: تازہ ترین

تازہ ترین ویڈیو

جعلی منرل واٹر کمپنیوں پر پابندی عائد کی جائے حاجی شریف الدین


fake mineral water company August 27, 2016 | 4:23 PM

کراچی:(نیوزآن لائن)بتول ویلفیئر ٹرسٹ کے چیئرمین حاجی شریف الدین نے وزیر اعلیٰ سندھ،وزیر بلدیات اور ایم ڈی کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ جعلی منرل واٹر کمپنیوں پر فوری پابندی عائد کی جائے کراچی کے شہریوں کو پانی کی شدید قلت کاسامنا ہے جبکہ جعلی منرل واٹر بنانے والی کمپنیاں عوام کوچور ی شدہ پانی بوتلوں میں بھر کر فروخت کر رہی ہیںانہوں نے کہا کہ کراچی کے شہریوں کے ساتھ کھلا ظلم ہو رہا ہے گھر وں کی آدھے انچ کی لائن میں پانی نہیں آرہا اور شہری بوند بوند کو ترس رہے ہیں مگر سینکڑوں منرل واٹر کی جعلی کمپنیاں اوردس ہزار سے زائد ٹینکر ز کروڑوں روپے یومیہ کا پانی جو گھروں میں نلوں کے ذریعے آنا چاہئے تھا وہی پانی چوری کر کے عوام کو بھاری قیمت میں فروخت کر رہے ہیں حاجی شریف الدین نے کہا کہ اس مکروہ دھندے میں کراچی واٹر بورڈکے افسران اور عملہ شامل ہے انہوں نے کہا کہ کراچی کو کوفہ نہ بنایا جائے اورجتنے بھی وال مینزہیںانہیں پانی کی مصنوعی قلت پیدا کرنے اور بھاری رشوتیں وصول کرکے عوام کو پانی فراہم کر نے کے جرم میں سخت ترین سزائیں دی جائیںحاجی شریف الدین نے کہا کہ جان بوجھ کر عوام کے لئے مسائل پیدا کئے جا رہے ہیں اور ا نہیں سیاسی بنیادوں پر الجھایا جا رہا ہے انہوں نے کہا کہ کراچی کے شہریوں کے پینے کے پانی کے منصوبوں کو فوری طور پر مکمل کیا جائے اور پانی فراہم کرنے کی تمام تنصیبات کو تحفظ فراہم کیا جائے حاجی شریف الدین نے کہا کہ دفعہ 144کے تحت کراچی بھر میں جعلی منرل واٹرفروخت کرنے والی گاڑیوں اورتمام پانی کے ٹینکرز کی نقل و حمل پر پابندی عائد کی جائے انہوں نے کہا کہ پانی کی تقسیم کے نظام کو رینجرز کے حوالے کردیا جائے تا کہ کراچی کے شہریوں کے لئے مصنوعی قلت آب کا مسئلہ حل ہو سکے

ریلوے حکام نے ٹنڈومحمد خان روڈ پر محکمے کی کروڑوں روپے کی اراضی لینڈ مافیا سے خالی کرانے کیلئے قانون نافذ کرنے والے اداروں سے رابطے


