: تازہ ترین

تازہ ترین ویڈیو

بھارتی حکمران بھول جائیں کہ وہ کشمیریوں کو بنوکِ بندوق اور بزورِ شمشیر زیر اور زِچ کرسکتے ہیں۔ محمد اعظم انقلابی


sirinagar September 12, 2016 | 5:52 PM

سرینگر:(نیوزآن لائن) جموںکشمیر محاذ آزادی کے سرپرست محمد اعظم انقلابی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ استعماری مزاج کے حامل بھارتی حکمران بھول جائیں کہ وہ کشمیریوں کو بنوکِ بندوق اور بزورِ شمشیر زیر اور زِچ کرسکتے ہیں۔ تمہیں محاذِ رائے شماری کی مزاحمتی تحریک راس نہیں آئی۔ نتیجہ یہ نکلا کہ کشمیر کے مجاہد دانشور بطلِ حریت مقبول بٹ نے 1966ء میں عسکری مزاحمت کا فلسفہ پیش کرتے ہوئے کشمیر کے انقلاب پسند نوجوانوں کو مزاحمت کی نئی اداؤں کے ساتھ صف بندی کرنے کی دعوت دی۔
بھارتی حکمرانوں کو میرواعظ مولوی فاروق، عبد الغنی لون صاحب، ڈاکٹر قاضی نثار، مقبول ملک، جلیل اندرابی، ایڈووکیٹ حسام الدین جیسے ہر دلعزیز کشمیری مزاحمتی رہنماؤں کی سیاست بھی راس نہیں آئی۔ نتیجہ یہ نکلا کہ اِس قوم میں اشفاق مجید وانی، مقبول الٰہی اور برہان وانی جیسے اولوالعزم کمانڈر پیدا ہوئے جنہوں نے غالب قوم کے ظلم وعدوان اور جبرواستبداد کے خلاف موثر مُزاحمت کے گُر سکھائے۔
آج پوری قوم پچھلے دو مہینوں سے سڑکوں پر پُرامن مُزاحمتی اجتماعات میں داستانِ مظلومیت سنا رہی ہے۔ میں کشمیر کے علمائے دین، اساتذہ اور وکلا حضرات سے اپیل کرتا ہوں کہ آپ اِن پُر امن اجتماعات میں اپنی فصیح اور بلیغ تقاریر میں بیرونی دنیا خاص کر امریکہ کو بتائیں کہ کشمیر ایک نیوکلیئر فلیش پوئنٹ ہے، پورای کشمیر بارود کے ڈھیر پر کھڑا ہے۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ دنیا کی بڑی طاقتیں مسئلہ کشمیر کے پُرامن تصفیہ کیلئے ضروری اقدامات کریں۔
ہمیں معلوم نہیں کہ افغانستان کے صدر اشرف غنی صاحب دہلی کا دورہ کرکے کیا گُل افشائی کریں گے۔ اُنہیں معلوم ہونا چاہئے کہ افغانستان کے 70یا 80فیصدی ولاقے پر طالبان مجاہدین کا کنٹرول ہے۔ وہ نئی دہلی میں ایسی کوئی بات نہ کہیں جس سے اُن کے لئے کابل اور اسلام آباد میں مشکلات پیدا ہوں۔ پچھلے 37سال کی مُزاحمت کے دوران افغانستان اور پاکستان حالات کی مجبوری کی وجہ سے اتنے قریب آئے ہیں کہ وہ ایک دوسرے کیلئے لازم و ملزوم بن گئے ہیں۔ میں افغانستان اور پاکستان کے عُلمائے دین اور دانشوروں سے پُر زور اپیل کرتا ہوں کہ وہ جگہ جگہ علمی کانفرنسوں کا انعقاد کریں اور پوری دنیا کو بتائیں کہ ایشیا میں امن و سکون کا ماحول پیدا کرنے کے لئے ضروری ہے کہ افغانستان سے بیرونی فوجوں کا انخلا ہوجائے۔

بھارتی حکمرانوں کا یہ الزام کہ پاکستان ہی کشمیر میں جذبات کی نمود کی تحریک میں مُحرکِ اوّل کی حیثیت رکھتا ہے دُرست نہیں ہے۔ سیدالطاف اندرابی


sirinagar August 28, 2016 | 2:38 PM

سرینگر:(نیوزآن لائن) جموںکشمیر محاذ آزادی کے سرپرست محمد اعظم انقلابی اور محاذکے صدر سیدالطاف اندرابی نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ بھارتی حکمرانوں کا یہ الزام کہ پاکستان ہی کشمیر میں جذبات کی نمود کی تحریک میں مُحرکِ اوّل کی حیثیت رکھتا ہے دُرست نہیں ہے۔ سابق وزیر اعظم پنڈت جواہرلال نہرو کے کشمیر سے متعلق وعدہ رائے شماری اور اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے باوجود بھارتی حکمرانوں نے استعماری اور توسیع پسندانہ عزائم کی وجہ سے ہی ایفائے عہد کا راستہ اختیار کرنے کے بجائے کشمیر میں اپنی برہنہ خون آلود تلوار کو ہی حاکِم، حُکم اور حَکم قرار دیا اور یہاں قتل وغارت گری کے ذریعے کشمیریوں کو زیر اور زچ کرنے کی مذموم پالیسی اختیار کی۔
بھارتی مستعمرین کے جارحانہ مزاج نے ہی ہمارے بطلِ حریت مقبول بٹ، فرزندِ کشمیر افضل گورو، میرواعظ مولوی فاروق، خواجہ عبدالغنی لون، ڈاکٹر قاضی نثار، مقبول ملک، جلیل اندرابی، شیخ عبدالعزیز، ایس حمید، ایڈووکیٹ حسام الدین، مولانا شوکت شاہ اور ڈاکٹر غلام قادر وانی جیسے ہر دلعزیز اُولوالعزم مُزاحمتی قائدین کو درجۂ شہادت تک پہنچایا۔ کیا یہ حقیقت نہیں کہ بھارتی بندوقوں نے ہی یہاں گاؤکدل، پتھری بل، کپوارہ، سوپور، ہندوارہ غرضیکہ کشمیر کے بے شمار مقامات پر جلیاوالا باغ کے مناظر پیش کئے۔ یوں ہمارے لاکھوں جگرپارے راہِ حق وحریت میں کام آئے۔ وہ قبروں کی زینت بنے۔
بھارتی مستعمرین کی شقاوتِ قلبی، عداوتِ حق اور خونخواری نے ہی یہاں کشمیر کے باغیرت صوفی منش لوگوںکو سڑکوں پر آکر اپنے جذبات کا اظہار کرنے پر آمادہ کیا۔ بھارتی حکمرانوں کے تکبر اور تمرد نے ہی مسائل کو پیچیدہ بنادیا، پاکستان ایٹمی طاقت کی حیثیت سے کشمیر کے محاذ پر محتاط رویہ اختیار کئے ہوئے ہے۔
اِس خطرناک صورتحال سے بچنے کی واحد صورت یہ ہے کہ آپ فوراً مزاحمتی رہنماؤں قبلہ سید علی گیلانی صاحب، میر واعظ عمرفاروق صاحب، یٰسین ملک صاحب اور شبیر احمد شاہ صاحب جیسے سینئر رہنماؤں کو اعتماد میں لیتے ہوئے کشمیر میں دیوارِ برلن (کنٹرول لائن) کے انہدام، آرپار فوجوں کے انخلا اور متحدہ کشمیر میں کشمیر پارلیمنٹ کے قیام کے لئے راستہ استوار کریں۔ کشمیر پارلیمنٹ کے معزز ارکان حقِ خودارادیت کے اصول کے تحت کشمیر کے سیاسی مستقبل کا تعّین کریں گے۔ اﷲ تمہیں بات سمجھنے کی توفیق عطا کرے، آمین۔

ایم کیو ایم کینیڈا ٹورنٹو چیپٹر کے تحت مسی ساگا میں ماورائے عدالت قتل ، لاپتہ کارکنان کے لئے احتجاج


mqm canada August 21, 2016 | 9:27 PM

رکن رابطہ کمیٹی حیدر عباس رضوی ، نگراں ڈاکٹر ندیم احسان ، سینٹرل آرگنائزر آصف قاضی کا مظاہرین سے خطاب
ایم کیو ایم کے کارکنان ، ہمدرد اور بڑی تعداد میں مقامی شہریوں نے مظاہرے میں شرکت کی اور ظالمانہ رویوں کی بھرپور مذمت کی
کراچی میں تادم مرگ بھوک ہڑتالی ساتھیوں کو خراج تحسین پیش کیا گیا اور حکومت سے مطالبہ کیا گیا کہ جبر کے سلسلے کو ختم کریں
ٹورونٹو :( نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کینیڈا نے گزشتہ ہفتے مسی ساگا میں میں بھرپور عوامی طاقت کا مظاہرہ کیا ۔ اجتماع ٹورونٹو کے علاقے مسی ساگا میں منعقد کیا گیا جس میں پاکستان سے تشریف لائے ہوئے سابقہ ممبر قومی اسمبلی ، اییم کیو ایم کے مرکزی رہنما اور رابطہ کمیٹی کے رکن حیدر عباس رضوی نے فکر انگیز خطاب کیا۔ انہوں نے اپنے پر مدلل خطاب میں تحریک پاکستان سے لے کر اب تک کی تاریخ اور بانیان پاکستان کی قربانیوں کا ذکر کرتے ہوئے جبرو ظلم کے حالیہ واقعات کی شدید الفاظ میں مذمت کی ۔ اس کے ساتھ انہوں نے اس عزم کا بھی اعادہ کیا کہ ایم کیو ایم کے کارکنان دنیا بھر میں قائدِ تحریک کے فلسفے اور نظریئے پر کاربنداور متحدہ ہیں ، اس موقع پر ایم کیو ایم کینیڈا کے نگراں ڈاکٹر ندیم احسان نے بھی خطاب کیاور کہا کہ متحدہ قومی موومنٹ کی ٣٢سالہ جدوجہد قائدِ تحریک الطاف حسین کی قربانیوں اور تربیت کا مظہر ہے اسے کوئی طاقت زورزبردستی ختم نہیں کر سکتی۔ ایم کیو ایم کینیڈا کے سنٹرل آرگنائزر آصف قاضی نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایم کیو ایم پر مسلط کئے گئے آپریشن کی آڑ میں اردو بولنے والے اور پاکستان کے بانیان کے اولادوں کی نسل کشی کی ہر گز اجازت نہیں دی جائے گی ۔ مسی ساگا شہر میں منعقد کئے گئے اس مظاہرے میں مظاہرین نے اپنے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھائے ہوئے تھے جس میں حکومت سے مطالبہ کیا گیا تھا کہ ماورائے عدالت قتل، بہیمانہ تشدد اور لاپتہ کارکنان کی فوری بازیابی جیسے نعرے درج تھے۔ مقریرین نے اپنی تقاریر میں کہا کہ مہاجر آج تک اپنے حق کی جنگ لڑ رہے ہیں لیکن ظلم و جبر کا یہ سلسلہ اب رک جانا چاہیے اس کے لیے انسانی حقوق کی تنظیموں اور صحافی برادری کا اپنا کردار ادا کرنا ہو گا۔

شام کے شہر رقہ میں روسی فضائیہ کی بمباری 30 افراد جاں بحق


sham bombing August 11, 2016 | 9:30 PM

شام کے شہر رقہ میں روسی فضائیہ کی جانب سے بمباری کی گئی ،بمباری کے نتیجے میں 30 افراد جاں بحق جبکہ متعدد افراد زخمی ہو گئے،جاں بحق ہونے والوں میں باغیوں سمیت تیس شہری شامل ہے جبکہ زخمیوں کو اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔

ایم کیو ایم آسٹریلیا کی جانب سے سانحہ گلشن پارک لاہور میںشہیدہونے والوں کوخراجِ عقیدت پیش کیا گیا


PIC MQM AUSTARIA April 3, 2016 | 8:39 PM

ایم کیو ایم آسٹریلیا کی جانب سے سانحہ گلشن پارک لاہور میںشہیدہونے والے بے گناہ اور معصوم بچوں ، مرد اور خواتین کی یاد میں شمعیں روشن کی گئیں اور شہداء کوخراجِ عقیدت پیش کیا گیا
سڈنی:(نیوزآن لائن)متحدہ قو می موومنٹ آسٹریلیا کے زیراہتمام سڈنی میں سانحہ گلشن پارک لاہورخودکش حملے میں شہید ہونے والے نہتے اور معصوم بچوں، مرد اورخواتین کی یاد میں شمیعں روشن کی گئیں اور شہداء کوخراجِ تحسین پیش کیا گیا۔جبکہ شہداء کے ایصال وثواب اورزخمیوںکی جلد صحتیابی کی دعائیں کی گئیں۔ تقریب میں سڈنی کے حق پرست ہمدردوں اور کارکنوںنے بڑی شرکت کی۔

ترکی میں باغیوں کیخلاف آپریشن کے دوران بم دھماکے میں چھ سیکیورٹی اہلکار جاں بحق


turkey blast April 3, 2016 | 3:52 PM

ترکی :( نیوزآن لائن)ترکی میںکر د باغیوں کیخلاف آپریشن کے دوران بم دھماکے ہوئے ،دھماکے کے نتیجے میں چھ سیکیورٹی اہلکار جاں بحق ہو ئے۔ترک میڈیا کے مطابق دھماکہ جنوب مشرقی صوبے نصیبن میں ہوا۔ سیکیورٹی فورسز کا کرد باغیوں کے خلاف آپریشن جاری ہے۔اس شہر میں مارچ کے وسط سے کرفیو نافذ ہے۔ ترک میڈیا کی رپورٹس کے مطابق نصیبن شہر میں کرد باغیوں نے شہر کے گرد رکاوٹیں کھڑی کردی ہیں۔ واضح رہے کہ دو زوز قبل دھماکے میں سات پولیس جاں بحق ہوئے تھے۔

مسلمانوں کے خلاف بات کرنے سے شدت پسندوں کو فائدہ ہوگا۔امریکی صدربراک اوباما


obama barik March 27, 2016 | 2:22 PM

واشنگٹن :( نیوزآن لائن)امریکی صدر براک اوباما نے برسلزحملوں کے بعد قوم سے ریڈیو خطاب میں امریکی صدر کا کہنا تھا کہ مسلمانوں کے خلاف بات کرنے سے شدت پسندوں کو فائدہ ہوگا۔انہوں نے کہا کہ امریکا کی ترقی و خوشحالی میں امریکی مسلمانوں کا کردار قابل ستائش ہے، دہشت گردوں کا اسلام سے کوئی تعلق نہیں،امریکی قوم برسلز حملوں کے بعد مسلمانوں کی توہین نہ کرے۔براک اوباما کا کہنا تھا مسلمانوں کے خلاف بات کرنے صرف شدت پسندوں کو فائدہ ہوگا۔

مہاجروں کی فکری نسل کشی کا سلسلہ بند ہونا چاہئے: ڈاکٹر سلیم حیدر


dr saleem haider mit March 23, 2016 | 8:18 PM

کئی نسلوں کی تباہی کے باوجود مہاجر آج بھی اپنے روشن مستقبل کے خواہاں ہیں
ایم آئی ٹی مہاجر طاقت کو بکھرنے سے بچانے کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کرے گی
نیویارک :( نیوزآن لائن)مہاجر اتحاد تحریک کے چیئرمین ڈاکٹر سلیم حیدر نے موجودہ صورتحال پر افسوس کااظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مہاجروں کو سیاست کی بھینٹ اور ان کے مستقبل کو داؤ پر نہ لگایا جائے ۔ پہلے ہی مہاجر ستم رسیدہ ہیں ۔ ہماری کئی نسلیں تباہ ہوچکی ہیں مزید ان کو تباہ ہونے سے بچانے کیلئے مثبت حکمت عملی تیار کی جائے کیونکہ مہاجر قوم کی قربانیوں کا سلسلہ قیام پاکستان سے قبل سے جاری ہے ۔ انہوں نے کہاکہ آج مہاجر قومیت اس پستی اور زوال کی طرف بڑھ رہی ہے اس میں مہاجر دانشوروں ، ادیب، صحافی، شعراء اور زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے باشعور افراد اپنا کردار ادا کرتے ہوئے مہاجروں کو روشن مستقبل کی راہ پر گامزن کریں۔ انہوں نے کہاکہ قاتل اور مقتول کی لاحاصل جنگ میں مہاجروں کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے ۔ اب یہ سلسلہ بند ہوجانا چاہئے کیونکہ اس سے سوائے مہاجروں کی نسل کشی کے کچھ حاصل نہیں ہوگا۔ آج مہاجر اپنے مستقبل سے خوفزدہ ہیں ، اس تعلیم یافتہ اور تہذیب یافتہ قوم کو سہارے کی ضرورت ہے ۔ اسے بکھرنے سے بچانے کیلئے ایم آئی ٹی اپنا بھرپور کردار ادا کرے گی ۔ ہم طاقت اور اقتدار کے حصول کے بجائے مہاجروں کو باعزت مقام دلانے کے خواہاں ہیں تاکہ مہاجروں کا کھویا ہوا وقار بحال ہوسکے ، انہوں نے کہاکہ مہاجر نوجوان شعور کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایم آئی ٹیکے ہاتھ مضبوط کریں اور مہاجر تحریک کو اپنے ہاتھ میں لیں۔

برسلز ائرپورٹ پر خود کش حملہ کرنیوالوں کی تصاویر جاری


brusselssuspectphotorelease_3-23-2016_219716_l March 23, 2016 | 5:19 PM

برسلز:(نیوزآن لائن)برسلز میں خودکش حملہ کرنیوالوں کی تصاویر جاری کردی گئی ہے۔ بیلجیئن سرکاری میڈیا کے مطابق حملہ کرنیوالے دونوں حقیقی بھائی ہیں اور ان کے نام خالد البکروی اور ابراہیم البکروی بتائیے گئے ہیں، بیلجیئن سرکاری میڈیا کی جانب سے دونوں دہشتگردوں کی تصاویر بھی جاری کردی گئی ہیں جس میں دونوں بھائیوں نے کالی جیکٹس پہن رکھی ہیں جبکہ تصویر میں موجود تیسرے شخص کی شاخت نجیم لاچروی کے نام سے کی گئی ہے ،واضح رہے کہ دہشت گردوں نے پیرس کے بعد برسلز کو نشانہ بنایا اور گزشتہ روز ائر پورٹ اور میٹرو اسٹیشن پر تین دھماکے کئے تھے۔ حملے کے بعد برسلز میٹرو اسٹیشن دوبارہ کھول دیا گیا ہے ۔ جبکہ ائر پورٹ آج بھی بند ہے۔ گزشتہ روز ہونے والے بم دھماکوں میں 34 افراد ہلاک جبکہ 200 سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔

یورپی بینک اورکمپنیاں ایران کے ساتھ کاروبار کرنے میں گریز کررہی ہیں۔ ایران


iran March 6, 2016 | 3:12 PM

تہران:(نیوزآن لائن)ایران کا کہنا ہے کہ یورپی بینک اورکمپنیاں ایران کے ساتھ کاروبار کرنے میں گریز کررہی ہیں۔ایرانی خبر رساں ایجنسی ادارے کے مطا بق ایرانی سینٹرل بینک کے گورنر کے مطابق بین الاقوامی پابندیوں کے خاتمے کے باوجود یورپی بینک اور کمپنیاں ایران کے ساتھ کاروبار کرنے میںگریز کررہی ہیں۔انہوں نے اس حوالے سے بین الاقوامی مالیاتی فنڈسے بھی رابطہ کیاگیا ہے کہ وہ یورپی خدشات کے خاتمے کیلئے اقدامات کریں۔یاد رہے کہ امریکہ کی جانب سے ایران پر عائد بیشتر پابندیاں ختم کردی ہیںتاہم بعض پابندیاں بدستور لاگو ہیں۔

پاکستانی وفد امریکہ سے اسٹریٹجک مذاکرات کیلئے امریکا پہنچ گیا


muzakarat February 28, 2016 | 3:36 PM

واشنگٹن:(نیوزآن لائن)پاکستانی وفد امریکہ سے اسٹریٹجک مذاکرات کیلئے امریکا پہنچ گیا۔پاک امریکا اسٹریٹجک مذاکرات کیلئے پاکستانی وفد مشیر خارجہ سرتاج عزیز کی قیادت میں امریکا پہنچ گیا۔ حکومتی ترجمان کے مطابق پاکستانی وفد میں عابد شیرعلی،احسن اقبال اورسیکرٹری داخلہ عارف خان شامل ہیں، جبکہ مذاکرات میں امریکی وفدکی قیادت سیکرٹری خارجہ جان کیری کریں گے۔دونوں ممالک کے درمیان اسٹریٹجک مذاکرات کا باقاعدہ آغاز پیر کو واشنگٹن میں ہوگا۔

شام :مغربی شہر حمص میںیکے بعد دیگرے دو دھماکے 25 افرادجاں بحق


sham blast February 21, 2016 | 9:39 PM

دمشق:(نیوزآن لائن) شام کے مغربی شہر حمص میںیکے بعد دیگرے دو دھماکے ہو ئے۔دھماکوںکے نتیجے میں25 افرادجاں بحق جبکہ  100سے زائدافراد زخمی ہو گئے۔تفصیلات کے مطابق شام کے مغربی شہر حمص میںیکے بعد دیگرے دو دھماکے ہو ئے،بم، گاڑی میں نصب کئے گئے تھے۔ دھماکے کے نتیجے میں 25 افرادجاں بحق جبکہ  100سے زائدافراد زخمی ہو گئے جنہیں قریبی اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جہاں زخمیوں کو طبی امداد دی جارہی ہے۔

