: تازہ ترین

تازہ ترین ویڈیو

  • ساہیوال: مبینہ پولیس مقابلے میں 4 افراد کی ہلاکت میں ملوث سی ٹی ڈی اہلکاروں کیخلاف دہشت گردی کا مقدمہ درج

    January 20, 2019 | 8:07 PM
    sahiwal

    ساہیوال:(نیوزآن لائن)ساہیوال میں مبینہ پولیس مقابلے میں جاں بحق افراد کے لواحقین کے پوری رات دھرنے اور شدید احتجاج کے بعد تھانہ یوسف والا پولیس نے مقابلے میں ملوث محکمہ انسداد دہشت گردی (سی ٹی ڈی) کے اہلکاروں کے خلاف دہشت گردی اور قتل کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کرلیا۔
    ایف آئی آر 16 نامعلوم اہلکاروں کے خلاف درج کی گئی ہے جنہیں گزشتہ روز ہی حراست میں لے لیا گیا تھا۔ مقتول خلیل کے بھائی کی مدعیت میں درج کیا۔گزشتہ شب وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے لواحقین سے ملاقات کرکے انہیں تسلیاں تو دی تھیں تاہم مقدمہ درج نہیں کیا گیا جس کے باعث ورثا مطمئن نہیں ہوئے تھے۔واضح رہے کہ تھانہ سی ٹی ڈی لاہور میں واقعے میں جاں بحق افراد پر بھی مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

Live News Channels

Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

Corruption News
CORRUPTION NEWS
CRIME STORIES
CRIME STORIES
TALK SHOWS
TALK SHOWS
DIPLOMAT NEWS
MINORITIES NEWS

ADVERTISEMENT CORNER

NewsOnline

Visitor Counter

Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player

Content on this page requires a newer version of Adobe Flash Player.

Get Adobe Flash player


(Click here)پاکستان نیوز

  • سینیٹر سرا ج الحق :منصورہ میں خطاب سانحہ ساہیوا ل کے لواحقین سے تعزیت، میڈیا گفتگو

