: تازہ ترین

تازہ ترین ویڈیو

قومی اداروں کی نجکاری کے خلاف محنت کش فیصلہ کن تحریک کا آغاز کریں گے۔ خیر محمد تونیو


20160103 NLF January 3, 2016 | 8:34 PM

چھ جنوری کو کراچی سٹی اسٹیشن پر محنت کشوں کا سمند امنڈ آئے گا۔
سراج الحق اور رانا محمود علی خان نجکاری کے خلاف محنت کشوں کو گائیڈ لائن فراہم کریںگے۔
کراچی:(نیوزآن لائن)قومی اداروں کی نجکاری کے خلاف محنت کش پوری قوت کے ساتھ احتجاج کریں گے۔ 6جنوری کو نیشنل لیبر فیڈریشن کے تحت سٹی اسٹیشن کراچی میں ”اینٹی نجکاری مزدور کنونشن” محنت کشوں کی آواز ثابت ہوگا۔ یہ بات اینٹی نجکاری مزدور کنونشن کی تیاریوں کے سلسلے میں قائم کی گئی کمیٹی کے کنوینر خیر محمد تونیو نے پریم یونین ریلوے کے کراچی آفس میں پروگرام کی تیاریوںکا جائزہ پیش کرتے ہوئے کہی۔ اس موقع پر این ایل ایف صوبہ سندھ کے صدر سید نظام الدین شاہ، این ایل ایف کراچی کے صدر خالد خان، پریم یونین ریلوے کے صدر راجہ عبد المناف اور این ایل ایف کے مرکزی میڈیا ڈائریکٹر قاسم جمال بھی موجود تھے۔ خیر محمد تونیو نے کہا کہ اینٹی نجکاری مزدور کنونشن کی تیاریاں عروج پر پہنچ چکی ہیں۔ پورے شہر میں پوسٹر، بینر اور اسٹیکر آویزاں کئے جارہے ہیں۔ مزدور کنونشن میں پاکستان اسٹیل، پی آئی اے، ریلوے، کے پی ٹی، شپ یارڈ، واٹر بورڈ، کے ایم سی سمیت کراچی کے صنعتی زونز سائٹ، کورنگی، لانڈھی، بن قاسم، نئی کراچی، فیڈرل بی ایریا اور نارتھ کراچی کے علاقوں سے ہزاروں محنت کش امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق کا ولولہ انگیز خطاب سننے کیلئے کنونشن میں شرکت کریں گے۔ مزدور کنونشن سے نیشنل لیبر فیڈریشن پاکستان کے مرکزی صدر رانا محمود علی خان، جنرل سیکریٹری حافظ سلمان بٹ، امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن، این ایل ایف سندھ کے صدر سید نظام الدین شاہ، این ایل ایف کراچی کے صدر خالد خان کے علاوہ واپڈا، پی آئی اے، پاکستان اسٹیل، شپ یارڈ، واٹر بورڈ، کے پی ٹی، پی این ایس سی ودیگر اداروں کے مزدور رہنما خطاب کریںگے اور قومی اداروں کی نجکاری کے خلاف لائحہ عمل تیار کیا جائے گا اور کراچی سے قومی اداروں کی نجکاری کے خلاف فیصلہ کن تحریک کا آغاز کیا جائے گا۔ 6 جنوری کو صبح 10 بجے کراچی سٹی اسٹیشن پر محنت کشوں کا سمندر امنڈ آئے گا۔ اور امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق اور نیشنل لیبر فیڈریشن پاکستان کے صدر رانا محمود علی خان قومی اداروں کی نجکاری کے خلاف محنت کشوں کو گائیڈ لائن فراہم کریں گے اور محنت کش کسی قیمت پر قومی اداروں کی فروخت نہیں ہونے دیں گے اور کراچی سے خیبر تک محنت کش سڑکوں پر نکل کر نجکاری کے خلاف بھرپور طریقے سے احتجاج بلند کریں گے۔