ہم ہر سال شہید غلام محمد بُلا کو عزت اور احترام کے جذبات سے یاد کرتے ہیں۔اعظم انقلابی


srinagar_map_240x180 (1) February 14, 2016 | 2:05 PM

سرینگر:(نیوزآن لائن) جموں کشمیر محاذِ آزادی کے سرپرست اعظم انقلابی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ہم ہر سال شہید غلام محمد بُلا کو عزت اور احترام کے جذبات سے یاد کرتے ہوئے اُن کی سرفروشی اور حُب الوطنی کو سلام پیش کرتے ہیں۔ اندرا عبد اﷲ ایکارڈ کے خلاف حق و صداقت کی آواز بلند کرنے والے اِس باغیرت کشمیری کو 15فروری1975ء کو گرفتار کرکے انٹروگیشن کے دوران درجۂ شہادت تک پہنچایا گیا۔ آج بھی جنگ بندی لائن پر ہمارے جگر پارے غلام محمد بُلا، مقبول بٹ، افضل گورو اور مقبول الٰہی بن کر قیمتی جانوں کا نذرانہ پیش کررہے ہے۔
کشمیر کے لاکھوں شہداء کی عظمت کو سلام۔ کشمیر کے یہ شہداء بزبانِ حال فریاد کررہے ہیں کہ کیا اب بھی کشمیر کی مقامی بھارت نواز تنظیمیںبھارت نوازی کے چُولہے پر لذّت اور راحت کی ہانڈی پکاتے رہیں گے۔ اگر اِن بھارت نواز کشمیری لیڈروں کے دلوں میں قومی غیرت کی تھوڑی رمق بھی موجود ہوتی تو وہ حق و صداقت کے لب و لہجے میں بھارتی حکمرانوں کو سمجھاتے کہ کنٹرول لائن پر کشت وخون کے معرکوں سے محظوظ ہونے کے بجائے بھارتی حکمرانوں کو پاکستان اور کشمیریوں کے ساتھ سنجیدہ مذاکرات کا عمل شروع کرکے مسئلہ کشمیر کا پُر امن اور پائیدارحل تلاش کرنا چاہئے۔
کسی دماغی مریض نے بغض وعداوت کے جذبات سے مبہُوت ہوکر قبلہ سید علی گیلانی صاحب کے خلاف دھمکی آمیز لہجے میں اُول فول بکا ہے۔ ہم اِس کی مذمت کرتے ہیں اور کشمیر پولیس کے مسلمان افسروں کو تلقین کررہے ہیں کہ وہ اصلاحِ احوال کے لئے سامنے آئیں۔

بھارتی مستعمرین کو کشمیری حریت پسندوں کی پُر امن جمہوری جدوجہد کبھی راس نہیں آئی۔اعظم انقلابی


sirinagar February 7, 2016 | 2:57 PM

سرینگر:(نیوزآن لائن) جموں کشمیر محاذِ آزادی کے سرپرست اعظم انقلابی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ بھارتی مستعمرین کو کشمیری حریت پسندوںکی پُر امن جمہوری جدوجہد کبھی راس نہیں آئی۔ دہلی دربار کے جبّارین اور متکبرین ہی تھے جنہوں نے محاذرائے شماری کے رہنماؤں کو دس سال تک جیلوں میں تڑپایا۔ جبرواستبداد اور تعدّی و تشدّد کا ماحول ہی تھا کہ محاذرائے شماری کے نوجوان رہنما محمد مقبول بٹ صاحب زیر زمین سرگرمیوں میں مصروف ہوئے۔ بالآخر شیرِ ترہگام بطلِ حریت شہید اوّل واعظم محمد مقبول بٹ صاحب 1958ء میں ترہگام سے ہجرت کرکے پاکستان پہنچے۔ وہاں مقبول بٹ ایمـاے اور قانون کی ڈگریاں پانے کے بعد اپنے دوست میجر امانااﷲ خان کے گھر (پشاور) میں 1965ء میں مزاحمتی تنظیم قومی محاذِ آزادی کے نصبُ العین کے تعلق سے اپنے عزائم کا تعارف کرایا۔ چنانچہ مقبول بٹ صاحب نے پاکستان میں تَنَعُّمْ اور تَعیُّش کی زندگی گزارنے کے بجائے جون 1966ء میں اپنے دوست میجر امان اﷲ کے ہمراہ وادی کشمیر کا رُخ کیا۔ یہاں بارہمولہ میں فوج کے ساتھ تصادم کے دوران مقبول صاحب کا ساتھی اورنگ زیب (عرف طاہر) شہید ہوا۔ مقبول صاحب گرفتار ہوئے۔ بالآخر وہ جیل توڑ کر اپنے دوستوں کے ہمراہ دسمبر 1968ء میں آزاد کشمیر میں وارد ہوئے۔ وہاں وہ گرفتار ہوئے اور مظفرآباد کے قلعہ میں اُنہیں انٹروگیشن کے دوران تشدّد کا نشانہ بنایا گیا۔ نومبر 1969ء میں مظفرآباد میں محاذرائے شماری کا کنونشن ہوا۔ میں اِس کنونشن میں موجود تھا۔ مقبول بٹ صاحب نے محاذ رائے شماری کے صدر کی حیثیت سے پُر جوش تقریر کی۔ اُنہوں نے فرمایا کہ کوئی ہمیں اجازت دے یا نہ دے ہم عسکری مُزاحمتی تحریک ہر قیمت پر جاری رکھیں گے۔ عزم وہمت کے پیکر مقبول بٹ صاحب مئی 1976ء میں عبد الحمید بٹ اور ریاض ڈار کے ہمراہ پھر واردِ کشمیر ہوئے۔ یہاں اُنہوں نے بزرگ مُزاحمتی رہنما صوفی محمد اکبر مرحوم کو بھی اعتماد میں لیا۔ فضل الحق قریشی صاحب، شبیر احمد شاہ صاحب اور خان سوپوری صاحب بھی اُن کے مجاہدانہ مواعظ سنتے رہے۔ جون 1976ء میں مقبول بٹ صاحب اپنے ساتھیوں کے ساتھ گرفتار ہوئے۔ مقبول بٹ صاحب نے تہار جیل دہلی میں قیدِ تنہائی میں پورے آٹھ سال گزارے۔ مجذُوبِ حق و حریت وہاں مُراقبہ، نماز اور تلاوتِ قرآن کے دوران اﷲ ربُ العزت کے ساتھ تعلق پیدا کرتے رہے۔ کوہِ وفا مقبول بٹ صاحب نے 11فروری1984ء کو تختۂ دار پر کلمۂ طیبّہ پڑھتے ہوئے شہادت پائی۔
بھارتی حکمران عداوتِ حق اور شقا وتِ قلبی کی وجہ سے اقتدار کے نشے میں دُھت تھے۔ اُنہوں نے رعُونت، تکبّر اور تَمرّدکا مظاہرہ کرتے ہوئے کشمیر کی عبقری شخصیت مقبول بٹ کو درجۂ شہادت تک پہچادیا۔ وہ اندازہ ہی نہیں کرسکے کہ وہ کشمیر کی مُزاحمتی تحریک کے اُولوالعزم قائد مقبول کوپھانسی دے کر کس غیر متوقع صورتحال سے دوچار ہونگے۔ یہاں نوجوان انقلاب پسند رہنما غیرتِ کشمیر اشفاق مجید وانی نے شیخ عبد المید، محمد یٰسین ملک اور دیگر دوستوں کے تعاون سے عسکری تحریک کا آغاز کیا۔ مقبول بٹ کی پھانسی نے کشمیر کے لاکھوں نوجوانوں کے جذبات کو مجرؤح کیا تھا۔ ہزاروں نوجوان کنٹرول لائن روندتے ہوئے آزاد کشمیر پہنچے۔ “ہم چھین کے لیں گے آزادی”نعروں سے کشمیر کے دشت وجبل گونجتے رہے۔ جنگ وشکوہ کے جاں گُسل عمل کے دوران ہزاروں جگرپارے مزار ہائے شہداء کی زینت بن گئے۔ تقریباً ڈیڑھ لاکھ غیعّور فرزندانِ چمن جامِ شہادت نوش کرگئے۔ مقبول بٹ صاحب چاہتے تو پاکستان کی قومی سیاست کا حصہّ بن کروہ وزیراعظم پاکستان بھی بن سکتے تھے۔ ہائے بھارتی مستعمرین اور مستکبرین نے کشمیر کے اِس زُودحِس، زُودفہم اور اوصافِ حمید کے حامل عظیم انقلابی رہنما کے وجود کو برداشت نہیں کیا۔ وہ نہیں جانتے تھے کہ اُن کی شہادت کشمیر میں انقلاب کا بُگل بجائے گی۔ آج سید صلاح الدین صاحب مقبول بٹ کے معنوی مُرید کی حیثیت سے اپنے ہزاروں مجاہدین کے ہمراہ راہِ عزیمت میں سفر جاری رکھے ہوئے ہیں۔ بھارتی جبارین اور ظالمین نے تاریخ سے کوئی سبق نہیں سیکھا۔ اُنہوں نے پھر ایک بار روایتی رعونت اور کبروغرور کے ساتھ فرزندِ کشمیر محمد افضل گورو کو 9فروری 2013ء کو اُسی جیل (یعنی تہار جیل دہلی) میں پھانسی دے کر اپنے استعماری عزائم کا تعارف کرایا۔ اُنہوں نے عملاً کشمیری نوجوانوں کو پھیر ایک بار دعوتِ مُبارزَت اور مُقاوَمت دی۔ مقبول اور گورو دونوں ہی تاکیدِ بلیغ کے ساتھ اصرار کررہے ہیں کہ کشمیر کے غیّور نوجوان بھارت کے غاصبانہ اور جابرانہ استعماری نظام کے خلاف مُزاحمت کا سفر جاری رکھیں۔
ہم بھارتی حکمرانوں سے مطالبہ کررہے ہیں کہ وہ سبھی مُزاحمتی اصحاب کہف کو جیلوں سے رہا کریں۔ ڈاکٹر محمد قاسم صاحب نے جیلوں میں پورے 23سال گزارے ہیں۔ تم لوگوں نے ہمارے اُولوالعزم قائدین مولوی فاروق، ڈاکٹر قاضی نثار، خواجہ عبد الغنی لون، مقبول ملک، جلیل اندرابی، ایس حمید اور ڈاکٹر غلام قادر وانی کو پہلے ہی درجۂ شہادت تک پہنچایا تھا۔ سبھی کشمیری چھ لاکھ شہداء کی قبروں پر باطنی طور صبح وشام حاضر ہوتے ہیں۔ وہ اشفاق مجید وانی، شمس الحق، مقبول الٰہی، مولانا شوکت شاہ، ڈاکٹر عشائی اور دیگر شہداء کی قبروں پر گُل باری کرتے رہتے ہیں۔ پوری قوم اپنے مزاحمتی قائدین قبلہ سید علی گیلانی، شبیر احمد شاہ، میرواعظ عمر فاروق، محمد یٰسین ملک اور دیگر اُولوالعزم مُزاحمتی رہنماؤںپر نازاں ہے۔ وہ سب ہماری پہچان ہیں۔ بھارتی حکمران اِن سیاسی مزاحمتی قائدین کا راستہ روکنے کے بجائے پاکستان کو اعتماد میں لے کر سہ فریقی مذاکرات کے لئے راستہ استوار کریں۔ دوممالک کے حکمران اپنے میزائلوںکو کنٹرول تو کرسکتے ہیں لیکن وہ جنگ بندی لائن کے آرپار کے ہزاروں اور لاکھوں مُریدانِ مقبول کا راستہ روک نہیں سکتے۔

جناب الطاف حسین تن تنہامظلوموں اور محروموں کا مقدمہ لڑ رہے ہیں، متین یوسف


mqm america February 1, 2016 | 8:41 PM

قائد پر غیر آئینی پابندی کیخلاف پاکستانی سفارت ، قونصل خانوں پر احتجاج اورکانگرس وسینٹرز کو آگہی خطوط ارسال کریں گے
ایم کیوا یم امریکہ کی نومنتخب سینٹرل آرگنائزنگ کمیٹی کے جنرل ورکرز اجلاس سے سینٹرل آرگنائزر متین یوسف و دیگر کی گفتگو
واشنگٹن ڈی سی:(نیوزآن لائن) سینٹرل آرگنائزنگ کمیٹی کی تنظیم نو کے بعد متحدہ قومی موومنٹ امریکہ کا پہلا جنرل ورکرز اجلاس سینٹرل آرگنائزر متین یوسف کی صدارت میں منعقد ہوا۔ جنرل ورکرز اجلاس میںسینئر جوائنٹ آرگنائزر عارف صدیقی، جوائنٹ آرگنائزر شمیم صدیقی ،کمیو نیکیشن اینڈ میڈیا سیل، ریسرچ اینڈ ڈویلپمنٹ ونگ، پولیٹیکل اوئرنس کمیٹی، متحدہ قومی فنڈ، سن چیڑیٹی یو ایس اے، پاکستان کلب اور متحدہ قومی موومنٹ امریکہ کے ٢٠ سے زائد چیپٹرز کے ذمہ داران و کارکنان نے شرکت کی۔جوائنٹ آرگنائزرشمیم صدیقی نے اجلاس کے شرکاء سے گفتگو کرتے ہوئے اجلاس کی اہمیت ، اجلاس کی کاروائی میں شامل نکات اوراغراض پر مختصر روشنی ڈالی،سینٹرل آرگنائزز متین یوسف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم خوش قسمت قوم ہیں جنہیں جناب الطاف حسین کی دوراندیش رہ نمائی حاصل ہے،الطاف حسین نے مظلوم مہاجر قوم کو ایک باہمت قوم میں تبدیل کردیا اور آج بھی جناب الطاف حسین تن تنہا پوری مظلوم قوم کا مقدمہ ہر محاذ پر پورے جوش، جذبہ، خلوص اور استقامت سے لڑ رہے ہیں۔بحیثیت کارکن یہ تحریک ہم سب کیلئے ایک دائرے کی مانند ہے جس کا مرکز و ماخذ جناب الطاف حسین کی ذات،انکی فکر و فلسفہ اور نظریہ ہے ،ایم کیو ایم کا خاصہ ہے کہ وہ مستقبل کے کسی بھی غیر متوقع صورتحال کا نہ صرف ادراک رکھتی ہے بلکہ ایسی کسی بھی صورتحال سے نمٹنے اور ہر جبر کا مقابلہ کرنے کی صلاحیت و جرات بھی رکھتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں ہر سطح پر اپنا اعتماد اور اتحاد برقرار رکھنا ہے تاکہ قائد تحریک کی قیادت میں انکی دی گئی فکر کی روشنی میں محروم و مظلوم عوام کے حقوق ، بلدیاتی اداروں کے اختیارات کا حصول، اور ملک میں حقیقی انصاف کے نظام کے قیام کی جدو جہد کو جاری رکھا جائے اور شہداء کی قربانیان رائگاں نہ جاسکیں۔انہوںنے کہاکہ جناب الطاف حسین کی تصاویر اور تقریر پر پابندی نہ صرف پاکستان کے ئین و قانون سے متصادم ہے بلکہ دنیا بھر میں بنیادی حقوق اور زادی اظہار رائے کے قوانین سمیت اقوام متحدہ کے چارٹر کے بھی خلاف ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان میں غیر قانونی و غیر آئینی پابندی کے خلاف پر امن احتجاج جاری ہے اور ایم کیو ایم امریکہ نے بھی اس بات کا فیصلہ کیا ہے کہ مہذب دنیا کی آگہی کیلئے ابتدائی طور پر نیو یارک،واشنگٹن، شکاگو، ہیوسٹن اور لاس اینجلس میں قائم پاکستانی سفارت خانوں اور قونصل خانوں کے سامنے احتجاجی مظاہرے کئے جائیں گے۔ ایسے شہر جہاں قونصل خانے موجود نہیں ہیں وہاں مقیم پاکستانی کمیونٹی اور بین الاقوامی برادری کی آگاہی کیلئے سیمینارز کا انعقاد کیا جائے گا۔ اسکے ساتھ ساتھ امریکی کانگرس مینز اور سینٹرز کو بھی پاکستان میں جاری آزادی اظہارپرر قدغن کے حوالے سے خطوط ارسال کئے جائیں گے۔ سینٹرل آرگنائزر نے اجلاس کے شرکاء کو بتا یا کہ قائد تحریک الطاف حسین کی درازی عمر، تندرستی ، غیرقانونی و جھوٹے مقدمات سمیت تمام پریشانیوں و مشکلات سے بچائو کیلئے ایم کیو ایم امریکہ کے14 چیپٹرز کے تحت دعائیہ اجتماعات منعقد کئے جائیں گے۔

نائجیریا: بوکوحرام کے شدت پسندوں کا حملہ چھیاسی سے زائد افراد جاں بحق


nigeriamap1 February 1, 2016 | 4:27 PM

نائجیریا: (نیوزآ ن لائن)نائجیریا کے شمالی صوبے میدوگری میں بوکو حرام کے شدت پسندوں نے ایک گائوں پر حملہ کرکے اندھا دھند فائرنگ شروع کردی۔ فائرنگ کے نتیجے میں چھیاسی سے زائد افراد جاں بحق جبکہ متعدد زخمی ہو گئے،جاں بحق ہونے والوں میں بڑی تعداد میں بچے اور خواتین شامل ہے۔برطانوی میڈیا کے مطابق نائجیریا میں بوکو حرام کی پر تشدد کارروائیوں کے نتیجے میں اب تک تقریبا سترہ ہزار افراد جاں بحق ہو گئے ہیں۔

الطاف حسین کی تقاریر،بیانات نشراورشائع کرنے پر پابندی کے خلاف ایم کیوایم یوکے کی جانب سے لندن میں 10ڈاؤننگ کے سامنے احتجاجی مظاہرہ


mqm america January 24, 2016 | 8:21 PM

مظاہرے میں لندن،برمنگھم، مانچسٹر، شیفیلڈ، بریڈ فورڈاوردیگرشہروںسے تعلق رکھنے والے کارکنوںاورہمدردوں کی بڑی تعدادمیں شرکت
سخت سردی کے باوجود ایم کیوایم کے مظاہرے میں نوجوانوں اوربزرگوں کے ساتھ ساتھ خواتین اوربچوں نے بھی بڑی تعدادمیں شرکت کی
پابندی کے خلاف مظاہرین کے زوردارنعرے ، سیاحوں میںمظاہرے کے مقاصدکے بارے میں ہینڈبل بھی تقسیم کئے گئے
قائد تحریک الطاف حسین کی تقاریر ، تصاویر اوربیانات نشراورشائع کرنے پر پابندی سراسرغیرآئینی، غیرقانونی اور غیرجمہوری ہے
حکومت آمرانہ ہتھکنڈوں کے ذریعے حق اورسچ کی آوازکودبانے کی کوششیں کررہی ہے۔،ایم کیوایم کے رہنماؤں کااظہارمذمت
پاکستان میں نام نہادجمہوریت کے نام پرآمریت کاراج ہے، اراکین رابطہ کمیٹی ایم کیوایم کی گفتگو
حکومت اوراس کے اداروں کی غلط پالیسیوںپرتنقیدکرنا سب سے بڑاجرم قراردیدیاگیاہے
پابندیوںاورظالمانہ ہتھکنڈوں کے باوجود عوام کے دلوں سے قائد تحر)یک الطاف حسین کی محبت کونکالانہیں جاسکتا، اراکین رابطہ کمیٹی
ایم کیوایم پاکستان کی تیسری بڑی اور ایک قانون پسندجماعت ہے جوملک کے تمام ایوانوں میں نمائندگی رکھتی ہے
ایم کیوایم یوکے کی جانب سے برطانوی وزیراعظم ڈیوڈکیمرون کے نام یادداشت بھی پیش کی گئی
وزیراعظم ڈیوڈکیمرون اس غیرقانونی اورغیرآئینی پابندی کے خاتمہ کیلئے اپنااثررسوخ استعمال کریں۔ایم کیوایم کی یادداشت میں اپیل
لندن:(نیوزآن لائن) ایم کیوایم کے قائدجناب الطاف حسین کی تقاریر،تصاویراوربیانات نشراورشائع کرنے پر پابندی کے خلاف ایم کیوایم یوکے کی جانب سے آج دارالحکومت لندن میں برطانوی وزیراعظم کی سرکاری رہائش گاہ 10ڈاؤننگ کے سامنے ایک احتجاجی مظاہرہ کیاگیا۔ مظاہرے میں لندن،برمنگھم، مانچسٹر، شیفیلڈ، بریڈ فورڈاوردیگرشہروںسے تعلق رکھنے والے ایم کیوایم کے کارکنوںاورہمدردپاکستانیوں نے بڑی تعدادمیں شرکت کی ۔ سخت سردی کے باوجودمظاہرے میں نوجوانوں اوربزرگوں کے ساتھ ساتھ خواتین اوربچوں نے بھی بڑی تعدادمیں شرکت کی ۔مظاہرے میں رابطہ کمیٹی کے ارکان محمدانور ، مصطفےٰ عزیزآبادی، محمداشفاق،منظوراحمد،ایم کیوایم کی سینٹرل ایگزیکٹوکمیٹی کے رکن اورسابق وفاقی وزیربابرخان غوری، سابق رکن سندھ اسمبلی اورایم کیوایم امریکہ کے سینٹرل فنانس سیکریٹری عارف صدیقی، ایم کیوایم یوکے جوائنٹ آرگنائزرسہیل خانزادہ اورآرگنائزنگ کمیٹی کے ارکان اوریوتھ کے ارکان شریک تھے۔ مظاہرین نے ہاتھوں میں قائدتحریک جناب الطاف حسین کی تصاویر اور ایم کیوایم کے پرچموں کے ساتھ ساتھ مختلف پلے کارڈزاٹھا رکھے تھے جن پر حکومت کی جانب سے میڈیاپر جناب الطاف حسین کی تقاریر، تصاویر اور بیانات نشراورشائع کرنے پرعائدپابندی کرنے کے خلاف انگریزی میں مختلف مذمتی کلمات،مطالبات اور نعرے درج تھے ۔مظاہرین اپنے مطالبات کے حق میں مسلسل زوردارنعرے لگاتے رہے۔10ڈاؤننگ آنے والے سیاحوں نے بھی مظاہرے میں دلچسپی کااظہارکیا۔ایم کیوایم یوکے کارکنوں نے سیاحوں میں ہینڈبل بھی تقسیم کئے جس میں ایم کیوایم کاتعارف اورمظاہرے کے مقاصدتحریر تھے ۔ اس موقع پررابطہ کمیٹی کے ارکان اوریوکے یونٹ کے ذمہ داران نے میڈیاسے گفتگوکرتے ہوئے حکومت پاکستان کی جانب سے الیکٹرانک اورپرنٹ میڈیاپر قائد تحریک الطاف حسین کی تقاریر ، تصاویر اوربیانات نشراورشائع کرنے پر پابندی کی شدیدمذمت کی اوراس پابندی کوسراسرغیرآئینی، غیرقانونی اور غیرجمہوری قراردیتے ہوئے کہاکہ حکومت اس طرح کے ہتھکنڈوں کے ذریعے حق اورسچ کی آوازکودبانے کی کوششیں کررہی ہے۔پاکستان میں جمہوریت نہیں بلکہ نام نہاد جمہوریت کے نام پرآمریت کاراج ہے جہاں حکومت اوراس کے اداروں کی غلط پالیسیوںپرتنقیدکرنااورظلم وناانصافیوں کے خلاف آواز احتجاج بلند کرنا سب سے بڑاجرم قراردیدیاگیاہے۔ انہوں نے مزیدکہاکہ اس طرح کی پابندیوںاورظالمانہ ہتھکنڈوں کے باوجود عوام کے دلوں سے قائد تحریک الطاف حسین کی محبت کونکالانہیں جاسکتا۔انہوںنے مطالبہ کیاکہ قائدتحریک کی تقاریر،تصاویراوربیانات نشراورشائع کرنے پر پابندی ختم کی جائے ۔ اس موقع پرایم کیوایم یوکے کی جانب سے برطانوی وزیراعظم ڈیوڈکیمرون کے نام ایک یادداشت بھی پیش کی گئی جس میں کہاگیاکہ ایم کیوایم پاکستان کی تیسری بڑی اور ایک قانون پسندجماعت ہے جوملک کے تمام ایوانوں میں نمائندگی رکھتی ہے ۔ جناب الطاف حسین اس کے متفقہ قائدہیں اوران کی تقاریر، تصاویر اور بیانات نشراورشائع کرنے پر پابندی عائد کرکے انہیں ان کے بنیادی حق سے محروم کردیاگیاہے۔یادداشت میںبرطانوی وزیراعظم سے اپیل کی گئی کہ وہ اس غیرقانونی اورغیرآئینی پابندی کے خاتمہ کے لئے اپنااثررسوخ استعمال کریں۔