    January 20, 2019 | 8:31 PM
    pic Siraj Ul Haq

    لاہور:(نیوزآن لائن)امیر جماعت اسلامی پاکستا ن سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ قوم حکمرانوں سے پوچھ رہی ہے کہ سی ٹی ڈی اور پولیس کو شہریوں کے قتل عام کا کس نے لائسنس دیا ہے ۔اگر لاٹھی گولی کی سرکار کا اقتدار ہے تو پھر عدالتوں کو تالے لگوا دیں ۔ وزیر اعلیٰ چند روپے دے کر بچوں سے ان کے والدین کے ناحق قتل کا سودا کرنا چاہتے ہیں ۔ معصوم لوگوں کے قاتلوں کو سزا دینے کی ذمہ داری کس کی ہے ۔ یہ قتل و غارت گری کب تک چلے گی ۔ عوام ظلم کے اس نظا م کو مزید برداشت نہیں کریں گے ۔ حکومت اب تک ہوائی قلعے تعمیر کر رہی ہے ۔ حکمران کچھ کرنے کی صلاحیت سے محروم ہیں ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے منصورہ میں جاری نیشنل ایسوسی ایشن فار ایجوکیشن (نافع) کے زیراہتمام اساتذہ کی تربیتی ورکشاپ سے خطاب اور ساہیوال واقعہ کے مقتولین کے گھر تعزیت کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر سیکرٹری اطلاعات جماعت اسلامی قیصر شریف بھی موجود تھے ۔
    سینیٹر سراج الحق نے تربیتی ورکشاپ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان ایک نظریاتی مملکت اور دنیا بھر کے مسلمانوں کے لیے اسلام کا قلعہ ہے ۔ حکمرانوں نے پہلے اس کو دولخت کیا اور اب باقی ماندہ پاکستان کی بنیادوں کو کھوکھلا کر رہے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ جو حکومت آتی ہے وہ تمام خرابیوں کاذمہ دار سابقہ حکومت کو قرار دے کر ہاتھ پہ ہاتھ دھرے بیٹھ رہتی ہے سب یہی کہتے ہیں کہ بہت گند ہے اس کو صاف کرناہے مگر دوسروں سے زیادہ گند ڈال کر چلے جاتے ہیں ۔ موجودہ حکومت بھی اب تک یہی کر رہی ہے ۔ پانچ ماہ میں حکومت نے کوئی ایک وعدہ بھی پورا نہیں کیا ۔ انہوں نے کہاکہ ملک کو مسائل کی دلدل سے نکالنے اور عالمی برادری میں اپنا کھویا ہوا وقار دوبارہ حاصل کرنے کے لیے خوف خدا رکھنے والی نظریاتی قیادت کی ضرورت ہے جو آئی ایم ایف ، و رلڈ بنک و امریکہ سمیت عالمی استعمار سے ڈرنے کی بجائے اللہ اور اس کے رسول ۖ کی تعلیمات پر عمل کرنے والی ہو ۔ انہوںنے کہاکہ اس وقت تمام جماعتیں ناکام ہوچکی ہیں تین تین بار اقتدار میں رہنے والی سابقہ حکمران جماعتوں کو بھی عوام نے دیکھ لیاہے اور موجودہ حکومت کو بھی ،جو تبدیلی کے بڑے بڑے دعوئوں اور نعروں کے ساتھ آئی تھی ۔