HYDERABAD SINDH November 15, 2015 | 5:20 PM

حیدرآباد(نیوزآن لائن)ریلوے حکام نے ٹنڈومحمد خان روڈ پر محکمے کی کروڑوں روپے کی اراضی لینڈ مافیا سے خالی کرانے کے لئے پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں سے رابطے شروع کردئیے،پولیس نے ریلوے حکام کو بلدیاتی انتخابات کے فوری بعد کاروائی کی یقین دہانی کرادی،لینڈ مافیا نے ریونیو کی جعلی لیز بنواکر ریلوے کی 25ایکٹر سے زائد اراضی پر قبضہ کررکھا ہے،مختیار کارتعلقہ لطیف آباد کی جانب سے کھاتہ منسوخ کئے جانے کے باوجود لینڈ مافیا ریلوے اراضی پر چائنا کٹنگ کرکے پلاٹ فروخت کررہا ہے،دیگر اضلاع سے قبضہ ختم کرانے اور پختہ تعمیرات توڑنے کے لئے مشنری مانگ لی گئی،تفصیلات کے مطابق کراچی میں ریلوے کی اراضی پر مون گارڈن اسکیم کے انکشاف کے بعد ریلوے نے سندھ بھر میں لینڈ مافیا سے اپنی زمینیں خالی کرانے کے لئے پولیس اور قانون فافذ کرنے والے اداروں سے رابطے شروع کردئیے،حیدرآباد میں ٹنڈومحمد خان روڈ پر تعلقہ لطیف آباد دیہہ مل میں ریلوے کی 25ایکٹر سے زائد اراضی پر لینڈ مافیا نے قبضہ کررکھا ہے ،جیسے خالی کرانے کے لئے ریلوے حکام نے ضلعی پولیس اور قانون نافذ کرنیو الے دیگر اداروں سے مدد طلب کرلی ہے ،لینڈ مافیا نے ریلوے کی مذکورہ اراضی پر ریونیوڈپارٹمنٹ کی جعلی لیز بناکر مختیار کار لطیف آباد کے دفتر میں زمین کا داخلہ کرایا تھا اور ڈائریکٹرپلاننگ وڈویلپمنٹ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی سے ملی بھگت کرکے علی اصغرآباد نامی کمرشل اور رہائشی اسکیم شروع کررکھی ہے،مختیار کارلطیف آباد نے ریونیو کی جعلی لیز اور ریلوے کی اراضی کاانکشاف ہونے کے بعد مذکورہ داخلے کو منسوخ اور بوگس قرار دے دیا تھا مگر لینڈ مافیا نے اثر رسوخ اور بھاری رشوت کے عیوض تاحال ریلوے کی اراضی پر اپنا قبضہ جمایا ہوا ہے اورچائناکٹنگ کے ذریعے پلاٹوں فروخت جاری ہے،جبکہ ریلوے کی مذکورہ اراضی پر کمرشل اور رہائشی تعمیرات بھی تیزی سے شروع کررکھی ہے تاکہ مون گارڈن کراچی کے مکینوں جیسا موقف اختیار کیا جاسکے،معلوم ہوا کہ ریلوے کی اراضی پر ایک پیٹرول پمپ بھی قائم کردیا گیا ہے اور دوسرے علاقوں سے خانہ بدوش خاندانوں کو منتقل کیا جارہا ہے،ذرائع کے مطابق ٹنڈومحمدخان روڈ پر بلدیاتی انتخابات کے بعد ریلوے انتظامیہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کی ذریعے اپنی کروڑوں روپے مالیت کی اراضی خالی کرانے کے لئے بڑا کریک ڈائون کرے گی جس کے لئے دوسرے شہروں سے بھاری مشنری منگوانے کے لئے رابطہ کئے جارہے ہیں ۔

لیاری ایکسپریس وے ریسیٹلمنٹ پراجیکٹ میں کرپشن اور قبضہ مافیا کے خلاف کاروائی کا آغاز۔ 4 افسران، اہلکار معطل