یورپی یونین اورامریکا نے ایران پر لگی عائد پابندیاں ختم کر دیں


union January 17, 2016 | 3:37 PM

نیو یارک :( نیوزآن لائن)ایرانی وزیر خارجہ اور یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کی سربراہ نے پریس کانفرنس کے دوران ایران پر سے پابندیاں ختم کرنے کا اعلان کیا ، ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ پابندیاں ختم کرنے پر یورپی یونین کے شکر گزار ہیں۔یو این خارجہ پالیسی کی سربراہ کہتی ہیں کہ دنیا کو محفوظ بنانے کیلئے تہران کے اقدامات قابل تعریف ہیں ، جواد ظریف نے معاہدے کے تمام فریقین سے اظہار تشکر کرتے ہوئے اسے خوش آئند قرار دیا ۔ایرن نے پابندیوں کے خاتمے کا خیر مقدم کیا جبکہ امریکا کا کہنا ہے کہ ایران کے ایٹمی طاقت بننے کا خطرہ ٹل گیا ہے ۔یورپی یونین خارجہ پالیسی کی سربراہ فریڈریکا موگرینی کا کہنا ہے کہ آج سے ایران جوہری معاہدے پر عمل درآمد کیا جا رہا ہے ۔ یورپی یونین اور امریکا نے ایران پر پابندیاں ختم کرنے کی ہدایت کر دی ہے ۔ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف کا کہنا تھا کہ ایران کے عوام کیلئے آج بہت بڑا دن ہے، پابندیاں ختم ہونے سے ایران عالمی منڈی میں تیل برآمد کر سکے گا۔ایران کے عالمی بینکوں میں منجمد اثاثے بھی بحال کر دیئے جائیں گے ،امریکی وزیر خارجہ جان کیری کا کہنا ہے کہ ایرانی جوہری معاہدے سے تمام خطرات ختم نہیں ہوئے ، صدر اوباما نے ایران پر پابندیاں اٹھانے کا حکم نامہ جاری کر دیا ہے ۔

روضیت کا راستہ اپناتے ہوئے آپ مسئلہ کشمیر اور دیگر مسائل کا حل تلاش کریں۔ اعظم انقلابی


Jammu_and_Kashmir_map_Srinagar_240 January 10, 2016 | 3:03 PM

سرینگر:(نیوزآن لائن) جموں کشمیر محاذِ آزادی کے سرپرست اعظم انقلابی نے اپنے ایک بیان میںبھارت اور پاکستان کے حکمرانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ دُور اندیشی، فہم و فراست اور تدّبُر کا مظاہرہ کرتے ہوئے مذاکراتی عمل میںاس حد تک سنجیدگی اختیار کریں کہ کوئی بھی منفی واقعہ سدِّراہ نہ بنے۔ مَعْروضیت کا راستہ اپناتے ہوئے آپ مسئلہ کشمیر اور دیگر مسائل کا حل تلاش کریں۔ کچھ طاقتیں چاہتی ہیں کہ آپ بد اعتمادی اور باہمی ٹکراؤ کی دلدل میں ہی پھنسے رہیں۔
مشرق وسطیٰ کے حالات کے تعلق سے عرض کررہا ہوں کہ شیعہ اور سنی علمائے دین قرآن اور کعبہ کو حَکم اور قاضی بناکر حرم شریف میں بیٹھ کر اختلافات کا حل تلاش کریں۔ یہ کام تکمیل تک پہنچتے ہی مسلم حکمران اتحاد اور اخوّت کا ماحول پیدا کرنے پر مجبور ہوں گے۔ یاد رکھیں کہ میں ملتِ اسلامیہ کے داخلی انتشار اور افراتفری کو عذابِ الٰہی سے تعبیر کرتا ہوں۔ ہائے خیرامت اور اُمتِ وَسَط اپنے دعوتی مقام سے ہی غافل ہوئی، نتیجہ یہ نکلا کہ ملتِ اسلامیہ اغیار کے لئے ترنوالہ بنی اور انہوں نے پوری مسلم دنیا کو میدانِ جنگ میں تبدیل کیا۔
افسوس کہ کشمیرکے مزاحمتی رہنما بھارتی مظالم پر سینہ کوبی اور مرثیہ خوانی سے آگے بڑھتے نہیں۔ قومی اور ملّی مشاورت کی اہمیت کا ادراک ہونے نہیں پاتا۔ پھر انتظار کریں جب مشرق اور مغرب کے مسلمانوں کو حج اور عمرہ کیلئے امریکہ بہادر سے این او سی کاغذات حاصل کرنے ہوں گے۔ یورشِ تاتار کی تاریخ کا مطالعہ کریں اور دیکھیں پچاس سال تک تاتاریوںنے مسلمانوں کو شہروں اور قصبوں کو تباہ وبرباد کرنے کا سلسلہ کس بے رحمی سے آگے بڑھایا۔ آج تو جگہ جگہ سقوطِ بغداد کے ہی مناظر دیکھنے میں آتے ہیں، اور ملت کے خواص ملت کی بے بسی کا نظارہ ہی کررہے ہیں۔ اﷲ رحم فرمائے۔

امرتسر:پٹھان کوٹ ایئربیس پر دوسرے روز بھی بم دھماکوں اور فائرنگ کا سلسلہ جاری 3فوجی زخمی


424984-indiaforces-1451805833-416-640x480 January 3, 2016 | 2:26 PM

امرتسر:(نیوزآن لائن)بھارتی پنجاب کے ضلع پٹھان کوٹ کی ایئربیس پر دوسرے روز بھی بم دھماکوں اور فائرنگ کا سلسلہ جاری ہے جس کے نتیجے میں 3 فوجی زخمی ہوگئے ہیں۔تفصیلات کے مطا بق پٹھان کوٹ ایئر بیس میں ایک حملہ آور کی موجودگی کی اطلاع پر دوسرے روز بھی سرچ آپریشن جاری ہے، اس دوران دھماکوں اور فائرنگ کی آوازیں آرہی ہیں، جس کے نتیجے میں اب تک مزید 3 فوجی زخمی ہوگئے ہیں۔ بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ حملہ آوروں نے ایئر بیس میں مختلف مقامات پر دھماکا خیز مواد نصب کررکھا ہے،واضح رہے کہ گزشتہ روز پٹھان کوٹ ایئر بیس پر حملے کے دوران زخمی ہونے والا بھارتی لیفٹیننٹ کرنل نرنجن اسپتال میں دم توڑ گیا ہے جس کے بعد حملے میں ہلاک ہونے والے بھارتی فوجیوں کی تعداد 7 ہوگئی ہے۔

ہم نریندر مودی اور نواز شریف کی لاہور ملاقات کو نیک شگون سے تعبیر کرتے ہیں۔ اعظم انقلابی


Jammu_and_Kashmir_map_Srinagar_240 December 27, 2015 | 2:46 PM

سرینگر:(نیوزآن لائن) جموں کشمیر محاذِ آزادی کے سرپرست اعظم انقلابی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ہم نریندر مودی اور نواز شریف کی لاہور ملاقات کو نیک شگون سے تعبیر کرتے ہیں۔ شاید جنوبی ایشیا کی دو متصادم ایٹمی طاقتوں نے یہ بات بخوبی سمجھ لی ہے کہ ایٹم بموں اور میزائلوں سے انسانی مسائل حل نہیں ہوسکتے ہیں۔ جنوبی ایشیا کے ڈیڑھ ارب لوگوں کو عدمِ تحفّظ اور بے یقینی کے بھنور سے نکالنے کی واحد صورت یہ ہے کہ بھارت اور پاکستان کشمیریوں کو خود اپنے سیاسی مستقبل کا تعیّن کرنے کا موقع دیں۔ اب وقت آیا ہے کہ بھارت اور پاکستان جنگ بندی لائن کے آرپار کے کشمیر سے اپنی فوجوں کو واپس بلائیں۔ہم دیوارِ برلن (یعنی کنٹرول لائن) کا انہدام چاہتے ہیں تاکہ متحدہ کشمیر کی جمہوری طور منتخب شدہ پارلیمنٹ کے ارکان جمہوری انداز میں حقِ خود ارادیت کے اصول کے تحت کشمیر کے سیاسی مستقبل کا تعیّن کرسکیں۔ ہم بھارت سرکار سے پُر زور مطالبہ کرتے ہیں کہ سبھی کشمیری نظربندوں کو جیلوں سے رہا کیا جائے، اور جنگ بندی لائن کے آرپار رہنماؤں کو ایک جگہ بیٹھ کر مشاورت کے ذریعے مستقبل کی راہیں تلاش کرنے کا موقع فراہم کیا جائے۔
یہاں نام نہاد ولیج ڈیفنس کمیٹیوں کے نام پر جو دہشت گرد ٹولہ موجود ہے اس پر پابندی عائد کی جائے اور اِن نام نہاد کمیٹیوںکو تحلیل کیا جائے۔ بزرگ مزاحمتی رہنما قبلہ سید علی گیلانی صاحب اِس دہشت گرد گروہ کے خلاف جو بھی فیصلہ کن جمہوری اقدام کریں گے ہم اس کی تائید و حمایت کریں گے۔
ہم ایران کے روحانی پیشوا جناب آیت اﷲخامنائی صاحب سے اپیل کرتے ہیں کہ شام میں وقت کے یزید اور لاکھوں لوگوں کے قاتل بشارالاسدکی حمایت کرنے کے بجائے ایران، پاکستان، سعودی عربیہ ، مصر اور دیگر مسلم ممالک کے شیعہ سنی علمائے دین کے ایک ورکشاپ کا اہتمام کیا جائے جہاں عقیدۂ توحید اور آخرت کو بنیاد بنا کر مومنین کے دلوں کو جوڑنے کا طریقِ کار وضع کیا جائے۔ قرآن کامل کتاب ہے جو ہر مشکل صورتحال سے نکلنے کی راہیں تجویز کرتی ہے۔
محاذِ آزادی کے نقیب محمد یوسف کلو صاحب اگلے چھ مہینے تک محاذِ آزادی کے تنظیمی امور میں مصروف اور منہمک رہ کر تنظیمی انتخاب کیلئے موافق ماحول پیدا کریں گے۔ ارکانِ شُوریٰ سید الطاف اندرابی صاحب، قطب عالم صاحب، جہانگیر سلیم صاحب، اور محمد شفیع میر صاحب نقیبِ محاذ کی معاونت کرتے رہیں گے۔

امریکا : صدارتی انتخابات کیلئے ڈیموکریٹک امیدوار فرنٹ رنر ہیلری کلنٹن اور برنی سینڈرزکے درمیان بحث کا آغاز


313789_31143098 December 20, 2015 | 3:17 PM

واشنگٹن :( نیوزآن لائن)امریکا میں صدارتی انتخابات کے لیے ڈیموکریٹک کے نامزد امیدوار فرنٹ رنر ہیلری کلنٹن اور برنی سینڈرزکے درمیان بحث کا آغازہوا۔ڈیموکریٹک کے فرنٹ رنر ہیلری کلنٹن اور برنی سینڈرز نے ثابت کرنے کی کوشش کی کہ اسلحے کو کنٹرول اور داعش کو شکست دینے میں کس کا ایجنڈا زیادہ اہم ہے۔ امریکی اقتصادیات داعش ، گن کنٹرول اور ہیلتھ کئیر جیسے مسائل پر اپنا ایجنڈا پیش کیا ۔ سپر پاور امریکا کے سب سے اہم عہدے کو جیتنے کا معاملہ ہے ۔ نامزد صدارتی امیدوار ملکی اور عالمی مسائل پر زوردار دلائل سے عوام کو قائل کر رہے ہیں ۔

آئندہ نسلوں کو پولیو سے بچانے کے لیے موثر اقدامات کیے ہیں،وزیر اعظم نواز شریف


nawaz sharif November 29, 2015 | 4:13 PM

ویلیٹا(نیوزآن لائن) وزیر اعظم نواز شریف کہتے ہیں پولیو کے خاتمے کے لیے اقدامات قومی فریضہ سمجھ کے کر رہے ہیں، آئندہ نسلوں کو پولیو سے بچانے کے لیے موثر اقدامات کیے ہیں، مالٹا میں دولت مشترکہ کے سر براہ اجلاس میں وزیر اعظم نواز شریف نے انسداد پولیو سیشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ذاتی طور انسداد پولیو بارے قومی ٹاسک فورس کی رہنمائی کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہر بچے تک پہنچنا حکومت کی ترجیح ہے تاکہ ملک بھر میں انسداد پولیو مہم میں کوئی بھی بچہ ویکسین کے قطرے پینے سے محروم نہ رہے۔وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ سب سے خوشی کی بات یہ ہے کہ پاکستان میں پولیو کے کیسز میں نمایاں کمی آئی ہے اور ہم پولیو کے خاتمے کی کوششوں میں دولت مشترکہ سے تعاون کی توقع رکھتے ہیں، وزیر اعظم کا کہنا تھا پولیو ہیلتھ ورکرز کا نیٹ ورک تشکیل دیا ہے، اور اس سلسلے میں سول سوسائٹی ، میڈیا اور مذہبی رہنماوں کو بھی مہم میں شامل کیا گیا ہے۔

متحدہ قومی موومنٹ کینیڈا فرانس میں دہشت گردی کے واقعہ کی بھرپور مذمت کرتی ہے ۔ سنٹرل آرگنائزر آصف قاضی


mqm canada November 22, 2015 | 4:12 PM

قائد تحریک الطاف حسین کے فلسفہ کے مطابق پاکستان سمیت دنیا بھر میں دہشت گردوں کے خلاف ایم کیو ایم فرنٹ لائن پر ڈٹ کر کھڑی ہے۔
ٹورونٹو: (نیوزآن لائن) متحدہ قومی موومنٹ کینیڈا کے سنٹرل آرگنائزر آصف قاضی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایم کیو ایم کینیڈا فرانس میں دہشت گردی کے واقعہ کی بھرپور مذمت کرتی ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ قائد تحریک الطاف حسین کے فلسفہ کے مطابق پاکستان سمیت دنیا بھر میں دہشت گردوں کے خلاف ایم کیو ایم فرنٹ لائن پر ڈٹ کر کھڑی ہے اور ہمیشہ اپنا کردار ادا کرتی رہے گی ۔ معصوم ، بے گناہ جانوں پر گولیاں برسانے والے کسی بھی مذہب کی ترجمانی نہیں کرتے ، طالبان، القائدہ یا داعش کا کوئی مذہب نہیں ۔ آصف قاضی نے کہا کہ ایم کیو ایم پاکستان کی واحد لبرل پروگریسو اور سیکولر جماعت ہے جس نے کھل کر دہشت گردی کا مقابلہ کیا ہے ۔ اسی وجہ سے چند ریاستی طاقتیں جو کہ انتہا پسندی اور دہشت گردی کوفروغ دیتی ہیں وہ ایم کیوایم کو کرش کرنے کا کوئی موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیتیں یہی وجہ ہے کہ ایم کیو ایم کے خلاف آج بھی پاکستان میں ایک ریاستی آپریشن جاری ہے ۔ انہوں نے اپنے بیان میں کہا کہ ہماری تمام تر ہمدردیاں فرانسیسی عوام اور واقعے میں ہلاک ہونے والوں کے ساتھ ہیں اور ایم کیو ایم کینیڈا فرانسیسی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کرتے ہیں او راُن کے غم میں برابر کے شریک ہیں ۔

میرواعظ ڈاکٹر مولوی محمد عمر فاروق نے مختلف مزاحمتی تنظیموں کا جو اجلاس منعقد کرنے کا فیصلہ کیا یہ واقعی خوش آئند ہے۔ اعظم انقلابی


Jammu_and_Kashmir_map_Srinagar_240 November 15, 2015 | 2:39 PM

سرینگر:(نیوزآن لائن) جموں کشمیر محاذِ آزادی کے سرپرست اعظم انقلابی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ میرواعظ ڈاکٹر مولوی محمد عمر فاروق صاحب نے 18 نومبر 2015ء کو مختلف مزاحمتی تنظیموں اور دیگر انجمنوں کا جو اجلاس منعقد کرنے کا فیصلہ کیا ہے یہ واقعی خوش آئند ہے۔ ضرورت اِس بات کی ہے کہ یہ کل جماعتی ورکشاپ ایک مستقل مشاورتی ادارہ کا روپ دھار لے اور یہ ادارہ کسی موزون نام سے باقی رہے تاکہ قومِ کا شمرکی قومی اور ملّی تمنّاؤں اور آرزوؤں کی تکمیل کے طور طریقے وضع ہوسکیں۔ پاکستان میں 7 اور 8 دسمبر 2015ء کو افغانستان کے تعلق سے جو دو روزہ کانفرنس منعقد ہو رہی ہے اِس کی کامیابی کا انحصار اِس بات پر ہے کہ آپ افغانستان میں موجود 36 سالہ غیر یقینی صورتحال کا معروضی تجزیہ کرنے میں کس حد تک خلوص اور سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ ہماری تجویز ہے کہ افغان مجاہدین کے کسی اعلیٰ تعلیم یافتہ دانشور کو اِس کانفرنس میں انگریزی زبان میں فصیح اور بلیغ تقریر کے دوران معروضی حقائق کو زیربحث لانے کا موقع دیا جائے۔ توقع ہے کہ کا نفرنس میں موجود سیاسی اور سفارتی ماہرین اُس کی درد اور دلیل پر مبنی پُرمغز تقریر سے تحریک پاکر ایک تاریخی قرارداد کی منظوری کیلئے عقل و دانش کا مظاہرہ کریں گے۔
تاریخ گواہ ہے کہ پہلے سویت یونین کی بے معنی فوجی مداخلت اور پھر امریکہ اور نیٹو فوجوں کی استعماری کارروائیوں سے افغانستان تباہ وبرباد ہوا ہے۔ افغانستان ایشیا کا دل ہے۔ اِس دل کی مرض کا علاج تجویز کرنے کیلئے ایک شفیق معالج کی ضرورت ہے۔ ہم برابر اصرار کرتے رہیں گے کہ او آئی سی ایک موثر نظریاتی فورم کا رول ادا کرنے کیلئے فِکری اور عملی صف بندی کرے۔ 57 ممالک کا فورم یو ا ین او میں بھی فیصلہ کن رول ادا کرسکتا ہے۔
ہم کشمیر کے مشہور اور معروف صحافی صوفی غلام محمد صاحب مرحوم کو عزت اور احترام کے جذبات سے یاد کرتے ہوئے اُن کیلئے عُلوِدرجات کی دُعا مانگتے ہیں۔ اﷲ انہیں کروٹ کروٹ جنت عطا کرے ۔ میرے کتنے ہی مضامین ہیں جنہیں مرحوم صوفی صاحب نے اپنے موقر اخبار سرینگر ٹائمز کی زینت بنایا۔ آج صحافت اور علم و ادب کا چراغ ہمارے درمیان موجود نہیں، لیکن اُن کی یاد باقی ہیں۔ مرحوم صوفی صاحب صحافتی بیباکی میں اپنی مثال آپ تھے۔ اﷲ قومِ کا شمر کے حال پر رحم فرمائے۔

