: تازہ ترین

تازہ ترین ویڈیو

دنیا بھر سے 2030 ء تک ایڈزکے خاتمے کیلئے بھر پور اقدامات کئے جا رہے ہیںراشد علی خان


AL rashid foundation August 27, 2016 | 4:30 PM

پاکستان کوایڈز کے مرض سے پاک کرنے کیلئے عوام میں شعور وآ گاہی پیدا کرنی ہوگی کراچی گنجائش سے زیادہ آبادی رکھنے والا شہرہے جہاں کسی بھی قسم کے وبائی امراض کے پھیلنے میں قطعی دیر نہیں لگتی
کراچی:(نیوزآمن لائن)دنیا بھر سے 2030 ء تک ایڈزکے خاتمے کیلئے بھر پور اقدامات کئے جا رہے ہیںپاکستان کوایڈز کے مرض سے پاک کرنے کیلئے عوام میں شعور وآ گاہی پیدا کرنی ہوگی کراچی گنجائش سے زیادہ آبادی رکھنے والا شہرہے جہاں کسی بھی قسم کے وبائی امراض کے پھیلنے میں قطعی دیر نہیں لگتی کراچی شہر پاکستان کا وہ شہر ہے جہاں ایڈز کے مریضوں کی تعداد سب سے زیادہ ہے یہ بات الراشد فائونڈیشن پاکستان کے چیئرمین راشد علی خان نے ایڈز کنٹرول سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہی انہوں نے کہا کہ پورے سندھ میں ایڈز کے مریضوں کی مجموعی تعداد کا 81فیصد کراچی میں ہے اس لئے کراچی میں ایڈز کنٹرول کرنے اور عوام میں شعورو آگاہی پیدا کرنے کیلئے زیادہ سے زیادہ مہم چلانے کی ضرورت ہے انہوںنے کہا کہ اس مرض میںمبتلا افراد کو ایڈز سے متعلق مکمل معلومات فراہم کرنے کے علاوہ مرض کی روک تھام کی بھر پور کوششیں کی جائیں راشد علی خان نے کہا کہ اس مرض میںمبتلا مریضوں کی ہلاکتوں روکنے کیلئے اقدامات کئے جائیں انہوں نے کہا کہ سائنسی بنیادوں پر اس عالمگیر مرض کے خاتمے کیلئے ہم سب کو ملکر اس وائرس کو شکست دینی ہوگی انہوں نے کہا کہ دنیا کا کوئی بھی ملک اسے مہلک مرض سے نہیں بچا ہے یہ دنیا کے تمام براعظموں تک پھیل گیا ہے اور اس کو ختم کرنے کے لئے عالمی اقدامات کی اشد ضرورت ہے راشد علی خان نے کہا کہ ایچ آئی وی کے خطرے کے خلاف بھر پور جنگ جاری رکھنی ہوگی انہوں نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ ہم اس مہلک مرض سے جلد نجات پانے میں کامیاب ہوجائیں گے چونکہ اہم ایسی حکمت عملی پر عمل کر رہے ہیںجو درست سمت میں جارہی ہے راشد علی خان نے کہا کہ ہمیں ایڈز سے تحفظ اور آگاہی کے لئے ہر سطح پر بہترین اقدامات کرنے ہونگے چونکہ یہ انسانی زندگیوں کوسوال ہے انہوں نے کہا کہ کراچی سمیت پورے سندھ میںاس مرض میں اضافہ ہو اہے جس میں کئی اموات بھی ہوئی ہیں راشد علی خان نے کہا کہ جو باعث تشویش ہیں راشد علی خان نے کہا کہ سندھ ایڈز کنٹرول پروگرام صرف کاغذوں تک ہی محدود نہیں رہنا چاہئے بلکہ اس سے ایڈز کے مریضوں کو فائدہ ہونے کے علاوہ اس کی روک تھام میں مدد اور عوام میں ایچ آئی وی سے مکمل واقفیت ہونا چاہئے