: تازہ ترین

تازہ ترین ویڈیو

فیڈریشن آف پاکستان چیمبرزآف کامر س اینڈ انڈسٹر ی کے صدر انجینئر داروخان اچکزئی ای سی او چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی ایگزیکٹو کمیٹی میں شرکت کیلئے استنبول روانہ


fpcci news July 28, 2019 | 4:25 PM

کراچی:(نیوزآن لائن)فیڈریشن آف پاکستان چیمبرزآف کامر س اینڈ انڈسٹر ی کے صدر انجینئر داروخاناچکزئی ای سی او چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی ایگزیکٹو کمیٹی میں شرکت کیلئے استنبول روانہ ہونگے۔ اس کمیٹی کا انعقاد 30-7-2019کو ہوگا جس میں ای سی او ممالک کے تمام قومی چیمبر ز کے سربراہان جن میںافغانستان،آزربائیجان،تاجکستان،ازبکستان،ترکمانستان،قازقستان،قرگزستان،پاکستان،ایران اور تر کی شرکت کریں گے۔
صدر ایف پی سی سی آئی ایگزکیٹو کمیٹی کی میٹنگ جو کہ انقرہ میں ٹی او بی بی کے تعاو ن سے منعقد کی جا رہی ہے سے خطاب کریں گے۔ اس وقت ای سی او،سی سی آئی،کی صدارت افغانستان جبکہ اس کا سیکریٹریٹ ٹی او بی بی کے پاس ہے۔ صدرایف پی سی سی آئی میں میٹنگ میں ای سی او ممالک کے مابین موجودہ تجا رتی مسائل کو اجاگر کریں گے ان میں ٹرانسپورٹ،سرمایہ کا ری،ثا لثی،سیاحت،معاشی تعاون تنظیم بر ائے آزاد تجا ر تی معاہدے چھوٹی اور درمیانے درجے کی صنعتوں کے مسائل خواتین کی کاروبا ری صلاحیت جیسے مسائل شامل ہیں۔ایگزیکٹو کمیٹی میٹنگ سے پہلے کمیٹی کی میٹنگز کا انعقاد ہوگا۔
ای سی او ممالک کی کل شرح نمو1.8ہے۔ اس کے علاوہ ای سی او،کا علاقائی تجارت کا حجم 64.6بلین ہے جو کہ دیگر علاقائی بلا کس کے مقابلے میں کم ہے۔ ای سی او کے ممبر ممالک کا عالمی تجارت میں 2%حصہ ہے۔ دس ای سی او،ممالک میں سے تین ممالک سمندری بندرگاہوں سے منسلک ہیں جبکہ بقیہ سات ممالک ہیں۔ صدر ایف پی سی س سی آئی پراجیکٹ سے متعلقہ معاشی مواقعوں کو بھی اجاگر کریں جو نہ صرف پاکستان کیلئے اہم ہے بلکہ پورے ای سی او خطے کیلئے بھی اہم ہے۔ صدرا ایف پی سی سی آئی،ای سی او خطے میں ذرائع نقل وحمل کی سہولیات کی بہتر ی پر بھی روشنی ڈالتے ہوئے ای سی او ٹرین پراجیکٹ کی ضرورت پر بھی زور دیں گے۔اس کے علاوہ صدر ایف پی سی سی آئی،ای سی او، ثالثی سینٹر کے ابتدائی عمل درآمد اور آپر یشنلا ئز یشن پر بھی تبا دلہ خیال کریں گے۔
صدر ایف پی سی سی آئی پاک ترکی جوائنٹ چیمبر آف کامرس جو کہ ایف پی سی سی آئی اور کے درمیان ایم او یو کے بعد وجود میں آیا کی پہلی میٹنگ میں بھی شرکت کریں گے۔دوطرفہ تجارت کا فروغ اور دونوں ممالک کے درمیان موجو دہ معاشی تعلقات اس میٹنگ کے اہم ایجنڈا ز میں شامل ہیں۔