بھارتی مستعمرین کو کشمیریوں کے خونِ ناحق کی لت پڑی ہے۔ اعظم انقلابی


Jammu_and_Kashmir_map_Srinagar_240 November 8, 2015 | 2:25 PM

سرینگر:(نیوزآن لائن) جموں کشمیر محاذِ آزادی کے سرپرست اعظم انقلابی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ بھارتی مستعمرین کو کشمیریوں کے خونِ ناحق کی لت پڑی ہے۔ ریاستِ جموں کشمیر کے چھ لاکھ باسیوں کو قتل کرنے کے بعد بھی اُن کی بے رحم خون آلود برہنہ تلواروں کی پیاس بجھی نہیں ہے۔ 7 نومبر بھارتی پولیس کے جس بے رحمی سے معصوم نوجوان گوہر ڈار کو قتل کیا اُس سے یہ بات بخوبی واضح ہورہی ہے کہ کشمیر میں موجود ایک ایک بھارتی سپاہی جنرل ڈائر اور ہلاکو کا رول ادا کرنے پر کمربستہ ہوا ہے۔ بھارتی حکمران یاد رکھیں کہ اگر وہ سارے بھارت کی دولت لاکر کشمیرکی سڑکوں پر سونا بچھادیں تب بھی کشمیری نعرہ بلند کرتے رہیں گے کہ رائے شماری جان سے پیاری۔ اے ظالمو اور غاصبو نعروں سے کشمیر کی دشت وجبل پہلے ہی گونج رہے ہیں۔ تم نے تمام مزاحمتی رہنماؤں کو گھروں اور تھانوں میں نظربند رکھا، پورے کشمیر کو وسیع جیل میں تبدیل کیا، اور پھر اِس پر مستزادیہ کہ اپنی تقریر میں مسئلہ کشمیر کے پُر امن تصفیہ کے تعلق سے لب کشائی ہی نہیں کی۔ بھارتی حکمران یاد رکھیں کشمیر کی باغیرت قوم طویل المدت مزاحمتی تحریک کا قصد کرچکی ہے۔ اور اِس تحریک میں رب العزت ہمارے ساتھ ہے۔
پاکستان کے حکمران تدبر اور فہم و فراست سے ایشیا کے مسائل کے تصفیہ کیلئے کوشاں رہیں۔ فوری طور پاکستان اور افغانستان کے عُلماء اور دانشوروں کا ایک مشترکہ جرگہ قائم کیا جائے۔ اِس کو مستقبل مشاورتی ادارہ بنائیں اور کسی موزون نام سے متعارف بھی کرائیں۔ افغانستان اور پاکستان میں امن و سکون کو یقینی بنانے کے عمل میں یہ جرگہ ایک فیصلہ کن رول ادا کرسکتا ہے۔ اور پھر افغان مجاہدین افغانستان کے جمہوری نظام کا لازمی حصہ بننے پر بھی آمادہ ہوں گے۔
مشرق وسطیٰ میں مسلم حکمرانوں کی انانیتی سیاست نے وہاں خانہ جنگی کے ماحول کو دوام بخشا ہے۔ یہ حکمران بھول جانے ہیں کہ بالآخر قیامت برپا ہوگی جب یہ پہاڑ رنگین دھول بن کر اڑتے پھریں گے، سمندروں کو آگ لگے گی اور پوری زمین کا نقشہ ہی تبدیل ہوگا۔ ارشاد ربّانی ہے۔ ” مالک عرش زمین کو ایسا ہموار چٹیل میدان بنادے گا کہ اس میں تم کوئی بَل اور سلْوَٹ نہ دیکھوں گے۔ اُس روز سب لوگ منادی کی پکار پر سیدھے چلے آئیں گے، کوئی ذرا اکڑ نہ دکھا سکے گا۔ اور آوازیں رحمان کے آگے دب جائیں گی”۔ (سورہ طٰہٰ، 106تا108)۔ کیا مسلکی جنگوں میں مصروف حکمران تا قیامت بے معنی محاذ آرائی میں مصروف رہیں گے۔ آپ سے اپیل کرتا ہوں کہ آپ فی الحال مسلکی کتابوں کو صندوق میں بند کریںاور صرف قرآن مجید کو واعظ، معلّم، حاکِم اور حَکم بناکر اِس کی طرف صمیم قلب سے رجوع کریں۔ مغربی استعماری طاقتوں نے پہلے ہی تہذیبوںکے ٹکراؤ کے نام پر ملت اسلامیہ کے ملکوں اور قوموں کو برباد کیا ہے۔ اور اب تم مسلکی بالادستی کی بے معنی جنگوں کے ذریعے اِس امت کو مکمل تباہی اور بربادی کے کھڈمیں پھینکنے پر مصر نظر آرہے ہو۔ اگر قرآن تمہیں متحد نہیں کر سکتا تو مسلکی بتوں کی پرستش سے کیا حاصل ہوگا؟۔
معروف و مشہور صحافی وید بھسین کے انتقال پر ہم آنجہانی صحافی کے لواحقین کے ساتھ اظہارِ تعزیت کررہے ہیں۔ وید بھسین کشمیر کی مزاحمتی تحریک کے مخلص ہمدرد تھے۔ صحافتی بے باکی اور راست بازی اُن کی پہچان تھی۔

صومالیہ کے دارالحکومت کے ایک ہوٹل پرالشباب کا حملہ 12افرادہلاک


somalia November 1, 2015 | 4:06 PM

صومالیہ:(نیوزآن لائن)صومالیہ کے دارالحکومت کے ایک ہوٹل پر شدت پسند تنظیم الشباب کے جنگجو نے حملہ کردیا ،حملے کے نتیجے میں بارہ افراد ہلاک جبکہ متعدد زخمی ہوگئے ہیں۔ پولیس کے مطابق حملہ آوروں نے ہوٹل کے مرکزی دروازے کو بارودی مواد سے اڑانے کے بعد اندر داخل ہو کر اندھادھند فائرنگ شروع کر دی۔ جس سے بارہ افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے۔ ہلاک ہونے والوں میں ہوٹل کے مالک کے علاوہ ایک سابق فوجی جنرل اور متعدد ملازمین بھی شامل ہیں۔

مہاجروں کو اپنی صحیح سمت کا تعین کرنا ہوگا :ڈاکٹر سلیم حیدر


dr saleem haider mit October 25, 2015 | 7:42 PM

ایم آئی ٹی دہشت گردوں ،بھتہ خوروں اور ٹارگٹ کلرز کیخلاف ہمیشہ آواز بلند کرتی رہی ہے
چند نادانوں کی سزا پوری قوم کو دینا غیر مناسب ہے، مہاجروں کیلئے سیاسی پیکیج دیا جائے
نیویارک:(نیوزآن لائن)ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہا ہے کہ اب وقت آگیا ہے کہ مہاجروں کو اپنی صحیح سمت کا تعین کرنا ہوگا کیونکہ اب مہاجروں کے پاس غلطی کی گنجائش نہیں ہے۔ آج پوری قوم جس صورتحال سے دوچار ہے اس کے ذمہ داروں کا احتساب کرنے کیلئے مہاجر دانشوروں ، صحافیوں، وکلاء ، ادیب اور تاجروں کو آگے آنا ہوگا ۔ وہ امریکا سے کراچی کمیٹی کے رہنماؤں شہزاد الرحمن، عمیر وہاب، اعجاز احمد ، ندیم حیدر زیدی اور دیگر سے ٹیلی فون پر بات چیت کررہے تھے۔ ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہا کہ ایم آئی ٹی دہشت گردوں، بھتہ خوروں اور ٹارگٹ کلرز کیخلاف برسوں سے آواز بلند کرتی رہی ہے جس کی پاداش میں خود ہمیں بھی دہشت گردی کا سامنا کرنا پڑا۔ ہم یہ سمجھتے ہیں کہ جب تک مہاجر جمہوری ، اصولی اور اخلاقی سیاست نہیں کریں گے اس وقت تک مہاجروں کی نسل کشی جارہی رہے گی۔ بدقسمتی سے چند نادانوں کی سزا پوری قوم کو دی جارہی ہے ۔ مہاجروں کو سیاسی پیکیج دینے کی ضرورت ہے ورنہ مہاجروں میں پائی جانے والی احساس محرومی منفی صورت بھی اختیار کرسکتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ مہاجر پاکستان کی سلامتی پر غیر متزلزل یقین رکھتے ہیں ۔ مہاجر کسی طورپر بھی پاکستان کے خلاف بات کرنا تو درکنار بات سننے کا بھی تصور نہیں کرسکتے ۔ لیکن کچھ قوتیں چند لوگوں کی بداعمالی کی سزا پوری قوم کو دینے کے درپے ہیں جو غیر مناسب ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ مہاجر سب سے زیادہ تعلیم اور تہذیب یافتہ قوم ہے جو اپنا ایک تاریخی ورثہ رکھتی ہے۔ لہٰذا اس قوم کے نوجوانوں کو منفی سمت میں جانے سے روکا جائے ورنہ یہ نہ صرف ملک بلکہ پوری قوم کا بھی نقصان ہوگا۔

غیرقوموں نے ہماری نظریاتی کمزوریوں کا بھر پور فائدہ اُٹھا کر پوری ملت نے اندر خانہ جنگی کا ماحول پیدا کیا ہے۔اعظم انقلابی


Jammu_and_Kashmir_map_Srinagar_240 October 18, 2015 | 2:21 PM

سرینگر:(نیوزآن لائن) جموں کشمیر محاذِ آزادی کے سرپرست اعظم انقلابی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ غیرقوموں نے ہماری نظریاتی کمزوریوں کا بھر پور فائدہ اُٹھا کر پوری ملت نے اندر خانہ جنگی کا ماحول پیدا کیا ہے۔ اعظم انقلابی کا کہنا تھاکہ میری والدہ محترمہ کے انتقال پر جن رہنماؤں، بزرگوں، دوستوں اور عزیزوں نے اظہار تعزیت کیا میں اُن سب کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ شہیدِ ملت میرواعظ مولوی فاروق صاحب نے حالتِ نجار میں ہی میرے دادا نورالدّین خان کی نماز جنازہ پڑھائی۔ میرے والد بزرگ عبدالرشید خان صاحب دنیا سے رخصت ہوئے تو میرواعظ مولوی فاروق صاحب پورے تین دن تک انقلابی منزل میں تعزیت کی محفلوں کو رونق بخشتے رہے۔ اور 13 اکتوبر 2015ء کو جب میری والدہ دنیا سے رخصت ہوئی تو میرواعظ ڈاکٹر عمرفاروق صاحب نے ہی اُن کی نماز جنازہ پڑھائی۔ قبلہ سید علی گیلانی صاحب نے 14 اکتوبر کو فون پر اظہار تعزیت کیا۔ لبریشن فرنٹ کے قائد محمد یٰسین ملک صاحب نے یہاں تعزیت کی محفلوں میں پورے چار دن گزارے۔ جماعت اسلامی کے رہنما غلام نبی نوشہری صاحب نے پاکستان سے فون پر اظہار تعزیت کیا۔ میں نے اُن سے کہا کہ آپ وہاں علماء کانفرنس کا انعقاد کرکے شیعہ سنی اختلاف کا باب بند کرانے میں اپنا رول ادا کریں۔ کچھ دوست اصرار کررہے تھے کہ میں تعزیت کی محفلوں میں موجود رہوں۔ اِن دوستوں میں بزرگ محمد اشرف صحرائی صاحب بھی تھے۔ اُن کے خلوص، محبت اور ہمدردی کے جذبات کو سلام۔ 16 اکتوبر کو چہارم کی محفل میں سینکڑوں بزرگ، دوست اور عزیز موجود تھے۔ اِس محفل میں میرا پیغام پڑھ کر سنایا گیا۔
اِس پیغام میں احقر نے بیان کیا تھا کہ اگر آپ مجھے محفل میں شرکت کرنے پر مجبور کریں گے تو میں پُر جلال تقریر میں بتاؤں گا کہ مصر، ایران اور سعودی عربیہ کے حکمران کیا کررہے ہیں۔ یہ خالص ایک جذباتی تقریر ہوتی اور میرے سنجیدہ طرزِ تحریر سے مختلف ہوتی۔ میں عقیدۂ توحید اور آخرت کے تحفظ کیلئے پیارے نبیۖ کے لائے ہوئے قرآن میں پناہ لیتا ہوں۔ میں نے سبھی مسلکی کتابوں کو صندوق میں بند کیا ہے۔ میرے مطالعہ کے لئے تفہیم القرآن کی چھ جلدیں کافی ہیں۔ نبیۖ میرے مُرشدِ اوّل اور اعلیٰ ہیں۔ اِس کے بعد میں شہداء بدر کی طرف رہنمائی کیلئے رجوع کرتا ہوں۔ اِن 14 شہداء بدر نے جن 17 قرآنی سورتوں کی سماعت ہی نہیں کی اُن میں سورۂ انفال، سورۂ توبہ، سورۂ انسا، سورۂ مائدہ، سورۂ نور، سورۂ احزاب ، سورۂ الفتح، سورۂ حجرات، سورۂ حدید، سورۂ حشر، سورۂ صف، سورۂ منا فقون اور سورۂ نصر بھی شامل ہیں۔ اِن اہم مدنی سورتوں کی سماعت کئے بغیر 2ھ کے شہداء بدر جنّت پہنچ گئے اور اپنی عظیم قربانی کے ذریعے مدینہ کی اسلامی ریاست کے استحکام بخشا۔ پیارے نبیۖ نے مدینہ کی اسلامی ریاست کے استحکام اور وُسعت کیلئے پورے آٹھ سال میدانِ جنگ میں گزارے، اور غزوہ اُحد میں آپۖ کا ایک مبارک دانت بھی شہید ہوا، آپۖ اپنے مجروح چہرے سے مبارک خون پونچھتے رہے۔
آج کی اُمتِ مسلمہ قرآنی اُمت نہیں۔ مسلکی بتوں کی موجودگی میں توحید خالص نظروں سے اُوجھل ہورہی ہے، اور غیرقوموں نے ہماری نظریاتی کمزوریوں کا بھر پور فائدہ اُٹھا کر پوری ملت نے اندر خانہ جنگی کا ماحول پیدا کیا ہے۔ میری تمنّا ہے کہ میرواعظ ڈاکٹر عمر فاروق صاحب، قبلہ سید علی گیلانی صاحب، محمد یٰسین ملک صاحب، آغا سید حسن بڈگامی صاحب، شبیر احمد شاہ صاحب اور دیگر مزاحمتی رہنماؤں اور عُلمائے دین کے تعاون سے ایک نظریاتی ورکشاپ کا اہتمام کریں۔ اِس ورکشاپ میں مزاحمتی تحریک اور ملت اسلامیہ کے مسائل کو زیربحث لاتے ہوئے فکری اور نظریاتی وحدت کا سماں پیدا کیا جائے۔
چہارم کی تقریب کو حُسنِ خوبی کے ساتھ انجام تک پہنچانے میں بشیر احمد طوطا صاحب، حکیم عبدالرشید صاحب، بشیر احمد بٹ صاحب، شکیل احمد بخشی صاحب، محمد اشرف لایا صاحب، قطبِ عالم صاحب اور الطاف اندرابی صاحب جیسے مزاحمتی رہنماؤں نے جو رول ادا کیا اﷲ اُنہیں اجرعظیم عطا کریں۔

بھاررتی حکمرانوں کی ریاستی دہشت گردی نے لاکھوں کشمیریوں کی زندگی اجیرن بنادی ہے ۔ اعظم انقلابی


srinagar_map_240x180 October 11, 2015 | 2:46 PM

سرینگر:(نیوزآن لائن) جموں کشمیر محاذِ آزادی کے سرپرست اعظم انقلابی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ جس ملک میں گائے کے نام نہاد تقدس کے لئے مسلمانوں کو ذبح کرنا مذہبی فریضہ قرار دیا جا رہا ہو، جس ملک کے حکمرانوں نے تمام مذہبی کتابوں کی تعلیمات کے عَلیَ الّرغم کشمیر میں بدعہدی کی، انتقاضِ معاہدہ کیا اور یوں رائے شماری کے وعدوں سے مُکر نے کے بعد کشمیریوں کے خونِ ناحق سے ہولی کھیلی، ہزاروں اور لاکھوں کشمیریوں کو قبرستان پہنچادیا، اُس ملک کے ظالمانہ، آمرانہ اور جابرانہ نظام کے خلاف علمِ بغاوت بلند کرنا فرضِ عین ہے، فرضِ کفایہ نہیں۔ بھارتی حکمرانوں کی ریاستی دہشت گردی نے لاکھوں کشمیریوں کی زندگی اجیرن بنادی ہے اور اُن کا جینا دُوبھر کیا ہے۔ پورا کشمیر ماتم سرائے بن چکا ہے جہاں لوگ بھارتی مظالم کے خلاف اور اپنی بے بسی کے اظہار کے طور سینہ کوبی کرتے رہتے ہیں۔ اور آزار پسند بیرونی دنیا اِس منظر سے محظوظ ہورہی ہے۔
سبھی ماہرین سیاست یہ بات بخوبی سمجھتے ہیں کہ مشرق اور مغرب کی طاغوتی قوتوں کی ریاستی دہشت گردی نے اکثر ممالک کا امن وسکون لوٹ لیا ہے۔ مغربی طاغوتی اور استعماری قوتیں اپنی لادینیت اور اباحیت پسندی کے تحفّظ کے لئے مستعد ہوئیں اور تہذیبوں کے ٹکراؤ کو حقیقت کا روپ عطا کرنے کے لئے خداپرست مجاہدین کے خلاف صف آرا ہوئیں۔ جب افغان مجاہدین سویت یونین کی سرخ فوجوں کے خلاف برسرپیکار تھے تو امریکہ نے اُنہیں اگلی صف کے مجاہدین قرار دے کر اُن کو جدید ہتھیار فراہم کئے۔ روسی فوجوں کے انخلا کے بعد جب سویت یونین کی شکست و ریخت کا سلسلہ شروع ہوا تو مغربی ممالک نے تہذیبوں کے ٹکراؤ کا مصنوعی نظریہ پیش کرتے ہوئے افغان مجاہدین کے خلاف ایک جنگ شروع کی جو تیرہ سال تک جاری رہی۔ لاکھوں افغانی شہید کئے گئے۔ بمباری سے پورے افغانستان کو برباد کیا گیا۔ اب بھی دس بارہ ہزار نیٹو اور امریکی فوجی وہاں افغان شہریوں کی تباہی کے درپے ہیں۔
حسرت اوور حیرت کا مقام ہے چین، پاکستان، وسط ایشیائی ریاستیں، ترکی، سعودی عربیہ اور ایران جیسے ممالک اِس پوری صورتحال کا بس نظارہ ہی کر رہے ہیں۔ پھر بھی چینی رہنما اور پاکستانی حکمران اقتصادی راہ داری اور گوادر پوٹ کی ترقی کے خواب دیکھ رہے ہیں۔ہم پاکستانی وزیر اعظم نواز شریف صاحب سے عرض کررہے ہیں کہ وہ ضروری فِکری اور سیاسی تیاری کے بغیر امریکہ کا دورہ کرکے خود اپنا مذاق نہ اڑائیں۔ پاکستان میں فوجی ماہرین کا تین روزہ ورکشاپ ہونا چاہئے۔ اِس کے ساتھ ساتھ ماہرین سیاست اور عمرانیات کا بھی سہ روزہ ورکشاپ ہونا چاہئے۔ اِن دو کانفرنسوں کی سفارشات کے آئینے میں ہی نواز شریف صاحب اپنے امریکی دورے کا ایجنڈا تیار کریں۔ میری خواہش ہے کہ دانشوروں کے ورکشاپ میں میرے اُس خط کے پیغام کو بھی نگاہ میں رکھا جائے جو میں نے 16 جون 2015ء کو امریکی صدر جناب بارک حسین اوبامہ کے نام لکھا۔ یہ خط سرینگر کے اردو روزناموں میں بھی شائع ہوا۔ میری نگاہوں میں دنیا کی دو بڑی قوتوں یعنی قومِ مسلم اور مسیحی قوم کے درمیان دوستانہ تعلقات قائم ہونا لازمی ہے۔

مغربی مستعمرین کی آزارپسندی نے ایشیائی ممالک کے باسیوں کی زندگی اجیرن بنادی ہے۔ اعظم انقلابی


srinagar_map_240x180 October 4, 2015 | 2:40 PM

سرینگر:(نیوزآن لائن) جموں کشمیر محاذِ آزادی کے سرپرست اعظم انقلابی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ مغربی مستعمرین کی آزارپسندی نے ایشیائی ممالک کے باسیوں کی زندگی اجیرن بنادی ہے۔ کل ہی کی بات ہے کہ امریکی بمبار جہازوں نے کُندوز افغانستان میں ایک ہسپتال پر بمباری کرکے زیر علاج مریضوں کو ہلاک کیا۔ اصل بات یہ ہے کہ افغانستان کے باغیرت اور بہادر مجاہدین پچھلے 36 سال سے سامراجی ممالک کی مداخلت کے خلاف مسلح مزاحمت کررہے ہیں۔ تاریخ گواہ ہے کہ سویت یونین کی سُرخ فوجیں، نیٹو اور امریکہ کی بے رحم فوجیں اپنے بمبار جہازوں، توپوں اور ٹینکوں سے افغانستان کے خدا پرست مجاہدین کو زیر نہیں کر سکیں۔ اب بھی وہاں دس بارہ ہزار نیٹو اور امریکی فوجیں اِن مجاہدین کو للکارتے ہوئے اِن کی غیرت کا امتحان لے رہی ہیں۔ اِن حالات کے پیش نظر افغانستان کے ہمسایہ ممالک چین، پاکستان، تاجکستان، ترکمانستان اور ازبکستان موثر سفارتی اور سیاسی مہم کے ذریعے مغربی ممالک پر واضح کریں کہ افغانستان میں بیرونی فوجوں کی موجودگی سے بدامنی کا ماحول پیدا ہورہا ہے اور اِس پورے خطے کی معیشت اور تجارت پر منفی اثرات مرتب ہورہے ہے۔ افغانستان سے بیرونی فوجیں رخصت ہوجائیں تاکہ افغان مجاہدین افغانستان کے جمہوری عمل کا حصّہ بن کر وہاں امن وسکون کو یقینی بنانے میںاپنا رول ادا کریں۔ متذکرہ بالا سبھی ایشیائی ممالک کے لئے گوادر کی بندرگاہ تجارتی تمناؤں کے تعلق سے انتہائی اہم ہے۔ اِس لئے اِن سبھی ممالک کو افغانستان کی حکومت کے ساتھ مل کر افغانستان میں مفاہمت کے عمل کو فوراً پائے تکمیل تک پہنچانا چاہئے۔ اِس عمل میں رول ادا کرنا ہوگا۔
پاکستان کے وزیراعظم نوازشریف صاحب کا یہ بیان کہ بھارت کے خفیہ ادارے پاکستان میں تخریبی کارروائیوں میں ملوث ہیں ہمارے لئے ہر لحاظ سے باعثِ استعجاب ، حیرت اور حیرانی ہے۔ یہی وہ باتیں ہیں جو مجھ جیسے حساس کشمیری پاکستانی حکمرانوں پر واضح کرتے رہے اور وہ اِن باتوں پر کان دھرنے کے بارے میں کبھی سنجیدہ نہیں رہے۔ اب اس صورتحال کا واحد موثر علاج یہ ہے کہ پاکستان آزاد کشمیر کی حکومت کو کشمیر کی انقلابی آزاد حکومت کے طور تسلیم کرتے ہوئے اِس کے ساتھ دفاعی معاہدہ بھی کرے۔ آزاد کشمیر کی انقلابی حکومت کا حکمران خود بھی فوجی لباس پہنے اور آزاد علاقہ کے لاکھوں نوجوان بھی رضا کار فوج کی شکل اختیار کریں۔ اِس کے ساتھ ساتھ آزاد علاقہ کی حکومت سبھی بڑے ممالک میں اپنے سفیروں کے ذریعے ایک بھر پور سفارتی مہم بھی چلائے۔ بطلِ حریت مقبول بٹ صاحب کا اپنی مدد آپ کا اصول بالکل موثر ثابت ہوگا۔