1100496336-1 October 20, 2014 | 3:30 PM

آغا مقصود عباس نے اجلاس کی صدارت کی۔
کراچی:(نیوزآن لائن) لیاری ایکسپریس وے ریسیٹلمنٹ پراجیکٹ (ال ائی آر پی)میں بڑے پیمانے پر کرپشن، غیر قانونی سرگرمیوں اور کمرشل، رفاعی پلاٹوں کو غیر قانونی طریقوں سے تبدیل و الاٹ کرنے میں ملوث افسران کو فوری طور پر معطل کرد یا گیا جبکہ دیگر افسران و اہلکاروں کی چھان بین شروع کر دی گئی۔
آغا مقصود عباس ڈائریکٹر جنرل لیاری ڈیولپمنٹ اتھارٹی، پراجیکٹ ڈائریکٹر لیاری ایکسپریس وے ریسیٹلمنٹ پراجیکٹ نے لیاری ایکسپریس وے ریسیٹلمنٹ پراجیکٹ (ال ائی آر پی)کی کارکردگی کا جائزہ لینے اورکارکردگی کو بہتر بنانے کے لئے اقدامات کرنے اور جعلی اور ناجائز پلاٹوں کی الاٹمنٹ کو منسوخ کرنے کے لئے اجلاس کی صدارت کی جس میں انجینیئرز اور دیگر سینیئر افسران نے شرکت کی۔
معطل کئے جانے والے افسران میں منور اقبال اسسٹنٹ ایگزیکٹیو انجینیئر ہاکس بے ڈویزن II، سید ارشد عباس اسسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈ ڈپارٹمنٹ، مہر دین اسسٹنٹ ہاکس بے ڈویزن II اور خرم سینیئر کلرک شامل ہیں۔
آغا مقصود عباس نے افسران کو کہا کہ ریسیٹلمنٹ کالونیز میں لینڈ مافیا اور قبضہ گروپ کے خلاف ہنگامی بنیاد پر بھرپور کار وائی کا ٓغاز کیا جائے۔
پراجیکٹ ڈائریکٹر نے کہا کہ لیاری ایکپریس وے ریسیٹلمنٹ پراجیکٹ میں بڑے پیمانے پر پلاٹوں سے متعلق شکایات موجود ہیں لہٰذا اس بات کی بھی تحقیقات ہونی چاہئے اور غیر قانونی طور پر پلاٹوں کی الاٹمنٹ میں ملوث افراد کو قانون کی گرفت میں لایا جائے اور لینڈ مافیا سے زمین کا قبضہ واگزار کرایا جائے۔
انہوں نے اس موقع پر تین ممبران عبدالعزیز میمن ڈائریکٹر کورڈینیشن، آغا نفیس ایگزیکٹیو انجینیئر اور سلیم الحق سیکریٹری پر مشتمل کمیٹی تشکیل دی جو فوری طور پر لیاری ایکسپریس وے پراجیکٹ میں الاٹ کئے گئے پلاٹوں کی قانونی حیثیت کا جائزہ لیگی اور غیر قانونی الاٹمنٹ کے علاوہ کمرشل فلاحی پلاٹوں کو تبدیل کرنے میں ملوث افسران کی نشاندہی کریگی تاکہ مزید افسران و اہلکاروں کے خلاف سخت قانونی کار روائی کی جا سکے۔
اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ لیاری ایکسپریس وے ریسیٹلمنٹ پراجیکٹ کے دفتر میں ایک کاؤنٹر قائم کیا جائے گا جہاں ریسیٹلمنٹ کالونیز (ہاکس بے اور تیسر ٹاؤن) میں 2010 سے الاٹ کئے گئے پلاٹوں کی تصدیق کی جائیگی اور غیر قانونی اور جعلی الاٹمنٹ کو بغیر کسی تفریق کے منسوخ کر دیا جائیگا۔
اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ ناجائز تجاوزات کو فوری طور پر منہدم کر دیا جائے اور ملوث افراد کی نشاندہی کر کے انکے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے اور رفاعی پلاٹوں کی فروخت کو محفوظ بنانے کے لئے منظم اقدامات عمل میں لائے جائیں۔
آغا مقصود عباس نے (ال ائی آر پی) کی کار کردگی کو بہتر بنانے کے لئے لیاری ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے 8 افسران کو احکامات دئے ہیں کہ وہ اپنی سرکاری ذمہ داریوں کے ساتھ ساتھ (ال ائی آر پی) میں بھی اضافی ڈیوٹی کے فرائض انجام دیں جن میں عبدالعزیز میمن، سلیم الحق، یاور مہدی، عبدالسمیع بھٹو، راجہ فیاض عدالت، شیر محمد خان، آغا نفیس اور مزمل احمد شامل ہیں۔

اینٹی کر پشن کا عا لمی دن منا نے کی پرو گرا مو ں کے سلسلے میں چیئر مین اینٹی کر پشن کی زیر صدارت اجلا س


images (11) November 26, 2013 | 8:31 PM

کراچی(نیوزآن لائن)چیئر مین اینٹی کر پشن سندھ شا ذر شمو ن نے ہدا یت کی ہے کہ 9دسمبر کو اینٹی کرپشن کا عا لمی دن منا نے کے سلسلے میں انتظا ما ت مکمل کر لئے جا ئیں۔ان خیا لا ت کا اظہا ر انہو ں نے آج اینٹی کرپشن کے عا لمی دن کے حوا لے سے بلا ئے گئے اجلا س کی صدارت کر تے ہو ئے کیا۔اجلا س میں ڈائریکٹر جنر ل اطلا عا ت محمد یا سین شر،ڈا ئریکٹر نیب عبدالحفیظ صدیقی،ڈا ئریکٹرز اینٹی کر پشن غلا م حسین میمن،محمد علی شا ہ،خادم حسین چند،ڈپٹی سیکریٹری آغا اعجا ز اور دیگر نے شر کت کی۔اجلا س میں بتا یا گیا کہ اینٹی کرپشن عا لمی دن کے مو قع پر اینٹی کرپشن اور نیب کی جا نب سے مشترکہ سیمینا ر منعقد کئے جا ئیں گے اور اسکولو ں میں خصو صی پرو گرا م منعقد کئے جائیں گے۔اجلاس میں ڈا ئریکٹر جنرل اطلا عا ت محمد یا سین شر نے بتا یا کہ محکمہ اطلا عا ت کی جا نب سے تما م پرو گرا مو ں کی پبلیسٹی کی جا ئے گی۔اجلا س میں تما م پروگرا مو ں کو حتمی شکل دیدی گئی۔