یہ حکومت بھی سابقہ حکومتوں کی طرح اسی استحصالی نظام کو جاری رکھے ہوئے ہے ۔ یہ حکومت بھی انہی مسافروں پر مشتمل ایک قافلہ ہے ان کا بھی وہی ایجنڈاہے جو ان سے پہلے حکمرانوں کا تھا ۔ یہ کسی قومی ایجنڈے پر نہیں ہمیشہ ذاتی مفادات کے ایجنڈے پر آتے ہیں او ر جب تک حکومت میں رہتے ہیں ، عوام کا خون چوستے اور اپنے مفاد کو پورا کرتے ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ چھ ماہ کے اندر ہی عوا م کی تمام امیدیں دم توڑ چکی اور خوش فہمیاں دور ہوگئی ہیں ۔ افراد اور پارٹیاں تبدیل ہو گئی ہیں مگر نظام وہی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ فرق صرف اتناآیاہے کہ بڑے بھائی کی جگہ چھوٹا ،چچا کی جگہ بھتیجا اور ماموں کی جگہ بھانجا حکومت میں آگیاہے اور کوئی فرق نہیں آیا۔
    مقتولین کے خاندان سے اظہار تعزیت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ یہ واقعہ رات کے اندھیرے میں نہیں ، دن کی روشنی میں ہواہے سانحہ ساہیوال کھلی دہشتگردی اور بدمعاشی ہے ۔ حکومتی وزراء نے سات بار موقف بدلاہے ۔ سانحہ پر پوری قوم افسردہ ہے ۔ عوام کو حکومت اور اس کی بنائی ہوئی جے آئی ٹی پر اعتماد نہیں ۔ عدالت اس واقعہ کا از خود نوٹس لے اور ذمہ داروں کو قرار واقعی سزا دی جائے ۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ کوئی دہشتگرد اہل خانہ اور بچوں کے ساتھ سفر نہیں کرتا یہ سیاسی نہیں ،انسانی مسئلہ ہے ۔ والدین کو بچوں کے سامنے شہید کر دیا گیاہے ۔ انہوںنے کہاکہ آج پتہ چلاکہ ادارے کیسے کام کر رہے ہیں ۔ معلومات نہ ہونے کے باوجود حملہ کیوں کیا گیا ۔ اپنے لوگوں کو دہشتگرد بناکر آپریشن کرنا ظلم اور دہشتگردی کی بدترین مثال ہے ۔ انہوںنے کہاکہ اس واقعہ سے عام شہریوں کے اندر خوف اور دہشت کی لہر دوڑ گئی ہے ۔ انہوںنے کہاکہ جماعت اسلامی مظلوم خاندان کے ساتھ ہے جب تک اس خاندان اور معصوم بچوں کو انصاف نہیں مل جاتا ، انہیں اکیلا نہیں چھوڑیں گے ۔

(Click here)سندھ نیوز

  • سندھ کا پہلا شہری جنگل( اربن فاریسٹ) کراچی میں قائم کیا جائے گا ۔ صوبائی وزیر جنگلات و جنگلی حیات کی زیر صدارت اعلیٰ سطحی اجلاس میں فیصلہ

