: تازہ ترین

تازہ ترین ویڈیو

ملک میں صرف 20فیصد افرادکو دانتوں کے علاج کی سہولت حاصل ہے


sm pic March 22, 2014 | 7:55 PM

ایف جے ڈی سی میں منہ کے امراض پر آگاہی سیمینار سے ڈاکٹر عارف علوی۔ ڈاکٹر ثاقب رشید، ڈاکٹر باقر عسکری کا خطاب
منہ کی صحت کا عالمی دن ہر سال سرکاری سطح پر منایا جائیگا
کراچی (نیوزآن لائن) پاکستان ڈینیٹل ایسوسی ایشن مرکز کے صدر ڈاکٹر ثاقب رشید نے کہا کہ پاکستان میں منہ کی صحت کے حوالے سے بہت کام کرنے کی ضرورت ہے اور صرف 20افراد کو دانتوں کے علاج اور منہ کے امراض کی سہولت حاصل ہے جبکہ 90فیصد افراد کو منہ، مسوڑھوں کے امراض لاحق ہیں۔اور انکا تعلق زیادہ تر دیہی علاقوں سے ہے۔ وہ گذشتہ روز منہ کی صحت کے حوالے سے عالمی دن کے موقع پر فاطمہ جناح ڈینیٹل کالج میں ایک رنگا رنگ تقریب سے خطاب کررہے تھے۔ اس موقع پر ایف جے ڈی سی کے چیف ایگزیکیٹو ڈاکٹر باقر عسکری، معروف ڈینیٹل سرجن اور اور ممبر قومی اسمبلی ڈاکٹر عارف علوی نے بھی خطاب کیا۔ اس موقع پر طلباء وطالبات کے علاوہ اطراف کے پرائمری اور سکینڈری اسکولر کے طلبہ کی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔ اس موقع پر مہمان خصوصی ڈاکٹر عارف علوی جو ایف ڈی آ ّئی پاکستان کے نو منتخب کونسلر بھی ہیں نے کہا قومی اسمبلی نے اس سال ورلڈ اورل ہیلتھ ڈے دنیا کے ساتھ سرکاری طور پر منانے کا بل پاس کرلیا ہے اور اب پاکستان یہ دن بڑے پیمانے پر منائے گا تاکہ آگاہی بڑھ سکے۔اسکے علاوہ میڈیکل اینڈ ڈینیٹل ایکٹ بھی جلد پارلمنٹ میں پیش کیا جائیگا۔ انہوں نے قانون کی موجودگی کے باوجود پان، گٹکا، چھالیہ اور دیگر مضر اشیاء کی سرعام فروخت پر تشویش کا اظہار کیا۔ اور کہا کہ ان پر سختی سے پابندی عائد کی جائے۔ڈاکٹر باقر عسکری نے کہا کہ ایف دے ڈی سی ہمیشہ میڈیکل اور ڈینیٹل ہیلتھ کے شعور بیدار کرنے کے لئے نمایاں رہا ہے۔ اور پورے سال یہاں مباحثے، آگاہی سیمینار روڈ سیفٹی وغیرہ منعقد کئے جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ منہ کا کینسر پاکستان میں دوسری عام بیماری بن گئی ہے اور ہر ایک ہزار میں ایک فرد اس بیماری کا شکار ہے۔ اور اسکی وجہ گٹکا، چھالیہ، مین پوری دودیگر زہریلی اشیاء ہیں۔ پروگرام میں اسکول کے طلبہ نے اس حوالے سے گانے، مزاحیہ خاکے پیش کئے اور پوسٹر ز، چارٹیس، ماڈلز اور ویڈیو فلموں کے ذریعے منہ کے امراض سے حفاظت کے لئے شعور بیدار کیا۔