مختلف محکمو ں میں کر پٹ افسرا ن اور عملے کے خلا ف سخت اقدا ما ت کر تے ہو ئے ان کے خلا ف کیسز کا اندرا ج کیا جائے۔منظو ر حسین وسا ن


SID-31-10-2013 (MINISTER ANTI CORRUPTION & PRISONS) October 31, 2013 | 7:49 PM

کراچی (نیوزآن لائن) سندھ کے وزیر اینٹی کرپشن و جیل خا نہ جا ت منظو ر حسین وسا ن نے اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ کی کا ر گر دگی پر عدم اطمینا ن کا اظہا ر کر تے ہو ئے متنبہ کیا ہے کہ مختلف محکمو ں میں کر پٹ افسرا ن اور عملے کے خلا ف سخت اقدا ما ت کر تے ہو ئے ان کے خلا ف کیسز کا اندرا ج کیا جا ئے اور انہیں بلا خو ف اور بلا تفریق گرفتا ر کیا جائے۔آج اپنے دفتر میں اینٹی کرپشن کے افسرا ن کے ایک اجلاس کی صدارت کر تے ہو ئے منظور حسین وسا ن نے مزید کہا کہ اینٹی کرپشن افسرا ن کو چا ہئے کہ وہ کر پٹ لو گو ں کے خلا ف کا ر وا ئی کریں اور معا شرے کو رشوت جسے مو ذی مر ض سے نجا ت دلا ئیں۔انہو ں نے افسرو ں کی کا ر گر دگی پر عد م اطمینا ن کا اظہا ر کر تے ہو ئے ہدا یا ت جا ری کیں کہ اب مجھے نتائج ملنا چا ہئے اورتما م زیر التوا ء انکو ائریز کو دو با رہ کھو لا جا ئے جبکہ اوپن انکوا ئریز پر تحقیقا ت فو راََ مکمل کی جا ئیں اور کرپٹ افسرا ن کو بھا گنے یا عدا لتو ں میں جا نے سے پہلے قا نو ن کی جکڑ میں لا یا جا ئے۔انہو ں نے مزید کہا کہ کیسز کے اندراج،گرفتا ریو ں اور تحقیقا ت کا عمل تیز کیا جا ئے۔منظو رحسین وسا ن نے کہا کہ سندھ کے غریب عوا م سے جو لوگ غیر قا نو نی پیسے اور رشوت لے رہے ہیں یا لی ہے ان کو قا نو ن کے کٹہر ے میں لا یا جا ئے۔منظو ر وسا ن نے مزید کہا کہ وہ تما م جلد حید ر آبا د اور سکھر میں اینٹی کرپشن کے افسرا ن سے اس سلسلے میں اہم اجلا س کا انعقا د کرینگے اور جو بھی اینٹی کرپشن اہلکا ر یا افسر غیر قا نو نی اور سست روی کے عمل میں ملو ث پا یا گیا ان کے خلا ف کیسز کا اندار ج بھی ہو گا اور انہیں گر فتا ر بھی کیا جا ئے گا۔منظو ر وسا ن نے مزید کہا کہ اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ اورانکو ائریز کا بنیا دی مقصد کرپٹ سرکاری اہلکارو ں کے خلا ف کا روا ئی کر نا ہے اس لئے میں نتا ئج چا ہتا ہو ں۔اجلا س میں چیئر مین انکو ائریز اینڈ اینٹی کرپشن شاہزر شمعون،ڈا ئریکٹر اینٹی کرپشن سندھ غلا م حسین میمن اور دیگر افسرا ن نے بھی شر کت کی۔

CORRUPTION STORY


January 22, 2013 | 11:55 PM

up lode this