڈزکی بروقت ادائیگی، لیو انکیشمنٹ کا دورانیہ 10سال سے کم کرکے 5سال کرایا جائے گا۔ افسران کی سینیارٹی لسٹ، سفارشی ترقیوں کو روکنا، افسران کو بزریعہ قرعہ اندازی عمرہ پر بھیجنے ، انکی رہائش کے مسائل، میڈیکل پالیسی ، ماضی میں نا انصافی کا شکار افراد کے ساتھ انصاف ، ریٹائرڈ ملازمین کے بچوں کو نوکریاں دلانا، میڈکل انشورنس پالیسی جیسے اقدامات شامل ہیں ۔ آفیسرز ویلفیئر ایسوسی ایشن جامعہ کراچی کا پینل برائے آفیسرز الائنس جامعہ کراچی کے افسران کو مایوس نہپیں کریگا۔ صدر منصور حسن نے 26دسمبر کو پینل کو ووٹ دینے کی اپیل کی ہے۔

علم ہماری پہچان اور تہزیب ہماری شناخت تھی،ڈاکٹر محمد انور


karachi December 23, 2018 | 9:10 PM

کراچی:(نیوزآن لائن) مہاجر نیشنل موومنٹ کے چیئرمین ڈاکٹر محمد انورنے کہا ہے کہ علم ہماری پہچان اور تہزیب ہماری شناخت تھی۔ عالمی کتب میلہ نے شہر کی سرگرمیوں میں اضافہ کردیا ہے۔ فروغ علم کے لئے عالمی کتب میلہ اچھی اور مثبت کاوش ہے۔ مہاجروں کی پہچان علم کے گہوارے اور انکی تربیت تھی۔ ہم اس روایت اور پہچان کو دوبارہ مہاجروں کی شناخت بنانے کے متمنی ہیں اور یہ کام جاری و ساری رہیگا۔ نوجوان اس روایت کو آگے بڑھائیں ۔ انہوںنے عالمی کتب میلے کے دورے کے موقع پر مہاجر نیشنل موومنٹ کے کارکنوں اور طالب علموں سے گفتگو میں یہ بات کہی۔ انہوں نے کہا کہ آئی ٹی کی صنعت کو بھی مہاجروفاقی وزیر ایک اچھی سمت میں ڈال کر مثبت روایتوں کے امین بنیں۔ ان میں اسکی صلاحیت موجود ہے ۔ دریں اثناء ناظم آباد بلاک ایل میں کارکنان کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوںنے کہا کہ ایم کیو ایم کی تقسیم کانعرہ لگانے والے افراد دراصل یہ پیغام دینا چاہتے ہیں کہ مہاجرمنتشر ہوگئے۔لیکن جس طرح تمام قوم پرست جماعتیں سندھی اشو پر ایک ہو جاتی ہیں ہم بھی اپنے بھائیوں کے ساتھ ایک نظر آئیں گے۔ ہم تطہیر اور تعظیم کی مہاجر سیاست پر عمل پیرا ہیں ۔مکمل مہاجر سیاست پر اترچکے ہیں ۔ ایک ایک کارکن ہماری جان ہے ۔ سینئر وائس چیئرپرسن روبینہ یاسمین نے کہا کہ ضلع وسطی مہاجروں کا گڑھ کہلاتا ہے۔ ہمیں تمام منفی سیاست دانوں کو اپنی مثبت سیاست سے شکست دینی ہے۔انہوں نے بلدیہ وسطی کے منافق چیئرمین ریحان ہاشمی پرکڑی تنقید کی جو تبادلوں پر رقوم لے رہے ہیں اوتر مہاجر خواتین کو ہراساں کر رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہ تربیت ایم کیو ایم کی نہیں یہ شخص پیسے کو دین ایمان سمجھ کر مہاجر سیاست کو ناقابل تلافی نقصان دے رہا ہے۔ لیکن فاروق ستار اور بہادرآباد کی خاموشی گناہ کے مترادف ہے۔

یوسی ا کیس گلشن اقبال کو آرچڈ اسکول گلشن اقبال کی جانب سے اسٹریٹ لائیٹ وین کا عطیہ


orchid school inorogation December 23, 2018 | 9:07 PM

اسٹریٹ لائیٹ وین کا عطیہ جنید نینی تال والا نے چئیرمین بلدیہ شرقی معید انور کے ذریعے یوسی کو پیش کیا گیا
مخیر حضرات اسی طرح بلدیاتی اداروں کی معاونت کریں تو شہریوں کو درپیش مسائل دور کرنا مشکل نہیں ہوگا، چئیرمین بلدیہ شرقی
آرچڈ اسکول کی اس خدمت پر ان کو جتنا سراہا جائے وہ کم ہے جنید نینی تال والا کا شکریہ ادا کرتا ہوں،معید انور
کراچی :( نیوزآن لائن)چئیرمین بلدیہ شرقی معید انور نے کہا ہے کہ مخیر حضرات اپنے حصے کا کردار ادا کرتے رہیں تو شہریوں کو خدمات کی فراہمی کوء مشکل کام ہی نہیں رہے، آرچڈ اسکول گلشن اقبال نے اسٹریٹ لائیٹ وین کا عطیہ کر کے اپنا کردار ادا کیا ہے جو لائق تحسین ہونے کے ساتھ قابل تقلید ہے، مخیر حضرات سے گزارش کرتا ہوں کہ وہ ضلع شرقی اور اسکی یوسیز کے مسائل حل کرنے میں ہماری معاونت فرمائیں یقین دلاتا ہوں مسائل کو برق رفتاری سے دور کر دیں گے ان خیالات کا اظہار انہوں نے آرچڈ اسکول گلشن اقبال کی جانب سے یوسی کو عطیہ کی گء اسٹریٹ لائیٹ وین کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر انہوں نے مزید کہا کہ جب اشتراک یامدد حاصل ہوتی ہے تو حوصلے بلند ہو جاتے ہیں اور کام کرنے کیلئے راستے صاف دکھاء دینے لگتے ہیں، ہم وسائل کی کمی کے سبب کام کی رفتار بڑھانے کی پوزیشن میں نہیں ہیں مخیر حضرات تعاون کرتے جائیں گے تو کسی کی جانب دیکھنے کے بجائے پوری قوت کے ساتھ مسائل کو حل کریں گے وائس چئیرمین بلدیہ شرقی عبالرؤف خان نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے آرچڈ اسکول کے اقدام کو سراہا اور کہا کہ بلدیہ شرقی اور اس کی یوسیز اس قسم کے تعاون کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں اور منتظر ہیں کہ مسائل کے حل کے سلسلے میں یہ دائرہ کار مزید وسیع ہو، آرچڈ اسکول کے منتظم جنید نینی تال والا نے اس موقع پر کہا کہ بلدیاتی اداروں کی مشکلات کو دور کرنے کیلئے اسٹریٹ لائیٹ وین کا تحفہ دیا ہے اور اپنے طور پر جو بن پڑے گا بلدیاتی اداروں کے ساتھ تعاون جاری رکھیں گے بعدازاں جنید نینی تال والا نے اسٹریٹ لائیٹ وین کی چابی چئیرمین بلدیہ شرقی معید انور کے ذریعے یوسی 21 کے چئیرمین محمد عدنان کے حوالے کیں، اس موقع پر وائس چئیرمین بلدیہ شرقی عبدالر?ف خان، چئیرمین یوسی 21 محمد عدنان خان، وائس چئیرمین تنزیل بن عبدالر?ف سمیت یوسی کے نمائندگان، آرچڈ اسکول کی انتظامیہ اور بڑی تعداد میں یوسی کے مکین بھی موجود تھے۔

کرسمس کے موقع پر بلدیہ وسطی میں مسیحی برادری کے لئے خصوصی انتظامات


baldiyati news December 23, 2018 | 9:03 PM

چیئرمین ریحان ہاشمی نے گرجاگھروں کا دورہ کیا ، انتظامیہ کے ارکان سے ملاقات
کراچی: (نیوزآن لائن) بلدیہ وسطی کی حدود میں قائم مسیحی آبادی اور گرجاگھروں کے اطراف چیئرمین بلدیہ وسطی ریحا ن ہاشمی کی خصوصی ہدیات پر صفا ئی اور روشنی کے خصوصی انتظاما ت کئے جارہے ہیں تاکہ مسیحی برادری کو کرسمس منانے میں کسی قسم کی دِقّت یا پریشانی کا سامنا نہیں کرنا پڑے۔ جبکہ ریحان ہاشمی نے چیئرمین اقلیتی امور الیاس کھوکھر کے ہمراہ بہ نفسِ نفیس گرجاگھروں پر جاکر وہاں کی انتظامیہ سے ملاقات کی اور انکے بلدیاتی مسائل سے آگاہی حاصل کی ۔ اس موقع پر چرچ انتظامیہ نے ریحان ہاشمی کی گرجا گھر آمد اور مسیحی برادری کے مسائل حل کرنے میں دل چسپی ظاہر کرنے پر اُنکا شکریہ اداکیا ، اور گرجا گھروں کے اطراف صفائی اور روشنی کے خصوصی انتظامات کرنے پر مسیحی برادری کی جانب سے اظہارِ تشکر کیا۔ واضح رہے کہ بلدیہ وسطی میں عیسائی اور ہندو برادری کی بڑی تعداد آباد ہے ۔ بلدیہ وسطی کی انتظامیہ دونوں مذاہب کے پیروکاروں کے لئے بلاتفریق خدمات مہیاکرتی ہے ۔حالیہ دنوں میں سیوریج کی مخدوش لائنوں کی مرمت اور نئی لائن ڈلوائی گئی جبکہ آمد و رفت میں بہتری کے لئے سی سی فلورنگ بھی بلدیہ وسطی کے اخراجات پر کرائی گی۔ کرسمس کے موقع پر بھی بلدیہ وسطی نے مسیحی برادری سے اظہارِ یکجہتی کرنے کے لئے گرجاگرو ں کادورہ کیا وہاں کی انتظامیہ کے ارکان سے ملاقات کی اور بلدیہ وسطی کی جانب سے کرسمس منانے کے لئے مسیحی برادری کے ساتھ ہر قسم کے تعاون کا یقین دلایا۔

کراچی میں مہاجروں کو اقلیت میںتبدیل کیا جارہاہے،ڈاکٹر سلیم حیدر


dr saleem haider mit charimen December 23, 2018 | 8:58 PM

اپنے ہی شہر میں مہاجر نوجوان تعلیم اور روزگار سے محروم کردیئے گئے ہیں
مہاجر قیادت اور مہاجر فکر رکھنے والے تمام افراد کو متحد ہوکر مشترکہ جدوجہد کرنی ہوگی
کراچی:(نیوزآن لائن) مہاجر اتحاد تحریک کے چیئرمین ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہا ہے کہ کراچی جوکہ مہاجروں کا سب سے زیادہ اکثریتی شہر ہے اس پر ایک منصوبہ بندی کے تحت مہاجروں کو اقلیت میں تبدیل کیا جارہا ہے۔ اپنے ہی شہر میں مہاجر نوجوانوں پر تعلیم اور روزگار کے دروازے بند کردیئے گئے ہیں۔ وہ طلباء کے وفد سے بات چیت کررہے تھے۔ ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہاکہ کراچی میں مہاجر قوم کو منتشر ہونے کے بعد مہاجر دشمن عناصر مہاجروں کو دیوار سے لگانے کیلئے کمر بستہ ہوگئے ہیں۔ اس صورتحال کا ادراک کرتے ہوئے ہم نے کافی عرصے قبل سے ہی مہاجر جماعتوں اور قائدین کو متحد کرنے کی کوششیں شروع کیں جو اب بھی جاری ہیں جس کا مقصد کراچی سمیت سندھ میں رہنے والے مہاجروں کو ان کے حقوق کے ساتھ ساتھ ان کے تحفظ کو بھی یقینی بنانا ہے۔ انہوں نے کہاکہ پیپلزپارٹی کی حکومت جس کی قیادت سے لے کر اراکین اسمبلی اور وزراء تک کرپشن میں ڈوبے ہوئے ہیں ، وہ کراچی کے وسائل کو اندرون سندھ میں ترقی کے نام پر لے کر جارہے ہیں ، جہاں سے وہ وسائل بھی بدعنوانی کی نذر ہوجاتے ہیں، انہوں نے کہاکہ مہاجر ماضی سے سبق سیکھتے ہوئے مثبت اور بہتر قیادت کو سامنے لے کر آئیں تاکہ مہاجروں کے دیرینہ مسائل اور ان کے حقوق کے حوالے سے جدوجہد کی جاسکے۔ کیونکہ سندھ میں جس طرح کی صورتحال پیدا کردی گئی ہے اس کے بعد اب مہاجروں کیلئے ہر آنے والا دن سخت سے سخت ہوتا جارہا ہے۔

کوئی ملک یا معاشرہ کسی بھی قسم کی ترقی کا تصور ہی نہیں کرسکتا جب تک وہ معاشرے یا قوم علم کی اہمیت کو تسلیم نہیں کرلیتے۔ڈاکٹر اجمل خان


karachi university December 9, 2018 | 6:28 PM

کوئی بھی ڈاکٹر یا ٹیچرتھر یااس جیسے دیگر علاقوں میں ڈیوٹی سرانجام دینا نہیں چاہتے ہیں۔سینیٹر امام الدین شوقین
کراچی پورے پاکستان کو ریلیف پہنچاتا ہے اور تقریباً70 فیصد ریونیوفراہم کرتاہے اورکراچی میں رہنے والے سب زیادہ انکم ٹیکس اداکرتے ہیں۔علی رضاعابدی
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد اجمل خان نے کہا کہ میں بحیثیت سائنسدان میں یہ بات کررہاہوں کہ پاکستان قدرتی وسائل میں دنیا کے امیرترین ممالک میں سے ایک ہے۔ملک کے تمام شعبے اس وقت ترقی کی جانب گامزن ہوسکتے ہیں جب ہم سب محنت سے اور مل کر کام کریں ۔پاکستان میں صلاحیتوں کی کمی نہیں ہے ،اگر ہم سب اپنی صلاحیتوں کو بروئے کار لائیں تو پاکستان کو ترقی یافتہ ممالک کی فہرست میں شامل ہونے سے کوئی نہیں روک سکتا۔ضرورت اس امر کی ہے کہ تمام اسٹیک ہولڈرز اپنی صلاحیتوں کا بھرپور استعمال کرکے ملک کو درپیش مسائل کے خاتمے کے لئے اپنا کردار اداکریں۔کوئی ملک یا معاشرہ کسی بھی قسم کی ترقی کا تصور ہی نہیں کرسکتا جب تک وہ معاشرے یا قوم علم کی اہمیت کو تسلیم نہیں کرلیتے اور اس کو اپنے ملک کی ترقی کیلئے ناگزیر نہیں سمجھ لیتے۔ آج اگر ہم جائزہ لیں تو وہی ملک ترقی کی بلندیوں پر نظر آتے ہیں جنہوں نے علم کی اہمیت کو تسلیم کیا۔ تاریخ گواہے کہ جو ممالک زوال پذیر ہوئے ہیں،ان کی پستی کی سب سے بڑی وجہ علم سے دوری ہے۔درحقیقت نوجوانی کا دور وہ دور ہوتا ہے جب انسان کے ارادے، جذبے اور توانائی اپنے عروج پہ ہوتے ہیں، اگران جذبوں اور توانائی سے قوم و ملک فائدہ نہ اٹھا سکیں تو یہ انتہائی بڑا نقصان ہے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے جامعہ کراچی کے شعبہ سیاسیات کے زیر اہتمام اور ینگ سوشل ریفارمرز کے اشتراک سے جامعہ کراچی کے کلیہ فنون وسماجی علوم کی سماعت گاہ میں منعقدہ کانفرنس بعنوان: ”پاکستان کی تعمیر وترقی میں نوجوانوں کا کردار” سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔سینیٹر امام الدین شوقین نے کہا کہ بحیثیت طالب علم ہمارے سوچنے اور چیزوں کو دیکھنے کا نظریہ مختلف ہوتاہے۔مگر جیسے ہی ہم اپنی پیشہ ورانہ زندگی کا آغاز کرتے ہیں ،ہماری ترجیحات یکسر تبدیل ہوجاتی ہیں۔کوئی بھی ڈاکٹر یا ٹیچرتھر یااس جیسے دیگر علاقوں میں ڈیوٹی سرانجام دینا نہیں چاہتے ہیں۔ اعلیٰ عدالتی احکامات پر ابھی حال ہی میں 100 سے زائد ڈاکٹر ز کا تھر میں تبادلہ کیاگیا تاہم جس پر ان کو اعتراض تھا کہ ان کے تبادلے سے ان کے گھریلو امور متاثر ہورہے ہیں جبکہ نوکری کے حصول کے وقت ڈاکٹرز اور ٹیچرز ہر جگہ کام کرنے کے لئے رضا مندی ظاہر کرتے ہیں۔لائق تحسین ہیں وہ لوگ جو اپنے بجائے دوسروں کے لئے سوچتے ہیں۔سابق ممبر قومی اسمبلی علی رضا عابدی نے کہا کہ آج پاکستان میں ہم سب کو جس چیز میں شامل ہونے کی ضرورت ہے وہ وہ پاکستان کی معیشت کی ری ہیبی لیٹیشن کی ضرورت ہے۔آج سے تین ماہ قبل جوگھرانے 30 ہزار وپے میں گزاراکرتے تھے آج انہیں 36 ہزار روپے کی ضرورت ہے۔کراچی میں بہت ڈیولپمنٹ کی ضرورت ہے ،کراچی پورے پاکستان کو ریلیف پہنچاتا ہے اور تقریباً70 فیصد ریونیوفراہم کرتاہے اورکراچی میں رہنے والے سب زیادہ انکم ٹیکس اداکرتے ہیں۔ہم سب کو مل کر پاکستان کو ری ہیبی لیٹیٹ کرنے کی ضرورت ہے۔عصر حاضر میںسوشل میڈیا کے استعمال کے ذریعے ہم مڈل مین کا رول ختم کرکے اصل ہنرمند کو زیادہ مالی فائدہ پہنچانے کا سبب بن سکتے ہیں،لہذا ہم سب اس کے لئے اپنا کرداراداکرنے کی ضرورت ہے۔سوشل سروس اور ڈیلیوری کا جذ بہ آپ اور ہم سب میں ہونا چاہیئے اور یہی چیز ہے جو آپ کو عوام سے قریب بھی کرتی ہے اور اپنے خیالات کے اظہار کا موقع اور رائے بھی ملتی ہیں۔چیئرمین ڈسٹرکٹ میونسپل کارپوریشن سینٹرل ریحان ہاشمی نے کہا کہ آنے والے وقتوں جنگ پانی کے مسئلے پر ہوں گی۔گذشتہ چند برسوں میں اندورن سندھ ہونے والی اموات کا تعلق غذائی قلت سے ہے، طبی سہولتوں کے فقدان سے نہیں ۔تھرسمیت صوبہ سندھ کے بیشتر ڈسٹرکٹ میں پینے کے لئے صاف پانی میسر نہیں ہے۔انہوں نے طلبہ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ہر مسئلے کے حل کے لئے حکومت پر بھروسہ کرنے کے بجائے متبادل ذرائع سے استفادہ حاصل کرنے کی کوشش کریں۔معروف موٹی ویشنل اسپیکر ساجد اطہر خان نے کہا کہ ہر شخص اپنی زندگی میں کسی نہ کسی مشکل کا سامنا کررہاہوتاہے۔لیکن اگر مثبت سوچ کے ذریعے اس کا سامنا کیا جائے تو ان مشکلات کو ختم بھی کیا جاسکتا ہے اور دوسری صورت میں اس مشکل کو کافی حدتک کم بھی کیا جاسکتا ہے۔مسکرانا اور مسکراہٹ کا جواب اسی طرح سے دینا آپ کی مشکلات کو کم کرنے میں مددگار ثابت ہوسکتا ہے۔آپ کے چہرے کے تاثرات آپ کی سوچ کی عکاسی کرتی ہے۔ہر ایک سیکنڈ میں آٹھ افراد اپنی جان سے ہاتھ دھوبیٹھتے ہیں ،ہمیں شکر اداکر نا چاہیئے کہ ہمارا شمار ان فراد میں نہیں۔مختلف لوگوں سے بات کرنا اپنے پیغا م کو دوسروں تک پہنچانے کا سب سے اہم ذریعہ ہے۔معروف قانون دان ضیاء اعوان نے کہا کہ پاکستان کا شمار دنیا میں امدادی کام کرنے والے ممالک میں دوسرے نمبر پر آتا ہے ،پہلے نمبر پر امریکہ جبکہ دوسرے نمبر پر پاکستان کا نام آتاہے۔ہمارے یہاں امدادی کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا جاتا ہے اور اس مد میں ایک خطیر رقم جمع ہوتی ہے لیکن اس کے صحیح استعمال کو لیکر خدشات کا اظہار بھی کیا جاتاہے۔بالاکوٹ میں ہونے والے زلرلے کے متاثرین کے لئے سب سے زیادہ امداد کراچی سے جمع کی گئی تھی۔بدقسمتی سے کراچی کا شمار سونامی اور زلزلے جیسی خطرنات قدرتی آفات والی جگہوں میں ہوتا ہے،اس لئے اس بات کی اشد ضرورت ہے کہ شہر کا انفراسٹرکچر محفوظ سے محفوظ تر بنایا جائے اور مزید انفرااسٹرکچر ان تمام خدشات کو مد نظر رکھتے ہوئے ترتیب دیا جائے اور کثیر المنزلہ عمارتوںکی تعمیر سے گریز کیا جائے ۔جامعہ کراچی کے شعبہ سیاسیات کے ڈاکٹر محمد علی نے کہا کہ نوجوانوں کو مزید بااختیار بنانا چاہیئے ،کیونکہ نوجوان ہی ہمارے ملک کامستقبل اور اثاثہ ہیں اور ملک کی ترقی میں اہم کردار اداکرتے ہیں۔شعبہ سیاسیات ینگ سوشل ریفارمرز کے ان اقدمات کی حوصلہ افزائی کرتاہے۔

