: تازہ ترین

تازہ ترین ویڈیو

موجودہ روایتی ‘ موروثی سیاستدانوں ‘ حکمرانوں اور اجارا داروں نے عوام کیلئے کچھ نہیں کیا۔طاہرکھوکھر


tahir khokhar mqm February 21, 2016 | 1:08 PM

مظفرآباد:(نیوزآن لائن)ایم کیو ایم آزادکشمیر کے پارلیمانی لیڈرچیئرمین قائمہ کمیٹی ٹرانسپورٹ طاہرکھوکھر نے کہا ہے کہ غربت جہالت اور بے روزگاری آزادکشمیر کے عوام کامقد ر نہیں ‘ آئندہ انتخابات میں عوام موجودہ اور ماضی کے تمام حکمرانوں کا محاسبہ کرتے ہوئے اپنے ووٹ کی طاقت سے انہیں مسترد کرتے ہوئے ایک نئی ‘ باصلاحیت اور دیانتدار قیادت کا انتخاب کریں تاکہ انہیں اور ان کے بچوں کو بھی برابری کی بنیاد پر حقوق مل سکیں اور وہ بھی ترقی کی دورڑ میں شامل ہو سکیں۔ مختلف عوامی وفود سے گفتگوکرتے ہوئے طاہرکھوکھر نے کہا کہ موجودہ روایتی ‘ موروثی سیاستدانوں ‘ حکمرانوں اور اجارا داروں نے عوام کیلئے کچھ نہیں کیا وزراء صرف اپنے حلقوں اور عزیزو اقارب کو نوازنے میں مصروف رہے ‘ سرکاری نوکریوں کو صرف وزراء کے بھانجوں اور بھتیجوں کیلئے وقف کردیاگیاہے ‘ بیوروکریسی حکمران بنی بیٹھی ہے اور روایتی سیاستدان اپنے اقتدار اور اجارہ داری کو دوام بخشنے کیلئے آنکھیںبند کئے ہوئے ہیں ‘ حالانہ بیوروکریسی کاکام عوام کی خدمت ہے ‘بیوروکریٹ حکمران نہیں بلکہ عوام کے خادم ہونے چاہیں کیونکہ وہ عوام کے خون پسینے کی کمائی کے ٹیکسز سے تنخواہیںلیتے ہیںلیکن یہ اس وقت تک ممکن نہیں جب عوام خود اپنے نمائندوں کا احتساب نہیں کرتے اور باصلاحیت اور متوسط طبقہ سے تعلق رکھنے والی نئی قیادت سامنے نہیں لاتے ۔ طاہرکھوکھر نے کہاکہ متحدہ قومی موومنٹ متوسط طبقہ کی سیاسی تحریک ہے جس نے سٹیٹس کو اور استحصالی طبقات کو عملی طور پر للکارا یہی وجہ ہے کہ آج تمام استحصالی طبقات ایم کیو ایم کو کچلنے کیلئے متحد ہو چکے ہیں اور ایم کیو ایم کیخلاف سازشوں کابازار گرم ہے لیکن اب ملک کے عوام باشعور ہوچکے ہیں اور وہ کسی کے پروپیگنڈا میں نہیں آئیں گے ۔ آج ایم کیو ایم کا منشور ملک کے ہر گلے کوچے اور گھر گھر تک پھیل چکا ہے اور عوام تبدیلی چاہتے ہیں انہوں نے کہاکہ آزادکشمیر کے عوام کو آئندہ انتخابات میں ایک موقع مل رہا ہے انہیںچاہیے کہ وہ روایتی سیاست اور سیاستدانوں سے نجات حاصل کرنے کیلئے علم بغاوت بلند کریں اور ماضی کے آزمودہ تمام سیاستدانوں کامکمل بائیکاٹ کرتے ہوئے اپنی صفوںمیں سے غریب اور متوسط طبقہ کے باصلاحیت اور تعلیم یافتہ نوجوانوں کو منتخب کرتے ہوئے ایوانوںمیںبھیجیں تاکہ ان کے مسائل حل ہوسکیں۔