    January 20, 2019 | 4:58 PM
    selected pic 20-1-19

    صوبائی وزیر جنگلات و جنگلی حیات سید ناصر حسین شاھ کی زیر صدارت اہم اجلاس پائیدار فاریسٹ مینجمنٹ پالیسی دع دو ہزار انیس کی تیاری کے لئے تفصیلی تبادلہ خیال تمام اسٹیک ہولڈرز کی رائے شامل کی جائے گی۔
    کراچی :( نیوزآن لائن ) صوبائی وزیر جنگلات و جنگلی حیات سید ناصر حسین شاھ نے کہا کہ سندھ کے جنگلات کی ترقی اور ان اضافے کے لئے جامع و مربوط اور شفاف پالیسی بنائی جائے گی اور اس سلسلے میں میرٹ و چیک اینڈ بیلنس کا پائدار ٹھوس نظام قائم کیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے محکمہ جنگلات کے دفتر میں پائیدار فاریسٹ مینجمینٹ پالیسی 2019 کی تیاری ، ایکٹس ، سالانہ ترقیاتی پروگرام ، سیکریٹریز کمیٹی میٹنگ میں جنگلات کے حوالے سے ایجنڈے ، سپریم اور ہائی کورٹ کے احکامات کی تعمیل کے حوالے سے منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں سیکریٹری محکمہ جنگلات عبدالرحیم سومرو، چیف کنزرویٹر آف فاریسٹ روینیو اعجاز نظامانی ، چیف کنزرویٹران لینڈ مینگروز ریاض احمد وگن ، کنزرویٹر جنگلات آغا طاہر حسین ، سوشل فاریسٹ سیکریٹری حیدرآباد ذوالفقار علی میمن، سوشل فاریسٹ سیکریٹری سکھر حیدر رضا خان، تمام سرکل کے کنزرویٹرز ، کنزرویٹر کراچی جاوید احمد مہر ، پی پی سی (ایس ایف ایم پروجیکٹ ) عبدالحق کے علاوہ ڈائریکٹر میڈیا مینجمینٹ وزیر جنگلات و جنگلی حیات محمد شبیہ صدیقی نے شرکت کی ۔ صوبائی وزیر نے اس موقع پر کہا کہ موسمیاتی تغیرات ، فضائی آلودگی اور ٹیمپرچر میں اضافہ کے پیش نظر کراچی میں سندھ کا پہلا شہری جنگل (اربن فاریسٹ) قائم کیا جائے گا جس کا دائرہ بتدریج صوبے کے تمام شہروں تک وسیع کیا جائے گا۔ گرین کراچی کے تحت ملیر ندی اور ریلوے لائن کے ساتھ پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت اور متعلقہ اداروں کے تعاون سے ماحول دوست اور پھلدار درخت لگائے جائے گیں اور بھرپور شجر کاری کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ اربن فاریسٹ قائم کرنے کا مقصد کراچی میں بڑہتی ہوئی آلودگی کو کم کرنا ، شہر کو سرسبز بنانا ، اور ٹیمپریچر میں اضافہ کو کم کرنا ہے۔صوبائی وزیر نے ہدایت کی کہ وہ آنے والے بہار کے موسم میں جنگی بنیادوں پر اپنی تیاری مکمل کرلیں اور اس سلسلے میں شجرکاری کے حوالے سے کام کرنے والی این جی اوز سے رابطہ کرکے انہیں اپنے پروگرام میں شامل کریں۔ صوبائی وزیرنے کہا کہ سندھ کے جنگلات میں اضافہ کے لئے شارٹ ٹرم اور لانگ ٹرم منصوبہ بندی کی جائے۔صوبائی وزیر سید ناصر حسین شاھ نے افسران کو سپریم کورٹ آف پاکستان اور سندھ ہائی کور ٹ کی جانب سے جنگلات کے حوالے سے دیئے گئے احکامات پر من وعن عمل کرنے کی ہدایت کی۔اس موقع پر انہوں نے افسران کو سندھ کے تمام ضلعی ہیڈکوارٹرز اور ڈویثرنل ہیڈکوارٹرز کے لیول پر اربن فاریسٹری شروع کرنے کی ہدایت کی۔سیکریٹری جنگلات نے اس موقع پر مختلف حوالوں سے تفصیلی بریفنگ دی اور بتایا کہ سندھ پائیدار فاریسٹ مینجمینت پالیسی 2019 کے لئے کنسلٹیٹو ورکشاپس ، سییمنارز ، اجلاسوں ، تمام اسٹیک ہولڈرز، اکیڈمیاں اور کمیونٹی کی آراء کو شامل کر کے ایک ڈرافٹ کی صورت میں آئندہ ہفتے پیش کردیا جائے گا۔اجلاس میں صوبائی وزیر نے افسران پر زور دیا کہ جنگلات کی ترقی صوبے میں درختوںکی تعداد میں اضافہ اور ان کی حفاظت کے لئے اپنی تمام تر صلاحیتیں بروئے کار لائیں ۔ انہوں نے کہا کہ جنگلات قومی امانت ہیں اور ہر صورت میں ان کی حفاظت و نشونما کے لئے اقدامات کئے جائیں ۔ انہوں نے کہا کہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور وزیر اعلیٰ سندھ اس سلسلے میں خصوصی دلچسپی رکہتے ہیں اور جنگلا ت کی ترقی و درختوں میں اضافہ کے لئے ان کی خاص ہدایات بھی ہیں۔ سرسبز سندھ ، سندھ حکومت کا عزم بھی ہے۔ اجلاس میں سالانہ ترقیاتی پروگرام کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی گئی اس موقع پر صوبائی وزیر نے تمام افسران کو ہدایت کی کہ وہ تمام جاری اسکیموں کو اعلیٰ معیار کے ساتھ وقت پر مکمل کروائیں۔