مہاجر شہداء کو سلام عقیدت پیش کرتے ہیں ۔ شہداء کے معاملے پر کسی کو سیاست کرنے کی ضرورت نہیں ۔ اگر کچھ کرنا ہے تو اختلافات بھلا کر ایک ہوجائیں ۔ ڈاکٹر محمد انور صدیقی


karachi December 9, 2018 | 6:21 PM

قوم کی مشکلات دن بدن بڑھ رہی ہیں ۔ ایم کیو ایم پاکستان کو کرش کیا جا رہا ہے۔ ہم نے اب کھل کر مہاجر سیاست اور عوامی اجتماعات کا فیصلہ کرلیا ہے۔ چیئرمین ایم این ایم
چاروں طرف سے مہاجر کش آپریشن ہورہا ہے۔ لیکن جنہیں مینڈیٹ دیا گیا وہ خاموشی کا روزہ رکھ کر بیٹھے ہیں۔چیئرمین ڈاکٹر انور کا جلدکنونشن منعقد کرنے کا بھی اعلان
مہاجر نام پر منتخب ہونے والے اسکی کو بٹہ لگا رہے ہیں ۔ فاروق ستار با با نے مہاجر قوم کی پیٹھ پر چھرے گھونپ گھونپ کراسے لہولہان کردیا ہے۔ روبینہ یاسمین سینئر وائس چیئرپرسن
کراچی کے تمام سرکاری اداروں میں مہاجر افسر و ملازمین کو چن چن کر لسانیت کی بنیاد پر نیب اور اینٹی کرپشن نشانہ بنا رہے ہیں ۔ متعدد جیلوں میں ہیں ۔ عقیل انبالوی وائس چیئرمین
آفاق احمد ، فاروق ستار ایک ہی سکے کے دو رخ اور لندن مافیاء مہاجر قوم کو لندن سے بیٹھ کر کچلنے کے لئے متحرک ہے۔ محمد یونس میمن ۔ عارضی جنرل سیکریٹری مہاجر نیشنل موومنٹ
عام انتخابات دھوکہ اور جھرلو تھے۔ ایم کیو ایم کو ہرانے میں خلائی مخلوق پیش پیش تھی۔ محسوس کر رہے ہیں کہ مہاجر سیاست کچل دی گئی ہے۔ شبانہ خانم جوائنٹ سیکریٹری ایم این ایم
مہاجر اشوز پر اب کسی کا انتظار نہیں کرینگے۔ جتنی بھی نشستیں ہیں ایم کیو ایم مہاجر حقوق پر آواز اٹھائے ۔ عادل شفیق سیکریٹری اطلاعات مہاجر نیشنل موومنٹ
تجاوزات کے خاتمے پر وسیم اختر مبارکباد کے مستحق ہیں ۔ سڑکیں کشادہ ہو رہی ہیں ۔ گھروں کے مسمار کرنے پر استعفی کا اعلان مہاجر میئر کا زبردست فیصلہ ہے۔ مرکزی کمیٹی
تحریک انصاف ملک ، قوم ، ایم کیو ایم سے مخلص نہیں ۔ ایم کیو ایم کو اب تک کیا ریلیف ملا جواب دیں ۔ عمرانہ سی ایف ایس جی، فاریہ ، عبدالقیوم ، کرن خان اورناصر خان کا خطاب
کراچی:(نیوزآن لائن) مہاجر نیشنل موومنٹ کے چیئرمین ڈاکٹر محمد انور صدیقی نے کہا ہے کہ مہاجر نام کو کچلنے کی کوششیں ناکام ہوں گیں۔ مہاجر شہداء کو سلام عقیدت پیش کرتے ہیں ۔ شہداء کے معاملے پر کسی کو سیاست کرنے کی ضرورت نہیں ۔ اگر کچھ کرنا ہے تو اختلافات بھلا کر ایک ہوجائیں۔ فاروق ستار ایک دانا سیاست کے بجائے دھوکہ باز مہاجر رہنما کی حیثیت سے سامنے آرہے ہیں جو قبضہ گروپ ہیں ۔ انا کے خول میں بند آمر رہنما کی تقلید میں وہ بند ڈبے میں نظر آرہے ہیں ۔ ڈاکٹر انور نے یہ بات مہاجر نیشنل موومنٹ کے عہدیداران کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ چیئرمین ڈاکٹر انور نے جلدکنونشن منعقد کرنے کا بھی اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ چاروں طرف سے مہاجر کش آپریشن ہورہا ہے۔ لیکن جنہیں مینڈیٹ دیا گیا وہ خاموشی کا روزہ رکھ کر بیٹھے ہیں ۔ ایسے اقتدار سے بہتر ہے کہ عوام کے پاس واپس آکر تحریک چلائی جائے ہم بھی شانہ بشانہ چلنے کو تیار ہیں ۔ ہم نے غیر مشروط حمایت کیں لیکن اب بھی مخالفت برائے مخالفت نہیں کریں گے مخالفت برائے اصلاح کریں گے۔ ہم آفاق احمد ، فاروق ستار ، ندیم احسان ، کی طرح قوم کی تقسیم اور تباہی کے لئے کسی کا ایندھن نہیں بنیں گے۔ لندن کو قوم کا مجرم سمجھتے ہیں وہاں سے تعلق کفر کے برابر ہے جو پاکستان کا نہیں وہ ہمارا نہیں ۔ ڈاکٹر انور نے علاقائی سطح پر ورکرز اجلاس شروع کرنے کا بھی اعلان کیا ۔ اتوار 16دسمبر کو یوم سقوط ڈھاکہ پر گلشن اقبال میں پہلا اجلاس منعقد ہوگا۔ سینئر وائس چیئرپرسن روبینہ یاسمین نے کہا کہ مہاجر نام پر منتخب ہونے والے اسکی کو بٹہ لگا رہے ہیں ۔ فاروق ستار با با نے مہاجر قوم کی پیٹھ پر چھرے گھونپ گھونپ کراسے لہولہان کردیا ہے۔ وائس چیئرمین عقیل انبالوی نے کہا کہ کراچی کے تمام سرکاری اداروں میں مہاجر افسر و ملازمین کو چن چن کر لسانیت کی بنیاد پر نیب اور اینٹی کرپشن نشانہ بنا رہے ہیں ۔ متعدد جیلوں میں ہیں۔ واحد ہم ہیں جس اس پر آواز اٹھا رہے ہیں ۔من مانی نہیں کرنے دیں گے۔ عارضی جنرل سیکریٹری محمد یونس میمن نے کہا کہ آفاق احمد ، فاروق ستار ایک ہی سکے کے دو رخ اور لندن مافیاء مہاجر قوم کو لندن سے بیٹھ کر کچلنے کے لئے متحرک ہے۔جوائنٹ سیکریٹری شبانہ خانم نے کہا کہ عام انتخابات دھوکہ اور جھرلو تھے۔ ایم کیو ایم کو ہرانے میں خلائی مخلوق پیش پیش تھی۔ محسوس کر رہے ہیں کہ مہاجر سیاست کچل دی گئی ہے۔ عادل شفیق نے کہا کہ مہاجر اشوز پر اب کسی کا انتظار نہیں کرینگے۔ جتنی بھی نشستیں ہیں ایم کیو ایم مہاجر حقوق پر آواز اٹھائے۔ تجاوزات کے خاتمے پر وسیم اختر مبارکباد کے مستحق ہیں ۔ سڑکیں کشادہ ہو رہی ہیں ۔ گھروں کے مسمار کرنے پر استعفی کا اعلان مہاجر میئر کا زبردست فیصلہ ہے۔ مرکزی کمیٹی کے دیگر رہنمائوں نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ تحریک انصاف ملک ، قوم ، ایم کیو ایم سے مخلص نہیں ۔ ایم کیو ایم کو اب تک کیا ریلیف ملا جواب دیں ۔ عمرانہ سی ایف ایس جی، فاریہ ، عبدالقیوم ، کرن خان اورناصر خان نے بھی خطاب کیا۔

اصلاح معاشرے کے لئے ہم سب کو مل کر کام کرنا ہوگا ۔،پروفیسر ڈاکٹر محمد مقصود الٰہی


islami rohani mission pakistan December 2, 2018 | 9:24 PM

علماء لوگوں کوجہنم کی آگ سے بچانے کا درس دیں
،اسلامی روحانی مشن کے بین الاقوامی اجتماع کے تیسرے روز خطاب
کراچی :( نیوزآن لائن)اسلامی روحانی مشن کے سرپرست اعلیٰ حضرت پروفیسر ڈاکٹر حکیم ابن حکیم محمد مقصود الٰہی نقشبندی نے بین الاقوامی اجتماع کے آخری روز ایف سی ایریا نمبر ایک لیاقت آباد نمبر 4 کے ٹنکی گرائونڈ میںہزاروں لوگوں کے اجتماع عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ علماء لوگوں کو جہنم کی آگ سے بچانے کا درس دیں انہوں نے کہا کہ پاکستان بے مقصد نہیں بنا اس کے بننے میں اللہ تعالیٰ کے رسول پاک ۖ کا مشورہ شامل تھا ۔پاکستانی فوج دراصل اسلام کی فوج ہے جو مضبوطی میں دنیا کی نمبر ون فوج بن گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سیاست دانوں کو اب دین کی خدمت کرنا ہوگی ورنہ ان کا نام نشان بھی مٹ جائے گا ایمانداری سے اپنا فرض ادا کرتے ہوئے ملک پاکستان میں دین کا نظام نافذ کرنے کا اہتمام کریں ۔سود کے خاتمہ تک معاشی نظام مضبوط نہیں ہوگا خوشحالی چاہتے ہیں تو سو د کو چھوڑ دیں ۔تمام مسالک کے لوگ ایک پلیٹ فارم پر جمع ہوجائیں ۔محبت کا درس دیں نفرتوں کو ختم کردیں ۔پہلوان تو وہ ہے جو اپنے غصہ پر قابو پالیتا ہے جھوٹ بولنے والوں سے اللہ اور نبی پاک ۖ نفرت فرماتے ہیں ،لوگوں پر ظلم نہ کریں ، خواتین کے ساتھ اچھا سلوک کریں اپنے گھر والوں سے محبت کریں ۔نماز کسی حالت میں نہ چھوڑیں نماز نبی پاک ۖ کی آنکھوں کی ٹھنڈک ہے نماز چھوڑنے والے کے لئے معافی نہیں ۔اصلاح معاشرے کے لئے ہم سب کو مل کر کام کرنا ہوگا ۔ہر محکمہ اپنا اپنا کردار ادا کرے تو مسائل حل ہونا شروع ہوجائیں گے حکمراںمظلوموں کے حق میں کھڑے ہوجائیں انہیں انصاف فراہم کرنے میں مدد دیں ۔مہنگائی کے طوفان نے لوگوں کے مسائل میں اضافہ کردیا ہے ۔اچھے لوگ وہ ہوتے ہیں جو لوگوں پر احسان کرتے ہیں لیکن کسی کے احسان کے طالب نہیںہوتے نیکی وہ خوشبوہے جس کے پھیلانے میں برکت ہے ۔اجتماع کے آخر میں ذکر کی اجازت اور پاکستان اور دنیا بھر کے مسلمانوں کے لئے دعا فرمائی ، ہزاروں افراد کو آب دیدہ کردیا ۔

ایم کیو ایم کی مثال کھیسانی بلی کھمبا نوچے کے مترادف ہے،وقار مہدی


ppp December 2, 2018 | 9:13 PM

کراچی: پاکستان پیپلز پارٹی سندھ کے جنرل سیکریٹری اور وزیر اعلی سندھ کے معاون خصوصی وقار مہدی نے ایم کیو ایم کے رہنما عامر خان کی پریس کانفرنس پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایم کیو ایم کی مثال کھیسانی بلی کھمبا نوچے کے مترادف ہے۔ تین دہائیوں سے بلدیاتی نظام پر قابض ایم کیو ایم نے اداروں کا بیڑا غرق کر دیا ہے اور گھوسٹ ملازمین، ایم کیو ایم کے کرپٹ نمائندوں نے پورے بلدیاتی سسٹم کو تباہ کر دیا ہے جس کو موجودہ حکومت ٹھیک کرنے کی بھرپور کوشش کررہی ہے۔ وقار مہدی نے اپنے جاری کردہ بیان میں مزید کہا کہ ایم کیو ایم کی سیاست بلیک میلنگ،دھونس اور دھمکیوں پر مبنی ہے اور ان کے لگائے گئے افسران عوام کے لئے کم اور اپنی جماعت کیلئے زیادہ کام کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 18ترمیم کسی ایک شخص کا نہیں بلکہ چاروں صوبوں اور پارلیمنٹ کا متفقہ فیصلہ ہے جو اسمبلی سے پاس ہوکر لاگو کیا گیا ہے اور ایم کیو ایم عملی سیاست سے باہر ہونے کے سبب اب اپنے آپ کو زندہ رکھنے کیلئے متنازعہ بیان دے رہی ہے’ ایم کیو ایم کو ٹیشو پیپر کی طرح استعمال کرنے والوں نے انہیں نئے دھندے پر لگا دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم کے حلف یافتہ ذمہ دار اداروں پر قابض ہے جو نہ خود کام کرتے ہیں اور نہ لوگوں کو کام کرنے دیتے ہیں اور اگر قانونی چارہ جوئی کی جاتی ہے تو لسانیت کو ہوا دیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ ایم کیو ایم کو پیٹ کا درد کیوں لاحق ہے،انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم نے اقتدار اور طاقت حاصل کرکے صرف غریب عوام پر صرف ظلم وجبر ہی کیا ہے اور کراچی شہر کا حلیہ بگاڑ کر رکھ دیا ہے چائنا کٹنگ اور ناجائز تجاوزات ایم کیو ایم کے ہی تحفے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج ایم کیو ایم جس پانی کے ایشو پر سیاسی کھیل کھیل رہی ہے مشرف دور میں ہی ایم کیو ایم نے کے فور کا منصوبہ سرد خانے میں ڈال دیا تھا اورجبکہ کے فور منصوبہ بھی پیپلز پارٹی نے ہی شروع کروایااوراپنے وسائل سے کے فور کا منصوبہ جاری رکھی ہوئے ہیں جبکہ وفاق کی جانب سے 50فیصد دینے پر بھی عملدرآمد نہیں کیا جارہا ۔ وقارمہدی نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے بھی اپنے منشور میں پانی کے مسائل کے حل کیلئے فلٹریشن پلانٹ کا اعلان کیا تھا جس میں سمندرکے پانی کو میٹھا کرنے کے منصوبے پر کام کررہی ہے ۔ کراچی کے مسائل کا حل ہمیشہ پیپلز پارٹی نے کیا ہے اور آئندہ بھی کرے گی ، ایم کیو ایم کا مظاہرہ انہی کی نااہلی کے سبب عوام پانی کے بحران کا سامنا کررہی ہے۔

کورٹ آرڈر کے نام پر آپریشن لاکھوں شہریوں کے لیے خوف کی علامت بن گیا ہے حافظ نعیم الرحمن


hafiz naim ul rehman December 2, 2018 | 9:05 PM

لاکھوں لوگوں کے بے روزگار اور چھت سے محروم ہونے کا خطرہ ہے لاقانونیت کے ذمہ داروں کو بھی کارروائی کا اختیار انصاف کے ساتھ مذاق ہے
بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی کارروائی سو چوہے کھاکر بلی حج کو چلی کے مترادف ہے میئر کراچی اور کے ایم سی کے افسران کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے
کراچی: (نیوزآن لائن)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے آرڈر کے نام پر جاری آپریشن لاکھوں لوگوںکے لیے خوف اور دہشت کی علامت بن گیا ہے ، اس نام نہاد تجاوزات کے خلاف جاری آپریشن میں چھ ہزار سے زائد دکانیں گراکر پچاس ہزار سے زائد گھروں کے چولہے بجھادیے گئے ، ان میں بڑی تعداد ایسی ہے کہ جن کے پاس اگلے دن کا خرچ اور بچوں کی فیس کے پیسے تک موجود نہیں ، اب مزید 9000دکانوں کے انہدام کی بات کرنا سفاکیت کی انتہا ہے ، ایک جانب دہشت گردی کے مقدمات میں ملوث وسیم اختر کی قیادت میں سندھ اور صوبائی حکومت کی آشیر باد کے ساتھ نام نہاد آپریشن جاری ہے تو دوسری جانب شہر کے کرپٹ ترین ادارے بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی جو کہ شہرمیں لاکھوں غیر قانونی تعمیرات کا ذمہ دارہے اور جس کے افسران حرام کی کمائی سے ارب پتی بن چکے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ اسکول رہائشی علاقوں میں نہیں ہوں گے تو کیا جنگل میں ہوں گے کون سے پلاٹ رہائشی علاقوں میں اسکولوں کے لیے موجود ہیں جہاں یہ منتقل ہوں ۔ انہوں نے کہاکہ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی کارروائی سے گلی محلے میں موجود لاکھوں دکانوں اور خلاف ضابطہ تعمیرات کو جو بلڈر اور سرکاری عملہ کی ملی بھگت سے بنی ہیں خطرہ ہے ، عجیب بات یہ ہے کہ بلڈر اور اتھارٹی کے افسران کمائی کرچکے اب غریب شہری کی زندگی بھر کی کمائی کو خطرہ لاحق ہے ، نوٹس کے ذریعے ان کے کرپٹ افسران کو کمائی کا دھندا دے دیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ جائز ملکیتی پلاٹوں پر موجود تعمیرات کو بنی گالہ کی طرح ریگولرائزیشن کیا جائے اور اس وقت جاری غیر قانونی تعمیرات فوری روکی جائیں تاکہ شہری آئندہ مشکلات سے بچ سکیں ۔ انہوں نے کہا کہ سرکلر ریلوے کی بحالی کے نام پر آبادیوں کے خلاف کارروائی سے پہلے اس کی بحالی کے امکانات پر مکمل رپورٹ بنائی جائے اور بتایا جائے کہ یہ ماضی میں کیوں بند ہوئی تھی۔انہوں نے کہاکہ ان آبادیوں میں پچاس ہزار کے قریب خاندان بستے ہیں جو انسان ہیں اور پاکستان کے شہری ہیں ، ان کے اسلامی اور انسانی حقوق کا پاکستان کے آئین میں بھی تحفظ کیا گیا ہے ، ان کے لیے متبادل کو پہلے یقینی بنایا جائے اور ضرورت سے زیادہ کارروائی سے گریز کیا جائے ۔ انہوں نے کہاکہ بے روزگار اور بے گھر ہونے والوں اور اس خطرہ کا شکار شہریوں کے حقوق کے تحفظ کے لیے جماعت اسلامی ہر ممکن قانونی اور عملی اقدامات اٹھائے گی۔ انہوں نے کہاکہ ہم ہرگز تجاوزات کی حمایت نہیں کرتے لیکن ان کے خلاف کاررورائی کی آڑ میں لاکھوں شہریوں کو بے روزگار اور بے گھر نہیں ہونے دیں گے ۔ متاثرین کو فوری متبادل فراہم کیا جائے اور قانونی دکانیں توڑنے اور لاکھوں کا مال ضائع کرنے اور میئر کراچی اور کے ایم سی کے افسران کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے ۔