افغانستان میں قیام امن کا عمل جلد شروع کرنا ہوگا،مشیر خارجہ سرتاج عزیز


sartaj-aziz2 September 27, 2015 | 3:11 PM

نیویارک :( نیوزآن لائن) مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ افغانستان میں قیام امن کا عمل جلد شروع کرنا ہوگا،پاکستان افغانستان میں امن کیلئے ہر ممکن کیلئے تیار ہے۔ نیویارک میں افغانستان میں امن اور تعمیر نو سے متعلق اجلاس منعقد ہوا ۔اجلاس میں پاکستانی مشیر خارجہ سرتاج عزیز ،افغان چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ اور ترک نائب وزیراعظم نے شرکت کی ۔۔ اجلاس کے دوران شریک ممالک نے خطے میں قیام امن کے لئے افغانستان اور طالبان کیدرمیان مصالحتی عمل کو آگے بڑھانے پر زور دیا۔اجلاس کے دوران سرتاج عزیز نے کہا کہ افغانستان میں امن کا قیام پاکستان کی سیکیورٹی کیلئے انتہائی اہم ہے، پاکستان افغانستان میں قیام امن کیلیے ہر طرح کی مدد کو تیار ہے۔

ڈاکٹرعاصم حسین کی گرفتاری انتہائی قابل افسوس ہے ، ڈاکٹرسلیم دانش، محمد اشفاق


mqm america August 30, 2015 | 9:21 PM

ڈاکٹر عاصم پر لگائے گئے الزامات عدالت میں ثابت ہونے سے قبل ہی حراست کے دوران ان کے ساتھ مجرموں جیسا سلوک کرنا کھلا ظلم اور ناانصافی کا بدترین عمل ہے ، ڈاکٹر سلیم دانش، محمد اشفاق
ڈاکٹرعاصم کی گرفتاری پر پوری پیپلزپارٹی کی جانب سے مجرمانہ خاموشی کے عمل سے ہرطبقہ فکر سے تعلق رکھنے والے
کارکنوں اور رہنماؤں میں شدید غم وغصہ پایاجاتا ہے، ڈاکٹر سلیم دانش، محمد اشفاق
پیپلزپارٹی کے وڈیرانہ اور جاگیردارانہ ذہنیت رکھنے والے کرپٹ رہنماؤں نے اپنی جانیں بچانے کیلئے
ڈاکٹرعاصم کو قربانی کا بکرا بنادیا ہے، ڈاکٹر سلیم دانش، محمد اشفاق
لندن:(نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے سینئر رکن ڈاکٹرسلیم دانش اور ابتدائی دنوں کے سینئرترین کارکن ورہنما محمد اشفاق نے اپنے مشترکہ بیان میں سابق وفاقی وزیرڈاکٹر عاصم حسین کی گرفتاری پر انتہائی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ ڈاکٹر عاصم پر لگائے گئے الزامات عدالت میں ثابت ہونے سے قبل ہی حراست کے دوران ان کے ساتھ مجرموں جیسا سلوک کرنا کھلا ظلم اور ناانصافی کا بدترین عمل ہے ۔ دونوں رہنماؤں نے مزید کہاکہ ڈاکٹرعاصم کی گرفتاری پر پوری پیپلزپارٹی کی جانب سے مجرمانہ خاموشی کے عمل سے ہرطبقہ فکر سے تعلق رکھنے والے کارکنوں اور رہنماؤں میں شدید غم وغصہ پایاجاتا ہے ۔ ڈاکٹر سلیم دانش اور محمد اشفاق نے آخر میں کہاکہ پیپلزپارٹی کے جانثار جیالے کھلے عام یہ کہہ رہے ہیں کہ پیپلزپارٹی کے وڈیرانہ اور جاگیردارانہ ذہنیت رکھنے والے کرپٹ رہنماؤں نے اپنی جانیں بچانے کیلئے ڈاکٹرعاصم کو قربانی کا بکرا بنادیا ہے ۔

ایم کیوا یم کے شعبہ سی ای سی کی رکن شمع منشی کے والدقطب الدین کی علالت پر جناب الطاف حسین کا اظہار تشویش


altaf hussain August 23, 2015 | 9:07 PM

ایم کیو ایم کے کارکنان ، ہمدرد اور عوام قطب الدین کی صحتیابی کیلئے دعا کریں ، الطاف حسین کی اپیل
لندن: (نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے قائدجناب الطاف حسین نے ایم کیوایم کے شعبہ سینٹرل ایگزیکٹو کونسل ( سی ای سی ) کی رکن شمع منشی کے والد قطب الدین کی علالت پر گہری تشویش کا اظہار کیاہے اور ان کی مکمل صحتیابی کیلئے دعا کی ۔ جناب الطا ف حسین نے کارکنان ، ہمدرد ماؤں بہنوں ، بزرگوں ، نوجوانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ ایم کیو ایم کے شعبہ سی ای سی کی رکن شمع منشی کے والد کی مکمل صحت یابی کیلئے اللہ تعالیٰ کے حضور خصوصی دعائیں کریں ۔

پنجاب کے وزیرداخلہ شجاع خانزادہ کی شہادت ایک قومی سانحہ ہے۔الطاف حسین


altaf-hussain-21jan August 16, 2015 | 8:24 PM

شجاع خانزادہ کی شہادت پراہل پنجاب ہی نہیں پورے ملک کے امن پسندعوام کوشدیددکھ اورافسوس ہواہے
دہشت گردوں نے جس طرح آج پنجاب کے وزیرداخلہ کونشانہ بنایاہے وہ انتہائی سنگین اور تشویشناک ہے
دہشت گردپاکستا ن کوغیرمستحکم کرنے کیلئے ہرشہرمیں دہشت گردی کی کارروائیاںکررہے ہیں ۔ الطاف حسین
دہشت گرد ی اورانتہاپسندی کوجڑسے اکھاڑپھینکنے کیلئے نیشنل ایکشن پلان پر بھرپور طریقے سے عمل کرناہوگا۔
حکومت، اپوزیشن، تمام سیاسی ومذہبی جماعتیںاورملک بھرکے عوام دہشت گردی اورانتہاپسندی کو جڑسے اکھاڑپھینکنے کیلئے اتحادویکجہتی کامظاہرہ کریں۔ الطاف حسین
شجاع خانزادہ کی شہادت پر وزیراعظم نوازشریف ، وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف اورحکومت پنجاب اورجاں بحق
ہونیوالوں کے اہل خانہ سے اظہارتعزیت
لندن: (نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے قائدجناب الطاف حسین نے اٹک میں پنجاب کے وزیرداخلہ شجاع خانزادہ کے ڈیرے پر خودکش بم دھماکے کی شدیدالفاظ میں مذمت کی ہے اوراس واقعہ میں وزیرداخلہ شجاع خانزادہ اور ڈی ایس پی سمیت کئی افراد کے شہید ہونے اور متعدد افرادکے شدیدزخمی ہونے پر دلی افسوس کا اظہارکیاہے ۔ اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہاکہ وزیرداخلہ شجاع خانزادہ کی شہادت ایک قومی سانحہ ہے جس پراہل پنجاب ہی نہیں بلکہ پورے ملک کے امن پسندعوام کوشدیددکھ اورافسوس ہواہے۔ انہوں نے کہاکہ دہشت گردوں نے جس طرح آج پنجاب کے وزیرداخلہ کونشانہ بنایاہے وہ انتہائی سنگین اور تشویشناک ہے جس سے پتہ چلتاہے کہ پنجاب سمیت پوراملک دہشت گردی کی لپیٹ میں ہے اوردہشت گردپاکستا ن کوغیرمستحکم کرنے کیلئے ہرشہرمیں دہشت گردی کی کارروائیاںکررہے ہیں ۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ دہشت گرد ی اورانتہاپسندی کوجڑسے اکھاڑپھینکنے کیلئے نیشنل ایکشن پلان پر بھرپور طریقے سے عمل کرناہوگا۔ انہوں نے کہاکہ یہ صورتحال اس امرکاتقاضہ کرتی ہے کہ حکومت، اپوزیشن، تمام سیاسی ومذہبی جماعتیںاورملک بھرکے عوام دہشت گردی کے خلاف متحدہوجائیںاور دہشت گردی اورانتہاپسندی کوملک سے جڑسے اکھاڑپھینکنے کیلئے اتحادویکجہتی کامظاہرہ کریں۔ جناب الطاف حسین نے خودکش دھماکے میں وزیرداخلہ شجاع خانزادہ اورمتعددافرادکے جاں بحق ہونے پر دلی تعزیت اورافسوس کااظہارکیا۔انہوں نے شجاع خانزادہ کی شہادت پر وزیراعظم نوازشریف ، وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہبازشریف اورحکومت پنجاب سے بھی دلی تعزیت اورہمدردی کااظہارکیا اوردعاکی کہ اللہ تعالیٰ جاں بحق ہونے والوں کو اپنی جواررحمت میں جگہ دے اوران کے سوگوارلواحقین کویہ صدمہ برداشت کرنے کاحوصلہ عطاکرے۔ انہوں نے دھماکے میں زخمی ہونے والے دیگرافراد کی صحتیابی کیلئے بھی دعاکی۔