(Click here)کراچی نیوز

  • حکمران عوام کے سر سے چھت چھیننے کا خیال دل سے نکال دیں حافظ نعیم الرحمن

    January 20, 2019 | 8:28 PM
    Naeem Final copy

    واٹر بورڈ لیاقت آباد ، سکند رآباداور اعظم آباد کے رہائشیوں کو متبادل مکانات دے ورنہ مکانات خالی نہیں کیے جائیں گے ۔احتجاجی کیمپ سے خطاب
    جماعت اسلامی نے ہمیشہ عوام کے مسائل پر آواز بلند کی ہے سندھ اسمبلی میںاینٹی انکروچمنٹ مہم کے خلاف تحریک التواء جمع کرادی ہے ۔سید عبد الرشید
    کراچی: (نیوزآن لائن)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ واٹر بورڈ اہلیان پرانا غریب آباد، لیاقت آباد ،سکند رآباداور اعظم آباد کو متبادل مکانات فراہم کرے ورنہ مکانات خالی نہیں کیے جائیں گے ، 50سال سے آبادشہریوں کو کسی صورت چھت سے محروم نہیں ہونے دیں گے ، جماعت اسلامی کے پاس بہترین بلدیاتی تجربہ اور قیادت ہے، ہم سے بات کریں متبادل بتائیں گے اگر 48انچ کی پانی کی لائن کا متبادل نہیں تو پہلے متاثرین کو متبادل جگہ فراہم کی جائے ، نعمت اللہ خان نے جب لیاری ایکسپریس وے تعمیر کیا تو عوام کو پہلے متبادل فراہم کیا تھا، عوام کسی کے فریب میں نہ آئیں ، آپس میں متحد رہیں ، جماعت اسلامی آپ کے ساتھ ہے ۔ اہلیان علاقہ کو کسی صورت بے گھر نہیں ہونے دیں گے ۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے واٹر بورڈ کی جانب سے سکندر آباد ، پرانا غریب آباد اور اعظم نگر کے مکینوں کو مکانات خالی کرنے کے نوٹس کے خلاف لگائے گئے احتجاجی کیمپ سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ کیمپ میں بچے ، بوڑھے ،مرد وخواتین نے بڑی تعداد میں شرکت کی اور شہری و صوبائی حکومت کے خلاف زبردست نعرے بھی لگائے ۔ اس موقع پر رکن سندھ اسمبلی و امیر جماعت اسلامی ضلع جنوبی سید عبد الرشید ، ضلع عبوری امیر گلبرگ و سابق ٹاؤن ناظم گلبرگ فاروق نعمت اللہ ، ناظم حلقہ جاوید احمد خان ، عبید احمد،سابق نائب ناظم لیاقت آباد ٹاؤن شہا ب احمد ،سکریٹری اطلاعات زاہد عسکری و دیگر بھی موجود تھے۔ حافظ نعیم الرحمن نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ واٹر بورڈ کے نوٹس نے علاقے کے رہائشیوںمیں بے چینی پیدا کردی ہے ، برسوں سے قائم آبادی جس میں باقاعدہ بجلی کا کنکشن اور گیس کی فراہمی کی گئی ہے لیکن اب واٹر بورڈ نے حکم نامہ جاری کرکے ان کا سکون برباد کردیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ عوام نے جن لوگوں کو ووٹ دے کر منتخب کیا آج وہ لوگ ان آبادیوں سے نکل کر ڈیفنس چلے گئے ہیں انہیں یہاں کے لوگوں کا کوئی خیال نہیں ہے ۔ہم واٹر بورڈ سے پوچھنا چاہتے ہیں کہ انہوں نے کراچی کے عوام کے لیے پانی کی فراہمی میں کتنا اضافہ کیا ؟۔کتنے پمپنگ اسٹیشنز کو ٹھیک کیا ؟۔سابق سٹی ناظم نعمت اللہ خان نے کراچی کے عوام کے لیے 100گیلن پانی کااضافہ کیا اور کے تین منصوبہ مکمل کیا اور اس کے بعد کے فورمنصوبہ کا آغازکیا تھا لیکن بدقسمتی سے اس کے بعد آنے والی حکومت نے ایک گیلن پانی کابھی اضافہ نہیں کیا۔کے فور منصوبہ کی لاگت 16ارب روپے جسے 2010میں مکمل ہونا تھا وہ ابھی تک مکمل نہیں ہوسکا اور اب اس کی لاگت کھربوں روپوں تک پہنچ گئی ہے ۔ جماعت اسلامی اس مشکل گھڑی میں متاثرین کے ساتھ ہے ، کسی قیمت میں بھی متاثرین کو بے گھر نہیں ہونے دیں گے ۔انہوں نے کہاکہ وفاقی و صوبائی حکومت کی ذمہ داری ہے کہ اہلیان سکندر آباد ، پرانا غریب آباد اور اعظم نگر کے عوام کو متبادل جگہیں فراہم کریں ورنہ ہم سڑکوں پر آئیں گے اور ضرورت پڑی تو گورنر ہاؤس کا بھی گھیراؤ کریں گے ۔ رکن صوبائی اسمبلی سید عبد الرشید نے کہاکہ جماعت اسلامی نے ہمیشہ عوام کے مسائل کے حل کے لیے آواز بلند کی ہے اور آئندہ بھی عوام کے ساتھ رہیں گے۔سندھ اسمبلی میں امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن کی ہدایت پر اینٹی انکروچمنٹ مہم کے خلاف تحریک التواء جمع کرادی ہے اور اہلیان سکندر آباد ، پرانا غریب آباد اور اعظم نگر سے منتخب ذمہ دارن سے ملاقات کروں گا اور مجھے امید ہے کہ دیگر منتخب عہدیداران بھی اس مسئلے کے حل کے لیے سے میرا ساتھ دیں گے ۔

(Click here)بزنس

  • اوور سیز پاکستانیوں کی جانب سے بھجوائی جانیوالی ترسیلات زر میں 10 فیصد اضافہ اور غیر ملکی سرمایہ کاری میں سترہ فیصد اضافہ