جامعہ کراچی کے کنفیوشس انسٹیٹیوٹ اور آغا خان یونیورسٹی کے مابین مفاہمتی یادداشت پر دستخط کی تقریب


karachi unversity jpg December 2, 2018 | 9:01 PM

جامعہ کراچی کے کنفیوشس انسٹیٹیوٹ اور آغا خان یونیورسٹی کے مابین مفاہمتی یادداشت پر دستخط کی تقریب
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے کنفیوشس انسٹیٹیوٹ اور آغا خان یونیورسٹی کے مابین مفاہمتی یادداشت پر دستخط کی تقریب گذشتہ روز منعقد ہوئی۔مفاہمتی یادداشت پر کنفیوشس انسٹی ٹیوٹ کے چینی و پاکستانی ڈائریکٹرز اور آغا خان میڈیکل کالج کے ڈین نے دستخط کئے۔ مفاہمتی یادداشت کے مطابق کنفیوشس انسٹیٹیوٹ جامعہ کراچی آغا خان یونیورسٹی کے میڈیکل کالج کے سال اول کے طلبہ کو چینی زبان کی تعلیم کے لئے چینی اساتذہ فراہم کرے گا۔علاوہ ازیں شام کی کلاسز میں اساتذہ، فیکلٹی اور دیگر عملے کے لئے بھی چینی زبان کی تدریس کا انتظام کیا جائے گا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جامعہ کراچی: شعبہ شماریات میں پوسٹ گریجویٹ میں داخلے آج سے شروع ہوں گے
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے رجسٹرار کے اعلامیہ کے مطابق شعبہ شماریات میں پوسٹ گریجویٹ ڈپلومہ(پی۔جی ۔ڈی) میں داخلے برائے 2018-19 ء آج بروز پیر 03 دسمبر 2018 ء سے شروع ہورہے ہیں ۔داخلہ فارم بمعہ کتابچہ 20 دسمبر2018 ء تک شعبہ شماریات کے دفتر سے حاصل/ جمع کرائے جاسکتے ہیں۔
میرٹ لسٹ شعبہ ہذا میں 26 دسمبر2018 ء کو آویزاں کی جائے گی جبکہ13500 روپے(بشمول داخلہ فیس) 28دسمبر2018ء تا10 جنوری 2019 ء تک جمع کرائی جاسکے گی۔ کلاسز کا آغاز 14 جنوری 2019 ء سے ہوگا۔کلاسوں کے نظام الاوقات سہ پہر 3:10 بجے تا5:40 بجے تک ہونگے۔مذکورہ ڈپلومہ کورس ان افراد کے لئے بھی کارآمد ہوگا جو کسی بھی شعبہ میں تحقیقاتی کام کررہے ہیں۔علاوہ ازیں بی اے ،بی کام ،بی ایس سی (بائیولوجیکل سائنسز) کے طلبہ اس ڈپلومہ کے ذریعے ماسٹر اِن کمپیوٹر سائنس (ایم سی ایس) اور ایم اے / ایم ایس سی شماریات میں داخلے کے اہل ہوجاتے ہیں۔

جرایم کی بیخ کنی کے لئے سی پی ایل سی کا کردار قابل تعریف ہے کمشنر کراچی افتخار شالوانی


commissioner  is being briefed at cplc December 2, 2018 | 8:50 PM

اغوا ، گاڑیاں چھیننے سمیت جرائم کے واقعات میں کمی ہوئی ہے کمشنر کو چیف سی پی ایل سی کی بریفنگ
کراچی : (نیوزآن لائن) کراچی میں اغوا برائے تاوان ، بنک ڈکیتی، گاڑیاں اور موبایل چھیننے اور قتل کے واقعات میں گذشتہ پانچ سال میں غیر معمولی کمی ہوئی ہے۔ 2013 اغوا برائے تاوان کے 173 واقعات ہوئے جو اب کم ہو کر دس ہوگئے ہیں، اسی طرح بنک ڈکیتی کے 31 واقعات ہوئے تھے لیکن 2018 میں تین ہوئے ہیں ۔ 2013 میں 4506 گاڑیاں چھینی گئیں جبکہ اکتوپر 2018 میں یہ تعداد کم ہو کر 660 ہو گئی ہے ۔۔ یہ بات کمشنر کراچی افتخار شالوانی کو انھیں سی پی ایل سی کے دفتر میں ان کے دورہ کے موقع پر ایک بریفنگ میں بتائی گئی ۔ اس موقع پر چیف سی پی ایل سی زبیر حبیب ،کمیٹی کے عہدیداران اور مخلتف زونز کے چیفس اور اراکین بھی مو جو د تھے۔ کمشنر نے کہا کہ شہر میں جرائم کی بیخ کنی ، مختلف مسائل کے حل اور سماجی امورمیں شہریو ں کی مدد کے کاموںکے حوالہ سے سی پی ایل سی کا کردار اہم ہے۔ انھوں نے کہا کہ کراچی انتظامیہ شہریوں کی خدمت کے کاموں میں ان کی خدمات کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے انھوں نے کہا کہ شہریوں کی خدمت کے جذبہ سے پولیس اوردیگر قانون نافذ کر نے والے اداروں کے ساتھ ادارے کا تعاون مثالی ہے انھوں نے کہا کہ جرائم کی بیخ کنی اور اور مختلف مسائل کے حل کے حوالہ سے حکومت اور شہریوں کی مشترکہ کوششوں کو اچھا ماڈل ہے۔ کمشنر نے سی پی ایل سی کے اپنی مدد آپ کے پروگرام نیبرہوڈ کی بھی تعریف کی اور اس کا دائرہ بڑھانے کی ضرورت پر زور دیا ۔ انھوں نے کہا کہ نیبر ہو ڈ طر ز کے پروگراموں کے ذریعے شہرکی بہتری اور شہری مسائل کے حل میں مدد لی جاسکتی ہے چیف سی پی ایل زبیر حبیب نے کمشنر کراچی کو مختلف شعبوں میں کارکردگی کی تفصیلات سے آگاہ کیا ۔ انھوں نے بتایا کہ سی پی ایل سی اغوابرائے تاوان میں اغوا ہو نے والوں کی بازیابی، چوری اور چھینی گاڑیوں ، چھینے ہوے موبائل فونز کی ریکوری، رقم چھیننے کے واقعات اور ایف آئی آر درج کرانے میں شہریوں کی مدد کرنے کے علاوہ سماجی خدمات کے کاموںمیں بھی شہریوں کی خدمت کر رہی ہے۔کمشنر نے سی پی ایل سی کاکمپلینٹ سینٹر آئی ٹی سیل اور دیگر شعبے دیکھے،کمشنر کو بتایا گیا کہ شہری سی پی ایل سی اپنے مسائل کے حل کے سلسلہ میں معلومات اور مدد کے حصول کے لئے دن رات کسی بھی وقت رابطہ کر سکتے ہیں ۔ کمشنر کو بتایا گیا کہ سی پی ایل سی میں شہریوں کے چھینے گئے یا گم ہونے والے موبائل فون کی ریکوری کا خصوصی سیل قائم ہے جو چوبیس گھنٹے ہیلپ لائن1102 پرشہریوں کی شکایت وصول کر رہا ہے۔ شکایت درج کرانے کے لئے موبایل فون کا آئی ایم ای آئی نمبر درکار ہو تا ہے۔ شہری کسی بھی وقت مدد حا صل کر سکتے ہیں۔

حافظ نعیم الرحمن کی شہید پولیس اہلکار عامر خان کے گھر جاکر بھائی سے ملاقات واظہار تعزیت


Taziyat copy November 25, 2018 | 7:47 PM

تخریبی کارروائی ،برسوں پر محیط پاک چین دوستی کو نقصان پہنچانے اورسی پیک منصوبے کو سبوتاژ کرنے کی کوشش ہے حافظ نعیم الرحمن
اعلیٰ تحقیقاتی اداروں کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس حملے کے پیچھے خفیہ ہاتھ کو بے نقاب کر نے کے لیے ہر پہلو سے تفتیش کریں
کراچی: (نیوزآن لائن) امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے چائنا قونصلیٹ میں دہشت گردی کے واقعے میں شہید ہونے والے پولیس اہلکار شہیدعامر کے گھر نیلم کالونی میں جاکران کے بھائی عمر خان ویگر بھائیوں سے ملاقات کی اور اظہار تعزیت کیااس موقع پر سکریٹری جماعت اسلامی ضلع جنوبی سفیان دلاور ، کونسلر کنٹونمنٹ بورڈ ذکرمحنتی ، ناظم زون امتیاز خان اور سفیر عباسی ودیگر بھی موجود تھے۔اس موقع پر حافظ نعیم الرحمن نے کراچی میں چینی قونصل خانے پر دستی بم سے حملے اور فائرنگ کو انتہائی افسوسناک اور قابل مذمت قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس واردات کے پیچھے امریکہ ،اسرائیل اور بھار ت کے کردار کو خارج ازامکان قرار نہیں دیا جاسکتا۔یہ کارروائی برسوں پر محیط پاک چین دوستی کو نقصان پہنچانے اور حالیہ دنوں میں دونوں ہمسائے ممالک کے درمیان شروع ہو نے والے تجارتی تعلقات بالخصوص سی پیک کے منصوبے کو سبوتاژ کرنے کی کوشش ہے۔ حملے میں سیکوریٹی اہلکاروں کی جانب سے جوابی کارروائی اور قونصل خانے کے عملے کی حفاظت کو یقینی بنانے کی کوششیں قابل ستائش ہیں جن میں دو اہلکار شہید بھی ہو گئے۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ حکومت ، قانون نافذ کر نے والے اداروں اور اعلیٰ تحقیقاتی اداروں کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس حملے کے محرکات اور اس کے پیچھے خفیہ ہاتھ کو بے نقاب کر نے کے لیے ہر پہلو سے تفتیش کریں اور حقائق عوام کے سامنے لائیں۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ کراچی میں دہشت گردی کی یہ کارروائی اس لحاظ سے بھی بہت اہم ہے کہ کراچی میں کافی عرصے سے جاری ٹارگیٹڈ آپریشن کے بعد امن وامان کی صورتحال قدر ے بہتر ہو گئی تھی لیکن اس کارروائی نے یہ بات واضح کی ہے کہ بیرونی مداخلت دہشت گردی اور دہشت گردوں کا نیٹ ورک ابھی ختم نہیں ہو اہے۔ اس لیے قانون نافذ کر نے والوں کی ذمہ داری ہے کہ صورتحال کو کنٹرول کر یں۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ ہم حملہ آوروں کے خلاف کارروائی میں شہید ہو نے والے اہلکاروں کے اہل خانہ سے دلی ہمدردی اور تعزیت کرتے ہیں اور دعا کرتے ہیں کہ اللہ تعالی ان کو صبر جمیل عطاء فرمائے اور شہداء کے درجات بلند کرے۔

جامعہ کراچی: شعبہ ویژول اسٹڈیزکا داخلہ ٹیسٹ پرسکون ماحول میں منعقد ہوا


November 25, 2018 | 7:31 PM

گیارہ سو نوے فارم جمع کرائے گئے، جبکہ1050طلبا وطالبات نے شرکت کی ۔
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے شعبہ ویژول اسٹڈیز کا داخلہ ٹیسٹ گذشتہ روز 25نومبر2018 ء کوصبح 11:00 بجے کلیہ فنون و سماجی علوم میں منعقد ہوا۔ شعبہ ویژول اسٹڈیز میں داخلے کے لئے 1190 فارم جمع کرائے گئے جبکہ 1050طلبا وطالبات نے شرکت کی ۔ ڈائریکٹر ایڈمیشنز پروفیسر ڈاکٹرمحمد احمد قادری ، پروفیسردُریہ قاضی ،سید شمعون حیدر اور تانیہ ناصرنے امتحانی مراکز کی مانیٹرنگ کا فریضہ انجام دیا۔
ڈائریکٹر ایڈمیشنز کے مطابق داخلہ ٹیسٹ کے لئے شیخ الجامعہ پروفیسر ڈاکٹر محمد اجمل خان کی خصوصی ہدایت پر سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے، کمرہ امتحان کے اردگرد غیر متعلقہ ا فراد کاداخلہ ممنوع تھا۔ ٹیسٹ انتہائی پرسکون ماحول اور نظم وضبط کے ساتھ منعقد ہوا۔ کسی بھی ناخوشگوار صورت حال سے نمٹنے کے لئے رینجرز اور کیمپس سیکورٹی (واچ اینڈ وارڈ) کا عملہ بھی خصوصی طور پر مختلف داخلی راستوں اور فیکلٹی میں تعینات کیا گیا تھا۔ واضح رہے کہ اکیڈمک کونسل کے فیصلے کی روشنی میں حتمی میرٹ لسٹ20% فیصد اکیڈمک پرسنٹیج جبکہ 60% فیصد داخلہ ٹیسٹ کے تناسب بیس20% فیصدانٹرویوز پر محیط ہوگی ۔

واٹر بورڈ کیجانب سے لیاری میں پینے کے پانی کی سپلائی کاناغہ نامنظور کرتے ہیں۔چیئرمین سائوتھ ملک محمدفیاض


Water crises in lyari November 25, 2018 | 3:19 PM

ناغہ سسٹم کو فی الفور ختم کیا جائے۔واٹر بورڈ انتظامیہ اہلیان لیاری کے صبر کا مزید امتحان نہ لے
تغلق لین، گل محمدلین، فوٹو لین،لاسی پاڑہ،مومن آباد،پھول پتی لائن،الفلاح روڈ،بلوچ پاڑہ،لیاقت کالونی،نیازی چوک،ملک حاجی عباس خان روڈ،علی محمد محلّہ،ہنگورہ آباد،نوالین اور شیررخ لین سمیت دیگر کئی علاقے اس وقت پانی کے شدید بحران کا شکار ہیں
ناغہ سسٹم کے باعث پانی جیسی بنیادی ضرورت کے حصول کیلئے ہماری مائیں بہنیں دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں اس ظلم کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا چار سے پانچ روزمیں پانی کا مسئلہ حل نہ ہوا تو عوام کے ساتھ سڑکوں پر واٹر مارچ کریں گے۔ملک فیاض کی واٹر بورڈ کو وارننگ
کراچی:(نیوزآن لائن)چیئرمین ڈی ایم سی سائوتھ ملک محمد فیاض نے کہا ہے کہ کراچی واٹر بورڈ کیجانب سے لیاری میں پینے کے پانی کی سپلائی کاناغہ نامنظور کرتے ہیں ناغہ سسٹم کو فی الفور ختم کیا جائے واٹر بورڈ انتظامیہ اہلیان لیاری کے صبر کا مزید امتحان نہ لے اور وقت ضائع کئے بغیر پانی کی بلا ناغہ فراہمی کو یقینی بنانے کیلئے جنگی بنیادوں پر فورا اقدامات کرے بصورت دیگر عوام کے ساتھ سڑکوں پر واٹر مارچ کریں گے یہ بات انہوں نے لیاری کے مختلف علاقوں میں پانی کی مسلسل عدم فراہمی پر بڑی تعداد میں احتجاج کرنے والے مظاہرین سے بات چیت کرتے ہوئے کہی چیئرمین ملک محمدفیاض نے کہا کہ پانی کے حصول کیلئے ہماری مائیں بہنیں سڑکوں پر دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں اس ظلم کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا پینے کے پانی جیسی بنیادی ضرورت کی فراہمی ہر شہری کا حق ہے لیاری میں پانی کے شدید بحران کے باعث علاقہ عوام سخت ذہنی اذیت وکوفت میں مبتلا ہیں خصوصا تغلق لین، گل محمدلین، فوٹو لین،لاسی پاڑہ،مومن آباد،پھول پتی لائن،الفلاح روڈ،بلوچ پاڑہ،لیاقت کالونی،نیازی چوک،ملک حاجی عباس خان روڈ،علی محمد محلّہ،ہنگورہ آباد،نوالین اور شیروک لین سمیت دیگر کئی علاقے اس وقت پانی کی قلّت سے شدید متاثر ہیںاوربارہا کی یقین دہانیوں اور تسلیوں کے باوجود اب تک پانی کے بحران کاحل نہ ہونا واٹربورڈکی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے چیئرمین ملک فیاض نے مزید کہا کہ ہفتہ وار ناغے کے دوسرے دن پانی آنے کے بجائے مزید تین سے چار دن بعد آتا ہے جس کے بعد فورا ناغے کادن دوبارہ آجاتا ہے جس کے باعث عوام پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں لیاری کیلئے وقف K-3 کی لائنوں کی تین ہٹی تا گولیمار تک واٹر بورڈ کی نااہلی ،ملی بھگت اور واٹر مافیا کیجانب سے پانی کی چوری اور ناجائز کنکشن کے خاتمے تک پانی کابحران حل نہیں ہوگا چیئرمین ملک فیاض نے اس موقع پر واٹر بورڈ انتظامیہ کو وارننگ دی کہ اگر اگلے4 سے 5 روزمیں لیاری میں پانی کا مسئلہ حل نہ ہوا تو وہ خود عوام کے ساتھ سڑکوں پر واٹر مارچ کریں گے پانی کے متاثرہ مظاہرین کو یقین دلاتے ہوئے ملک فیاض نے کہا کہ غیر قانونی کنکشن کاٹنے کی ذمّے داری واٹر بورڈ انتظامیہ کی ہے اگر وہ اس میں ناکام ہوئی تو ہم سب مل کر ناجائز کنکشن کا خاتمہ کردیں گے۔