ایم کیوایم امریکہ کے 19ویں سالانہ کنونشن سے قائدتحریک الطاف حسین کاخطاب


altaf-hussain-meeting-london-051013 (8) August 2, 2015 | 3:43 PM

لندن:(نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے قائدجناب الطاف حسین نے کہاہے کہ دنیامیں تیزی سے تبدیلیاں آرہی ہیں، گریٹربلوچستان بنے گا، گریٹرپختونستان بھی بنے گا اور گریٹرپنجاب بھی ہوگاجس کا ہیڈکوارٹر کراچی ہوگااسی لئے اسٹیبلشمنٹ کے متعصب لوگوںنے فیصلہ کرلیاہے کہ اپنے حقوق کی بات کرنے والے کراچی کے مہاجرنوجوانوں کومارواورجوباقی بچیں ان سے غلامی کراؤ ۔انہوں نے ایم کیوایم امریکہ کے کارکنوں سے کہاکہ آپ اقوام متحدہ جائیں اورنیٹوکے ہیڈکوارٹر جائیں ، وہاں جاکرانہیںمہاجروںپر ڈھائے جانے والے مظالم سے آگاہ کریںاوران سے کہیں کہ وہ کراچی میں اقوام متحدہ یانیٹوکی فوج بھیجیں تاکہ وہ وہاںمعلوم کریں کہ کس نے قتل عام کیااورکون کون اس کاذمہ دارتھا۔ جب پاکستان سمیت دنیابھرمیںکارکنان گرین سگنل دیں گے توہم پھرباقاعدہ مطالبہ کریںگے کہ مہاجروں کے لئے الگ صوبہ بنایاجائے اور ہمیں ہماراحق دیاجائے ۔انہوں نے کہاکہ میں سچی اورکھری باتیںکرتاہوں تومجھ پر غداری کے مقدمات بنائے جاتے ہیںمگرمجھے ان مقدمات کی کوئی پروا نہیں۔مجھے ایک بارنہیں بلکہ سوبارپھانسی ہو اوراللہ مجھے سوبارنئی زندگی دے تب بھی میںحق اورسچ کی بات کروں گا۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے امریکہ کے شہر ڈیلاس میں ایم کیوایم امریکہ کے تین روزہ سالانہ کنونشن کے موقع پر منعقدہ ایک بڑے اجتماع سے ٹیلی فون پرخطاب کرتے ہوئے کیا۔ کنونشن کی کارروائی اور جناب الطاف حسین کا خطاب پاکستان ، برطانیہ ،آسٹریلیا، جرمنی، بیلجیئم اور خلیجی ممالک سمیت مختلف ممالک میں ایم کیوایم ویب ٹی وی کے ذریعہ دنیابھر میں نشرکیا گیا۔ اپنے خطاب میں جناب الطاف حسین نے امریکہ سمیت دنیا بھر میں مقیم ایم کیوایم کے ذمہ داروں، کارکنوں اور ہمدردوں کو ایم کیوایم امریکہ کے 19 ویں سالانہ کنونشن کی مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہاکہ 19 کا ہندسہ ایم کیوایم کی تاریخ میں اہمیت کا حامل ہے اور ایم کیو ایم ایسی جماعت ہے جسے پوری دنیا مٹانا بھی چاہے تو مٹانہیں سکتی ۔ آج پاکستان کی ایک عدالت میں میرے خلاف غداری کا مقدمہ دائر کیاگیا ہے جبکہ انسداددہشت گردی کی عدالت نے اقدام قتل کے مقدمے میں مجھے مفرور قراردیدیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ میں نوجوان طبقہ بالخصوص طلبا وطالبات سے کہنا چاہتا ہوں کہ میں 37 برسوں سے مظلوموں اور محروموں کے حقوق کی جدوجہد کرتا چلاآرہا ہوں ، اس جدوجہد کی پاداش میں مجھ پر سینکڑوں جھوٹے مقدمات قائم کیے گئے اور پاکستان میں مجھے تین مرتبہ قیدوبند کی صعوبتوں کا بھی سامنا کرنا پڑالیکن ظلم وستم کا کوئی بھی ہتھکنڈہ میرے حوصلے پست نہیں کرسکا۔ گزشتہ دنوں فوجی اسٹیبلشمنٹ کی ایماء پرمیرے خلاف ملک بھر کے پولیس اسٹیشنوں میں راتوں رات ڈیڑھ سو سے زائد غداری کے مقدمات قائم کیے گئے ، اس سے اندازہ لگایاجاسکتا ہے کہ اکیلاالطاف حسین پانچ لاکھ فوج سے ڈرتا ہے یا پانچ لاکھ فوج الطاف حسین سے ڈرتی ہے۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ پاکستان میں مسلح افواج کو مقدس سمجھاجاتا ہے لیکن میں مسلح افواج کو سلام اور سیلوٹ پیش کرکے بڑی غلطی کرچکا ہوں ، اللہ مجھے اس پر معاف فرمائے کیونکہ دوسری جنگ عظیم میں سکھوں ، ہندوؤں اورعیسائیوں نے کعبة اللہ پر گولیاں چلانے سے انکارکردیا تھا لیکن ان مسلمان فوجیوں نے انگریزوں کے حکم پر خانہ کعبہ پر گولیاں چلائیں۔میں ایسی فوج کو مقدس نہیں سمجھتا جو خانہ کعبہ پر گولیاں چلاتی ہے ، جواپنے ہم مذہب اور کلمہ گو بنگالی مسلمانوں کا قتل عام کرتی ہے، ایک لاکھ مسلم بنگالی خواتین کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بناکر حاملہ کردیتی ہے، جوجنرل یحییٰ خان کے زمانے میں مہاجربیوروکریٹس کو ایک جھٹکے میں ملازمتوں سے برطرف کردیتی ہے ،قائداعظم محمد علی جناح کو سلو پوائزن دیکرماردیتی ہے ، محترمہ فاطمہ جناح کو قتل کردیتی ہے ، جنرل ایوب خان کے دورمیں ایک ہزار مہاجرسول بیوروکریٹس کو ملازمتوں سے نکال دیتی ہے ، مہاجروں کو معاشی طورپر کمزور کرنے کیلئے ذوالفقار علی بھٹو اور فوجی جرنیلوں نے مل کرنیشنالائزیشن پالیسی کے تحت مہاجروں کی صنعتیں اور کاروبار ہتھیا لیتے ہیں ، چندبرسوں کے بعد ان اداروں کو نیلام کرکے پرائیوٹائز کردیتے ہیں اور وہ ادارے ان کے اصل مالکان کے بجائے بھانجوں بھتیجوں کو دے دیتے ہیں ۔جناب الطاف حسین نے برطانیہ کے ممتازاخبار دی ٹائمز کے 8، جنوری 1965ء کے شمارے کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ اس رپورٹ میں لکھا گیا ہے کہ صدارتی انتخاب میں محترمہ فاطمہ جناح کا ساتھ دینے کی پاداش میں جنرل ایوب خان کے بیٹے گوہر ایوب کی قیادت میں کراچی کے مختلف علاقوںمیں حملے کیے گئے ، درجنوں افراد کوقتل و زخمی کیاگیا اور ہزاروں گھروں کو آگ لگادی گئی۔ انہوںنے کہاکہ ایم کیوایم کے مخالفین الزام لگاتے ہیں کہ جب سے الطاف حسین اور ایم کیوایم آئی ہے کراچی کاامن خراب ہوگیا ، کراچی میں قتل وغارتگری ہونے لگی ہے لیکن وہ 1965ء میں مہاجروں پر مسلح حملے کاکوئی ذکرنہیں کرتے حالانکہ اس وقت الطاف حسین کی عمر محض 12 سال تھی۔ اس وقت ہمارے بزرگوں نے حقائق سے نظریں چرائیں ، اگر ہمارے بزرگ اس وقت ہمت وجرات سے کام لیتے تو آج ان کی اولادوںکو ذلت کی زندگی نہ گزارنی پڑتی۔ رمضان المبارک کی 29 ویں مقدس شب کو وردی والوںنے نائن زیروپر دوبارہ چھاپہ مارکر رابطہ کمیٹی کے انچارج کہف الوریٰ اور رکن قمرمنصور کوگرفتارکرلیا،حراست کے دوران قمرمنصورپر اتنا تشدد کیاگیا کہ وہ چلنے پھرنے سے قاصر تھے ، ان کی حالت دیکھ کر عدالت نے حکم دیا کہ قمرمنصور کا اسپتال میں طبی معائنہ کرایاجائے لیکن آج کے دن تک قمرمنصور کو طبی معائنے کیلئے اسپتال نہیں لایاگیا۔
جناب الطاف حسین نے کہاکہ سرائیکی بیلٹ سمیت صوبہ پنجاب ، صوبہ بلوچستان ، صوبہ خیبرپختونخوا اور اندرون سندھ میںایسی غربت اور افلاس ہے کہ لوگ کئی کئی دن فاقے کرنے پر مجبور ہیں، بعض علاقوں میں لوگ پانی سے روٹی کھاتے ہیں،ان غریبوں کی حالت دیکھ کر آپ کا دل چاہے گا کہ اپنے منہ کا نوالہ بھی انہیں دے دیںجبکہ جاگیرداروں اوروڈیروں کی نجی جیلوںمیں غریب ہاری کسان پورے خاندان سمیت قید کردیے جاتے ہیں اور ظالم جاگیرداروں کے محافظ یہی وردی والے ہیں، اگران میں ہمت ہوتی تو یہ غریبوں پر مظالم ڈھانے والے جاگیرداروں ، وڈیروں اور ملک کا خزانہ لوٹنے والوں کو سرعام لٹکادیتے ، جن کرپٹ جرنیلوں نے کرپشن کرکے اربوں روپے کمائے انہیں بھی لٹکاتے ۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ اگست 2013ء میں کراچی آپریشن شروع کیاگیا اورآج 2015ء ہے ان دوبرسوں کے دوران ایم کیوایم کے ہزاروں بے گناہ کارکنوں کو گرفتارکیاگیا، سینکڑوں کارکنوں کو حراست میں وحشیانہ تشددکا نشانہ بناکر معذورکردیاگیا، درجنوں کارکنوں کو گرفتارکرنے کے بعد لاپتہ کردیاگیااور درجنوں کارکنوں کو ان کے اہل خانہ کے سامنے گرفتارکرنے کے بعد سفاکی سے قتل کرکے ان کی لاشیں سڑکوں پر پھینک دی گئیں ، ان دوبرسوں کے دوران رینجرز نے ایم کیوایم کے گرفتارکارکنوں کی رہائی کیلئے ایک ہزارارب روپے رشوت حاصل کی ۔انہوں نے سوال کیا کہ کیا غیرت مند اوربہادر فوجی ایسے ہوتے ہیں؟ جناب الطاف حسین نے کنونشن کے شرکاء کومخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے یقینا وہ مناظر دیکھے ہوں گے کہ جب رینجرز کے ”بہادر” جوانوںنے نائن زیروپر چھاپہ مارا تو دوسرے دن کس طرح شرفاء کو جنگی قیدیوںکی طرح عدالت میں پیش کیا۔ جب 71ء میں 93 ہزارفوجیوں کو بھارتی فوجیوں نے قیدی بنایاتوانہیں بھی اس طرح پیش نہیں کیاگیا تھا۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ ہم کسی کے خلاف نہیں ہیں، ملک بھرکے غریب ومحروم پنجابی ، بلوچ، سندھی، پختون ، کشمیری ، سرائیکی ، ہزاروال اور دیگر قومیتوں کے لوگ ہمارے بھائی تھے ، بھائی ہیں اور بھائی رہیں گے ، ان مظلوم عوام پر ظلم کرنے والے بھی وہی ہیں جوانگریزوں کی غلامی کرتے تھے اورجنہیں انگریزوںنے انعام میں جاگیریں دی تھیں۔انہوںنے کہاکہ پاکستان ہمارے بزرگوں نے 20 لاکھ جانوں کانذرانہ دیکر بنایا ، قیام پاکستان کی جدوجہد میں دولاکھ بہنوںنے اپنی عصمتوں کے تحفظ کیلئے کنوؤں میں کود کرجانیں دیں ، سینکڑوں بیٹیوں کی عزتیں پامال ہوئیں ، سینکڑوں جوانوں کو انکے بوڑھے والدین کے سامنے کاٹا گیا اور سینکڑوں حاملہ خواتین کے پیٹ چاک کرکے نومولود بچوں کو نیزوں پراچھالا گیالیکن قیام پاکستان کیلئے اپنا سب کچھ قربان کردینے والوں کی اولادوںکے ساتھ پاکستان میں غیروں جیسا سلوک کیاجارہا ہے ۔ امریکہ میں مقیم مہاجراگر چاہیں تو پاکستان میں مہاجروں پر ڈھائے جانے والے مظالم کے خلاف نہ صرف متعلقہ اداروں میں انفرادی پٹیشن ارسال کرسکتے ہیں بلکہ اقوام متحدہ اور وائٹ ہاؤس کے سامنے لاکھوں افرادکا مظاہرہ کرکے پوری دنیا کو مہاجروںکے خلاف مظالم سے آگاہ بھی کرسکتے ہیں۔ جناب الطاف حسین نے سینئر مہاجربزرگوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ حق پرستی کی 37 سالہ جدوجہد کے دوران ایم کیوایم کے 25 ہزار سے زائد کارکنان وہمدرد فوج ، رینجرز اورپولیس کے ہاتھوں قتل کیے جاچکے ہیں ، مہاجروں کاسیاسی، تعلیمی اور معاشی قتل عام کرنے کیلئے 1973ء میں ذوالفقارعلی بھٹو نے فوج کے ساتھ مل کر صرف صوبہ سندھ میں کوٹہ سسٹم نافذ کیا جو آج تک نافذہے ۔انہوںنے کہاکہ آج جس کا دل چاہتا ہے بانیان پاکستان کی اولادوں کو بھوکا ننگا قراردے دیتاہے اورانہیں مغلظات بکتا ہے اگر مہاجروں کو گالی دینے والے ایک دو افراد کی زبانوں کو لگام دی جاتی تو کسی میں ہمت نہیں ہوتی کہ وہ بانیان پاکستان کی اولادوں کے خلاف بکواس کرتا۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ پاکستان میں مذہبی انتہاء پسندی کوفروغ دیا جارہا ہے ، پہلے القاعدہ ، طالبان ، لشکرجھنگوی ، لشکر طیبہ اوردیگر جہادی تنظیمیں پوری دنیامیں بنتی رہیں لیکن اب داعش تمام تنظیموں کو ٹیک اوور کررہی ہے اورپوری دنیا میں اپنی مرضی کا مسلک نافذ کرنا چاہتی ہے ۔
جناب الطاف حسین نے کہاکہ دنیامیں تیزی سے تبدیلیاں آرہی ہیں، گریٹربلوچستان بنے گا، گریٹرپختونستان بھی بنے گااورگریٹرپنجاب بھی ہوگاجس کا ہیڈکوارٹر کراچی ہوگااسی لئے اسٹیبلشمنٹ کے متعصب لوگوںنے فیصلہ کرلیاہے کہ اپنے حقوق کی بات کرنے والے کراچی کے مہاجرنوجوانوں کومارو، جوباقی بچیں ان سے غلامی کراؤ ۔انہوں نے کہاکہ ہم پر لسانیت کاالزام لگایاجاتاہے،لیکن ا1973ء میں جب سندھ میں شہری اوردیہی کی بنیادپر40/60 کا کوٹہ سسٹم نافذ کیا گیاتھاتوکیااس وقت الطاف حسین سیاست میں تھا؟1973ء میں توالطاف حسین کی عمر 20سال تھی ،اس وقت تومیں نیشنل کالج میں فرسٹ ایئرکاطالبعلم تھا۔کوٹہ سسٹم دس سال کیلئے نافذ کیاگیاتھالیکن بھٹوکی حکومت کے خاتمہ کے بعد بھی جرنیلوں اورسویلین کی حکومتیں آتی رہیں لیکن کوٹہ سسٹم کوختم کرنے کے بجائے اس کی میعادمیں اضافہ کیاجاتارہامگرشہری علاقوںکو 40 فیصد تو کجا ایک فیصد کوٹہ بھی نہیں دیا جاتا۔ انہوں نے کہاکہ میں نے توکوئی لسانی سیاست کاآغاز نہیں کیا، مہاجربستیوں پرمہاجر دشمنوں کی جانب سے حملہ کیاجاتاتھا، ان کاقتل عام کیاجاتاتھا،مہاجرماؤںبہنوںکی بیحرمتی کی جاتی تھی۔میراجرم یہ تھاکہ میں نے مہاجروںکو تبلیغ کی کہ اٹھواوراپنادفاع کرو، اپنے گھرباراوربال بچوں ، ماؤںبہنوں کی جان ومال اورعزت وآبروکادفاع کرنے کاحق ملک کاقانون بھی دیتاہے ، اسلام بھی اورقرآن مجید بھی دیتاہے۔ انہوں نے ایم کیوایم امریکہ کے کارکنوں سے کہاکہ آپ اقوام متحدہ جائیں اورنیٹوکے ہیڈکوارٹرجائیں ، وہاں جاکرانہیںمہاجروںپر ڈھائے جانے والے مظالم سے آگاہ کریںاوران سے کہیں کہ وہ کراچی میں اقوام متحدہ یانیٹوکی فوج بھیجیں تاکہ وہ وہاںمعلوم کریں کہ کس نے قتل عام کیااورکون کون اس کاذمہ دارتھا۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ ہم جوجدوجہدکررہے ہیں وہ کرتے رہیں گے لیکن جب پاکستان سمیت دنیابھرمیںکارکنان گرین سگنل دیں گے توہم پھرباقاعدہ مطالبہ کریںگے کہ مہاجروں کے لئے الگ صوبہ بنایاجائے اور ہمیں ہماراحق دیاجائے ۔جناب الطاف حسین نے اس موقع پرکراچی کے بارے میںواشنگٹن پوسٹ کی ایک حالیہ رپورٹ پڑھ کرسنائی جس میں تفصیل سے ذکرہے کہ کس طرح آپریشن کے دوران ایم کیوایم کے ساتھ زیادتی کی جارہی ہے ۔ انہوں نے وال اسٹریٹ جرنل کی گزشتہ روزشائع ہونے والی کراچی کے بارے میں تفصیلی رپورٹ بھی پڑھ کرسنائی جس میں تفصیل سے بتایاگیاہے کہ کراچی میں اورنگی ٹاؤن اوردیگرعلاقوں میں کالعدم تنظیمیں کس طرح آزادی کے ساتھ کام کررہی ہیں جبکہ ایم کیوایم جیسی لبرل سیاسی جماعت کے کارکنوں پر قدغن اورپابندیاںہیں۔ رپورٹ میں بتایاگیاہے کہ کس طرح ان کالعدم تنظیموں کے رہنماؤںکوپولیس کاتحفظ بھی حاصل ہے ۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ اس رپورٹ سے صاف ظاہرہے کہ کراچی میں لشکرجھنگوی اوردیگرکالعدم تنظیموں پرکسی قسم کی کوئی پابندی نہیں بلکہ وہ آزادنہ طورپراپنی سرگرمیاں جاری رکھے ہوئے ہیں جبکہ ایم کیوایم کے عہدیداروں اورکارکنوں کوگرفتارکیاجارہا ہے۔عیدالفطرپر اورنگی ٹاؤن اورکراچی کے دیگرعلاقوں میں کالعدم تنظیموں نے باقاعدہ اسٹال لگاکرفطرہ اورصدقات جمع کئے جبکہ ایم کیوایم کے فلاحی ادارے کوباقاعدہ اعلان کرکے زکوٰة فطرے کے عطیات جمع کرنے پرپابندی لگادی گئی اوراگرکہیں کارکنوں نے عطیات جمع کرنے کی کوشش کی توانہیں گرفتار کرلیاگیا۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ ایسی تنظیموںپربھی کوئی قدغن نہیں ہے جوکھلے عام اہل تشیع کمیونٹی اوردیگر اقلیتی فرقوں کوکافرقراردیتی ہیں۔انہوں نے کہاکہ بانی ء پاکستان قائداعظم محمدعلی جناح بھی خوجہ اثنائے عشری شیعہ تھے ، اگرشیعہ کافرہیں توپوراپاکستان کافرہے۔انہوںنے کہاکہ جولوگ اہل تشیع حضرات کوکافر قرار دیکران کاقتل کرتے ہیں، اسماعیلیوں کومارتے ہیںان کوکیوںنہیں پکڑاجاتا؟القاعدہ کاہرلیڈرجماعت اسلامی کے گھروںسے پکڑاگیالیکن ان کونہیں پکڑاجاتا۔جنا ب الطاف حسین نے کہاکہ میں سچی اورکھری باتیںکرتاہوں تومجھ پر غداری کے مقدمات بنائے جاتے ہیںمگرمجھے ان مقدمات کی کوئی پروا نہیں۔مجھے ایک بارنہیں بلکہ سوبارپھانسی دی جائے اوراللہ مجھے سوبارنئی زندگی دے تب بھی میںحق اورسچ کی بات کروں گا۔ انہوںنے کارکنوں سے کہاکہ میری تحریک شہیدوں کی امانت ہے، اگرمیں ماردیاجاؤں تو اس تحریک کوجاری رکھنااورشہیدوں کی قربانیوںکورائیگاںنہیں جانے دینا۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ اسٹیبلشمنٹ کی پوری کوشش ہے کہ کسی طرح شہیدانقلاب ڈاکٹرعمران فاروق کاقتل میرے متھے ڈال دیاجائے لیکن اللہ بہترجانتاہے کہ میراڈاکٹرعمران فاروق شہیدکے قتل سے کوئی تعلق نہیں۔ہم دنیاسے چھپاسکتے ہیں لیکن اللہ تعالیٰ سے نہیں چھپاسکتے۔اللہ تعالیٰ ہی بہترانصاف کرنے والاہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان میں فوج کوگالیاں دینے والے عمران خان کوتوسرپرچڑھایاجاتاہے لیکن میری تقریرپرپابندی لگادی گئی ہے ۔ جناب الطاف حسین نے اپنی تقریرمیںہیومن رائٹس کمیشن آف پاکستان کی کراچی کے بارے میں حالیہ رپورٹ کابھی حوالہ دیاجس میں کہاہے گیا ہے کہ کراچی میں جاری رینجرزآپریشن کاہدف ایم کیوایم ہے اورایم کیوایم کوظلم کانشانہ بنایاجارہاہے۔رپورٹ میں رینجرزآپریشن کو زیادہ شفاف اورقانون کے دائرے میں رکھنے کی ضرورت پر زوردیاگیاہے۔ کمیشن نے کراچی میں ماورائے عدالت قتل پر بھی اپنی تشویش کااظہارکیاہے اورکہاہے کہ اس حوالے سے قانونی تقاضے پورے نہیں کئے جارہے ہیں… ہیومن رائٹس کمیشن نے ایم کیوایم کے کارکنوں اورہمدردوںکوگرفتارکرکے غائب کرنے کے واقعات پر سخت تشویش کااظہارکرتے ہوئے واضح الفاظ میں کہا کہ لوگوں کااٹھالیاجانااوران کے اتے پتے کے بارے میں کافی عرصہ تک لاعلم ہوناکسی بھی صورت قابل قبول نہیں ہے ” ۔ا یچ آرسی پی نے یہ بھی کہا ہے کہ ایم کیوایم کے مرکزپرچھاپوں کے واقعات کی بھی آزادانہ چھان بین ہونی چاہیے۔ انہوں نے کہاکہ ہیومن رائٹس کمیشن نے رینجرزمخالف تقاریر پر مقدمات درج کرنے پر بھی تشویش کااظہار بھی کیاہے اورکہاہے کہ رینجرزیاکسی بھی ادارہ پر تنقیدکے حق پر کسی بھی قسم کی قدغن لگانے کی کوئی جائزوجہ موجود نہیں۔انہوں نے کہاکہ پاکستان میں میڈیاپر دباؤڈالاگیاکہ ہیومن رائٹس کمیشن کی اس رپورٹ کوشائع نہ کیاجائے۔ پاکستان میںآزادی اظہار کاگلاگھونٹاجارہاہے ،میڈیاکی آزادی سلب کی جارہی ہے۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ اس کنونشن کا موضوع ” مزید صوبے … مضبوط پاکستان ” ہے اور آج کے حالات میں پاکستان میں مزیدصوبوں کاقیام وقت کی اہم ضرورت ہے۔پاکستان میں ہرجگہ محرومی ہے ۔پاکستان کے موجودہ چاروں صوبوں میں نئے صوبوں کے قیام کے مطالبے موجودہیں۔خیبرپختونخوا میں ہزارہ صوبے کا مطالبہ ہے، بلوچستان میں جنوبی پشتونخوا صوبہ کامطالبہ موجود ہے ، پنجاب میں سرائیکی صوبہ ، بہاولپور صوبہ اورپوٹھوہارصوبہ کی آوازیں موجود ہیں،فاٹا صوبہ کے قیام کیلئے بھی آوازیں اٹھ رہی ہیں اورسندھ میں کراچی صوبہ یاشہری سندھ کے صوبے کامطالبہ بھی برسوں سے موجود ہے جو اب شدت اختیارکررہاہے۔انہوںنے کہاکہ پاکستان اسی صورت میں مضبوط ہوگاجب مزیدصوبے قائم کئے جائیں گے۔ جناب الطاف حسین نے کارکنوں سے کہاکہ لندن میں بینک اکاؤنٹس بندہیں اورتحریک مالی دشواریوں کاشکارہے لہٰذا کارکنان حسب توفیق چندہ بھیجیں۔انہوں نے دعاکی کہ اللہ تعالیٰ مہاجروں کی غیب سے مددفرمائے، ہماری مشکلات کوحل فرمائے ۔ انہوں نے پاکستان کے ممتازمزاحیہ اداکارفریدخان کے انتقال پر دلی افسوس کا اظہار کیا اورانہیں زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ان کے لئے فاتحہ خوانی کرائی۔ جناب الطاف حسین نے تاریخی کنونشن کے انعقادپرایم کیوایم امریکہ کے سینٹرل آرگنائزرجنیدفہمی، سینٹرل آرگنائزنگ کمیٹی اورامریکہ کی تمام ریاستوں کے چیپٹرزکے ذمہ داران وکارکنان کودلی مبارکباداورخراج تحسین پیش کیا۔

کسی بھی سازشی ہتھکنڈے کے ذریعے کراچی پرقبضہ نہیں کیاجاسکتا، الطاف حسین


altaf-hussain-meeting-london-051013 (8) July 15, 2015 | 10:13 PM

سول حکومتیں اب غیر جمہوری قوتوں کے ساتھ ملکر جائز و ناجائز ہتھکنڈے استعمال کرکے ایم کیوایم سے کراچی چھیننا چاہتی ہیں ، الطاف حسین
ایم کیوایم کی این اے 246کی نشست پر تاریخی جیت کے بعد بھی پاکستان کے سویلین اور غیر سیویلین ادارو ں نے
کوئی سبق حاصل نہیں کیا ، الطا ف حسین
سویلین اور غیر سویلین ادارے اور حکومتیں مشترکہ طور پر اتحاد کرکے بار بار ایم کیوایم کو ختم کرنے
کیلئے ریاستی آپریشن کرچکے ہیں، الطاف حسین
این اے 246کے ضمنی الیکشن میں غیر سویلین اور دیگر ملکی اداروں نے ایم کیوایم کو شکست دلانے میں کوئی کسر باقی نہیں چھوڑی ، الطا ف حسین
محروم و مظلوم عوام کے حقوق کیلئے اپنی 37سالہ زندگی جدوجہد میں لگا دی ، الطاف حسین
ایم کیوایم کے کارکنان و ذمہ داران وفا کا تقاضا نبھاتے ہوئے ، وعدو ںکا پاس رکھتے ہوئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرتے رہے، الطاف حسین
اللہ تعالیٰ اور عوام کی تائید کی بدولت ایم کیوایم کا پرچم بلندیوں پر لہراتا رہے گا ، الطاف حسین
ایم کیوایم پنجاب کے صدر سینیٹر میاں عتیق اور آرگنائزنگ کمیٹی پنجاب سے ٹیلی فون پر گفتگو
لندن:(نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے قائد جناب الطا ف حسین نے کہا ہے کہ کراچی کے حقوق کیلئے ہزاروں کارکنان نے اپنی جانوں کی قربانیاں دیں ہیں اور ہم کسی بھی صورت یا کسی بھی سازشی ہتھکنڈے کے ذریعے کراچی پر قبضہ نہیں ہونے دینگے ، ایم کیوایم کو عوام اور اللہ تعالیٰ کی تائید حاصل ہے اور اسکی بدولت ایم کیوایم کا پرچم بلندیوں پر لہراتا رہے گا ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے ایم کیوایم پنجاب کے صدر اور حق پرست سینٹر میاں عتیق اور اراکین آرگنائزنگ کمیٹی ایم کیوایم پنجاب سے ٹیلی فون پر گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ میں نے محروم و مظلوم عوام کے حقوق کیلئے اپنی 37سالہ زندگی جدوجہد میں لگا دی اور اس جدوجہد کے دوران میں نے منشو ر ومقاصد اور نظریاتی لیکچر ز ، سوال و جواب کے سیشن کا انعقاد کرکے ایک ایک ساتھی کو نظریاتی طور پر تیا کیا ہے یہی وجہ ہے کہ سویلین اور غیر سویلین ادارے اور حکومتیں مشترکہ طور پر اتحاد کرکے بار بار ایم کیوایم کو ختم کرنے کیلئے ریاستی آپریشن کرچکے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ ایم کیوایم جدوجہد کے دوران آگ و خون کے دریا عبور کرتی آرہی ہے ، ایم کیوایم کے کارکنان و ذمہ داران وفا کا تقاضا نبھاتے ہوئے ، وعدو ںکا پاس رکھتے ہوئے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرتے رہے لیکن سویلین حکومت اور غیر سویلین اداروں کے ایجنٹ نہیں بنے بلکہ انہوں نے آزمائش کے بعد اپنی جان دینا گوارہ کیا لیکن اپنے ظرف و ضمیر کاسودا نہیں کیا ۔ انہوں نے کہاکہ حال ہی میں این اے 246کراچی کی نشست پر ہونے والے ضمنی انتخاب میں ایم کیوایم کو شکست دینے کیلئے ایک طرف تمام حربے استعمال کئے گئے تو دوسری جانب غیر سویلین اور اداروں نے بھی ایم کیوایم کو اس انتخاب میں شکست دلانے کیلئے کوئی کسر باقی نہیں چھوڑی لیکن اس کے باوجود اللہ کے فضل و کرم سے تمام تر سویلین اور غیر سویلین اور حکومت کے مل جانے ، سازشی ہتھکنڈوں اور آزمائش کے بعد یہ ایم کیوایم سے این اے 246کی سیٹ حاصل نہیں کرسکے اور عوام نے تمام تر پریشانیوں اور رکاوٹوں کے باوجود ایم کیوایم کوشاندار فتح سے ہمکنار کرایا ۔ انہوں نے کہاکہ این اے 246کی نشست پرایم کیوایم کی واضح اور شاندار کامیابی کے بعد بھی پاکستان کے سویلین اور غیر سویلین اداروں نے کوئی سبق حاصل نہیں کیا ۔ انہوں نے کہا کہ سول حکومتیں اب غیر جمہوری قوتوں کے ساتھ ملکر جائز و ناجائز ہتھکنڈے استعمال کرکے ایم کیوایم سے کراچی چھیننا چاہتی ہیں یعنی کراچی کوغیر جمہوری ہتھکنڈوں اور مافیا کے ذریعے ایم کیوایم سے حاصل چاہتے ہیں ۔ انہوں نے میاں عتیق کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ میں آپ کو بتانا چاہتا ہوں کہ جب تک ایم کیوایم کو عوامی اور رضاکارانہ مینڈیٹ حاصل ہے تب تک کسی بھی طاقت کے ذریعے حکومت یا غیر جمہوری لوگ ایم کیوایم سے کراچی نہیں چھین سکتے اور ہم کراچی میں مافیا ، چور اچکوں کا قبضہ نہیں ہونے دینگے ۔ انہوں نے کہاکہ تحریکی جدوجہد میں حق پرستی کی خاطر ہزاروں ساتھیوں نے جانوں کا نذرانہ دیا لیکن کوئی بھی ہتھکنڈہ استعمال کرلیاجائے عوام الطاف حسین کو ہرگز نہیں چھوڑیں گے ۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ ایم کیوایم اللہ تعالیٰ کی تائید اور عوام کی حمایت حاصل ہے اور وہ وقت دور نہیں جب ایم کیوایم کر پرچم کراچی سمیت ملک بھر میں بلندیوں پر لہراتا نظر آئے گا ۔ اس موقع پر ایم کیوایم پنجاب کے صدر میاں سینیٹرعتیق اور اراکین آرگنائزنگ کمیٹی پنجاب نے جناب الطاف حسین کے فکر و فلسفہ پر اپنے بھر پور اعتماد کااظہار کرتے ہوئے اس عزم کا اعادہ کیا کہ پنجاب کے حق پرست عوام تمام تر نامساعد حالات کے باوجود جناب الطاف حسین اور ایم کیوایم کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہیں ۔

حکومت تعلیمی معیار بہتر بنانے اوریکساں مواقع فراہم کرنے پر یقین رکھتی ہے، وزیراعظم نواز شریف


1436350011_pm malala July 8, 2015 | 4:16 PM

اوسلو:(نیوزآن لائن) وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ کہ لاکھوں لوگ ملالہ کو بہادری اور جرات کی مثال کے طور پر دیکھتے ہیں،حکومت تعلیمی معیار بہتر بنانے اوریکساں مواقع فراہم کرنے پر یقین رکھتی ہے۔وسلو میں نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی سے گفتگو کرتے ہوئے نوازشریف نے کہا کہدہشتگرد ی کیخلاف قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی۔ انہوں نے کہا کہ خواتین بچوں اور اقلیتوں کے حقوق کے فروغ کیلئے اہم اقدامات کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے تعلیمی اخراجات کو مجموعی ملکی پیداوار کے چار فیصد تک بڑھانے کا تہیہ کررکھا ہے۔ انہوں نے تعلیم کے فروغ کے نصب العین کے لئے ملالہ کی ذاتی دلچسپی کو سراہا۔انہوں نے کہا کہ ملالہ پاکستان کا فخر ہیں، دہشتگر دی کیخلاف دی جانے والی قربا نیاں رائیگاں نہیں جائیں گی،اس موقع پرملالہ یوسف زئی کا کہنا تھا کہ دہشتگردی کے خاتمے کیلئے تعلیم اہم جزو ہے۔

پاک فوج اور رینجرز کی جانب سے شدیدگرمی سے متاثرہ شہریوں کوطبی امداد فراہم کرنے کیلئے کراچی اوراندرون سندھ میں ” ہیٹ اسٹروک سینٹر ” قائم کرنا مثبت اورخوش آئندقدم ہے۔ الطاف حسین