    January 20, 2019 | 8:18 PM
    Dollars

    اسلام آباد:(نیوزآن لائن) رواں مالی سال کے 6 ماہ کے دوران اوور سیز پاکستانیوں کی جانب سے بھجوائی جانیوالی ترسیلات زر میں 10 فیصد اضافہ اور غیر ملکی سرمایہ کاری میں سترہ فیصد اضافہ ہوا ہے اورملک کے اقتصادی اعشاریے حکومت کی بہتر کارکردگی اور درست سمت کا اظہار ہے۔
    وزارت خزانہ کی جانب سے گذشتہ روز یہاں سے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق ان خیالات کا اظہار وزارت خزانہ کے ترجمان خاقان نجیب نے گذشتہ چھ ماہ کی اقتصادی صورتحال کے حوالے سے یہاں سے جاری کردہ اپنے بیان میں کیا۔ترجمان وزارت خزانہ کا مزید کہنا ہے کہ موجودہ حکومت کے گذشتہ چھ ماہ کے دوران ملک میں اقتصادی اعشاریئے بہتر ہوئے ہیں جو حکومت کی بہتر کارکردگی اور درست سمت کی عکاسی کرتے ہیں انھوں نے کہا کہ رواں ماالی سال 2018-19 کے پہلے چھ ماہ کے دوران بیرون ممالک میں مقیم پاکستانیوں کی جانب سے بھجوائی جانیوالی ترسیلات زر میں دس فیصد اضافہ ہے جبکہ غیر ملکی سرمایہ کاری کی شرح میں 17فیصد اضافہ ہوا ہے۔اس کے علاوہ رواں مالی سال کی پہلی ششہاہی کے دوران تجارتی خسارے میں پانچ فیصد کمی واقع ہوئی ہے جبکہ ملکی برآمدات میں دو فیصد اضافہ اور درآمدات میں دو فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔

(Click here)ثقافت

  • بالی ووڈ اداکار رنویر سنگھ کا کہنا ہے کہ وہ اپنی اہلیہ دپڈپیکا وکون سے کئی سال قبل شادی کرچکے تھے

    January 20, 2019 | 8:12 PM
    download

    ممبئی: (نیوزآن لائن) بالی ووڈ اداکار رنویر سنگھ کا کہنا ہے کہ وہ اپنی اہلیہ دپیکا پڈوکون سے کئی سال قبل شادی کرچکے تھے۔ رنویر سنگھ سے جب یہ پوچھاگیا کہ شادی کے بعد وہ کیسا محسوس کررہے ہیں اور کیا وہ اپنے دوستوں کو بھی شادی کرنے کا مشورہ دیں گے تو انہوں نے کہا شادی کے بعد کی زندگی بہت اچھی اور خوبصورت ہے اور میں اپنے دوستوں اور دیگر لوگوں کو بھی شادی کا مشورہ دوں گا کیونکہ شادی کے بعد زندگی بہت خوبصورت ہوجاتی ہے۔رنویرسنگھ نے مزید کہا کہ میں ہمارے رشتے کے ابتدائی دنوں میں ہی دپیکا سے شادی کرنے کا فیصلہ کرچکاتھا دپیکا سے ملنے کے بعد مجھے یہ احساس ہوگیا تھا کہ یہی وہ لڑکی ہے جس کے ساتھ میں اپنی پوری زندگی گزارنا چاہتا ہوں۔ ہماری شادی کی رسمیں تو ابھی ہوئی ہیں لیکن دپیکا سے شادی میں اپنے دماغ میں بہت پہلے کرچکاتھا میں صرف اس بات کا انتظار کررہا تھا کہ دپیکا کب شادی کے لیے ذہنی طور پر تیار ہوتی ہیں اور جیسے ہی وہ تیار ہوئیں ہم نے شادی کرلی۔

(Click here)انٹر نیشنل

  • امریکی فضائیہ نے صومالیہ میں الشباب جنگجووں کے ٹھکانوں پر فضائی حملے میں 52 شدت پسندوں ہلاک

    January 20, 2019 | 8:21 PM
    somalia

    جلب: (نیوزآن لائن) امریکی فضائیہ نے صومالیہ میں الشباب جنگجووں کے ٹھکانوں پر فضائی حملے میں 52 شدت پسندوں کو ہلاک کرنے کا دعوی کیا ہے۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق صومالیہ کے جنوبی علاقے جِلِب میں امریکی فوج کے فضائی حملے میں شدت پسند تنظیم الشباب کے 52 جنگجو مارے گئے جب کہ متعدد زخمی ہوگئے۔امریکی فوج کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ فضائی حملہ الشباب جنگجووں کے صومالی فوج پر کیے گئے ایک حملے کے جواب میں کیے گئے ہیں۔ الشباب نے گزشتہ روز صومالی فوج کے 8 اہلکاروں کو قتل کردیا تھا۔