نظام مصطفی پارٹی کا کراچی میں چائنا قونصلیٹ پر دہشت گردی کے حملے کی شدید الفاظ میں مذمت


nizam mustafa party news November 25, 2018 | 2:43 PM

کراچی:(نیوزآن لائن)نظام مصطفی پارٹی کے سربراہ سابق وفاقی وزیرڈاکٹرحاجی محمدحنیف طیب ،میاں خالد حبیب ایڈووکیٹ،وسیم ممتازایڈووکیٹ،قاضی شبیراحمد،الحاج محمدرفیع ،پیر زادہ غلام حسین چشتی نے کراچی میں چائنا قونصلیٹ پر دہشت گردی کے حملے کی شدیدالفاظ میں مذمت کی اور اس کے نتیجے میں دوپولیس اہلکارسمیت چارافرادکی ہلاکت پرافسوس کا اظہارکیا۔انہوںنے کہاکہ آپریشن میں موجودقانون نافذکرنے والے ادارے خراج تحسین کے مستحق ہیں کہ جنہوں نے بروقت کارروائی کرکے بڑے نقصان سے بچایااور ملک دشمن عناصرکے ناپاک عزائم کو خاک میں ملاکر سفارت خانے میں موجودچینی عملہ کی جان ومال کو محفوظ بنایا۔انہوںنے کہاکہ سی پیک منصوبہ پاکستان کی معاشی،تجارتی،اقتصادی اور معاشرتی ترقی کے لئے مفید ہوسکتاہے جس کو ملک دشمن عناصر ناکام بنانے کی کوششیں کررہے ۔ملک دشمن عناصر یہ بات بھی جان لیں کہ ایسے واقعات سے پاک چین دوستی کومتاثر نہیں کیاجاسکتاہے۔انہوں نے کہاکہ موجودہ حالات میں پاکستان کواندرونی اور بیرونی طورپرمضبوط بنانے اور مستحکم کرنے کی ضرورت ہے۔سیاسی محاظ آررائی کے باعث پاکستان میں دہشت گردی کوروکنے کے لئے بنائے گئے قوانین پر مؤثر عمل درآمدجس طرح سے ہوناچاہیے تھانہیں ہوپارہا۔انہوںنے کہاکہ عوام یہ جانناچاہتی ہے کہ ملک دشمن عناصر کی دہشت گردانہ سرگرمیوں کو روکنے کے لئے نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمدکیوں نہیں ہورہا۔یہ حملہ آورکون تھے۔ان کا تعلق کہاسے تھا۔ان کاماسٹر مائنڈکون تھااس کو بے نقاب کرکے کیفرکردارتک پہنچایاجائے۔

تیسر ٹائون میں کرنٹ لگنے سے 4سالہ خضر کے ورثاء کو انصاف فراہم کیا جائے حافظ نعیم الرحمن


hafiz naeem rehman November 18, 2018 | 11:20 PM

کے الیکٹرک کی انتظامیہ اور متعلقہ ذمہ داران کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے ، جماعت اسلامی متاثرہ خاندان کے ساتھ ہے
شکایت کر نے پر علاقے کو ہائی لاسز زون قرار دے کر عملے کو نہ بھیجنا انتہائی غیر انسانی اور سفاکانہ رویہ ہے
کراچی : (نیوزآن لائن)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ کے الیکٹرک کی نا اہلی اور غیر انسانی رویہ کے باعث تیسر ٹائون میں 4سالہ خضر کے جاں بحق ہو نے پر کے الیکٹرک کی انتظامیہ اور متعلقہ ریجن اور ڈیپارٹمنٹ کے ذمہ داران کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے اور بچے کے ورثاء کو انصاف فراہم کیا جائے ۔ جماعت اسلامی متاثرہ خاندان کے ساتھ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کے الیکٹرک کے تاروں سے کرنٹ لگنے سے تیسر ٹائون میں 4سالہ خضر کی ناگہانی موت’ ہلاکت کا دوسرا واقعہ ہے ۔اس سے قبل ملیر میں بھی معصوم اذہان بارش کے دوران تار گر نے اور کرنٹ لگنے سے جاں بحق ہو ا جبکہ تاروں سے کرنٹ لگنے سے دو بچے اپنے ہاتھوں سے محروم ہو چکے ہیں ۔ علاوہ ازیں پی ایم ٹی گر نے کے واقعے میں بھی شہری کے زخمی ہونے کی اطلاعات موجود ہیں ۔ کرنٹ لگنے والے تمام واقعات میں تاروں کے گر نے اور کرنٹ پھیلنے کی اطلاع کے الیکٹرک کو دی گئی مگر عملے اور متعلقہ ذمہ داران کی طرف سے مجرمانہ غفلت و لاپرواہی اور بے حسی کا مظاہرہ کیا گیا ۔ شکایت کر نے اور اطلاع دینے کے باوجود کے الیکٹرک والے تاروں کو درست کر نے نہیں آئے جس کی وجہ سے قیمتی انسانی جانیں ضائع ہوئیں ۔ جبکہ اس حالیہ واقعے میں انتہائی غیر انسانی اور سفاکانہ رویے کا مظاہرہ کیا گیا اور علاقہ مکینوں کی شکایت پر اس علاقے کو ہائی لاسز زون قرار دے کر عملے کو نہیں بھیجا گیا اور بالآخر یہ سانحہ رونما ہوا اور ایک بچہ اپنی جان کی بازی ہار گیا ۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ کے الیکٹرک کا ادارہ کراچی کے عوام کے لیے زحمت بن چکا ہے اور اس کی نا اہلی و ناقص کارکردگی سے شہری سخت نالاں ہیں ۔ لوڈشیڈنگ ،اووربلنگ اور اب بریک ڈائون نے عوام کی زندگی اجیرن بنا کر رکھ دی ہے لیکن اس سے کوئی پوچھنے اور جواب طلب کر نے والا نہیں ۔ نیپرا کی جانب سے صرف نمائشی اقدامات اور بیانات کے بعد خاموشی اختیار کر لی جاتی ہے ۔ اب صورتحال انتہائی سنگین ہوتی جا رہی ہے اور کے الیکٹرک کی نظر میں انسانی جانوں کی بھی کوئی اہمیت نہیں ہے ۔ کرنٹ لگنے سے بچے کی ہلاکت کا حالیہ واقعہ اس کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی و صوبائی حکومتوں اور حکومتی پارٹیوں کے عوامی نمائندوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس معاملے پر چشم پوشی اختیار کر نے کے بجائے کے الیکٹرک کے خلاف سخت کارروائی کر نے کے لیے اپنا کردار ادا کریں ۔ متاثرہ خاندانوں کو انصاف فراہم کریں اور عوام کو ریلیف دلائیں ۔انہوںنے کہا کہ جماعت اسلامی مظلوموں کے شانہ بشانہ کھڑی ہے اور ان کو ان کا حق دلانے کے لئے ہرممکن کوشش کرے گی۔اگر اس سے قبل کے الیکٹرک کی وجہ سے ہلاک اور زخمی ہونیوالوں کی داد رسی حکومت اور عدالتیں بروقت کر دیتیں تو بعد کے واقعات سے بچا جاسکتا تھا۔اگر اب بھی عدالتیں فیصلے جلددیں تو آئندہ واقعات کی پیش بندی ہوسکتی ہے۔

جامعہ کراچی: میرٹ کی بنیاد پربیچلرزاور ماسٹرز پروگرام میں داخلوں کا آغا ز


November 18, 2018 | 11:17 PM

کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے ڈائریکٹر ایڈمیشنز پروفیسر ڈاکٹرمحمد احمد قادری کے اعلامیہ کے مطابق بیچلرزاور ماسٹرز (مارننگ پروگرام ) میں اوپن میرٹ کی بنیاد پر ہونے والے داخلوں برائے سال 2019 ء کا آغاز ہوگیا ہے۔۔تفصیلات کے مطابق بیچلرزپروگرام میںایکچوریل سائنس اینڈ رسک مینجمنٹ، ایگریکلچر اینڈ ایگری بزنس مینجمنٹ،عربی ،بنگالی ،بائیوکیمسٹری ،باٹنی ،کیمسٹری ،کرمنالوجی ،اکنامکس ،فائینینشل میتھمیٹکس ،جنرل ہسٹری ،جغرافیہ ،جیولوجی ،ہیلتھ فزیکل ایجوکیشن اینڈ اسپورٹس سائنسز،اسلامک ہسٹری،اسلامک لرننگ،لائبریری اینڈ انفارمیشن سائنس،میرین سائنس،میتھمیٹکس، مائیکروبائیولوجی،پرشین،فلاسفی،فزکس،فزیالوجی،پولیٹیکل سائنس،سائیکولوجی،قرآن وسنہ،اسکول آف لائ(بی اے ایل ایل بی پانچ سالہ)،سندھی، سوشل ورک،سوشیالوجی،اسپیس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی،اسٹیٹسٹکس،اُردو،اصول الدین،ویمن اسٹڈیزاور زولوجی میں اوپن میرٹ کی بنیاد پر داخلے دیئے جائینگے۔جبکہ ماسٹرز پروگرام میںاپلائیڈ کیمسٹری اینڈ کیمیکل ٹیکنالوجی ،اپلائیڈ فزکس ،عربی ،بنگالی ،بائیوکیمسٹری ،بائیوٹیکنالوجی ،باٹنی ،کیمسٹری ،کمپیوٹر سائنس،کرمنالوجی،اکنامکس،اکنامک اینڈ فنانس(ایم ای ایف)، جنرل ہسٹری،جینیٹکس،جغرافیہ،جیولوجی،ہیلتھ فزیکل ایجوکیشن اینڈ اسپورٹس سائنسز،انڈسٹریل اینڈ بزنس میتھمیٹکس،انٹرنیشنل ریلیشنز،اسلامک بینکنگ اینڈ فنانس،اسلامک ہسٹری،اسلامک لرننگ،لائبریری اینڈ انفارمیشن سائنسز،میرین سائنس،میتھمیٹکس، مائیکروبائیولوجی،پاکستان اسٹڈیز،پرشین،پیٹرولیم ٹیکنالوجی،فارماکو لوجی(ایم ایس)،فلاسفی،فزکس،فزیالوجی، پولیٹیکل سائنس،سائیکولوجی،پبلک پالیسی،قرآن وسنہ،اسکول آف لائ(ایل ایل بی تین سالہ)، سندھی،سوشل ورک،سوشیالوجی،اسپیس سائنس اینڈ ٹیکنالوجی،اسپیشل ایجوکیشن،اسٹیٹسٹکس،اُردو،اُردو(ایم اے اِن اقبالیات)،اصول الدین،ویمن اسٹڈیزاور زولوجی میں اوپن میرٹ کی بنیاد پر داخلے دیئے جائینگے۔گریس /کنڈونیشن مارکس یاڈویژن کے حامل طلبہ کے داخلے زیر غور نہیں لائے جائیں گے) ۔ایسے طلبہ جو پاکستان کے پبلک سیکٹر بورڈ یاجامعات کے مقابلے میں دیئے جانے والے سرٹیفیکٹ / ڈگری کی بنیاد پر داخلے کے خواہشمند ہیں انہیں جامعہ کراچی کی ایکویلینس کمیٹی آئی بی سی سی کی جانب سے جاری کردہ ایکویلینس سرٹیفیکٹ داخلہ فہرست جاری ہونے سے تین دن قبل تک لازمی جمع کرانا ہوگا۔

بلدیہ وسطی میں جشنِ میلادالنبی ۖ منانے کی تیاریاں زور و شور سے جاری


Mehfil Millad karachi baldia wasti November 18, 2018 | 11:12 PM

چئیرمین ریحان ہاشمی کی مختلف محافلِ میلاد اور پرچم کشائی کی تقریبات میں شرکت
مساجد، امام بارگاہوں ، میلاد منعقد کرنے کے مقامات اور جلوسوں کی گزرگاہوں کی صفائی
کراچی :( نیوزآن لائن) چیئرمین بلدیہ وسطی ریحان ہاشمی کی ہدایت پر بلدیہ وسطی میںجشنِ عیدِ میلادالنبی ۖ مذہبی جذبات کے تحت زور و شور سے منانے کی تیاریاں جاری ہیں۔بلدیہ وسطی کے افسران و کارکنان بلدیہ وسطی کے چاروں زونز کی ہر یوسی میں صفائی ستھرائی کے انتظامات بہتر طور پر انجام دینے کے لئے شب و روز مصروف ہیں۔ بلدیہ وسطی کی حدود میں تمام مساجد، امام بارگاہوںکے اطراف میلادِ مصطفےٰ ۖ کے انعقاد کے لئے مختص مقامات اور جلوسوں کی گزرگاہوں کی صفائی پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے ۔ مزید برآ ں چیئرمین ریحان ہاشمی بہ نفس ِ نفیس محافلِ میلاد مصطفی ۖ میں شرکت کررہے ہیں تاکہ میلاد کی محفلیں سجانے والے افراد سے براہ راست انکی ضروریات سے آگاہی حاصل کرسکیں اور انکی شکایات کو دُور کرنے کے لئے فوری اقدام کئے جاسکیں۔ درایں اثنأ ریحان ہاشمی نے مختلف مساجد میں اسلامی تشخص کی پہچان سبز ہلالی پرچم کو لہرانے کی تقاریب میں بھی شرکت کی۔ انہوں نے مساجد کی انتظامیہ اور جلوس کے منتظمین کو بلدیہ وسطی کے وسائل کے مطابق بہترین بلدیاتی خدمات مہیاکرنے کی یقین دہانی بھی کرائی۔ واضح رہے کہ ضلع وسطی میں ترقیاتی کام بھی تسلسل سے جاری ہیں ضلع وسطی کی مختلف یونین کونسل میں سڑکوں استرکاری ،فٹ پاتھ کی مرمت اور سیوریج لائنوں کی صفائی کے ساتھ ساتھ سیوریج کی نئی لائنیں بھی ڈالی جارہی ہیں جبکہ متعدد شاہرائوں اور پارکس کی تزئین و آرائش کے بعد عوام کے لئے کھول دیئے گئے ہیں ۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے ریحان ہاشمی ربیع الاوّل کا چاند نظر آنے کے ساتھ ہی جشنِ ولادتِ باسعادت ۖ کی تقریبات کو بلدیہ وسطی میںبہتر طور پر اور اسلامی بھائی چارے کے ساتھ منانے کے لئے دن رات کوشاں ہیں۔ اس سلسلے میں انہوں نے مسلمانوں کے مختلف مکاتبِ فکر کے علمأ سے ملاقات بھی کی اور یقین دلایا کہ بلدیہ وسطی جشنِ عیدِ
میلاد النبیۖ کے انتظامات کے سلسلے میں بہتر سے بہتر خدمات بہم پہنچانے میں کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں کرے گی۔

ابھی تک حکومت نے مہاجروں کیلئے کوئی پیکیج نہیں دیا: ڈاکٹر سلیم حیدر


dr saleem haider MIT November 18, 2018 | 11:03 PM

قومی دھارے کے نام پر مہاجروں کو دیوار سے لگایا جارہا ہے ، اسٹیبلشمنٹ سندھ کے مہاجروں پر توجہ دے
ایم کیوایم بہادر آباد گروپ یہ بتائے کہ اس نے کن شرائط پر پی ٹی آئی کی حکومت سے وزارتیں لیں
کراچی:(نیوزآن لائن)مہاجر اتحاد تحریک کے چیئرمین ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی کی حکومت بتائے کہ انہوں نے اب تک سندھ کے مہاجروں کیلئے کون سے پیکیج کا اعلان کیا ہے اور اس حکومت میں مہاجروں کے حوالے سے کیا پالیسیاں ہیں۔ قومی دھارے کے نام پر مہاجروں کو دیوار سے لگایا جارہا ہے ۔ مہاجر ہمیشہ قومی دھارے میں رہے ہیں لیکن ان کے مسائل کبھی حل نہیں کئے گئے اور نہ ہی کبھی سیاسی جماعتوں اور اسٹیبلشمنٹ نے سندھ میں آباد مہاجروں کے مسائل حل کرنے پر توجہ دی۔ یہی وجہ ہے کہ ہر آنے والے دن کے ساتھ مہاجروں کے مسائل میں اضافہ ہوتا جارہا ہے لیکن اسٹیبلشمنٹ سندھ میں نئے نئے تجربات کرکے مہاجروں کے کیس کو خراب کرنے میں مصروف ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ایم کیوایم بہادر آباد گروپ یہ بتائے کہ اس نے کن شرائط پر پی ٹی آئی کی حکومت سے وزارتیں لیں اور ان کی وزارتیں لینے سے مہاجروں کو اب تک کیا فوائد ملے ہیں۔ اس سے پہلے وہ 30 سال تک صوبائی اور وفاقی حکومت میں وزارتیں اور مشیری لیتے رہے کیا اس کے بعد مہاجر مسائل حل ہوگئے، کیا مہاجر قومیت مستحکم ہوئی ، کیا مہاجر نوجوانوں کو باعزت روزگار اور تعلیم کے مواقع میسر آگئے۔ انہوں نے کہاکہ ایم کیوایم نے سب سے زیادہ مہاجروں کے کیس کو خراب کیا۔ ہم جو بات 20 سال سے کہتے آئے ہیں آج ایم کیوایم کے مرکزی قائدین وہی الزامات ایک دوسرے کو لگارہے ہیں لیکن اب بھی سوائے مفادات اور مالی وسائل سمیٹنے کے کچھ بھی نہیں کیا جارہا ہے۔

عید الضحیٰ پر اعلیٰ کارکردگی کا مظاہرہ کرکے صحت و صفائی عوام کی دہلیز تک فراہم کی ہیں:جان محمد بلوچ


16-09-2016 Chairman, MC after Eid-ul-Azha Safaee visit September 16, 2016 | 3:34 PM

کراچی:(نیوزآن لائن)چیئرمین بلدیہ ملیر جان محمد بلوچ نے کہا کہ جس طرح آفسران و ملازمین نے عید الضحیٰ پر اعلیٰ کارکردگی کا مظاہرہ کرکے عوام کو صحت و صفائی ان کی دہلیز تک فراہم کی ہیں امید کر تا ہوں کے آئندہ بھی مذہبی تہوار پر دل جمی سے کام کریں گے،بلدیہ ملیر میں عید الضحیٰ پر آلائشیں اٹھاکر دفنانے کے کام کی مثال نہیں ملتی ،عوام کی جانب سے بھی ضلعی انتظامیہ ملیر کی بہترین کاردگی کو سراہا گیا ہے، عید کے بعد بھی بلدیہ ملیر کی تمام یوسیز کی مرکزی و ذیلی شاہراہوں اور کچرا کنڈیوں کی روزانہ کی بنیاد پر صفائی کو یقینی بنائیںجائے۔ میونسپل کمشنر منظور حسین عباسی نے کہا کہ عید الضحیٰ کے موقع پر بلدیاتی نمائندوں کی جانب سے آلائشوں کی بروقت اطلاع ملنے کی وجہ سے یوسیز کی سطح پر آلائشیں اٹھانے میں بہت آسانی ہوئی ،سینی ٹیشن آفسران و ملا زمین روٹین کے کام پر بھر پور توجہ رکھیں۔ان خیالات اظہار چیئرمین بلدیہ ملیر جان محمد بلوچ نے میونسپل کمشنر منظور حسین عباسی کے ہمراہ بلدیہ ملیر کی مختلف یوسیز کے دورے کے موقع پر صفائی ستھرائی کے کام کا معائنہ کرتے ہوئے کیا۔ میونسپل کمشنر بلدیہ ملیر نے موقع پر موجود افسران کو ہدایت دیتے ہوئے کہاکہ اپنے محکمے کے ملازمین کی وقت پر حاضر ی کو یقینی بنائیں، بلخصوص صفائی ستھرائی کے حوالے سے یوسیز چیئرمین و دیگر بلدیاتی نمائندوں سے تجاویز لی جائیں تاکہ بلدیہ ملیرکی عوام کو پہلے سے بھی بہتر اور صحت مندانہ ماحول فراہم کرنے میں ہم اپنے حق ادا کرسکیں ۔ اس موقع پر سپرنٹنڈنٹ انجینئر نصراللہ میمن، ڈائریکٹر انفارمیشن جمال ناصر،ڈائریکٹر سالیڈ ویسٹ واثق ظفر اور دیگر بلدیاتی افسران بھی موجود تھے۔#