Altaf-Hussain-150913 June 22, 2015 | 9:22 PM

میں نے کل ہی اپنے بیان میں شدیدگرمی سے متاثرہ شہریوں کی امدادکیلئے آرمی چیف جنرل راحیل شریف سے
عملی اقدامات کرنے کی اپیل کی تھی
لندن :( نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے قائدجناب الطاف حسین نے پاک فوج اور رینجرز کی جانب سے شدیدگرمی سے متاثرہ شہریوں کوطبی امداد فراہم کرنے کیلئے کراچی اوراندرون سندھ میں ” ہیٹ اسٹروک سینٹر ” قائم کرنے کاخیرمقدم کیاہے ۔اپنے ایک بیان میں جناب الطاف حسین نے کہاکہ میں نے کل ہی اپنے بیان میں شدیدگرمی اورلوڈشیڈنگ سے پیداہونے والی صورتحال پرقابوپانے اورشہریوں کی امداد کیلئے چیف آف آرمی اسٹاف جنرل راحیل شریف سے عملی اقدامات کرنے کی اپیل کی تھی، مجھے خوشی ہے کہ پاک فوج کی قیادت نے اس پر فوری نوٹس لیااور آج پاک فوج اوررینجرزکی جانب سے شدیدگرمی سے متاثرہ افرادکوطبی امداد فراہم کرنے کیلئے کراچی اور اندرون سندھ میں ” ہیٹ اسٹروک سینٹرز”قائم کئے گئے ہیں جوکہ ایک مثبت اورخوش آئندقدم ہے۔

ایم کیوایم کے سینیٹربیرسٹرڈاکٹرفروغ نسیم کے والد اورممتازقانون داں محمدنسیم ایڈوکیٹ کے انتقال پرقائد تحریک الطاف حسین کااظہارتعزیت


altaf hussain June 15, 2015 | 10:02 PM

لندن:(نیوزآن لائن)قائدتحریک الطاف حسین نے رابطہ کمیٹی، تنظیمی شعبہ جات، ارکان پارلیمنٹ ، انٹرنیشنل سیکریٹریٹ کے ارکان، ایم کیوایم یوکے اور
یوتھ ونگ کے بیک وقت اجلاس میں فروغ نسیم کے والد محمدنسیم ایڈوکیٹ مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کیلئے فاتحہ خوانی کرائی
اجلاس میں بیرسٹر فروغ نسیم کی والدہ کی صحت یابی کے لئے بھی دعاکی گئی
بیرسٹرفروغ نسیم اوران کے تمام اہل خانہ کے غم میں برابرکے شریک ہیں۔ الطاف حسین
متحدہ قومی موومنٹ کے قائدجناب الطاف حسین نے ایم کیوایم کے سینیٹربیرسٹرڈاکٹرفروغ نسیم کے والد اورممتازقانون داں محمدنسیم ایڈوکیٹ کے انتقال پر دلی صدمہ اورگہرے رنج وغم کااظہارکیاہے۔جناب الطاف حسین نے آج کراچی، اسلام آباداورلندن میں رابطہ کمیٹی، تمام تنظیمی شعبہ جات ارکان پارلیمنٹ ، انٹرنیشنل سیکریٹریٹ کے ارکان، ایم کیوایم یوکے اوریوتھ ونگ کے بیک وقت اجلاس میں فروغ نسیم کے والد محمدنسیم ایڈوکیٹ کے انتقال پر شدیدافسوس کا اظہار کیا۔ جناب الطاف حسین نے مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کے لئے فاتحہ خوانی کرائی اوردعاکی کہ اللہ تعالی محمدنسیم ایڈوکیٹ مرحوم کی مغفرت فرمائے ، انہیں جنت الفردوس میں اعلی مقام عطاکرے اوربیرسٹرفروغ نسیم اورانکے تمام اہل خانہ کویہ صدمہ برداشت کرنے کاحوصلہ اورصبرجمیل عطافرمائے ۔ اجلاس میں بیرسٹر فروغ نسیم کی والدہ کی صحتیابی کے لئے بھی دعاکی گئی ۔

خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں ایم کیوایم کے خواتین سمیت نامزد کردہ 22امیدواروں کی کامیابی پر الطاف حسین کی مبارکباد


altaf hussain June 1, 2015 | 10:07 PM

نامزد حق پرست امیدواروں کی خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں کامیابی ملک بھر کے مظلوم عوام کی فتح ہے، الطا ف حسین
خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں کئی حلقوں میں خواتین کوحق رائے دہی استعمال کرنے سے روکا گیا، الطاف حسین
خواتین کو ووٹ کا حق استعمال نہ کرنے دینے کے باوجود ایم کیوایم کی نامزد کردہ 9خواتین امیدواروں نے بلدیاتی انتخابات میں نہ صرف حصہ لیا بلکہ بھر پور کامیابی حاصل کی جس پر میں ان کی جرات ، ہمت اور بہادری پر زبردست خراج تحسین پیش کرتا ہوں ، الطا ف حسین
خیبر پختونخوا سے حق پرست امیدواروں کی کامیابی سے ثابت ہوگیا کہ ایم کیوایم ملک گیر سطح کی جماعت ہے ، الطاف حسین
بلدیاتی انتخابات میں کامیابی ایم کیوایم پر لسانیت کی تہمت لگانے والی سیاسی ومذہبی جماعتوں کے رہنمائوں کی
آنکھیں کھولنے کیلئے کافی ہے، الطا ف حسین
آزاد کشمیر ، گلگت بلتستان کے بعد اب خیبر پختونخوا میں حق پرست امیدواروں کی کامیابی غریب و مظلوم عوام کا ایم کیوایم
پر اعتماد کا کھلا مظہر ہے ، الطا ف حسین
کامیاب بلدیاتی امیدواران خیبر پختونخوا کے عوام کے مسائل اور مشکلات کے حل کیلئے کوئی کثر باقی نہ چھوڑیں اور اپنی تمام صلاحیتوں کا استعمال کرکے عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولیات کی فراہمی کیلئے اپنا بھر پوراور عملی کردار ادا کریں، الطاف حسین
ذمہ دارا ن و کارکنان ثابت قدمی اور عزم وحوصلے کے ساتھ حقوق کی جدوجہد جاری رکھیں انشاء اللہ تعالیٰ فتح حق پرستوں کا مقدر بنے گی، الطاف حسین
لندن:(نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے قائد جناب الطاف حسین نے خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں ایم کیوایم کے خواتین سمیت نامزد کردہ 22امیدواروں کو کامیابی پر دلی مبارکباد پیش کی ہے اور کہا ہے کہ نامزد حق پرست امیدواروں کی خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں کامیابی ملک بھر کے مظلوم عوام کی فتح ہے ۔ ایک تہنیتی بیان میں جناب الطاف حسین نے کہاکہ خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں حق پرست امیدواروں کی تمام تر مصائب ، مشکلات اور نامساعد حالات کے باوجود کامیابی سے ایک مرتبہ پھر ثابت ہوگیا ہے کہ ایم کیوایم ملک گیر سطح کی جماعت ہے اورحق پرست بلدیاتی امیدواروں کی خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں کامیابی ایم کیوایم پر لسانیت کی تہمت لگانے والی سیاسی ومذہبی جماعتوں کے رہنمائوں کی آنکھیں کھولنے کیلئے کافی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں کئی حلقوں میں خواتین کوحق رائے دہی استعمال کرنے سے روکا گیا لیکن اس کے باوجود ایم کیویم کی نامزد کردہ 9خواتین امیدواروں نے بلدیاتی انتخابات میں نہ صرف حصہ لیا بلکہ بھر پور کامیابی حاصل کی جس پر میں ان کی جرات ، ہمت اور بہادری پر زبردست خراج تحسین پیش کرتا ہوں ۔ انہوں نے مزید کہاکہ ایم کیوایم کی نامزد کردہ خواتین امیدواروں کی کامیابی اس بات کا ثبوت ہے کہ خیبر پختونخوا کی خواتین فرسودہ روایات اور جمہوریت کے برعکس ناجائز پابندیوں کا خاتمہ چاہتی ہیں اور قائد تحریک جناب الطا ف حسین کی حق پرستانہ جدوجہد کے ساتھ ہیں ۔انہوں نے کہاکہ آزاد اکشمیر ، گلگت بلتستان کے بعد اب خیبر پختونخوا میں حق پرست امیدواروں کی کامیابی غریب و مظلوم عوام کا ایم کیوایم پر اعتماد کا کھلا مظہر ہے ۔انہوں نے کامیاب ہونے والے بلدیاتی امیدواروں کو تلقین کی کہ وہ خیبر پختونخوا کے عوام کے مسائل اور مشکلات کے حل کیلئے کوئی کثر باقی نہ چھوڑیں اور اپنی تمام صلاحیتوں کا استعمال کرکے عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولیات کی فراہمی کیلئے اپنا بھر پوراور عملی کردار ادا کریں ۔ انہوںنے مزید کہاکہ تاریخ گواہ ہے کہ ایم کیوایم پرجب بھی عرصہ حیات تنگ کیا گیا اور اسے مظلوم قومیتوں کے حقوق کی جدوجہد سے باز رکھنے کی کوشش کی گئی اور مظالم کا نشانہ بنایا گیا تب تب ایم کیوایم ملک کے گوشے گوشے میں پھیلتی رہی اورانشاء اللہ تعالیٰ خیبر پختونخوا کے بلدیاتی انتخابات میں کامیاب ہونے والے حق پرست امیدواران پورے خیبر پختونخوا میں ایم کیوایم کے پیغام حق پرستی کو فروغ دیں گے اور عوام کی خدمت کو شعار بنا کر ایک نئی مثال قائم کریں گے ۔ جناب الطاف حسین نے صوبہ خیبر پختونخواہ کے بلدیاتی انتخابات میں 22حق پرست امیدواروں کی کامیابی پر ایم کیوایم کے تمام ذمہ داران و کارکنان کو بھی دلی مبارکباد پیش کی اور کہا کہ ذمہ دارا ن و کارکنان ثابت قدمی اور عزم وحوصلے کے ساتھ حقوق کی جدوجہد جاری رکھیں انشاء اللہ تعالیٰ فتح حق پرستوں کا مقدر بنے گی ۔

ڈسکہ میں پولیس کے ہاتھوں دووکلاء کی ہلاکت پر الطاف حسین کااظہار افسوس


altaf-hussain-21jan May 25, 2015 | 10:23 PM

پولیس کے ہاتھوں پرامن اور بے گناہ شہریوں کے قتل کے واقعات ناقابل قبول ہیں، الطاف حسین
قانون پسندشہریوں پر گولیاں چلانے کے بجا ئے ان کی جان ومال کاتحفظ یقینی بنایا جائے ، الطاف حسین
لندن :( نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے قائد جناب الطاف حسین نے سیالکوٹ، ڈسکہ میں وکلاء پرپولیس کی فائرنگ کی شدید مذمت کی ہے اور فائرنگ کے نتیجے میں ڈسکہ بار کے صدر خالد عباس سمیت دو وکلاء کے جاں بحق ہونے پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے ۔ ایک بیان میں جناب الطاف حسین نے کہاکہ کسی بھی مہذب معاشرے میں پولیس کے ہاتھوں پرامن اور بے گناہ شہریوں کے قتل کے واقعات ناقابل قبول ہیں اور قانون نافذ کرنے والے اداروں پر لازم ہے کہ وہ قانون پسندشہریوں پر گولیاں چلانے کے بجائے ان کی جان ومال کاتحفظ یقینی بنائیں ۔ جناب الطاف حسین نے وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف ، وفاقی وزیرداخلہ چوہدری نثارعلی خان اور وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف سے مطالبہ کیا کہ پولیس کے ہاتھوں وکلاء کے قتل کی فوری تحقیقات کرائی جائے اور شہریوں کی جان ومال کا تحفظ یقینی بنایاجائے۔جناب الطاف حسین نے جاں بحق ہونے والے وکلاء کے سوگوارلواحقین سے دلی تعزیت وہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے دعا کی کہ اللہ تعالیٰ جاں بحق وکلاء کو اپنی جوار رحمت میں جگہ عطافرمائے اورسوگوارلواحقین کو یہ صدمہ برداشت کرنے کا حوصلہ دے ۔(آمین)

ایم کیوایم برطانیہ کے تحت سلائو یونٹ کی تنظیم نو کردی گئی


mqm america May 25, 2015 | 10:15 PM

الطاف حسین کے نظریے اور فلسفے کو برطانیہ میں پھیلانے میں اپنا کردار ادا کریں گے،ڈاکٹر سلیم دانش
کراچی پاکستان کی شہہ رگ ہے جو پورے پاکستان کو 70فیصدر سے زائد ریونیودیتا ہے
کراچی کے شہریوں کے ساتھ کھلی ناانصافی کی جارہی ہے اور پانی کی بوند بوند سے ترسایہ جارہا ہے،ڈاکڑ سلیم دانش
ایم کیوایم سلائو یونٹ کی تنظیم نو کے موقع پر خطاب
لندن :( نیوزآن لائن )ایم کیوایم رابطہ کمیٹی کے رکن ا ور برطانیہ کے آرگنائزر ڈاکٹر سلیم دانش نے کہا ہے کہ قائد تحریک جناب الطاف حسین کے حق پرستانہ نظریے اور فلسفے کو پورے برطانیہ میں پھیلانے میں اپنا کردار ادا کریں گے ۔ یہ بات انہوں نے ایم کیوایم سلائو یونٹ کی تنظیم نو کے موقع پر خطاب کر تے ہوئے کہی ۔ اس موقع پرسی ای سی کے رکن ورکن سندھ اسمبلی عادل صدیقی ، ایم کیوایم برطانیہ کے جوائنٹ آرگنائزر سہیل خانزدہ اور وآرگنائزنگ کمیٹی کے ارکان اور سلائو یونٹ کے ذمہ داران وکارکنان بھی موجود تھے ۔ انہوں نے کہا جس طرح پاکستان میں ایم کیوایم کا میڈیا ٹرائل کیا جارہاہے اس سے حق پرست عوام میں عدم احساس تحفظ اوراحساس بگانگت پید ا ہورہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کراچی پاکستان کی شہہ رگ ہے جو پورے پاکستان کو 70فیصد سے زائد ریونیودیتا ہے مگر اس شہر کے ساتھ کھلی ناانصافی کی جارہی ہے اور یہاںکے شہریوں کو پانی کی بوند بوند سے ترسایہ جارہا ہے جبکہ بجلی کی کئی کئی گھنٹے غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے جس سے کراچی کے شہریوں کی زندگی اجیر بن کر رہ گئی ہے ۔ انہوںنے کہا کہ ایم کیوایم کے کارکنان کی تو جے آئی ٹی بہت ہی گرم جوشی سے بنائی جاتی ہے مگر صفور ہ گوٹھ میں آغاخانی کمیونٹی کی بس پر فائرنگ کر کے معصوم لوگوں کو قتل کرنے والوں پر کوئی JITنہیں بنائی جارہی ہے ۔ اس موقع پر عادل صدیقی نے بھی مختصر اً خطاب کیا ۔بعد ازاں ایم کیوایم سلائو یونٹ کی نورکنی کمیٹی کا اعلان کیا گیا جس کے مطابق سید مظہر نظامی سلائو یونٹ کے انچارج ، آفتاب احمد اور شہریار احمد جوائنٹ انچارجز جبکہ ارکان میں ندیم اختر، سیدانور،محمد فاروق مرتضیٰ،محمد اشرف،حامد علی اور شاہد علی شامل ہیں ۔

خیبرپختونخوا میںبارشوں اور طوفان کے باعث بڑے پیمانے پر جانی ومالی نقصانات پرالطاف حسین کا اظہار افسوس


altaf hussain April 27, 2015 | 10:25 PM

عوام دعا کریں کہ اللہ تعالیٰ ،مزیدطوفانوں اور بارشوںکی تباہ کاریوںسے پاکستان اور ا سکے عوام کو محفوظ رکھے، الطاف حسین
بے گناہ کارکنان کی قانونی معاونت، متاثرین کی امداد، ضمنی اورکنٹونمنٹ بورڈز کے انتخابی اخراجات کے سبب
ایم کیوایم شدید مالی بحران کا شکار ہے، الطاف حسین
حق پرست عوام بالخصوص مخیرحضرات سے بڑھ چڑھ کر ایم کیوایم کی مالی معاونت کریں ، الطاف حسین
عوام اور مخیرحضرات اپنے عطیات خدمت خلق کے مرکزی دفتریا نائن زیروپر جمع کرائیں، الطاف حسین
عوام اور مخیرحضرات اپنے عطیات کی رسید ضرور حاصل کریں اور بغیررسید کسی کوبھی ہرگز ہرگز عطیہ نہ دیں، الطاف حسین
لندن:(نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے قائد جناب الطا ف حسین نے صوبہ خیبرپختونخوا میں شدیدبارشوں اور طوفان کے باعث بڑے پیمانے پر جانی ومالی نقصانات پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ہے ۔ ایک بیان میںجناب الطاف حسین نے حق پرست عوام سے پرزوراپیل کی کہ وہ صوبہ خیبرپختونخوا میں قیامت خیز طوفان اوربارشوں میں جاںبحق ہونے والے افراد کیلئے دعا کریں کہ اللہ تعالیٰ جاں بحق ہونے والے افراد کو اپنی جواررحمت میں جگہ عطا فرمائے ، متاثرین کے مالی نقصانات کے ازالے کیلئے غیب سے مدد فرمائے اور اللہ تعالیٰ مزیدطوفانوں اور بارشوںکی تباہ کاریوں سے پاکستان اور ا سکے عوام کو محفوظ رکھے۔(آمین)
جناب الطاف حسین نے حق پرست عوام بالخصوص مخیر حضرات کو مخاطب کرتے ہوئے کہاکہ کراچی میں ایم کیوایم کے خلاف جاری آپریشن کے دوران گرفتارکیے گئے بے گناہ کارکنان کی قانونی معاونت، متاثرین کی امداد، ضمنی اورکنٹونمنٹ بورڈز کے انتخابات میں ہونے والے اخراجات کے سبب متحدہ قومی موومنٹ پر بھاری مالی بوجھ آگیا ہے اور اس وقت ایم کیوایم شدید مالی بحران کا شکار ہے ۔ انہوںنے حق پرست عوام بالخصوص مخیرحضرات سے اپیل کی کہ وہ بڑھ چڑھ کر ایم کیوایم کی مالی معاونت کریں اور اپنے عطیات فیڈرل بی ایریابلاک 14 میں واقع خدمت خلق فاؤنڈیشن کے مرکزی دفتر یا ایم کیوایم کے مرکز نائن زیروعزیزآباد میں جمع کرائیں ۔ جناب الطاف حسین نے مالی معاونت کرنے والے حق پرست عوام اور مخیرحضرات سے کہاکہ وہ خواہ ایک روپیہ عطیہ کریں یا لاکھوں روپے کے عطیات دیں لیکن اپنے عطیات کی رسید ضرور حاصل کریں اور بغیررسید کسی کوبھی ہرگز ہرگز عطیہ نہ دیں۔

حلقہ این اے 246اور کنٹونمنٹ بورڈ ز کے انتخابات میں حق پرست امیدواران کی شاندار کامیابی پرایم کیو ایم کینیڈا کا جشن


mqm america April 27, 2015 | 10:23 PM

کیلگری ، ٹوررنٹو، مونٹریال اور ونڈ سر سمیت کینیڈا کے مختلف شہروں میں جشن فتح کے پروگرامز کا انعقاد کیا گیا
کراچی پاکستان کا دل ہے جہاں بسنے والے ہر فرد کے دل میں جناب الطاف حسین کا نام دھڑکتاہے ، آصف قاضی
ٹورنٹو میں منعقدہ جشن فتح کے مرکزی پروگرام سے ایم کیو ایم کینیڈاکے سینٹرل آرگنائزر آصف قاضی کا خطاب
کینیڈا :( نیوزآن لائن)حلقہ این اے 246کے ضمنی انتخاب اور کنٹونمنٹ بورڈ کے بلدیاتی انتخابات میں حق پرستوں کی شاندار کامیابی پر ایم کیو ایم کینیڈا کے زیر اہتمام کیلگری’ ٹورنٹو’ مونٹریال’ ونڈسرسمیت مختلف شہروں میںجشن منا یا گیاجس میں ایم کیو ایم کینیڈا کے سینٹرل آ رگنائزر آصف قاضی ‘ جوائنٹ آرگنائزر مسعود حسن اراکین سینٹرل کمیٹی مختلف شعبہ جات کے ذمہ داران اور تمام چیپٹر انچارجز سمیت کینیڈا میں مقیم ہم وطنوں اور معزز شخصیات نے بڑی تعداد نے شرکت کی۔جشن فتح کا مرکزی پروگرام ٹورنٹو میں منعقد ہوا جس سے خطاب کرتے ہوئے ایم کیو ایم کینیڈا کے سینٹرل آرگنائزز آصف قاضی نے کہا کہ کراچی پاکستان کا دل ہے اور وہاں بسنے والے ہر فرد کے دل میں جناب الطاف حسین کا نام دھڑکتاہے یہی وجہ ہے کہ سازشی عناصر کے جھوٹے الزامات کے باوجودکراچی کی غیور عوام نے ہمیشہ کی طرح اس مرتبہ بھی حق پرستوں کو فتح سے ہمکنار کیا ہے۔آصف قاضی نے کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ عالمی جریدے نے جناب الطاف حسین کی خدا داد صلاحیتوں کا بر ملا اعتراف کرکے انہیں دی رائٹ مین کا اعزاز دیاہے لیکن پاکستانی سیاست کی بد قسمتی ہے کہ انہوں نے کبھی جناب الطاف حسین اور ایم کیو ایم کے کارکنان و ہمدردوں کو محب وطن تسلیم نہیں کیالیکن اب وقت اْگیا ہے کہ پاکستان بھر کے تمام دانشور’ کالم نگار اور ادیب ایسے عناصر کو بے نقاب کریں جو متحدہ کو پاکستان کی خدمت کرنے سے دور رکھنا چاہتے ہیں ۔انہوں نے مزید کہا کہ اسٹیبلشمنٹ کی جانب سے ایم کیو ایم ہ کو بد نام کرنے کے لئے جھوٹے ہتھکنڈے استعمال کیے گئے لیکن بالاآخر کامیابی و فتح حق و سچ ہی کی ہوئی ہے۔ اس موقع پر جشن فتح میں شریک حاضرین نے جناب الطاف حسین ، پاکستان میں موجود ایم کیو ایم کے کارکنان و ذمہ داران نے ایک دوسرے کو حلقہ 246 اور کنٹونمنٹ بورڈز کے الیکشن میںکامیابی کی مبارک باد پیش کرتے ہوئے مٹھائیاں تقسیم کیں اور جناب الطا ف حسین کی صحتیابی اور پاکستان کی ترقی و خوشحالی کے لئے خصوصی دعا بھی کی۔

