: تازہ ترین

تازہ ترین ویڈیو

سندھ میں کرونا وائرس کے نام پر فنڈز کی تحقیقات کی جائے: ڈاکٹر سلیم حیدر


dr saleem haider MIT March 29, 2020 | 8:19 PM

پندرہ سال سے پیپلزپارٹی کی حکومت صوبے کے وسائل کو لوٹ رہی ہے
جو حکومت ایڈز اور ہیپاٹائٹس کے مریضوں کا علاج نہیں کراسکی اس سے کوئی امید نہیں کی جاسکتی
کراچی:(نیوزآن لائن)مہاجر اتحاد تحریک کے چیئرمین ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے نام پر سندھ میں خرچ کئے جانے والے فنڈز کو مانیٹر کرنے کیلئے ہائیکورٹ کے اعلیٰ سطح ججز پر مشتمل کمیٹی بنائی جائے جو اس بات کا تعین کرے کہ اربوں روپے کے یہ فنڈز وفاقی اور صوبائی حکومتیں کس طرح خرچ کررہی ہیں کیونکہ سندھ میں پیپلزپارٹی کی کرپٹ حکومت 15 سال سے سندھ کے وسائل کو لوٹ رہی ہے اور اب یہ قدرتی آفات پر ملنے والے فنڈز بھی لوٹنے کیلئے سرگرم ہوگئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ سندھ کے شہری علاقوں میں 10 روز سے کاروبار بند اور نظام زندگی مفلوج ہے ۔ غریب مزدور جوکہ پہلے ہی معاشی بدحالی کا شکار تھے اب فاقہ کشی میں مبتلا ہورہے ہیں لیکن یہ حکومت اب تک نہ تو کسی ایک شخص کو راشن دے پائی ہے اور نہ ہی ان کی ضرورت کا سامان، جس کے بعد یہ اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ کرونا وائرس کے نام پر اربوں روپے کے یہ فنڈز کس کی جیب میں جائیں گے ۔ پیپلزپارٹی جو زکوٰة و خیرات کی رقم بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کے نام پر اعلیٰ افسران اور جیالوں میں تقسیم کرتی ہے اس سے یہ توقع نہیں کی جاسکتی کہ وہ سندھ کے شہری علاقوں کی کچی آبادیوں اور غریب افراد میں راشن تقسیم کرے گی اس کا اندازہ اس بات سے بھی لگایا جاسکتا ہے کہ حیدرآباد میں شرجیل انعام میمن جیسے مستند نیب زدہ اور کرپٹ شخص کو فوکل پرسن بناکر انتظامیہ کو ان کے ماتحت کردیا گیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پیپلزپارٹی کی حکومت جو لاڑکانہ اور سندھ کے دیگر اضلاع میں ایڈز میں مبتلا ہوجانے والے سینکڑوں افراد کو علاج کے لئے دوا دینے کو تیا رنہیں جو ہیپاٹائٹس کنٹرول پروگرام کے نام پر اربوں روپے کی کرپشن کررہی ہو ، ملیریا ، ٹی بی کنٹرول پروگرام کے نام پر وڈیرے او رمن پسند افسران عیاشیاں کررہے ہوں ان سے کرونا جیسی آفت سے نمٹنے کے نام پر غریب عوام کی مدد کی کس طرح توقع کی جاسکتی ہے۔