چرم قربانی کے عطیات جامع بنوریہ کے مسافرطلبہ کودیں، مولانا غلام رسول


jamia banoria September 12, 2016 | 6:24 PM

دینی ادارے طلبہ کو تعلیم ، کتب طبی ودیگر سہولیات مفت فراہم کرتے ہیں،عوام الناس سے اپیل
کراچی:(نیوزآن لائن) جامعہ بنوریہ عالمیہ کے ایڈمنسٹریٹر مولانا غلام رسول نے کہاکہ دینی اداروں کی خدمت ملک وملت کیلئے ناقابل فراموش ہیں چرم قربانی کے حقدار دینی ادارے اور مدارس دینیہ ہیں جو بے لوث ہوکر دنیا بھر کے طلبہ وطالبات کو مفت تعلیم او سہولیات فراہم کرتے ہیں،جمعرات کو جامعہ بنوریہ عالمیہ سے جاری بیان میں ایڈمنسٹریٹر جامعہ بنوریہ عالمیہ مولانا غلام رسول نے کہاکہ دینی ادارے اور مدارس دینیہ بے لوث ہوکر دنیا بھر میں دین اسلام کی حقیقی ترجمانی کررہے ہیں جس کو کبھی فراموش نہیں کیا جاسکتا،اور عصر حاضر میں دینی مدارس بھی بلاشک وشبہ بے لوث ہوکر دینی خدمات انجام دینے میں مصروف ہیں ،ان دینی اداروں اور مدارس کے ساتھ تعاون کرنا ہر صاحب خیر مسلمان کا دینی فریضہ ہے اس لیے چرم قربانی کے اصل حقدار مدارس دینیہ کے مسافر طلبہ ہیں جو اپنے ممالک ،شہروں ، علاقوں سے آکر دین اسلام کی تعلیم حاصل کررہے ہیں اور مدارس دینہ میں ان کیلئے تعلیمی کتب ، طبی ودیگر سہولیات مفت مہیہ کرتے ہیں جو سب اہل خیر کے تعاون سے ہوتاہے چرم قربانی میں دینی اداروں کے ساتھ تعاون ہر مسلمان کی ذمہ داری اور دینی فریضہ ہے یہ ادارے عوام کے تعاون سے ہی دینی خدمات سرانجام دے رہے ہیں ۔

مہاجر چہرے بدل کر آنے والوں کا احتساب کریں: ڈاکٹر سلیم حیدر


dr saleem haider mit September 12, 2016 | 6:15 PM

پاکستان زندہ باد کہنے سے ماضی کے گناہ اور بداعمالیاں نہیں دھل سکتیں، قوم کو حساب دینا ہوگا
کراچی میں 20سال سے بیٹھ کر اقتدار کے مزے لینے والوں نے مہاجروں کے کتنے مسائل حل کروائے
کراچی:(نیوزآن لائن)مہاجر اتحاد تحریک کے چیئرمین ڈاکٹر سلیم حیدر نے اہل وطن کو عید کی مبارکباد دیتے ہوئے تمام مہاجروں سے اپیل کی ہے کہ وہ عید کی خوشیوں میں ان کو بھی شریک رکھیں جو ہم سے بچھڑ گئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ عید کا مفہوم خود احتسابی بھی ہے ۔ مہاجروں کو اپنے آپ کا بھی احتساب کرنا چاہئے کہ وہ 30 سالوں سے مہاجر نام پر کن بازی گروں اور شعبدے بازوں کے ہاتھ مضبوط کرتے رہے اور اب بھی ان کے سہولت کار بہروپیوں کے بہکاوے میں آرہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان زندہ باد کا نعرہ لگانے سے ماضی کے گناہ اور مہاجروں کو دیئے جانے والے فریب دھوئے نہیں جاسکتے۔ مہاجر قوم اچھی طرح جانتے ہیں کہ کل کے یہ سہولت کار آج پارسائی اور بے گناہی کے کتنے ہی دعوے کریں لیکن یہ سر سے پاؤں تک جرائم اور مہاجر دشمنی میں ڈوبے ہوئے ہیں۔ اب ایک بار پھر روپ تبدیل کرکے قوم کو پھر نئے سرے سے دھوکہ دینے کی کوشش کررہے ہیں لیکن اس بار مہاجران کے اصل چہروں کو پہچان چکے ہیں کیونکہ جس طرح مہاجر نام کو ان بازی گروں نے اپنے ذاتی مفادات کیلئے استعمال کیا وہ کسی سے پوشیدہ نہیں۔ انہوں نے کہا کہ مہاجر قوم کو ان سے سوال کرنا چاہئے کہ 20 سال سے یہ کراچی میں بیٹھ کر اقتدار کے مزے لوٹ رہے ہیں اس دوران انہوں نے کتنے مہاجر بیروزگار نوجوانوں کو ملازمتیں دلوائیں، مہاجروں کے کتنے مسائل حل کرائے ، کتنی مرتبہ مہاجر حقوق کیلئے ایوانوں میں آواز اُٹھائی ، کتنی مرتبہ مہاجر حقوق کیلئے سڑکوں پر احتجاج کیا ۔ انہوں نے کہاکہ شخصیت پرستی سیاست کو فروغ دینے والے آج چہرے بدل بدل کر پارسائی کے دعوے کررہے ہیں ۔

جامعہ کراچی: شعبہ پبلک ایڈمنسٹریشن کے زیراہتمام یوم دفاع کی مناسبت سے تقریب کا انعقاد


IMG-20160907-WA0000 (1) September 12, 2016 | 6:09 PM

کراچی:(نیوزآن لائن)چھہ ستمبر کا دن ہمارے عزم اور حوصلوں کو تقویت دیتا ہے، عصر حاضر میں ملک کو درپیش خطرات اور چیلنجز کا مقابلہ اسی صورت ممکن ہے اگر ہم اپنی صفوں میں اتحاد اور اتفاق پیدا کریں۔ ہم اپنے دشمنوں کا بھی اسی صورت ڈٹ کر مقابلہ کر سکتے ہیں جب ہم جذبہ حب الوطنی سے سرشار ہو کر ایک سوچ اور فکر کا مظاہرہ کریں گے۔ ہماری بہادر فوج نے ملک کے دفاع اور سلامتی کیلئے ہمیشہ قربانیوں کی بے مثال تاریخ رقم کی ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ پوری قوم اختلافات بھلا کر سیسہ پلائی دیوار بن جائے اور نظریہ پاکستان کو عملی کردار کے طور پر اپنا لے۔ان خیالات کا اظہار صدر انجمن اساتذہ جامعہ کراچی پروفیسر ڈاکٹر شکیل الرحمن فاروقی اور چیئر مین شعبہ پبلک ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر شبیب الحسن نے یوم دفاع کی مناسبت سے شعبہ پبلک ایڈمنسٹریشن میں منعقد ہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر مباحثہ کا بھی اہتمام کیا گیاجس میں ایوان کی متفقہ رائے سے قرارداد ”تھا جس کا انتظار یہ وہ سحر تو نہیں ” بھی منظور کی گئی۔ ڈاکٹر شکیل الرحمن فاروقی نے نوجوانوں کو مستقبل کا معمار قراردیتے ہوئے کہا کہ ضرورت اس امر کی ہے کہ ہماری نوجوان نسل ملک کی ترقی کے لئے اپنا مثبت کردار کریں ہماری خوش قسمتی ہے کہ ہماری آبادی کا بڑا حصہ نوجوانو ں پر مشتمل ہے۔مباحثہ میں پہلی پوزیشن شعبہ بائیوٹیکنالوجی کی طالبہ خضراعروج نے حاصل کی جبکہ دوسری پوزیشن شعبہ پبلک ایڈمنسٹریشن کے طالب علم بلال احمد نے اور تیسری پوزیشن زین آفتاب نے حاصل کی اور ٹیم ٹرافی شعبہ پبلک ایڈمنسٹریشن کے طالب علم زین آفتاب اور شبانہ کوثر نے اپنے نام کی ۔مباحثہ میں جامعہ کراچی کے مختلف شعبہ جات کے طلباوطالبات نے حصہ لیا اور اس طرح کی تقریبات کے انعقاد کو وقت کی اہم ضرورت قراردیا۔
================================
جامعہ کراچی: بی اے لاء سال اول سالانہ امتحانات برائے 2015 ء کے نتائج کا اعلان
کراچی:(نیوزآن لائن) جامعہ کراچی کے ناظم امتحانات پروفیسر ڈاکٹر ارشد اعظمی کے اعلامیہ کے مطابق بی اے لاء سال اول سالانہ امتحانات برائے 2015 ء کے نتائج کا اعلان کردیا گیا ہے۔نتائج کے مطابق امتحانات میں کل 142 طلبہ شریک ہوئے،35 طلبہ کو کامیاب قراردیا گیا جبکہ 107 طلبہ ناکام قرارپائے ۔کامیاب طلبہ کا تناسب 24.65 فیصد رہا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جامعہ کراچی: بی کام پرائیوٹ کے ضمنی امتحانات برائے 2015 ء 22 ستمبر سے شروع ہوں گے
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے ناظم امتحانات پروفیسر ڈاکٹر ارشد اعظمی کے اعلامیہ کے مطابق بی کام پرائیوٹ کے ضمنی امتحانات برائے 2015 ء 22 ستمبر 2016 ء سے شروع ہوں گے ۔تمام امتحانات دوپہر 2:00 تاشام 5:00 بجے تک جبکہ جمعہ کے روز دوپہر 2:30 شام 5:30 بجے تک منعقد ہوں گے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جامعہ کراچی : اسلامی بینکاری ، صنعت ،مواقع چیلنجز اور ہماری ذمہ داری کے عنوان سے لیکچر کا انعقاد
کراچی:(نیوزآن لائن)اسلامی بینکاری کوروز اول سے ہی شکوک وشبہات کی نظر سے دیکھاجاتارہا ہے، حقیقت یہ ہے کہ عام بینکاری کا انحصار سودی نظام پر مبنی ہے جبکہ اسلامی بینکاری ”سود” کے خلاف وضع کردہ بلاسودی نظام پر مبنی ہے جو باالفاظ دیگر سود کے خلاف اعلان جنگ ہے۔مسلم دنیا کے بڑے بڑے بینک اسلامی بینکاری سسٹم کو اپنارہے ہیں اس پر مزید یہ کہ بین الاقوامی سطح پر مغربی ممالک میں بھی بلاسود ی بینکاری نظام قابل عمل تصور کیا جانے لگاہے اور مرحلہ وار رائج ہورہا ہے۔ اسلامی بینکاری میں غیر سودی بینکنگ کے ذریعے حلال منافع قابل لحاظ حدتک پرکشش اور قابل تقلید نظر آرہاہے جوکہ عالمی کساد بازاری کے لئے لمحہ فکریہ ہے ،چنانچہ مغربی ممالک میں اسلامی نظام بینکاری کی افادیت اور قابل عمل تصورکرتے ہوئے جدید طرز پر آہستہ آہستہ رواج دیا جارہا ہے۔ اسلامی بینکاری کو صحیح طور پر متعارف کرانے اور حلال بزنس کرنے کے لئے اسٹاف کی پروفیشنل اسلامی تعلیمات اورتربیت بہت ضروری ہے ۔شیخ زید اسلامک سینٹر کی کاوشیں لائق تحسین ہیں کہ یہ ادارہ سرٹیفیکٹ کورسز سے لے کر ایم فل اور پی ایچ ڈی تک اسلامی بینکنگ کی تربیت کے مواقع فراہم کرتاہے۔ان خیالات کا اظہار مقررین نے شیخ زید اسلامک سینٹر کے زیر اہتمام منعقد ہ لیکچر بعنوان: ”اسلامی بینکاری ، صنعت ،مواقع چیلنجز اور ہماری ذمہ داری” سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔مقررین میں ملائیشیاء کے پروفیسر داتک ،نیشنل یونیورسٹی پولیٹیکس اینڈ لاء چائنا کے ڈاکٹر احمد موسیٰ ،آئی این سی ای آئی ایف کے ڈپٹی ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر عثمان الحبشی ،ڈائریکٹر شیخ زید اسلامک سینٹر ڈاکٹر عابدہ پروین اور اسلامک بینکنگ پروگرام کے انچارج ڈاکٹر سید عضنفر شامل ہیں۔پروفیسر داتک نے اسلامک بینکنگ کو نہ صرف مسلم اُمہ بلکہ پوری دنیا کے لئے وقت کی اہم ضرورت قراردیااور معاشرے میں ہونے والی معاشی نا انصافیوں اور نقصانات سے آگاہ کیا۔پروفیسر ڈاکٹر احمد موسی نے اسلامی تعلیمات پر عمل کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہم اللہ کی طرف سے یہاں ایک مشن پر آئے ہوئے ہیں اور ہمارا مقصد اسلامی بینکاری کو اسلامی شریعت کے مطابق فروغ دینا ہے۔اس موقع پر ڈاکٹر سید غضنفر نے پی ایچ ڈی آن لائن پروگرام اور فیکلٹی ایکسچینج پروگرام کے بارے میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ دونوں سینٹرز کو یہ پروگرام شروع کرنے چاہیئے تاکہ ایک دوسرے کے تجربہ سے مستفید ہوسکیں۔آخر میں ڈاکٹر عابدہ پروین اور ڈاکٹر غضنفر نے مہمان حضرات کو سینٹر کی جانب سے اعزازی شیلڈ بھی پیش کی۔

ایم کیو ایم سے قبل کراچی کے عوام اپنی آزاد مر ضی سے ہی قر بانی کی کھالیں دیا کر تے تھے ۔حافظ نعیم الرحمن


hafiz naim ul rehman September 10, 2016 | 7:01 PM

کھالیں جمع کر نے کا آغاز جماعت اسلامی نے ہی کیا اور جبر و تشدد کے دور میں بھی عوامی خدمت کے جذبے سے کھالیں جمع کیں
فاروق ستار کی جانب سے عوام کو کھالیں دینے کے لیے آزاد چھوڑ نے کے بیان کا خیر مقدم
کراچی: (نیوزآن لائن) امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے ایم کیو ایم کے رہنماء فاروق ستار کی جانب سے عید الضحیٰ کے مو قع پر قر بانی کی کھالوں کے حوالے سے ایم کیو ایم کی پالیسی اور کراچی کے عوام کو آزاد چھوڑ دینے کے بیان کا خیر مقدم کر تے ہوئے کہا ہے کہ ایم کیوایم سے قبل کراچی کے عوام اپنی آزاد مر ضی سے ہی قر بانی کی کھالیں دیا کر تے تھے ۔کراچی میں قر بانی کے جانوروں کی کھالیں جمع کر نے کا آغاز جماعت اسلامی نے ہی کیا تھا اور جماعت اسلامی کے کارکنوں نے سخت رکاوٹوں اورزور زبرستی اور جبر وتشدد کے دور میں بھی عوامی خدمت اور رضائے الٰہی کے حصول کے جذبے کے تحت قر بانی کی کھالیں جمع کی ہیں ۔کراچی کے عوام نے جماعت اسلامی اور الخدمت پر ہمیشہ اعتماد کا اظہار کیا ہے کیونکہ عوام اچھی طرح جانتے ہیں کہ ان کی دی ہوئی کھال اور عطیہ کی گئی رقم کی پائی پائی مستحقین اور ضرورت مندوں پر خرچ ہوتی ہے ملک سے باہر نہیں بھیجی جاتی ۔حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ کراچی کے اندر جبری کھالیں جمع کر نے کا سلسلہ ایم کیو ایم نے ہی شروع کیا اور ایم کیو ایم کی طرزِ سیاست کے نتیجے میں لوگ اپنی اور اپنے قر بانی کے جانوروں کی جانوں کے تحفظ کے لیے قر بانی کی کھالیں اسے دینے پر مجبور ہوئے ۔حافظ نعیم الرحمن نے کراچی کے عوام سے اپیل کی کہ وہ الخدمت کے رفاعی اور فلاحی منصوبوں کی تکمیل کے لیے قر بانی کی کھالیں زیادہ سے زیادہ تعداد میں الخدمت کو دیں ۔

مہاجر دلبرداشتہ ہونے کے بجائے نئی صف بندی کریں: ڈاکٹر سلیم حیدر


Dr Saleem Hadar September 10, 2016 | 6:55 PM

مہاجر نام پر ووٹ، نوٹ اور کھالیں لینے والوں نے مہاجروں کو رسوائی، ذلت اور پسپائی کے سوا کچھ نہیں دیا
مہاجر کارکنوں نے ہمیشہ قربانیاں دیں ، اب قیادت اَنا اور خودساختہ شخصیت کی قربانی دیں: چیئرمین ایم آئی ٹی
کراچی:(نیوزآن لائن)مہاجر اتحاد تحریک کے چیئرمین ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہا ہے کہ مہاجر قوم مایوس اور دلبرداشتہ ہونے کے بجائے نئے سرے سے صف بندی کریں اور ماضی کی غلطیوں کے ازالے کیلئے جرات اور ہمت کا مظاہرہ کیاجائے۔ آج مہاجر جس قدر ذہنی اذیت کا شکار ہے اس کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی، برسہا برس سے مہاجر نام پر ووٹ، نوٹ اور کھالیں حاصل کرنے والوں نے مہاجروں کو رسوا، ذلت اور پسپائی کے کچھ نہیں دیا۔ آج پوری قوم بندگلی میں آکھڑی ہوئی ہے۔ قوم کو رسوا کرنے والے قوم کو بچانے کی نوید سنارہے ہیں۔ اب مہاجروں کو ان عناصر کا احتساب کرنا ہوگا جو مہاجروں کو دیئے جانے والے دھوکے میں شریک رہے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ مہاجر اتحاد تحریک مہاجر حقوق کی بانی جماعت ہے اور مہاجر حقوق کیلئے بے سروسامانی کی حالت میں آواز بلند کرتی رہی ہے۔ اب بھی مہاجروں کو مایوس نہیں ہونے دیں گے۔ مہاجروں کی بھی ذمہ داری ہے کہ وہ صحیح اور غلط کی تمیز کرتے ہوئے مہاجر دوستوں اور مخلص قیادت کا ساتھ دیں ، ماضی کی غلطیوں کا ازالہ کرتے ہوئے از سر نو اُٹھ کھڑے ہوں اس لئے کہ مہاجر دشمن قوتیں مہاجروں کو تقسیم در تقسیم کرنا چاہتی ہیں اس لئے اب قیادت سے لے کر کارکنوں تک سب کو مخلصی اور سنجیدگی کا مظاہرہ کرنا ہوگا۔ مہاجر کارکنان برسہا برس سے قربانیاں دیتے آرہے ہیں ۔ اب مہاجر قیادت کو اپنی اَنا اور خودساختہ شخصیت کی قربانی دینی ہوگی تاکہ مہاجروں کا شیرازہ بکھرنے سے بچایا جاسکے اور مہاجروں کو متحد رکھ کر اپنے حقوق حاصل کئے جاسکیں۔ انہوں نے مہاجر دانشوروں، ادیبوں ، شعراء اور صحافیوں سے اپیل کی کہ وہ اس کڑے وقت میں مہاجر مخلص قیادت کے ہاتھ مضبوط کریں۔