انشاء اللہ 23اپریل حق پرستوں کی تاریخی فتح کا دن ہوگا ،الطاف حسین


altaf-hussain-2 April 20, 2015 | 10:19 PM

روز باطل پرستوں کے تمام جھوٹے چراغ بجھ جائیں گے اورالطاف حسین کاجلایاہواحق پرستی کا چراغ جلتا رہے گا
طلبہ وطالبات دل لگا کر تعلیم حاصل کریں اور اپنے والد ین کا نام روشن کریں ،الطاف حسین
نوجوان محنت کے کسی کام کرنے میںشرم محسوس نہ کریں،الطاف حسین
اتوار کی شب جناح گرائونڈ عزیز آباد میں میوزیکل پروگرام کے ہزاروں شرکا ء سے خطاب
لندن :( نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے قائد جناب الطاف حسین نے کہاہے کہ اللہ تعالیٰ کی تائید اورعوام کی حمایت سے 23اپریل حق پرستوں کی تاریخی فتح کا دن ہوگا ۔اس روز باطل پرستوں کے تمام جھوٹے چراغ بجھ جائیں گے اورالطاف حسین کاجلایاہواحق پرستی کا چراغ جلتا رہے گا ۔ انہوں نے یہ بات اتوار کی شب جناح گرائونڈ عزیز آباد میں میوزیکل پروگرام کے ہزاروں شرکا ء سے خطاب کرتے ہوئے کہی جن میں بزرگ ،خواتین ،نوجوان طلبا وطالبات اور بچوں کی بہت بڑی تعداد موجود تھی ۔ جناب الطاف حسین نے اس موقع پر طلبہ وطلبات پر زور دیا کہ وہ دل لگا کر تعلیم حاصل کریں اور اپنے والدین کے نقش قدم پر چل کر اپنا اور اپنے خاندان کا نام روشن کریں ۔جناب الطاف حسین نے کہا کہ آج کل امتحان میں نقل کا دور چل رہا ہے لیکن آپ کونہ چیٹنگ کرنی ہے نہ چیٹر بننا ہے ۔ اگر میں کراچی میں موجود ہوتا تو ایک کالج سے دوسرے کالج جاتا اور طلبہ کوان ذہنوں سے شارٹ کٹ سے کامیابی حاصل کرنے کاخیال نکالتا ،ان کے ذہنوں کو صاف کرتا اورکہتا کہ خوب محنت کر و خواہ جھاڑو لگائو، محنت کی کمائی بھیک سے بہتر ہے لہٰذا محنت سے کسی کام کرنے میںشرم محسوس نہ کرو۔ انہوں نے اپنی مثال دیتے ہوئے کہاکہ میں بسوں، منی بسوں میںسفر کرتا تھا اپنی جان ہتھیلی پر رکھ کر بسوں میں لٹک کر سفر کرتا تھا اورشام کو ٹیوشن پڑھاتا تھا ، ٹیوشن پڑھا کر پہلے سائیکل خریدی پھر 10سال پرانی ہنڈا ففٹی موٹر سائیکل خرید ی اور محنت کی وجہ سے ہی آج تحریک کو یہاں تک پہنچادیا ۔آج اللہ کے کرم سے پوری دنیامیںایم کیوایم کے چاہنے والے موجود ہیں ۔انہوں نے اجتماع میں موجود لڑکیوںکیلئے دعاکی کہ اللہ تعالیٰ آپ کو اپنی حفظ وامان میں رکھے،آپ کو خوش رکھے ،آپ کامستقبل اچھا کرے جن کی شادیاں نہیں ہوئی ہیں ان کوا للہ نیک اور اچھے رشتے عطا کر ے ۔

جناب الطاف حسین کی پاکستان سمیت دنیا بھر میں مقیم ”سکھ برادری ” کو مذہبی تہوار ویساکھی کی مبارکباد


altaf hussain April 13, 2015 | 10:04 PM

بابا گرونانک کی تعلیمات لوگوں کے درمیان اعتدال پسندی ، ہم آہنگی ، پیار و محبت اور خلوص پر مشتمل تھی، الطاف حسین
ایم کیوایم تمام مذاہب کا عملی طور پر احترام اور مذہبی ہم آہنگی کے فروغ کیلئے ہمیشہ سے کردار ادا کرتی آئی ہے ، الطاف حسین
سکھ برادری ویساکھی کے تہوار کے موقع پر اپنی عبادات میں ملک و قوم کی سلامتی ، دہشت گردی کے خاتمے اور امن و امان
کے قیام کیلئے خصوصی دعا کریں ، الطاف حسین
لندن:(نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے قائد جناب الطاف حسین نے پاکستان سمیت دنیا بھر میں مقیم ”سکھ برادری کو ان کے مذہبی تہوار ”ویساکھی ” کی دلی مبارکباد پیش کی ہے ۔ ویساکھی کے تہوار کے موقع پر اپنے خصوصی بیان میں انہوں نے کہا کہ بابا گرونانک کی تعلیمات لوگوں کے درمیان اعتدال پسندی ، ہم آہنگی ، پیار و محبت اور خلوص پر مشتمل تھی ۔ انہوں نے کہاکہ ایم کیوایم تمام مذاہب کا عملی طور پر احترام کرتی ہے اور مذہبی ہم آہنگی کے فروغ کیلئے ہمیشہ سے کردار ادا کرتی آئی ہے ۔ جناب الطا ف حسین نے سکھ برادری سے اپیل کی کہ وہ ویساکھی کے موقع پر اپنی عبادات میں ملک و قوم کی ترقی و خوشحالی ، دہشت گردی کے خاتمے ، امن و امان کے قیام اور ایم کیوایم کے حق پرستانہ مشن ، مقصد اور نظریئے کی کامیابی کیلئے خصوصی دعا کریں ۔

الطاف حسین نے پاکستان کے استحصال زدہ عوام کو وہ شعور اور پہچان دی ہے۔ جنید فہمی،سینٹرل آرگنائزرایم کیوایم امریکہ


mqm america April 13, 2015 | 9:49 PM

کراچی ایم کیو ایم کا تھا ، کراچی ایم کیو ایم کا ہے اور کراچی ایم کیو ایم کا رہے گا
کراچی سے ہمدردی کا ناٹک کرنے والے سیاسی و مذہبی ڈھونگیوں نے ہمیشہ کراچی دشمنی کی ہے
عوام ٢٣ اپریل کو پتنگ کے نشان پر مہرلگا کر ایک بار پھرقائدتحریک الطاف حسین سے اپنی محبت کا ثبوت دینگے
شکاگو:(نیوزآن لائن) متحدہ قومی موومنٹ امریکہ کے سینٹرل آرگنائزر جنید فہمی نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ کراچی کے عوام باشعور ہیں وہ اپنے دشمنوں اور مخالفین کو اچھی طرح پہچانتے ہی نہیں بلکہ انکے شرمناک ماضی، انکی کراچی اور مہاجر دشمنی سے بھی مکمل واقفیت رکھتے ہیں۔ وہ جانتے ہیں کہ وہ کون لوگ تھے جنہوں نے قیام پاکستان کی مخالفت کی تھی، کن کی زبانیں سفاک طالبانی قاتلوں کی مذمت کرتے آج بھی بل کھاتی ہیں، کون ہیں وہ لوگ جنھوں نے نام نہاد جہاد کے نام پر ملک بھر میں اسلحہ اور سیاست میں اس کا کلچر متعارف کروایا۔اہل کراچی ان لوگوں سے بھی واقف ہیںجن کا ماضی و حال کراچی و مہاجر دشمنی سے عبارت ہے خواہ وہ کھیل کا شعبہ ہو یا سیاست کا۔ وہ ان عناصر کو بخوبی پہچانتے ہیں جنہوں نے لفظ مہاجر کو گالی سے تشبیہ دی اور آج اپنی ہی ماں کو مہاجر کہنے پر مجبور ہو گیا۔ کراچی میں کون ہے جو انکے شرمناک ماضی سے واقف نہیں، ایمپائر کی انگلی کے منتظر ہر سیاسی و مذہبی ڈھونگی کو یہ قوم پہچانتی ہے ۔ اب وہ دور نہیں رہا جب جس کا دل چاہتا تھا مہاجر آبادیوں پر لشکر کشی کر تا تھا۔ جب جس کے جی میں آتی تھی مہاجر آبادیاں خون میں نہلائی جاتی تھیں اور انکے حق میں کوئی آواز بلند نہ ہوتی تھی۔ الطاف حسین پر تنقید کرنے والوں کو یہ جان لینا چاہئے کہ یہ وہ قوم ہے جسے الطا ف حسین نے ایک مکمل پہچان دی ہے۔ اپنے حقوق کی جدوجہد کا شعور اور معاشرے میں سر اٹھا کر جینا سکھایا ہے ۔ یہ قوم اب غلام نہیں ہے طاقت کے بل پر اس پر ظلم تو ہو سکتا ہے لیکن اسکی آواز کو نہ تو دبایا جاسکتا ہے نہ شعور کے اس پودے کو ختم کیا جاسکتا ہے جس کا بیج الطاف حسین نے ان ذہنوں میں بودیا ہے۔ اور ظلم بھی کب تک ایک روز پھر ہر ظلم کا حساب تو دینا ہی ہو گا۔انہوں نے مزید کہا کہ اہل کراچی الطاف حسین کو اپنا سیاسی قائد ہی نہیںبلکہ اپنا نجات دہندہ بھی مانتے ہیں اور صرف ایم کیو ایم کو ہی اپنی نمائندگی کے قابل سمجھتے ہیں۔ جس کا ثبوت وہ گزشتہ تین دہائیوں میں ہونے والے انتخابات ہیں۔ وہ جانتے ہیں کہ نائن زیرو پر غیر قانونی چھاپہ، میڈیا میں موجود بکائو عناصر کا شرمناک کردار، ایم کیو ایم ، مہاجر کارکنان اور مہاجر عوام کی کردار کشی اور بغیر تحقیقات و عدالتی احکام کے میڈیا پر انہیں مسلسل مجرم پیش کرنا اور انکی تشہیر ایک ہی سازش کا تسلسل ہے ۔ ان سازشوں سے مہاجر عوام کو ایم کیو ایم اور انکے محبوب قائد سے نہ پہلے دور کیا جاسکاتھا نہ اب کیا جا سکے گا ۔ اب بھی اس سیٹ کو حاصل کرنے، ایم کیو ایم کا مینڈیٹ چوری کرنے کیلئے کراچی کی تمام مسترد شدہ قوتیں ایک بار پھر متحرک ہیں بلکہ ہر جائز و ناجائز اشتعال انگیز ہتھکنڈوں کا بھی استعمال کر رہی ہیں تاکہ حلقہ میں امن و امان کی صورتحال کو خراب کیا جاسکے اور اس کاالزام ایم کیو ایم پرعائدکرکے اس کے میڈیا ٹرائل میں مزید تیزی لائی جاسکے۔ لیکن ہمیں اپنے مہاجر بھائیوں، بہنوں اور بزرگوں پر کامل یقین ہے کہ وہ ان سازشوں کا ڈٹ کر مقابلہ کریں گے اور ٢٣ اپریل کو پتنگ کے نشان پر مہر لگا کر ایک بار پھر ایم کیو ایم کوشاندارکامیابی سے ہمکنارکریںگے۔

سعودی عرب فوجیں بھیجنے کے معاملے پر پاکستان کی بقاء وسالمیت کودیکھئے، پاکستان کواولیت دیجئے۔الطاف حسین


altaf-hussain April 6, 2015 | 9:25 PM

ہمیں ” بیگانی شادی میں عبداللہ دیوانے ” کاکرداراداکرنے اورچوہدری بننے کاشوق ہے۔الطاف حسین
بشمول الطا ف حسین ہر مسلمان کے دل میں خانہ کعبہ اورمسجدنبوی ۖ کابہت احترام ہے۔الطاف حسین
خدانخواستہ وقت پڑا تومیں بھی خانہ کعبہ اورمسجدنبویۖ کی حرمت وتقدس کی سلامتی کیلئے دوڑا چلاجاؤں گا
اس وقت معاملہ خانہ کعبہ یامسجدنبویۖ کانہیں بلکہ سعودی عرب اوریمن کاہے۔الطاف حسین
استعفے دینے والے ارکان کو اجلاس میں شرکت کی اجازت دینا آئین وقانون کامذاق اڑانے کے مترادف ہے
جس طرح طلاق کے بعد دوبارہ رجوع کرناپڑتاہے اسی طرح استعفے کے بعد دوبارہ اسمبلی میں جانے کیلئے دوبارہ
الیکشن لڑناپڑتاہے۔ موجودہ صورتحال پر الیکٹرانک میڈیاسے گفتگو
لندن :( نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ کے قائدجناب الطاف حسین نے پاکستان کے ارباب اختیارسے کہاہے کہ سعودی عرب فوجیںبھیجنے کے معاملے پر پاکستان کی بقاء وسالمیت کودیکھئے، پاکستان کواولیت دیجئے اور پاکستان کواپنے مفادات کی بھینٹ نہ چڑھائیں۔انہوں نے کہاکہ استعفے دینے والے ارکان کو اجلاس میں شرکت کی اجازت دینا آئین وقانون کامذاق اڑانے کے مترادف ہے۔انہوں نے ان خیالات کااظہارآج موجودہ صورتحال پر الیکٹرانک میڈیاسے گفتگوکرتے ہوئے کیا۔جناب الطاف حسین نے کہاکہ مجھے افسوس کے ساتھ کہناپڑتاہے کہ آج پارلیمنٹ کے اجلاس میں ارکان کی حیثیت کٹھ پتلی کے تماشبین سے زیادہ نہیں تھی اور سعودی عرب یمن کے درمیان جاری چپقلش پر پاکستان کے مؤقف کے بارے میں اول فول بات کی گئی اوراجلاس شام تک کیلئے ملتوی کردیاگیا۔ انہوں نے کہاکہ میں پاکستان کے محروم ومظلوم عوام کے نمائندے کی حیثیت سے یہ بتاناچاہتاہوںکہ میں پاکستان اوراس کے عوام کادوست اورہمدردہوں۔ انہوں نے کہاکہ پارلیمنٹ کے اجلاس میں کہاگیاکہ سعودی عرب کاہرجگہ ہرلحاظ سے دفاع کیاجائے گا۔ ایساکہنے والوں کوشرعی اصولوںکا کوئی تجربہ ہے اور نہ ہی دنیاوی قوانین کااورنہ ہی اقوام متحدہ کی سیکوریٹی کونسل کی قراردادوں کاکوئی بھرم ہے۔انہوں نے کہاکہ اقوام متحدہ کاچارٹر7یہ کہتاہے کہ اگر کسی ملک کی جانب سے کسی ملک کے خلاف جارحیت ہو اوراس کی وجہ سے اس ملک کے استحکام کوخطرہ ہوتواقوام متحدہ کی سیکوریٹی کونسل اس بارے میں قراردادپاس کرتی ہے کہ کس کس کوکس کی مددکرنی چاہیے۔انہوں نے کہاکہ عرب لیگ نے اپنے اجلاس میں یمن کے خلاف کارروائی کی بات کی۔ عرب لیگ نے انڈیاکومبصر کی حیثیت سے ممبرکادرجہ دیاہواہے لیکن پاکستان کومبصرکادرجہ بھی نہیںدیاگیا ہے۔اس لحاظ سے سعودی عرب کے
دفاع کے لئے انڈیاکو کہاجانا چاہیے تھالیکن ہمیں ” بیگانی شادی میں عبداللہ دیوانے ” کاکرداراداکرنے اورچوہدری بننے کاشوق ہے۔انہوں نے کہاکہ بشمول الطا ف حسین ہر مسلمان کے دل میں خانہ کعبہ اورمسجدنبوی ۖ کابہت احترام ہے اورخدانخواستہ وقت پڑا تومیں بھی تمام مشکلات کی زنجیریں توڑکرخانہ کعبہ اورمسجدنبویۖ کی حرمت وتقدس کی سلامتی کیلئے دوڑا چلاجاؤں گالیکن اس وقت معاملہ خانہ کعبہ یامسجدنبوی کانہیں بلکہ سعودی عرب اوریمن کاہے۔ جناب الطاف حسین نے کہاکہ پاکستان کی فوج پہلے ہی ملک میں ضرب عضب میں مصروف ہیںایسے میں پاکستان کی فوجیں کس طرح کہیں اوربھیجی جاسکتی ہیں ؟ انہوں نے سوال کیاکہ پاکستان کے تحفظ کیلئے آج تک کس ملک کی افواج آئی ہیں؟1948ئ، 1965ئ، 1971ء کی جنگ میں کس ملک نے پاکستان کا ساتھ دیا؟ کارگل کی جنگ میں کس ملک نے پاکستان کاساتھ دیا؟آرمی پبلک اسکول میں معصوم بچے شہیدہوئے لیکن کسی نے مدد نہیں کی اور اگر مدد کی ہو تو کسی کے ذاتی خزانے میں مددکی ہوگی ۔ انہوں نے کہاکہ خدار پاکستان کی بقاء وسالمیت کودیکھئے، پاکستان کواولیت دیجئے اور پاکستان کواپنے مفادات کی بھینٹ نہ چڑھائیں۔جناب الطا ف حسین نے کہاکہ سعودی عرب یمن کے معاملے پرآج پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کی آڑ میں ایسے ارکان کوبھی ایوان میں آنے کی اجازت دی گئی جنہوںنے بہت پہلے ہی استعفے دیدیے تھے۔اس لحاظ سے ان کی رکنیت اوراجلاس میں شرکت ناجائز ہے۔انہوںنے کہاکہ آئین کے آرٹیکل 64کی شق ایک کے تحت جب کوئی رکن ایک مرتبہ استعفیٰ دیدے تواس کی سیٹ خالی ہوجاتی ہے۔ اسی طرح آئین کے آرٹیکل 64کی شق 2کے تحت اگرکوئی رکن مسلسل 40دن تک ایوان سے غیرحاظررہے توبھی اس کی رکنیت ختم ہوجاتی ہے۔ استعفے دینے والے ارکان کو اجلاس میں شرکت کی اجازت دینا آئین وقانون کامذاق اڑانے کے مترادف ہے۔انہوں نے کہاکہ جس طرح طلاق کے بعد دوبارہ رجوع کرناپڑتاہے اسی طرح استعفے کے بعد دوبارہ اسمبلی میں جانے کیلئے دوبارہ الیکشن لڑناپڑتاہے۔انہوں نے کہاکہ خدارامفادات کے بجائے صحیح فیصلے کئے جائیں۔

رینجرز کے دعوے کے باوجود سیاسی جماعتوں کے مرکزی دفاتر پرکھڑی رکاوٹیں نہیں ہٹائی گئیں، رابطہ کمیٹی


mqm america March 24, 2015 | 10:18 PM

رکاوٹیں ہٹانے کے الٹی میٹم کی مدت ختم ہونے کے باوجودر ینجرز نے نہ تو رکاوٹوں کو ختم کیا اور نہ ہی
کسی سیاسی جماعت کے دفتر پر چھاپہ مارا، ایم کیوایم رابطہ کمیٹی لندن کے اراکین کا بیان
رینجرز نے اعلان کیا تھا کہ تمام جگہوں سے نہ صرف رکاوٹیں ہٹائی جائیں گی بلکہ چھاپے مارنے
کا عمل بھی بلاامتیاز جاری رہے گا، رابطہ کمیٹی
رینجرز کے دعوے کے باوجود سیاسی جماعتوں کے مرکزی دفاتر پرکھڑی رکاوٹیں نہیں ہٹائی گئیں، رابطہ کمیٹی
عوام ،رینجرز کے دہرے معیار پر آپس میں گفتگو کرکرکے افسردہ اور غم زدہ ہیں، رابطہ کمیٹی
رینجرز کی جانب سے شہر بھرسے بلاامتیاز رکاوٹیں ہٹانے کا دعویٰ کیا صرف ایک نعرہ ہے؟ عوام کا سوال
لندن :( نیوزآن لائن)متحدہ قومی موومنٹ رابطہ کمیٹی لندن کے اراکین نے اپنے ایک بیان میں قوم کے ایک ایک فرد کو مخاطب کرتے ہوئے کہا ہے کہ جس انداز صوبہ سندھ میں رینجرز کے افسران اور جوانوں نے غریبوں کی واحد نمائندہ سیاسی جماعت ایم کیوایم کے قائد جناب الطاف حسین کے گھر پر چھاپہ مارا تھا اور ڈیڑھ سو کے لگ بھگ محلے والوں اور نائن زیرو کے مختلف شعبہ جات میں کام کرنے والے کارکنوں کو گرفتار کرلیا تھا ۔ اس کے بعد رینجرز نے اعلان کیا تھا کہ تمام جگہوں سے نہ صرف رکاوٹیں ہٹائی جائیں گی بلکہ چھاپے مارنے کا یہ عمل بلاامتیاز سیاسی جماعت جاری رہے گا۔
اراکین رابطہ کمیٹی نے کہاکہ شہر بھر کے مختلف محلوں کے مکینوں کو تمام رکاوٹیں ختم کرنے خصوصاً سیاسی جماعتوں کے مرکزی دفاتر پر کھڑی کی گئی رکاوٹوں اور بیریئرزکو ہٹانے کیلئے دیئے جانے والے الٹی میٹم کی مدت گزشتہ روزکل شام سات بجے یعنی 23، مارچ کی شام ختم ہوگئی تھی ۔ پوری قوم کا بچہ بچہ ہرذی شعور آج حیرت کناں ہے کہ مدت ختم ہوجانے کے باوجود رینجرز نے کہیں اور کسی مقام پر کھڑی ہوئی رکاوٹوں اوربیریئرز کو نہ تو ختم کیا اور نہ ہی کسی سیاسی جماعت کے دفتر پر چھاپہ مارا۔