جامعہ بنوریہ عالمیہ اجتماعی قربانی میں 800سے زائد جانور ذبح کیے جائیں گے


jamia banoria September 10, 2016 | 6:50 PM

بیرون ممالک سے آئن لائن قربانی کے تحت 310افراداجتماعی قربانی میں حصہ لیںگے
بنوریہ ویلفیئر ٹرسٹ کے تحت غریب ونادار افراد کیلئے 30سے زائد جانور ذبح کیے جارہے ہیں
عوام الناس کو مشکلات اور دھوکہ دیہی سے بچانے کیلئے اجتماعی قربانی کانظام بہترین ہے،مولانا غلام رسول
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ بنوریہ عالمیہ سائٹ ٹاؤن میں مجموعی طور پر800بڑے اور300سے زائد چھوٹے جانوروں کی اجتماعی قربانی کی جائیں گی،جبکہ310افراد آن لائن قربانی میں حصہ لے رہے ہیں جن کا تعلق امریکا،برطانیہ ، تھالینڈاور دنیا کے دیگر ممالک سے ہے، بنوریہ ویلفیئر ٹرسٹ کے تحت غریب ونادار طبقے کو عید کی خوشیوں میں شامل کرنے کیلئے 30سے زائد بڑے جانوروں کی قربانی کی جارہی ہے۔ جامعہ بنوریہ عالمیہ کے ترجمان کے مطابق معروف علمی دینی درسگاہ جامعہ بنوریہ عالمیہ نے ہر سال کی طرح امسال بھی جامعہ بنوریہ عالمیہ کے تحت شہر کے 22 مختلف مقا مات پر اجتماعی قربانی کے مراکز کام کررہے ہیں جہاں جید علماء کرام و مفتیان کرام کونگران مقرر کردیا گیا ہے جو شہریوں کو قربانی کے مسائل سے آگاہ کرنے کے ساتھ اجتماعی قربانی کو شرعی اصولوں کے مطابق انجام دیںگے ،جامعہ بنوریہ عالمیہ سائٹ ٹاؤن مرکز سمیت 22مراکز میں مجموعی طورپر 5600سے زائد حصوں پر مشتمل 1000سے زائد چھوٹے بڑے جانور ذبح کیے جائیں گے ، اسی طرح بیرون ممالک میں مقیم پاکستانی بالخصوص مسلم کمیونٹی کو درپیش مسائل کا ادراک کرتے ہوئے آن لائن قربانی کا نظام بھی متعارف کرایا گیا جس کے تحت کمبوڈیا، امریکا، برطانیہ ، تھالینڈ، انڈونشیا ء اور دیگر دیگریورپی ممالک سے 310افرادقربانی کے حصے کی آن لائن بکنگ کراچکے ہیں ،بنوریہ ویلفیئر ٹرسٹ کے تحت غریب ونادار طبقے کو عید کی خوشیوں میں شامل کرنے کیلئے 30سے زائد بڑے جانور ذبح کیے جائیں گے جن کا گوشت نومسلم بھائیوں ، مدارس اور غریب ونادار افراد میں عید کے تقسیم کیاجائے گا، دریں اثناء ایڈمنسٹریٹر جامعہ بنوریہ عالمیہ مولانا غلام رسول نے کہاکہ اجتماعی قربانی کے سسٹم کو سب سے پہلے جامعہ بنوریہ عالمیہ نے متعارف کرایا اور اب آن لائن قربانی متعارف کرانے میں بھی بنوریہ عالمیہ نے سب سے پہل کی ہے ، انہوں نے کہاکہ ہر سال اجتماعی قربانی حصہ لینے والوں میں اضافہ ہورہاہے،کیونکہ موجودہ دور میں قربانی کیلئے جانور کی خریدار سے لیکر اسے گھر میں لاکر رکھنے اور ذبح کیلئے قصائی ڈھونڈنے تک مشکلات ہی مشکلات ہی ہیں جو عام آدمی کے بث کی بات نہیں ہوتی ، بعض اوقات جانور کی خریدار ی میں دھوکہ ہوتاہے عوام کو بچانے کیلئے اجتماعی قربانی کانظام متعارف کرایا گیا الحمد اللہ اس کے بہت فائدے ہورہے ہیں، انہوںنے کہاکہ پہلے مشکلات کے ڈر سے بہت سے لوگ قربانی فرض ہونے کے باوجود گریزاں تھے اب اجتماعی قربانی کے نظام کے باعث ہر شخص بڑھ چڑھ کر حضرت ابراھیم کی سنت کی پیروی میں قربانی میں حصہ لے رہاہے ۔

عید الاضحی کے موقع پر آلائشیں اٹھانے کے اقدامات،کمشنر کراچی کی زیر صدارت جائزہ اجلاس۔


EIDul AZHA Arrangements Meeting News Picture 10-09-2016 September 10, 2016 | 6:47 PM

بلدیہ عظمیٰ کراچی اور ڈی ایم سیز کی کمشنر کو بریفنگ، شکایاتی مراکزقائم کر نے کا فیصلہ۔
کراچی :( نیوزآن لائن)کمشنر کراچی اعجاز احمد خان کی زیر صدارت اجلاس میں عید الاضحی کے موقع پر قربانی کے جانوروں کی آلائشیں اٹھانے ، انھیں ٹھکانے لگانے اور اس موقع پر صفائی کے اقدامات کا جائزہ لیا گیا تمام متعلقہ اداروں نے اس سلسلہ میں اجلاس میں اپنے اپنے ہنگامی منصوبوں کی تفصیلات سے آگاہ کیا ۔ اجلاس میں تمام ڈپٹی کمشنرز، بلدیہ عظمیٰ کراچی، تمام ڈسٹرکٹ میونسپل کارپوریشنز اور ڈسٹرکٹ کونسل کراچی کے سینئر افسران اور دیگر نے شر کت کی، کمشنر کراچی کو بتایا گیاکہ تمام بلدیاتی اداروں نے قربانی کے جانوروں کی آلائشیں اٹھانے انھیں ٹھکانے لگانے اور اس موقع پر صفائی کو یقینی بنانے کے انتظامات مکمل کر لئے ہیں۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ کمشنر کراچی کے دفتر بلدیہ عظمیٰ کراچی ، تمام ڈی ایم سیز اور ڈسٹرکٹ کونسل کے دفاتر میں شکایاتی مراکز قائم کئے جائیں گے، شکایاتی مراکز پر شہریوں کی شکایات کے ازالے اور انکی رہنمائی و مدد کے لئے خصوصی عملہ متعین کیا جا ئے گا۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ نماز عیدکے سلسلہ میں مساجد، عید گاہوں اور امام بارگاہوں اور نماز عید کیلئے مختص کئے جانے والے مقامات پر صفائی کے خصوصی انتظامات کئے جائیں گے۔ تمام ڈپٹی کمشنرز اپنے اپنے اضلاع میں نماز عید کے مقامات کا خو د دورہ کر کے معائنہ کریں گے اورانتظامات کا جائزہ لیں گے کمشنر کراچی نے کہا کہ تمام ڈپٹی کمشنرز اسسٹنٹ کمشنرز اور دیگر انتظامیہ کے افسران عید کے دنوں میں آلائشیں ٹھکانے لگانے اور صفائی کے انتظامات کے سلسلہ میں متعلقہ اداروں کے ساتھ رابطہ و تعاون کو مضبوط بنائیں گے۔فیصلہ کیا گیا کہ کمشنر کراچی کے دفتر میں 1299 پر شکائتی مرکز قائم کیا جا ئے گا۔ اس سلسلہ میں خصوصی عملہ متعین کیا جا رہا ہے جو شہریوں کی شکایات کے ازالے اور آپس میں اداروں کے درمیان رابطے اور تعاون میں مدد فراہم کر نے کے لئے فرائض انجام دے گا۔اجلاس میں بتایا گیا کہ بلدیہ عظمیٰ کراچی عید الاضحی کے موقع پر آلائشیں اٹھانے اور صفائی سے شہریوں کی شکایات سننے کے لئے 1339 کو فعال بنایا جا ئے گا جو 24 گھنٹے کام کرے گا۔

شکور پٹھان نے اپنے شہر کے بڑے ناموں کو یاد کرکے قابل قدر تحفہ دیا ہے، سحر انصاری


Picture September 10, 2016 | 5:19 PM

میرے شہر والے کتاب ایک نادر تصنیف اور قابل تعریف کتاب ہے، پروفیسر عنایت علی خان
ادب کی خدمت کرنا معاشرے کی خدمت کرنا ہے، نفیس احمد خان
کراچی:(نیوزآن لائن) شکور پٹھان نے اپنے شہر کے بڑے ناموں کو یاد کرکے قابل قدر اور قابل تحسین کام کیا ہے۔ یہ بات آرٹس کونسل آف پاکستان لائبریری کمیٹی سوشل اسٹوڈینٹس فورم اور سخن پارے کے اشتراک سے منعقدہ تقریب کی صدارت کرتے ہوئے پروفیسر سحر انصاری نے کہی۔ انہوں نے کہا کہ عبدالشکور پٹھان ادب میں ایک ایسا اضافہ ہیں کہ جس کی کمی ہمیشہ محسوس کی جاتی ہے اور اس کمی کو عبدالشکور پٹھان نے میرے شہر والے جیسی خوبصورت کتاب لکھ کر ہم سب شہر والوں کو تحفہ دیا ہے۔قبل ازیں سوشل اسٹوڈنٹس فورم کے چیئرمین نفیس احمد خان نے کہا کہ ادب کی خدمت کرنا، معاشرے کی خدمت کرنا ہے کیونکہ معاشرے ادب اور تہذیب کا گہوارہ ہوتے ہیں اور ہم فورم کے پلیٹ فارم سے ایسی تقریبات کا انعقاد کرنا اپنا فرض سمجھتے ہیں۔ اس موقع پر تحسین عبید اللہ علیم، عارف مصطفی، عقیل عباس جعفری، معراج جامی نے بھی خطاب کیا۔ کتاب کے مصنف عبدالشکور پٹھان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وطن سے محبت ایک ایسا جذبہ ہے اس سے دور رہ کر بھی ذرا ماند نہیں پڑتا بلکہ اس کا احساس وطن سے دور جا کر کچھ زیادہ ہی ہوجاتا ہے۔ میں نے اپنے شہر کی خدمت کی نیت سے اس کتاب کو تحریر کرنے کی کوشش کی ہے۔ ابتدائی طور پر میں نے مختلف شخصیات کے بارے میں فیس بک پر لکھنا شروع کیا جسے پڑھ کر میرے ساتھیوں نے میری حوصلہ افزائی کی اور کچھ ساتھیوں نے کہا کہ اس تحریر کو کتابی شکل دینی چاہئے جو میرا بھی خواب تھا اور اللہ تعالیٰ نے میرے اس خواب کی تکمیل کردی اور آج یہ کتاب آپ لوگوں کے ہاتھوں میں ہے۔ اور جس طرح میری پذیرائی فورم کے اراکین اور میرے ساتھیوں نے کی ہے میں ان سب کا مشکور ہوں۔ تقریب کے مہمانِ خصوصی پروفیسر عنایت علی خان نے مصنف کی کاوش پر مبارکباد پیش کی اور کہا کہ کسی بھی شعبے میں کتاب لکھنا ایک ناممکن کام ہے جسے احسن طریقے سے عبدالشکور پٹھان نے کتابی شکل دے کر ہم سب کو اپنا مقروض کردیا ہے۔ ہم انہیں اپنی جانب سے دلی مبارکباد پیش کرتے ہیں۔ اس موقع پر سخن پارے کے صدر منیر پٹھان نے کتاب کی رونمائی کرتے ہوئے تمام مہمانوں کو اپنے بھائی عبدالشکور پٹھان کی کتاب پیش کی۔ اس تقریب کی میزبانی کے فرائض سلیم فاروقی صاحب نے نہایت احسن انداز سے ادا کیے۔ آخر میں فورم کے ادبی کمیٹی کے چیئرمین اور سیکریٹری نشر و اشاعت وقار زیدی نے تمام مہمانوں کا شکریہ اور لذت و کام و دہن کا اعلان کیا۔

کے ایم سی افسران کو عید پر تنخواہیں نہ دینے سے وزیر بلدیات، حکومت سندھ کی بدنیتی ظاہر ہوگئی۔ سہیل اختر ہاشمی


karachi September 10, 2016 | 1:12 PM

منتخب نمائندوں کو ناکام بنانے کے لئے عمل کیا گیا، اسسٹنٹ کمشنرز منتخب نمائندوں کے متوازی اختیارات استعمال کر رہے ہیں۔ ارشد وہرہ کا ساتھ دیں گے۔ سہیل اختر ہاشمی
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کراچی:(نیوزآن لائن)کراچی آفیسرز ویلفیئر ایسوسی ایشن کے چیئرمین سہیل اختر ہاشمی نے عیدالاضحی پر کے ایم سی افسران کو تنخواہیں نہ دینے لی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سے وزیر بلدیات کا تعصب اور حکومت سندھ کی بد نیتی ظاہر ہوگئی۔ منتخب نمائندوں کو ناکام بنانے کے لئے یہ عمل کیا گیا۔ ڈپٹی میئر کراچی ارشد وہرہ نے مثبت سوچ کے ساتھ وزیر بلدیات سے ملاقات کی لیکن کوئی فائدہ نہیں ہوا۔ منتخب میئر کو آزاد کرنے کے بجائے جیل میں رکھا گیا ہے۔ یہ سارا عمل افسوس ناک ہے ہم ارشد وہرہ کا ساتھ دیں گے اپنے ممبران کو مکمل سپورٹ کا کہ دیا ہے۔ کے ایم سی آفیسرز ویلفیئر ایسوسی ایشن کے بھی ساتھ ہیں۔ سہیل اختر ہاشمی نے مذید کہا کہ اسسٹنٹ کمشنرز بلدیہ عظمی کراچی اور ڈی ایم سیز میں منتخب نمائندوں کے اختیارات استعمال کر رہے ہیں۔ لوکل ٹیکس، لینڈ معاملات میں اختیارات سے تجاوز کرکے اداروں کو مفلوج کیا جا رہا ہے ۔ ہم اسکی مذمت کرتے ہوئے ۔ چیف سیکریٹری سندھ سے کاروائی اور وزیر اعلی سندھ سے خصوصی توجہ و مداخلت کا مطالبہ کرتے ہیں۔

ایم کیوایم کے 20سے زائد پولنگ کیمپوں کو اکھاڑ ا گیا ہے جبکہ درجنوں پولنگ کیمپوں کو لگنے ہی نہیں دیا گیا ہے، ڈاکٹر فارو ق ستار


515691-FarooqsattarAPP-1362403742-275-640x480 September 8, 2016 | 8:30 PM

ایم کیوایم پاکستان کے سربراہ ڈاکٹر فاروق ستار کا پی ایس 127کے ضمنی انتخاب کے سلسلے میں ملیر میں قائم مختلف پولنگ کیمپوں کا دورہ
پولنگ کے عملے اور ووٹروں سے ملاقاتیں کیں اور ان سے پولنگ کی تفصیلات معلوم کیں
ایم کیوایم کے 20سے زائد پولنگ کیمپوں کو اکھاڑ ا گیا ہے جبکہ درجنوں پولنگ کیمپوں کو لگنے ہی نہیں دیا گیا ہے، ڈاکٹر فارو ق ستار
ہمارے اکثریتی علاقوں میں کھلی غنڈہ گردی ، بد معاشی کی گئی اور پولنگ کو ہلکا کیا گیا جو کہ سوچے سمجھے منصوبے کا حصہ ہے، ڈاکٹر فاروق ستار
پولنگ والے دن صبح سے رینجرز موجود نہیں تھی جبکہ پولیس کی غیر جانبداری مشکوک ہے، ڈاکٹر فاروق ستار
ڈر و خوف کی فضاء پھیلائے جانے کے باوجود 2بجے کے بعد عوام نکلی ہے ، ڈاکٹر فاروق ستار
کراچی :( نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ (پاکستان ) کے سربراہ ڈاکٹر محمد فاروق ستار نے پی ایس 127کے ضمنی انتخاب کے سلسلے میں ملیر میں قائم ایم کیوایم پاکستان کے مختلف پولنگ کیمپوں کا دورہ کیا اور پولنگ کے عملے اور ووٹروں سے ملاقاتیں کیں اور ان سے پولنگ کی تفصیلات معلوم کیں ۔ ڈاکٹر فاروق ستار لوگوں میں گھل مل گئے اور وہ جن جن کیمپوں پر گئے عوام کا ایک ہجوم ان کے پیچھے پیچھے رہا ۔ اس موقع پر ایم کیوایم کی رابطہ کمیٹی کے رکن عارف خان ایڈووکیٹ ، نامزد حق پرست امیدوار برائے پی ایس 127وسیم احمد اور حق پرست اراکین قومی وصوبائی بھی موجود تھے ۔ ڈاکٹر فاروق ستار نے شاد مان ٹائون یوسی 6،جعفرطیار ، عمار یاسر فیز ون ، سن رائز چلڈرن اکیڈمی اسکول اور نفیس بنگلو ز سمیت دیگر علاقوں میں قائم ایم کیوایم کے پولنگ کیمپوں کے دورے کئے اور ذمہ داران و کارکنان پر زور دیا کہ وہ پولنگ سے قبل ووٹروں کو گھروں سے نکالیں اور ایک ایک ووٹ کاسٹ کرائیں ۔ اس موقع پر ذمہ داران و کارکنان اور مرد و خواتین ووٹروں نے ڈاکٹر فاروق ستار کو جرائم پیشہ حقیقی دہشت گردوں کی کھلی غنڈہ گردی ، فائرنگ ، تشدد ، خوف وہراس پھیلانے اور ایم کیوایم کے اکثریتی علاقوں میں ووٹروں کو ووٹ نہ ڈالنے کی تفصیلات سے بھی آگاہ کیا ۔ڈاکٹر فاروق ستار نے مختلف پولنگ کیمپوں پر گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ ایم کیوایم کے 20سے زائد پولنگ کیمپوں کو اکھاڑ ا گیا ہے جبکہ درجنوں پولنگ کیمپوں کو لگنے ہی نہیں دیا گیا ہے ، حقیقی دہشت گردوں نے ڈر و خوف کی فضا پیدا کی جبکہ پیپلزپارٹی کے اکثریتی علاقوں میں بدامنی نہیں تھی ہمارے اکثریتی علاقوں میں کھلی غنڈہ گردی اور بد معاشی کی گئی اور پولنگ کو ہلکا کیا گیا جو کہ سوچے سمجھے منصوبے کا حصہ ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پولنگ والے دن صبح سے رینجرز موجود نہیں تھی جبکہ پولیس کی غیر جانبداری مشکوک ہے ، پولیس نے سعادی ٹائون اور امروہہ کے علاقوں میں ایم کیوایم کے پولنگ کیمپوں کا اکھاڑا جبکہ انتظامیہ اس صورتحال پر جانبدار بنی رہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ ڈر و خوف کی فضاء پھیلائے جانے کے باوجود 2بجے کے بعد عوام نکلی ہے ، مجھے یقین ہے کہ دھاندلی کے باوجود ایم کیوایم یہ الیکشن جیتے گی ۔ انہوں نے کہاکہ پی ایس 127میں ہمارے پاس بائیکاٹ کا آپشن تھا لیکن ہم نے فیصلہ کیا کہ الیکشن لڑیں گے اور الیکشن کے میدان میں جیت کر دکھائیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ بائو گوٹھ میں حقیقی دہشت گرد افضل کوٹی سرگرم ہے اور دندناتے پھیر رہا ہے لیکن پولیس اسے روکنے میں ناکام ہے ۔ انہوں نے پولنگ کیمپوں پر موجود نوجوانوں ، بزرگوں ، خواتین سے اپیل کی کہ ابھی پولنگ ختم ہونے میں دو گھنٹے باقی ہیں لہٰذا اپنے اپنے علاقوں اور گھروں میں ایک ایک خواتین اور مرد کا ووٹ ضرور کاسٹ کرائیں جن لوگوں نے ڈر و خوف کی فضا پیدا کی ہے وہ ایم کیوایم کی فتح پرآج رات ماتم کریں گے ۔ اس موقع پر خواتین ، نوجوانوں ، بزرگوں اوربچوں نے ڈاکٹر فاروق ستار سے آٹو گراف لئے اور نعرہ متحدہ جئے متحدہ ، پاکستان زندہ ، نعرہ پاکستان جئے پاکستان اور دیگر نعرے پرجوش انداز میں لگائے ۔

کراچی کو ہر قسم کے غیر قانونی اسلحے سے پاک کیا جائے راشد علی خان


karachi September 8, 2016 | 8:13 PM

سابق وزیر داخلہ ذوالفقار مرزا کی جانب سے جاری کردہ تمام اسلحہ لائسنس منسوخ کئے جائیں اور نئے سرے سے تمام اسلحہ لائسنس کی جانچ پڑتال کی جائے
کراچی:(نیوزآن لا ئن) کراچی کو ہر قسم کے غیر قانونی اسلحے سے پاک کیا جائے سابق وزیر داخلہ ذوالفقار مرزا کی جانب سے جاری کردہ تمام اسلحہ لائسنس منسوخ کئے جائیں اور نئے سرے سے تمام اسلحہ سائسنس کی جانچ پڑتال کی جائے یہ بات الراشد فائونڈیشن پاکستان کے چیئرمین راشد علی خان نے وفاقی و صوبائی وزیر داخلہ ، وزیر اعلیٰ سندھ اورہوم سیکٹریٹری سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ کراچی میں امن و امان کے قیام کے لئے ضروری ہے کہ اسلحہ لائسنس جاری کرنے کے قانون کے سخت بنایا جائے تا کہ صرف ایک شخص کو اس کے اپنے تحفظ کے لئے چار چار اسلحہ لائسنس کے بجائے صرف ایک لائسنس جارہ کیا جائے تا کہ شہر میں اسلحہ کی بھر مار کو کم کیا جا سکے اور صرف اہل افرادجن میں جج صاحبان ،ڈاکٹرز ،انجینئر ز،وکلائ، صحافی،تاجر برادری اور دیگر معزز شہریوں کو اسلحہ لائسنس چھان بین کے ذریعے جاری کئے جائیں راشد علی خان نے کہا کہ غیر قانونی اسلحہ کی وجہ سے کراچی میں گزشتہ 30سالوں سے امن و امان کی صورتحال خراب رہی ہے انہوں نے کہا کہ نہ صرف غیر قانونی اسلحہ بر آمد کیا جائے بلکہ کراچی کے داخلی اور خارجی راستوں کی بھی سخت نگرانی کی جائے راشد علی خان نے کہا کہ مختلف سیاسی جماعتوں کے عسکری ونگز کو نہتاکیا جائے اورغیرقانونی اسلحہ جمع کرانے والوں کے لئے پر کشش مہم شروع کی جائے تا کہ شہر بھر سے رضا کارانہ طور پر لوگ تھانوں میں اسلحہ جمع کرائیں انہوں نے کہا کہ اسلحہ کے زور پر عوام سے کاریں ،موٹر سائیکلیں ،موبائل فونزاور دیگر اسٹریٹ کرائم کئے جاتے ہیں جس میں عوام لاکھوں روپئے کے قیمتی سامان سے محروم ہو جاتے ہیں راشد علی خان نے کہا کہ شہر بھر کے سی سی ٹی وی کیمروں کو بھی مکمل طور پر فعل کیا جائے تا کہ جرائم پیشہ افراد کی نشاندہی ہو سکے اور جرائم کا مکمل طورپر خاتمہ ہو سکے ۔

حافظ نعیم الرحمن کی نیپرا کے اجلاس میں شرکت،بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی مخالفت


Nepra Ijlas Pic September 8, 2016 | 7:57 PM

نیپرا کے الیکٹرک کی ظلم و زیادتی سے کراچی کے عوام کو نجات دلائے،کے الیکٹرک نے قبلہ درست نہ کیا تو دھرنا دیں گے
مقامی ہوٹل میں نیپرا کے سہ ماہی اجلاس میں شرکت کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو
کراچی :( نیوزآن لائن)جماعت اسلامی کراچی کے امیر حافظ نعیم الرحمن نے جمعرات کے روز مقامی ہوٹل میں کراچی کے عوام کی نمائندگی کرتے ہوئے نیپرا کے اجلاس میں شرکت کی۔کے الیکٹرک کے خلاف عوام کا مقدمہ پیش کیا اور بجلی مہنگی کرنے کے مطالبے کو رد کرتے ہوئے حقائق پیش کیے۔ انہوں نے کے الیکٹرک کی جانب سے بجلی کے نرخوں میں اضافے کے حوالے سے عوامی احساسات و جذبات پر مبنی اپنا مؤقف پیش کیا ۔واضح رہے کہ نیپرا نے حافظ نعیم الرحمن کی کراچی کے نمائندے کی حیثیت سے کے الیکٹرک کے خلاف فریق بننے کی درخواست منظور کی تھی۔ اجلاس کے بعد حافظ نعیم الرحمن نے میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ نیپرا کے الیکٹرک کی پشت پناہی کررہی ہے اسی وجہ سے کے الیکٹرک پرلگائے گئے جرمانے کے باوجود اور سپریم کورٹ میں مقدمہ دائر کرنے کے باوجود عوامی مسائل حل نہیں کیے جارہے،انہوںنے کہا کہ 5ارب روپے کی سبسیڈی کے فوائد کو عوام تک نہیں پہنچایا گیا ، عوام پر بجلی کی قیمت میں اضافے کا مطالبہ عوام کے ساتھ سراسر ناانصافی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کراچی کے عوام کے ساتھ ہے اورکراچی کے عوام کا مقدمہ لڑرہی ہے ۔انہوںنے کہا کہ کے الیکٹرک بجلی زیادہ تر گیس سے بنا رہا ہے۔ وفاق کی طرف سے 650 میگا واٹ سستی بجلی ،پانی سے پیدا کرکے،کے الیکٹرک کو فراہم کی جاتی ہے،کے الیکٹر ک آئی پی پی ایس سے بھی سستی بجلی خرید کر صارفین کو مہنگے ریٹ پر بیچتا ہے۔ تین ماہ سے زائد عرصہ گزر جانے کے بعد بھی کے الیکٹرک کے 52 صارفین جنہوں نے اس کے کے خلاف اوور بلنگ کے حوالے سے نیپرا میں درخواستیں دی تھیںآج تک انکا فیصلہ نہیں سُنایا گیا جبکہ قانون کے مطابق نیپراسماعت کے 15 دن تک فیصلہ سُنانے کا پابند ہے۔ پرانا ملٹی ایئر ٹیرف جس کی معیاد30 جون2016ء کو ختم ہوگئی ہے ۔نئے ملٹی ائیر ٹیرف پر نیپرا ہیرنگ میں کیوں تاخیر کر رہی ہے۔ کے الیکٹرک کراچی کی صارفین سے 15 پیسے فی یونٹ اضافی ملازمین کے نام پر آج تک اربوں روپے وصول کر رہی ہے۔ جبکہ کے۔ الیکٹرک نے اپنے ملازمین کی چھانٹی کر کے تعداد17 سے 10ہزار کر دی ہے ۔انہوں نے کہا کہ کے الیکٹرک کراچی کی عوام سے ڈبل بینک چارجز اور ناجائز میٹر رینٹ کے نام پر اربوں روپے کی وصولی کر رہا ہے۔نیپرا جو فیصلے صارفین کے حق میں کرتا ہے اس پر عمل درآمد نہیں ہوتا اور جو فیصلے کے۔الیکٹرک کے حق میں ہوتے ہیں اس پر فوراً عملدرآمد ہوجاتاہے۔انہوں نے کہا کہ کے الیکٹر ک کی نجکاری کا بنیادی مقصد اس کی کارکردگی کو بہتر بنانا اورعوام کو بلا تعطل بجلی کی فراہمی کو یقینی بنانا تھالیکن کراچی کے عوام بجلی کی لوڈ شیڈنگ ،اوور بلنگ اور بوگس بلنگ سے تنگ آچکے ہیں۔ بجلی کے بریک ڈاؤن سے کراچی کوپانی کی فراہمی بھی معطل ہو جاتی ہے ۔اس طرح کراچی کے شہری شدید گرمی سے دوہرے عذاب کا شکار ہو جاتے ہیں۔ ہم نے سپریم کورٹ میں کے الیکٹرک کے خلاف مقدمہ درج کرایا ہے، لیکن اس کے باوجود عوام کے مسائل حل نہیں کیے جارہے اور عوام کو ریلیف نہیں دی جارہی ۔انہوں نے کہا کہ اگر عوامی مسائل حل نہیں کیے گئے توہم دھرنا دیں گے اور کے الیکٹرک کے عذاب سے عوام کو چھٹکارا دلائیں گے ۔ اس موقع پر جماعت اسلامی کراچی کے ،کے الیکٹرک صارفین حقوق کے انچارج عمران شاہد اور سکریٹری اطلاعات زاہد عسکری اور دیگر بھی موجود تھے ۔

مہاجر مسائل آج بھی منہ کھولے کھڑے ہیں: ڈاکٹر سلیم حیدر


dr saleem haider mit September 8, 2016 | 7:53 PM

اسمبلی کے اندر اور اسمبلی کے باہر مہاجر مسائل کیلئے کبھی بات نہیں کی گئی جو مہاجر مینڈیٹ کے ساتھ دھوکہ ہے
مہاجر نسلوں کو تباہ کرنے والے بہروپیوں سے مہاجر قوم جلد سے جلد جان چھڑائیں: چیئرمین ایم آئی ٹی
کراچی:(نیوزآن لائن) مہاجر اتحاد تحریک کے چیئرمین ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہا ہے کہ شخصیت پرستی کی سیاست اپنے منطقی انجام کو پہنچ رہی ہے ، بدقسمتی سے 30 سال کے دوران مہاجر حقوق اور مہاجر مسائل پر بات کرنے کے بجائے شخصیت پرستی کی سیاست کو فروغ دیا گیا۔ جس نے مہاجروں کے حقوق اور مسائل پس پشت ڈال کر اپنی ذات کو اُجاگر کیا ۔ انہوں نے کہاکہ مہاجر مسائل آج بھی منہ کھولے کھڑے ہیں۔ برسہا برس سے قیادت اور کارکنوں کے مسائل پر احتجاج سے لے کر ہنگامہ آرائی تک تو کی گئی لیکن مہاجر مسائل پر نہ اسمبلی او رنہ ہی اسمبلی کے باہر کوئی بات ہوئی۔ حد تو یہ ہے کہ کراچی اور حیدرآباد کے مہاجروں کیلئے تعلیمی ادارے بھی نہیں بنائے گئے ۔ حیدرآباد کے شہریوں کا دیرینہ مسئلہ یونیورسٹی کے قیام پر آج تک کوئی توجہ دی گئی اور نہ ہی کراچی میں مہاجر نوجوانوں کیلئے یونیورسٹی اور کالج بنائے گئے۔ انہوں نے کہاکہ مہاجروں کو جس طرح بدنام اور رسوا کیا گیا ہے اس سے سب کے سر شرم سے جھک گئے ہیں۔ پاکستان بنانے والوں کی اولادوں پر پاکستان دشمنی کے الزام کے بعد ہمارے آباؤ اجداد کی روحیں بھی تڑپ اُٹھی ہوں گی۔ لیکن وہ جوکہ شخصیت پرستی کی سیاست کو پروان چڑھانے میں آگے آگے تھے آج وہی پاکستان کی سالمیت کے دعویدار بنے بیٹھے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ مہاجروں کی نسلوں کو تباہ وبرباد کرنے والے بہروپیوں کیخلاف قوم کوغیرمعمولی فیصلے کرنا ہوں گے۔ اگر ابھی مصلحت اور منافقت کا ساتھ نہیں چھوڑا گیا تو پھر مہاجروں کی داستان بھی نہ ہوگی داستانوں میں۔

جامعہ کراچی: شعبہ سماجی بہبود کی 55 ویں سالگرہ کے موقع پر دوروزہ کانفرنس کی افتتاحی تقریب


Social Work Final Pic for Publication September 8, 2016 | 7:25 PM

جامعہ کراچی: شعبہ سماجی بہبود کی 55 ویں سالگرہ کے موقع پر دوروزہ کانفرنس کی افتتاحی تقریب
=====
کراچی:(نیوزآن لائن)کسی بھی قوم کی ترقی اور اس کی بقا کا دار و مدار اسی بات پر ہوتا ہے کہ اس کے افراد اپنے معاشرتی فرائض کی ادائیگی کس حد تک کرتے ہیں، کیونکہ وہ اعمال اور ذمہ داریاں صرف انہی کی ذات تک محدود نہیں ہوتی بلکہ ایک وسیع دائرہ ہوتا ہے جس پر ان کے اثرات مرتب ہوتے ہیں۔سوشل ورک صرف ویلفیئر کے کام تک محدود نہیں بلکہ یہ سائنسی طریقوں سے سماجی مسائل کا حل نکالنے کا ذریعہ بھی ہے۔عصر حاضر میں سچائی اور ایمانداری سے سماج کے لیے کام کرنے والے سوشل ورکرز کی سخت ضرورت ہے۔نہایت افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ ہمارے یہاں سماجی خدمات حکومتی ترجیحات میں شامل نہیں ہے جو لمحہ فکریہ ہے ۔ہماری نوجوانسل کو چاہیئے کہ سماجی ترقی اور تبدیلی کے لیے اپنا مثبت کردار اداکرے۔تعلیم یافتہ ہونے کے باوجود اگر ہمارا کردار اچھا نہ ہو اور بحیثیت شہری ہمیں اجتماعی زندگی میں رہنے کے بنیادی اصول ہی معلوم نہ ہوں تو ہم اس تعلیم کے باوجود بد تہذیب اور غیر متمدن کہلائیں گے۔ جس قوم کے لوگوں میں جس قدر معاشرتی آداب موجود ہوتے ہیں وہ قوم اسی قدر مہذب اور ترقی یافتہ خیال کی جاتی ہے۔ان خیالات کا اظہار وزیر برائے سوشل ویلفیئر حکومت سندھ محترمہ شمیم ممتاز ، سیکریٹری سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ گورنمنٹ آف سندھ شارق احمد،جامعہ کراچی کے شعبہ سماجی بہبود کی چیئر پرسن پروفیسر ڈاکٹر نسرین اسلم شاہ اوررئیس کلیہ سماجی علوم پروفیسر ڈاکٹر مونس احمر نے جامعہ کراچی کے شعبہ سماجی بہبود کی 55 ویں سالگرہ کے موقع پر شعبہ کے زیر اہتمام اور ہائرایجوکیشن کمیشن پاکستان،سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ حکومت سندھ اور انجمن ترقی نسواں کے اشتراک سے سینٹر آف ایکسلینس فارویمنز اسٹڈیز کے عبدالستار ایدھی سیمینار ہال میں منعقدہ دوروزہ کانفرنس بعنوان: ”سوشل ویلفیئر :پاکستان میں سماجی بہبود اور ویلفیئر کو درپیش چیلنجز” کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ رئیس کلیہ سماجی علوم پروفیسر ڈاکٹر مونس احمر نے مزید کہا کہ ہمارے یہاں ایک بڑی تعداد کو سماجی طور پر نظر اندازکیا جارہاہے جس میں غربت اور بچوں کی مشقت جیسے دیگر مسائل شامل ہیں جس کا سد باب وقت کی اہم ضرورت ہے۔مثبت نتائج حاصل کرنے کے لئے نظام پر تنقید کے بجائے اصلاحات اور بہتری کی ضرورت ہے۔ہمیں ان مسائل پر توجہ دینے کی ضرورت ہے قبل اس کے کہ یہ اپنے عروج پر پہنچ جائیں۔شعبہ سماجی بہبود کی چیئر پرسن پروفیسر ڈاکٹر نسرین اسلم شاہ نے کہا کہ شعبہ سماجی بہبود انتظامی اُمور اور مشاورت کی پیشہ ورانہ تربیت فراہم کرتا ہے جو کہ پس ماندہ افراد کے لئے بنیادی مدد کی خدمات فراہم کرنے کے منظم طریقہ کار کے مطالعے پر مرکوز ہے جس میں سماجی بہبود کی پالیسی میں دی گئی ہدایات پر عمل، کیس ورک کی منصوبہ بندی، سماجی کائونسلنگ اور مداخلتی حکمت عملی، انتظامی طریقہ کار اور ضوابط اور مخصوص خدمات کے حوالے سے جیسے کہ بچوں کی نگہداشت اور فلاح، خاندان کی بہبود، آزمائشی تقرر، روزگار کی فراہمی اور معذور افراد کی مشاورت شامل ہیں۔ سماجی تحقیق اس شعبہ کا طرۂ امتیاز ہے۔ ماسٹرز کی سطح پر تحقیقی مقالے تحریر کرنا انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔ تحقیق کے موضوعات مختلف النوع ہوتے ہیں جو تقریباً تمام قابل فہم سماجی مسائل کا احاطہ کرتے ہیں۔اس کے علاوہ شعبہ سماجی بہبود کے طلباء و طالبات بھی مختلف نوعیت کے تحقیقی کاموں میں حصہ لیتے رہتے ہیں۔ موجودہ سماجی مسائل کو مدنظر رکھتے ہوئے طلباء و طالبات نے ٣٦٥٠ افراد کا ڈیٹا جمع کیا ہے جس کو ”کراچی کی کچی آبادیاں: ایک جائزہ” کے نام سے کتابی شکل میں شائع کیا جائے گا۔ شعبے کے طلباء و طالبات کو متحرک رکھنے کے لئے مختلف غیر نصابی سرگرمیاں منعقد کی جاتی رہی ہیں جیساکہ سماجی بہبود کے طلباء و طالبات نے ٤ سال تک مسلسل تصویری مقابلہ بعنوان ”کراچی ہماری نظر میں” منعقد کیا جس میں کراچی کو تصویری شکل میں مختلف پہلوئوں سے دکھایا گیا اور اس کاوش کو کتابی شکل میں بعنوان ”شہرِ قائد کے ہنرمند لوگ” شائع کیا گیا۔ تصویری نمائش کا یہ سلسلہ ابھی بھی جا ری ہے، شعبے کے ٥٥ سال مکمل ہونے کے موقع پر آج یہ تصویری مقابلہ دوبارہ منعقد کیا جا رہا ہے۔ اس کے علاوہ ہر سال شعبے کے فارغ التحصیل طلباء و طالبات پاکستان کے ہر شہر میں سرکاری، غیر سرکاری اور بین الاقوامی اداروں کے مختلف شعبہ جات میں سوشل کیس ورکر، کمیونٹی آرگنائزر، مشاورت دینے والے(کونسلر)، کے طور پر اپنی خدمات بھرپور طریقے سے انجام دے رہے ہیں۔ اس موقع پر پاکستان جرنل آف اپلائیڈ سوشل سائنسز کے چوتھے شمارے کا اجرائ، تصویری مقابلہ ”کراچی ہماری نظر میں” اور پاکستانی ثقافتی شو بھی منعقد کیا گیا جس کو حاضرین نے بیحد سراہا۔
====
جامعہ کراچی: سنڈیکیٹ کا اجلاس
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد قیصر کی صدارت میںگذشتہ روز سینڈیکیٹ کا اجلاس منعقد ہوا جس میںسنڈیکیٹ کے اجلاس منعقدہ ٦جون٢٠١٦ء کی روداد کی توثیق کی گئی اور قراردادوں پر عملدرآمد کی رپورٹ کی منظوری دی گئی۔ پروفیسر ڈاکٹر فرح اقبال کوشعبہ نفسیات جبکہ پروفیسر منیرہ نسرین انصاری کو شعبہ لائبریری اینڈ انفارمیشن سائنس کا چیئر پرسن مقررکرنے کی منظوری دی گئی۔شعبہ سماجی بہبود کے ڈاکٹر صابر مائیکل کے کیس کو اگلی سنڈیکیٹ تک ملتوی کردیا گیا ہے۔جامعہ کراچی کے ملازمین کو اوورٹائم کی ادائیگی کے معاملے پر ایک کمیٹی تشکیل دے گئی ہے جو اپنی سفارشات شیخ الجامعہ کو پیش کریں گی۔کمپیوٹر آپریٹر سے متعلق فیصلہ کیا گیا کہ ایسے کمپیوٹر آپریٹر جنہوں نے ڈی آئی ٹی سندھ بورڈ آف ٹیکنیکل ایجوکیشن یا یونیورسٹی کے تسلیم شدہ اداروں سے کیا ہے ان کی موجودہ حیثیت برقراررہے گی جبکہ ایسے کمپیوٹر آپریٹر جنہوںنے ڈی آئی ٹی سندھ بورڈ آف ٹیکنکل ایجوکیشن یا یونیورسٹی کے تسلیم شدہ اداروں سے نہیں کیا ان کو مہلت دی گئی ہے کہ وہ جلد ازجلد اپنا ڈی آئی ٹی مکمل کرلیں۔جامعہ کراچی کے نرسری کے عقب میں قائم مکانات جامعہ کراچی کی ملکیت ہے اور اس میں رہائش پذیر ملازمین سے ہائوس سیلنگ اور یوٹیلیٹی چارجز وصول کئے جائیں گے۔اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ جامعہ کراچی میں قائم شدہ یوبی ایل کی برانچ،بوتھ اورایم سی بی بوتھ کے سلسلے میں معاہدے کے لئے ایک کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے جو نیامعاہدہ تیار کرکے سنڈیکیٹ کے آئندہ اجلاس میں پیش کرے گی ۔جامعہ کراچی میں قائم انسٹی ٹیوٹ اور تجارتی مراکز سے یوٹیلیٹی بلز تجارتی نرخوں پر وصول کرنے کی منظوری دی گئی ۔محترمہ فرحین نوید کو جامعہ کراچی کی اعزازی ڈگری دیئے جانے کی منظوری نہیں دی گئی۔شعبہ ویژول اسٹڈیز کی چیئر پرسن محترمہ دریہ قاضی کی موجودہ حیثیت برقراررہے گی اور یہ آسامی مشتہر کی جائے گی۔اسمبلی کی قرارداد کے مطابق جامعہ کراچی میں ”صوبھوگیانچندانی” چیئر کے قیام کی منظوری دی گئی۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ سیرت چیئر کو فعال کیا جائے گا اور اس سلسلے میں فنڈز کی فراہمی کے لئے ہائرایجوکیشن کمیشن سے رابطہ کیا جائے گا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جامعہ کراچی: سابق شیخ الجامعہ ڈاکٹر عبدالوہاب کی یاد میں تعزیتی اجلاس آج ہوگا
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے سابق شیخ الجامعہ پروفیسر ڈاکٹر عبدالوہاب کی یاد میںایک تعزیتی اجلاس آج بروزجمعہ09 ستمبر 2016 ء کو صبح 11:00 بجے کلیہ سماجی علوم کی سماعت گاہ میں منعقد ہوگا۔ تمام تدریسی ،غیر تدریسی عملے اور طلباوطالبات سے شرکت کی درخواست ہے۔

معاشرے کی تباہی کی وجہ اسلام سے دوری ہے،مفتی محمد نعیم


jamia banoria September 2, 2016 | 8:50 PM

علماء کرام معاشرے میں تیزی سے پھیلنے والی برائیوں کے سدباب کیلئے کردار ادا کریں
اسلامی طرز زندگی کو عام کرکے ہی مغربی تہذیبی یلغار کا مقابلہ کیا جاسکتاہے،علماء کے وفد سے گفتگو
کراچی:(نیوزآن لائن) جامعہ بنوریہ عالمیہ کے رائیس وشیخ الحدیث مفتی محمدنعیم نے کہاکہ امت مسلمہ کے زوال اور معاشرے کی تباہی کی وجہ اسلام سے دوری ہے،مغرب اور اس کے آلہ کار مسلم معاشرے کو مادر پدر آزادبنانے کے مواقعوں کی تلاش میں ہیں،مختلف ذرائع سے بے ہودگی اور مغربی کلچر کے فروغ دیا جارہے جس کے باعث نسل نو میں معاشرتی خرابیاں پیداہورہی ہیں ،علماء کرام معاشرے میں تیزی سے پھیلنے والی برائیوں کے سدباب کیلئے کردار ادا کریں کیونکہ اسلامی طرز زندگی کو عام کرکے ہی مغربی تہذیبی یلغار کا مقابلہ کیاجاسکتاہے۔جمعہ کو جامعہ بنوریہ عالمیہ آئے ہوئے علماء کے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے رئیس وشیخ الحدیث مفتی محمدنعیم نے کہاکہ دنیا بھر میں اسلام اور مسلمانوں کے خلاف پروپیگنڈوں کے باوجو دآئے روز لوگ جوق در جوق اسلام داخل ہورہے ہیں اسلام دشمن قوتیں جان چکی ہیں ظلم وتشدد اور پروپیگنڈوں سے اسلام کی تبلیغ کو نہیں روکا جاسکتا، جس کیلئے منظم منصوبہ بندھی کے تحت پوری دنیا میں مسلمانوں کے کلچر کو مسخ کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں اور تعلیمی اداروں میں فحاشی و عریانی کو پروان چڑھا یا جارہا ہے،جس کے باعث آئے روز انسانیت سوز واقعات پیش آرہے ہیں اور معاشرے سے صبروبرداشت ختم ہوتاجارہاہے ، انہوں نے کہاکہ وطن عزیز میں بھی منظم منصوبے کے تحت کلچر کے نام پر ناچ گانے کی محفلوں کا انعقاد کیا جارہاہے تو کبھی تبدیلی کے نام پر قوم میں بے حیائی کو فروغ دینے کی کوششیں کی جاتی ہیں ،انہوںنے کہاکہ اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات ہے قرآن مجید انسانیت کی رہنمائی کیلئے دنیا میں آیا آج سوچی سمجھی سازش کے تحت نسل نو کو قرآن مجید سے دورکرکے مختلف قسم کی وہیات میں لگایا جارہاہے، انہوں نے کہاکہ موجودہ معاشرتی مسائل سے نکلنے کیلئے اسلامی طرز زندگی کو عام کرنے کی ضرورت ہے، انہوںنے کہاکہ علماء کی ذمہداری بنتی ہے کہ وہ حکمت او ربصیرت کے ساتھ دین اسلام کی تبلیغ کریں اور معاشرے کے اندر تیزی سے پھیلنے والی بیماریوں کے سدباب کیلئے کردار ادا کریں، انہوںنے کہاکہ آج پوری دنیا میں مسلم ممالک کے خلاف سیاسی و معاشی ڈھانچے اور اجتماعی نظام میں یہودیوں و صلیبی جنگ میں مصروف ہیں ،نام نہاد این جی اوزکے زیر انتظام چلنے والے تعلیمی اداروں میں نئی نسل کے ذہن، عقیدے اور اخلاق برباد کئے جارہے ہیں،اسلامی طرز زندگی کو عام کرکے ہی مغربی تہذیبی یلغار کا مقابلہ کیا جاسکتاہے۔

بعض قوتیں ایم کیوایم پاکستان کو اس کے سیاسی اور جمہوری حق سے محروم رکھ رہی ہیں۔ ایم کیوایم رابطہ کمیٹی پاکستان


MQM-flag-040413 September 2, 2016 | 8:23 PM

سادہ لباس پولیس اہلکاروں کی جانب سے ایم کیوایم لیاقت آباد ٹائون کے
آرگنائزر اسماعیل کی غیر قانونی گرفتاری پر رابطہ کمیٹی پاکستان کااظہار مذمت
ہزاروں کارکنان کی گرفتاریوں کے باوجود قانون نافذ کرنے والے ادارے اور حکومت و انتظامیہ اب تک یہ بتانے
سے قاصر ہے کہ انہیں ایم کیوایم کے کتنے کارکنان مطلوب اور غیر مطلوب ہیں، رابطہ کمیٹی پاکستان
بعض قوتیں ایم کیوایم پاکستان کو اس کے سیاسی اور جمہوری حق سے محروم رکھ رہی ہیں۔ ایم کیوایم رابطہ کمیٹی پاکستان
ایم کیوایم کے ذمہ داران و کارکنان کی سلب کی گئی سیاسی اور جمہوری آزادی بحال کی جائے، گرفتار شدگان کو فی الفور رہاکیاجائے، رابطہ کمیٹی پاکستان
کراچی:(نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ رابطہ کمیٹی پاکستان نے سادہ لباس پولیس اہلکاروں کی جانب سے ایم کیوایم لیاقت آباد ٹائون کے آرگنائزر اسماعیل کی غیر قانونی گرفتاری کی شدید مذمت کی ہے اور کہا ہے کہ ایم کیوایم کے ذمہ دارن و کارکنان کی بلاجواز گرفتاریوں کا سلسلہ فی الفوربند کرایاجائے ۔ ایک مذمتی بیان میں رابطہ کمیٹی پاکستان نے کہاکہ کراچی آپریشن کی آڑ میں پولیس اور سادہ لبا س اہلکاروں کی جانب سے ایم کیوایم کے ذمہ داران و کارکنان کے گھروں پر ہزاروں چھاپہ مار کاروائیاں کی گئیں اور ہزاروں ہی کارکنان و ذمہ داران کو گرفتار کیا گیا اور انہیں جھوٹے مقدمات میں ملوث کرکے پابند سلاسل کردیا گیا لیکن قانون نافذ کرنے والے ادارے اور حکومت و انتظامیہ اب تک یہ بتانے سے قاصر ہیں کہ انہیں ایم کیوایم کے کتنے کارکنان مطلوب اور غیر مطلوب ہیں ۔ رابطہ کمیٹی پاکستان نے کہاکہ ایم کیوایم پاکستان ،پرامن سیاسی اور جمہوری جماعت ہے اور ملک کے آئین و قانون میں رہتے ہوئے اپنے سیاسی ، سماجی اور معاشی حقوق کی جدوجہد کررہی ہے مگر ایم کیوایم کے ذمہ داران و کارکنان کے گھروں پر چھاپے ، اس کی سیاسی سرگرمیوں پر پابندی سے صاف ہوتا ہے کہ بعض قوتیں ایم کیوایم پاکستان کو اس کے سیاسی اور جمہوری حق سے محروم رکھ رہی ہیں اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کی مرتکب ہورہی ہیں جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔ رابطہ کمیٹی پاکستان نے وزیراعظم نواز شریف ، چیف آف آرمی اسٹاف جنرل راحیل شریف اور وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ سے مطالبہ کیا کہ ایم کیوایم لیاقت آباد ٹائون کے آرگنائزر اسماعیل کو سادہ لباس اہلکاروں کی جانب سے بلاجواز گرفتارکرنے کا سختی سے نوٹس لیاجائے ، ایم کیوایم کے ذمہ داران و کارکنان کی سلب کی گئی سیاسی اور جمہوری آزادی بحال کی جائے، گرفتار شدگان کو فی الفور رہاکیاجائے اور ایم کیوایم کو ملک کے آئین و قانون میں رہتے ہوئے سیاسی اور جمہوری حق فراہم کیاجائے ۔

جامعہ کراچی: آفس آف ریسرچ اینوویشن اینڈ کمرشلائزیشن کے زیر اہتمام اجلاس 05 ستمبر کو ہوگا


September 2, 2016 | 8:16 PM

جامعہ کراچی: آفس آف ریسرچ اینوویشن اینڈ کمرشلائزیشن کے زیر اہتمام اجلاس 05 ستمبر کو ہوگا
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی میں06 اور 07 دسمبر 2016 ء کو منعقد ہونے والے پہلے اینوینشن ٹو اینوویشن سمٹ سندھ 2016 ء کے انعقاد سے متعلق ایک اہم اجلاس جامعہ کراچی کے وائس چانسلر سیکریٹریٹ میں بروز پیر 05 ستمبر 2016 ء کو دوپہر 2:30 بجے منعقد ہوگا ۔اجلاس میں شیخ الجامعہ پروفیسر ڈاکٹر محمد قیصر،رجسٹرار پروفیسر ڈاکٹر معظم علی خان ،ڈائریکٹر آفس آف ریسرچ اینویشن اینڈ کمرشلائزیشن جامعہ کراچی پروفیسر ڈاکٹر عالیہ رحمن ،مشیر شیخ الجامعہ برائے سیکورٹی پروفیسر ڈاکٹر خالد عراقی ،رئیس کلیہ سماجی علوم پروفیسر ڈاکٹر مونس احمر،مشیر امورطلبہ پروفیسر ڈاکٹر انصر رضوی ،انچارج گیسٹ ہائوس پروفیسر ملاحت کلیم شیروانی اورانچارج گرلز ہاسٹل پروفیسرڈاکٹر انیلا امبر ملک شرکت کریںگی۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جامعہ کراچی: بی اے ،بی کام اور بی اوایل پرائیوٹ کے رجسٹریشن فارم جمع کرانے کی تاریخ میں توسیع
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے ناظم امتحانات پروفیسر ڈاکٹر ارشد اعظمی کے اعلامیہ کے مطابق بی اے،بی کام،بی اوایل کے پرائیوٹ اور امپرومنٹ آف ڈویژن کے لئے بی اے ،بی کام اور بی ایس سی کے رجسٹریشن فارم جمع کرانے کی تاریخ میں 03 اکتوبر 2016 ء تک توسیع کردی گئی ہے۔طلبہ اپنے رجسٹریشن فارم 3500/= روپے فیس کے ساتھ جمع کراسکتے ہیں، فارم کے حصول اور جمع کرانے کے لئے جامعہ کراچی کے سلورجوبلی گیٹ پر واقع بینک کائونٹرز سے رجوع کرسکتے ہیں۔ واضح رہے کہ مضمون کی تبدیلی کے لئے بھی 700/= روپے فیس کے ساتھ انہی تاریخوں میں فارم جمع کرائے جاسکتے ہیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جامعہ کراچی: شعبہ سماجی بہبود کی 55 ویں سالگرہ کے موقع پر دوروزہ کانفرنس 08 اور 09 ستمبر کو منعقد ہوگی
کراچی:(نیوزآن لائن)جامعہ کراچی کے شعبہ سماجی بہبود کی 55 ویں سالگرہ کے موقع پر شعبہ کے زیر اہتمام اور ہائرایجوکیشن کمیشن پاکستان،سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ حکومت سندھ اور انجمن ترقی نسواں کے اشتراک سے دوروزہ کانفرنس بعنوان: ”سوشل ویلفیئر :پاکستان میں سماجی بہبود اور ویلفیئر کو درپیش چیلنجز” 08 اور 09 ستمبر 2016 ء کو جامعہ کراچی کے سینٹر آف ایکسلینس فارویمنز اسٹڈیز کے عبدالستار ایدھی سیمینار ہال میں منعقد ہوگی۔کانفرنس کی افتتاحی تقریب کی 08 ستمبر کو صبح 10:00 بجے منعقد ہوگی جس کی صدارت شیخ الجامعہ پروفیسر ڈاکٹر محمد قیصر کریں گے جبکہ وزیر برائے سوشل ویلفیئر حکومت سندھ محترمہ شمیم ممتاز مہمان خصوصی ہوں گی۔کانفرنس میں سینٹر آف ایکسلینس فارویمنز اسٹڈیز کے جرنل آف اپلائیڈ سوشل سائنسز کے چوتھے شمارے کا اجراء کیا جائے گاجبکہ پوسٹر سازی کامقابلہ اور پاکستانی ثقافتی شو کا بھی انعقاد کیا جائے گا۔

بارشوںکے بعدشہرمیںبجلی کافراہمی منقطع ہونا کے الیکٹرک کی نااہلی و ناکامی ہے،حق پرست اراکین سندھ اسمبلی


MQM-flag-040413 August 28, 2016 | 8:55 PM

کراچی میںبارشوںکے بعد مختلف علاقوں میں کرنٹ لگنے سے متعددافرادکے جاں بحق اور ایک سو اسی سے زائد فیڈرٹریپ ہونے سے بجلی منقطع ہونے پرحق پرست اراکین اسمبلی کااظہارمذمت
بارشوںکے بعدشہرمیںبجلی کافراہمی منقطع ہونا کے الیکٹرک کی نااہلی و ناکامی ہے،حق پرست اراکین سندھ اسمبلی
وزیراعلیٰ سندھ سیدمرادعلی شاہ شہرمیں کرنٹ لگنے سے شہریوںکی ہلاکت اورکے الیکٹرک کی نااہلی وناکامی کانوٹس لیں
کراچی:(نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے حق پرست اراکین سندھ اسمبلی کراچی میںحالیہ بارشوںکے بعد مختلف علاقوںمیںکرنٹ لگنے سے متعددافرادکے جاںبحق اور 180سے زائدفیڈرٹریپ ہونے اوراس کے نتیجے میںبجلی کی فراہمی منقطع ہونے کی شدیدالفاظ میںمذمت کی ہے اوراسے کے الیکٹرک کی نااہلی و ناکامی قراردیاہے۔ایک بیان میںحق پرست اراکین سندھ اسمبلی نے کہاکہ کراچی میںہفتہ کی شام سے شروع ہونیوالی بارشوںنے کے الیکٹرک کاپول کھول دیا ہے۔انہوںنے کہاکہ شہرمیںبارشوںکے بعدبجلی کی فراہمی کی منقطع ہونے سے کے الیکٹرک انتظامیہ کی کارکردگی بھی سوالیہ نشان بن چکی ہے جس نے شہریوںکوشدیدعذاب میںمبتلاکررکھاہے۔انہوںنے کہاکہ کراچی پاکستان کاسب بڑاشہراورقومی خزانے میں70فیصدسے زائدریونیوجمع کروانے والا میگاسٹی ہے اس شہرمیںبجلی کے ناقص انتظام نے شہریوںکی زندگی اجیرن بنارکھی ہے جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔انہوںنے کہاکہ مختلف علاقوںمیںکرنٹ لگنے سے متعددافرادکے جاںبحق ہوچکے ہیںجبکہ شہربھرمیںگذشتہ شام سے 180سے زائدفیڈربندپڑے ہیںاورشہرکابیشترحصہ اندھیرے میںڈوباہواہے جبکہ شہرمیںبجلی کی فراہمی بندہونے سے پانی کی فراہمی بھی متاثر ہے جس کے باعث شہریوںکوشدید مشکلات وپریشان سامناہے اوران کے روزمرہ کے معمولات زندگی شدیدمتاثرہیں۔حق پرست اراکین سندھ اسمبلی نے وزیراعلیٰ سندھ سیدمرادعلی شاہ سے مطالبہ کیاکہ کرنٹ لگنے سے شہریوں کی ہلاکت اورکے الیکٹرک کی نااہلی وناکامی کانوٹس لیاجائے ۔